karachi

آپریشن کے دعوئے ٹھس، سول اسپتال کے اردگرد تجاوزات کی بھرمار

کراچی جدت ویب ڈیسک ملک کے ممتاز رمزدور ہنما آل پاکستان فائر اینڈ ریسکیوورکرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری سیدذوالفقارشاہ نے کہا ہے کہ سول اسپتال ،بے نظیر بھٹو ٹراما سینٹر ،SIUT،اردویونیورسٹی عبدالحق کیمپس ،ڈائو یونیورسٹی فزیاتھراپی سینٹر ،کراچی کالج برائے خواتین ،بزنس سینٹر کے اردگرد کی فٹ پاتھ پر ایدھی ،چھیپا اور سیلانی ویلفیئر ٹرسٹ ،SIUTاسپتال ،برنس سینٹر،سول اسپتال انتظامیہ ہوٹل مافیا ،اردو یونیورسٹی انتظامیہ نے قبضہ کررکھا ہے جبکہ سول اسپتال انتظامیہ نے غیر قانونی طور پر سیکورٹی کے نام پر سول اسپتال سے فائر بریگیڈ نشتر روڈ آنے والی مین سڑک کو آمدروفت کے لیے بند کررکھا ہے ۔فٹ پاتھوں اور سڑک پر قبضے کے باعث روانہ صبح 8بجے سے لیکر شام6بجے تک اس علاقے میں بدترین ٹریفک جام رہتی ہے جبکہ آگ بجھانے کی گاڑیوں اور صفائی ستھرائی کی گاڑیوں کو آنے جانے میں دشواری پیش آتی ہے اسکے علاوہ مکینوں کا ٹریفک جام رہنے اور فٹ پاتھوں پر قبضے کے باعث گھروں میں آناجانا محال ہوگیا ہے ۔اردویونیورسٹی نے مین روڈ کی فٹ پاتھ پر قبضہ کرکے پارکنگ شیڈ لگا کر سڑک بند کردی ہے اور اسکے بالکل سامنے واقع ہوٹل کی باہر لگی سرگرمیوں کی وجہ سے مزید آدھی سڑک آئے دن بندرہتی ہے ۔جبکہ فٹ پاتھ پر پنکچر والوں اور پتھارے والوں نے بھی قبضہ کررکھا ہے ۔کے ایم سی اور ڈی ایم سی سائوتھ کی انکروجمنٹ انتظامیہ برائے نام فرضی کاروائی کرکے کراچی انتظامیہ اور عدلیہ کی آنکھوں میں دھول جھونک رہی ہے ۔مکینوں کی زندگی عذاب کرنے پر مکین عدالت سے رجوع کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں انہوں نے چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان اور چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ سے ازخود نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.