PMLN

اگلے الیکشن میں زرداری اور جھوٹے کھلاڑی کو شکست فاش ہو گی‘شہبازشریف

بورے والا /لاہور جدت ویب ڈیسک وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے تحصیل بورے والا ، ضلع وہاڑی کا دورہ کیااورعلاقے کے عوام کی ترقی و خوشحالی کے لئے اربوں روپے کی لاگت سے مکمل ہونیوالے منصوبوں کا افتتاح کیا۔وزیراعلیٰ نے ضلع کے عوام کی فلاح و بہبود کیلئے مختلف منصوبوں کا سنگ بنیاد بھی رکھا۔وزیراعلیٰ نے 300 بیڈز پر مشتمل ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال وہاڑی کی اپ گریڈیشن اور نئے ایمرجنسی بلاک کا افتتاح کیااوراس منصوبے پر62 کروڑ 50 لاکھ روپے لاگت آئی ہے۔وزیراعلیٰ نے سپورٹس سٹیڈیم وہاڑی میں9 کروڑ 20 لاکھ روپے لاگت سے قائم ہونے والی ای۔لائبریری کا افتتاح کیا۔گورنمنٹ سپیشل ایجوکیشن سنٹر عظیم آباد، بورے والا کا افتتاح بھی کیااوریہ منصوبہ 8 کروڑ 30 لاکھ روپے سے مکمل کیا گیا ہے۔وزیراعلیٰ نے بورے والا میں 7 کروڑ 20 لاکھ روپے کی لاگت سے بننے والے ریسکیو 1122 کا افتتاح کیا اور5کروڑ 60 لاکھ روپے کی لاگت سے بننے والے اراضی ریکارڈ سنٹر کا بھی افتتاح کیا۔وزیراعلیٰ نے وہاڑی میں موبائل ہیلتھ یونٹ کی فراہمی کے منصوبے کا افتتاح کیا جس پر 5کروڑ روپے لاگت آئی ہے۔وزیراعلیٰ نے میلسی اور ملحقہ آبادیوں کے لئے واٹر سپلائی اور سیوریج سکیموں کی بحالی اور توسیع کے منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا،اس منصوبے پر 28 کروڑ روپے لاگت آئے گی۔وہاڑی میںنیو گورنمنٹ گرلز ہائی سکول، شرقی کالونی کا سنگ بنیاد بھی رکھا، سکول کی تعمیر پر 10کروڑ 10 لاکھ روپے لاگت آئے گی۔وزیراعلیٰ نے بورے والا میں شہبازشریف رنگ روڈ کا سنگ بنیادبھی رکھااوریہ منصوبہ 32کروڑ 20 لاکھ روپے کی لاگت سے مکمل ہوگا۔ضلع وہاڑی میں جامع واٹر سپلائی اور سیوریج سکیم کے منصوبے کا بھی سنگ بنیاد رکھاجس پر30 کروڑ 90 لاکھ روپے لاگت آئے گی۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں کے افتتاح کے اورسنگ بنیاد رکھنے کے بعد بورے والا میں ایک بہت بڑے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے گزشتہ ساڑھے 9سالوں میں ضلع وہاڑی میں تقریبا 30ارب روپے سے زائد کے منصوبے مکمل کئے ہیں-’’پکیاں سڑکا ں، سوکھے پینڈے‘‘ کے تحت وہاڑی میں ساڑھے 3ارب روپے کی لاگت سے کھیتوں سے منڈیوں تک بہترین سڑکیں بنائی گئی ہیں جن سے دیہات اور قصبے آپس میں جڑ گئے ہیں- 300بستروں پر مشتمل ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کو اپ گریڈ کیا گیاہے-بورے والا او رمیلسی میں نئے ہسپتال بن رہے ہیں-ضلع وہاڑی کے ہسپتال میں جدید سی ٹی سکین مشین فراہم کر دی گئی ہے جبکہ دور دراز کے علاقوں کے عوام کو معیاری طبی سہولتوں کی فراہمی کے لئے موبائل ہسپتال فراہم کر دیا گیاہے یہ ہسپتال دیہاتوں اور قصوبوں