Iran Nuclear Deal Withdraw

ایران نے جوہری معاہدے سے دست برداری کا عندیہ دے دیا

تہران جدت ویب ڈیسک :ایران کے نائب وزیر خارجہ عباس عراقجی کا کہنا ہے کہ اگر ایران کو جوہری معاہدے کے مقابل اقتصادی خصوصیات حاصل نہ ہوئیں اور بڑے بینکوں نے تہران کے ساتھ معاملات سے گریز کا سلسلہ جاری رکھا تو اْن کا ملک 2015 میں س دستخط شدہ جوہری معاہدے سے دست بردار ہو جائے گا۔ انہوں نے واضح کیا کہ اگر ےہی پالیسی جاری رہی تو ہم ایسے معاہدے کو باقی نہیں رکھ سکتے جس سے ہمیں کوئی فائدہ نہ پہنچے ، جولائی 2015 میں ایران اور چھ بڑی طاقتوں برطانیہ ، چین ، فرانس ، جرمنی ، روس اور امریکا کے درمیان معاہدہ طے پایا تھا۔ اس معاہدے کے تحت ایران کو پابند بنایا گیا کہ وہ اقتصادی پابندیوں کو اٹھائے جانے کے مقابل اپنے جوہری پروگرام میں کمی کرے گا۔تاہم امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 12 جنوری کو یورپی قوتوں کو خبردار کرتے ہوئے کہا ایرانی جوہری معاہدے میں موجود پریشان کن خامیوں کی اصلاح لازم ہے، بصورت دیگر وہ ایران پر سے امریکی پابندیاں اٹھانے سے انکار کر دیں گے۔اگر ٹرمپ نے 12 مئی کو ان پابندیوں کے اٹھائے جانے سے متعلق نیا تجدیدی فیصلہ نہ کیا تو امریکی پابندیاں پھر سے عائد ہو جائیں گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.