کے عوام کو ان کی دہلیز پر تشخیص او رعلاج کی جدید سہولتیں فراہم کرے گا-وزیراعلی نے گگوشہر کو تحصیل کا درجہ دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ اس ضمن میں ہم الیکشن کمیشن کے قواعد وضوابط کے مطابق عمل کریں گے -وزیراعلی نے دریائے ستلج پر نئے پل کی تعمیرکے منصوبے کا بھی اعلان کیا-وزیراعلی نے وہاڑی میں زرعی یونیورسٹی کے کیمپس کو مکمل زرعی یونیورسٹی بنانے کا اعلان کیا جبکہ انہوں نے وہاڑی میں میڈیکل کالج بھی بنانے کا اعلان کیا- وزیراعلی نے اڈارسول پور سے متیلہ چوک تک 120کلو میٹر دورویہ سڑک اور حاصل پور سے لڈن تک سڑک کی تعمیر کے منصوبوں کا اعلان کیا-وزیراعلی نے بہائوالدین ذکریا یونیورسٹی کے کیمپس کے شعبوں کے لئے عمارت کی تعمیر کا بھی اعلان کیا-جلسے کے دوران تحریک انصاف کے قومی اسمبلی کے سابق امیدوار اور پنجاب کے نائب صدر ریاست علی بھٹی نے وزیراعلی پنجاب محمدشہبازشریف کی قیادت پر بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ ن میں شمولیت کااعلان کیا-وزیراعلی نے بورے والا ،میلسی اور وہاڑی کے لئے اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں کا ا علان کرتے ہوئے کہاکہ اگر اللہ تعالی نے ہمیں 2018ء کے انتخابات میں کامیاب کیا اور عوام کی خدمت کا موقع ملا تو ان منصوبوں پر فی الفور کام شروع کر کے پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے گا- انہوں نے کہاکہ میں نے بورے والا میں پہلے بھی جلسے کئے ہیں لیکن آج یہ بورے والا کی تاریخ کا بڑا جلسہ ہے – ہزاروں لوگ پنڈال سے باہر موجود ہیں جنہیں اند رآنے کا موقع نہیں ملا-عوام کا یہ ٹھاٹھیں مارتا ہوا سمندر اس بات کی گواہی دے رہاہے کہ اگلے الیکشن میں مداریوں ، زرداریوں اور جھوٹے کھلاڑی جو کہ جھوٹوں کا آئی جی ہے کو شکست فاش ہو گی- انہوںنے کہاکہ ساڑھے 4سال قبل پاکستان مسلم لیگ( ن) کی حکومت اور میرے قائد محمد نوازشریف نے قوم سے وعدہ کیا تھا کہ پانچ سال میں ملک سے بجلی کی لوڈشیڈنگ ختم کردیں گے -ہماری دن رات کی محنت اور مخلصانہ کاوشوں کی بدولت ساڑھے 4 سالبعد ہی ملک سے بجلی کے اندھیرے دور ہوگئے ہیں-محمد نوازشریف کی قیادت میں مسلم لیگ ن کی وفاقی حکومت اور پنجاب حکومت نے ملکر ہزاروں میگا واٹ بجلی کے منصوبے لگائے ہیں-سی پیک کے تحت بھی توانائی کے منصوبے مکمل کئے گئے ہیں-آنے والی گرمیوں میں آپ کے کمرے ٹھنڈے ہوںگے وہاں پنکھے چل رہے ہوںگے-مارکیٹوں میں تجارتی سرگرمیاں پورے زور وشور سے جاری ہو ںگی -کھیتوں ، کھلیانوں ، میں لہلہاتی فصلیں ہوںگی -سکول، کالج، ہسپتال اور دفاتر روشن ہوں گے-بجلی کی لوڈشیڈنگ ہمیشہ کے لئے ملک سے غائب ہوچکی ہوگی-جھوٹے خان صاحب جو جھوٹوں کے آئی جی ہیںنے 2013ء کے الیکشن میں کہاکہ ہم کے پی کے میں بجلی پیدا کریں گے او ریہ بجلی پاکستان کو بھی دیں گے- ساڑھے 4سال بعد کہتے ہیں کہ ہم نے 74میگا واٹ بجلی پیدا کی ہے ، خان صاحب خدارا !عوام کو بتائیں کہ آپ کی پیدا کردہ بجلی کہاں ہے-کیا یہ بجلی آسمانوں میں ہے ،زمین میں ہے یا پہاڑوں میں ہے؟میرا نیازی صاحب کو مشورہ ہے کہ جتنا جھوٹ بولنا ہے بول لیں لیکن خدا کے واسطے اس قوم پر رحم کریں اور گھر چلے جائیں-کیونکہ سیاست آپ کے بس کی بات نہیں-اسی جھوٹے خان صاحب نے یہ بھی کہا تھا کہ ہم میٹروبس نہیں بنائیں گے-وفاقی حکومت سے جو پیسے ملیں گے اس سے ہم سکول، کالج اور ہسپتال بنائیں گے-پشاور میں ڈینگی آیا تو ان کے پاس علاج کا انتظام نہ تھا اورموصوف خود ڈرکر پہاڑوں پر چڑھ گئے-جب 2011ء میں ڈینگی لاہور میں حملہ آور ہوا تو ہم نے سر جھکا کر اللہ تعالی کی مدد سے ڈینگی کا مقابلہ کیااور اسکا یہاں سے خاتمہ کیا- آج ہمارے پاس ڈینگی سے نمٹنے کے لئے مہارت بھی موجود ہے اور ہم اس مرض کے علاج کی اہلیت بھی رکھتے ہیں- پشاور میں ڈینگی آیا تو ہم نے پنجاب سے ماہرین ، ڈاکٹروں او رپیرامیڈیکل سٹاف کے علاوہ موبائل ہسپتال اور ادویات بھی بھجوائیںجبکہ خان صاحب اس دوران کہیں نظر نہ آئے بلکہ وہ نتھیا گلی چلے گئے- ساڑھے 4سال گزرنے کے بعد پشاور میں میٹروبس کا سنگ بنیاد رکھا گیاہے او راس منصوبے کے نام پر پشاور شہر کو اکھاڑ کر رکھ دیا گیاہے-انہوںنے کہاکہ اگر ا للہ تعالی نے ہمیں موقع دیا تو ہم ہی اس منصوبے کو مکمل کریں گے-دوسری طرف زرداری صاحب ہے جو کہتے ہیں کہ لوٹی ہوئی دولت واپس لاؤں گا۔میرا انہیں یہی مشورہ ہے کہ وہ یتیموں،بیواؤں،بے سہاراافراد اورغریب قوم کی جو دولت انہوںنے لوٹ کر باہر بھجوائی ہے ۔اسے خود واپس لے آئیں ورنہ 2018ء کے الیکشن میں اگر ہمیں خدمت کا موقع ملا تو دنیا کے آخری کونے میںپڑی اس غریب قوم کی کمائی لاکرعوام کے قدموں پر نچھاور کردیںگے۔روشنیوں کے شہر کراچی کابیڑہ غرق کر دیا گیا ہے۔ہر طرف کوڑا،گندگی کے ڈھیر اور ٹوٹی ہوئی سڑکیں عوام کیلئے مشکلات کا باعث بن رہی ہیں۔انہوںنے کہاکہ خان صاحب اورزرداری صاحب اپنے صوبوں میںکچھ نہیں کرسکے ہیں اس لئے اب وہ عوام کو منہ دکھانے کے قابل نہیں ہیں، اسی لئے وہ پنجاب اورلاہور میں آکر ہڑتالوں کی بات کرتے ہیں۔ خان صاحب نے پہلا دھرنا2014ء میں اسلام آباد میں دیا۔چین کے صدر نے ستمبر2014ء میں معاہدوں پر دستخطوں کیلئے پاکستان آنا تھا لیکن خان صاحب کی ضد اورہٹ دھرمی کے باعث چین کے صدر کا یہ دورہ موخر ہوا۔خان صاحب کا یہ رویہ پاکستان کے عوام اور ملک کے ساتھ دشمنی کے مترادف تھا۔جو معاہدے 7ماہ پہلے ہونے تھے وہ اس دھرنے کی وجہ سے اپریل 2015ء میں ہوئے۔اگر یہ معاہدے 7ماہ پہلے مکمل ہوجاتے تو منصوبے پہلے مکمل ہونے سے پاکستان ترقی کے لحاظ سے کئی آگے بڑھ چکا ہوتا۔ہم نے محنت سے تاخیر کا ازالہ کیا ہے اورمنصوبوں کو پایہ تکمیل تک پہنچایا ہے ۔زرداری اورخان صاحب نے غریب عوام کے خوابوں کو چکناچورکرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ یہ چاہتے تھے کہ قائدؒ اوراقبالؒ کاخواب پورانہ ہو۔زرداری اور نیازی صاحب نے ترقیاتی منصوبوں میں روڑے اٹکا کر غریب عوام کے خوابوں اور ارمانوں کا خون کیا، عوام اب ان کا محاسبہ کریںگے-میں خیبر پختونخوا کے غیور عوام، مہران کی وادیوں میں بسنے والوں اوربلوچستان کے عظیم بلوچوں سے کہتا ہوں کہ اگراللہ تعالیٰ نے 2018ء کے انتخابات میں ہمیں کامیابی دی تو پاکستان مسلم لیگ(ن) کراچی،پشاور اورکوئٹہ کوترقی کے لحا ظ سے لاہوربنا دیںگے۔انہوںنے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے گزشتہ ساڑھے چار سال کے دوران عوام کی بے لوث خدمت کی ہے اورپاکستان کو ترقی وخوشحالی کی راہ پر گامزن کردیا ہے اورترقی کے سفر کو مزید تیز کریںگے۔انہوںنے کہا کہ پنجاب حکومت نے صحت کے شعبے میں انقلاب برپا کیا ہے،تمام ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتالوں میں سی ٹی سکین مشینیں نصب کی جارہی ہیں جو 24گھنٹے عوام کو سی ٹی سکین کی سہولت مفت فراہم کریں گی،اب مریضوں کو سی ٹی سکین کیلئے دھکے نہیں کھانے پڑیںگے اورانہیں ہزاروں روپے خرچ کر کے باہر سے سی ٹی سکین کرانے پر مجبور نہیں ہونا پڑے گا۔انہوںنے کہاکہ میرا وہاڑی کے عوام سے وعدہ ہے کہ زرعی یونیورسٹی کے جو چند شعبے اب چل رہے ہیں اسے مکمل یونیورسٹی بنائیںگے اوروہاڑی میں میڈیکل کالج بھی بنائیں گے۔ وزیراعلیٰ نے زراعت کے فروغ اورچھوٹے کاشتکاروں کی فلاح کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ وفاقی حکومت اورپنجاب حکومت ملکر کاشتکاروں کو آدھی قیمت پر کھاد فراہم کررہی ہے جبکہ پنجاب حکومت بجلی سے چلنے والے زرعی ٹیوب ویلوں پر اربوں روپے کی سبسڈی دے رہی ہے ۔ملک کی 70سالہ تاریخ کا یہ پہلا موقع ہے کہ چھوٹے کسانوں کو بلا سود قرضے دیئے جارہے ہیں ۔پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے تحت غریب گھرانوں کے ہونہارتین لاکھ بچے اوربچیوں کو تعلیمی وظائف دیئے جارہے ہیں اوراس تعلیمی فنڈ سے فائدہ اٹھا کر ہزاروں ڈاکٹرز،انجینئرز اورسائنسدان بنے ہیں جو ملک کی تعمیر وترقی میں اپنا کردارادا کررہے ہیں ۔گزشتہ 70سالوں کی تاریخ میں کوئی ایسی مثال موجود نہیں کہ غریب گھرانوں کے بچوں کو اعلی تعلیم کے لئے اس طرح کے وظائف فراہم کیے گئے ہوں۔ گزشتہ 9سالوں میں اب تک 15ارب ر وپے کے وظائف دیئے جاچکے ہیں ۔وزیراعلیٰ خود روزگار سکیم کے تحت نوجوانوں کو 50ہزار روپے تک کے بلاسود قرضے دیئے جارہے ہیں اورسوا کروڑ افراد ان قرضوں سے مستفید ہوکراپنا باعزت روزگار کمارہے ہیں ۔اللہ تعالیٰ نے ہمیں موقع دیا تو ان قرضوں میں اربوں روپے کا اضافہ کریںگے۔انہوںنے کہا کہ موجودہ حکومت کی مدت 8جون کو پوری ہورہی ہے میں کاشتکاروں کو خوشخبری دینا چاہتا ہوں کہ وہ گندم کے رواں سیزن کے دوران جتنی گندم فروخت کرنا چاہیں گے پنجاب حکومت خرید ے گی جس طرح ماضی میں خریدتی رہی ہے۔میں گندم خریداری مراکز پر خود جاؤں گااورکاشتکاروں کو ان مراکز پر دی گئی سہولتوں کا جائزہ لیتا رہوں گا۔وزیراعلیٰ نے لودھراں میں ضمنی انتخابات میں مسلم لیگ(ن) کی شاندار کامیابی کاتذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے اس حلقے میں پاکستان مسلم لیگ(ن) کو بڑی عزت دی ہے ۔اس حلقے میں پیسہ اور ہیلی کاپٹر ہار گیا ،مخالفین نے اپنے پیسے کے زور پر ووٹروں کو خریدنے کی کوشش کی لیکن اللہ کو کچھ اور ہی منظور تھا اوراس نے اس علاقے میں فرشتہ صفت اور درویش انسان اقبال شاہ کو چن لیااوراسے شاندار فتح جبکہ علی ترین کو بدترین شکست دی۔ترین صاحب آپ نے پیسہ خرچ کیا وہ کہاں گیا؟میرے اللہ کو کچھ اور ہی منظور تھا،اسی لئے حلقے میں عوامی خدمت کی سیاست کی جیت ہوئی ہے ۔خانیوال ،لودھراں کی دورویہ سڑک23مارچ کو مکمل ہوجائے گی اوراس پر 27ارب روپے خرچ کیے جارہے ہیں ۔اس سڑک کا 9کلو میٹر حصہ ضلع وہاڑی سے بھی گزرتا ہے۔ پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے پنجاب بھر کی طرح ضلع لودھراں میں بھی عوام کی فلاح کے کئی منصوبے مکمل کیے ہیں۔ سپیڈو بس سروس لودھراں اوربہاولپور کے عوام کو باوقار سفری سہولتیں فراہم کررہی ہیں۔اللہ تعالیٰ نے موقع دیا تو وہاڑی اوربورے والا میں بھی سپیڈوبس سروس چلائیںگے۔وزیراعلیٰ نے عوام سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے ملک کی ترقی کیلئے دن رات کام کیا ہے ۔اب عوام نے دن رات کی محنت پر ڈاکہ نہیں پڑنے دینا۔پاکستان ترقی کی راہ پر گامزن ہوچکا ہے اورترقی کی اس رفتار کو مزید تیز کرنا ہے۔آئندہ انتخابات کے بعد نوجوانوں کو بلاسود قرضوں کی فراہمی کے پروگرام کو وسعت دیں گے تاکہ ملک میں کوئی بے روزگار نہ رہے اورہر کوئی باوقار طریقے سے زندگی بسر کریں ۔ یہی قائد اوراقبال کا خواب ہے اور یہی اسلام کی تعلیمات ہے۔انہوںنے کہاکہ پاکستان کو زبردست معاشی قوت بنائیںگے ۔یہ چیلنج ضرور ہے لیکن محنت اوراللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے یہ چیلنج ضرور پورا کریںگے۔انہوںنے کہاکہ مجھے کہتے ہے کہ غریبوں کی بات کیوں کرتے ہو۔میراانکو یہی جواب ہے کہ میں اس ظالمانہ نظام کا خاتمہ چاہتا ہوں ۔ میری خواہش ہے کہ یہاں سب کو انصاف ملے ،روزگار ملے اورپاکستان عظیم سے عظیم ملک بنے۔ انہوںنے کہاکہ ہم تمام وسائل عوام کی ترقی اورملک کی خوشحالی پر صرف کردیںگے-اراکین قومی اسمبلی سعید احمد خان منہیس، تہمینہ دولتانہ ،نذیر آرائیں ، ساجد مہدی، اراکین قومی و صوبائی اسمبلی، صوبائی وزرانعیم اخترخان بھابھہ، آصف سعید منہیس، خواجہ عمران نذیراور لوگوں کی بہت بڑی تعداد پنڈال میں موجود تھی-

Leave a Reply

Your email address will not be published.