آم کے آم گٹھلیوں کے دام…چھت لگائیں بجلی مفت پائیں

جدت ریسرچ ڈیسک:جوں جوں انسان ترقی کرتا جارہا ہے ویسے ویسے یہ مزید مصروف ہوتا جارہا ہے اور اگر ہم بغور جائزہ لیں تو انسان کی تمام تر تگ و دو اور مصروفیت کا مقصد اصل میں اس لئے ہے کہ وقت بچایا سکے۔ دیکھیں ناں کمپیوٹر کس لئے ایجادا ہوا کہ بہت سارا کام کم وقت میں ہوسکے اور وقت بچایا جاسکے لیکن آج ہم دیکھتے ہیں کہ انسان اتنا ہی زیادہ مصروف ہے اسی طرح موبائل و دیگر اشیاء کو ہم دیکھیں تو اس کے بھی غلط استعمال کے باعث ایک طرف تو انسان مزید پریشانیوں کا شکار ہوتا جارہا ہے۔ تو دوسری طرف فطری زندگی سے دور ہوتا جارہا ہےاورسائنسدان بھی دن بہ دن نت نئی ایجادات میں مصروف ہیں اور ہم دیکھتے ہیں ہر روز کوئی نہ کوئی چیز ہماری نظروں کے سامنے سے خبر ،آڈیو یا ویڈیو کی شکل میں گزرتی ہےجس میں مختلف ایجادات کا ذکر ہوتا ہے ان میں سے بعض انسانوں کی تفریح طبع سے متعلق ہوتی ہیں جبکہ بعض انسان کی ضروریات سے متعلق ہوتی ہیں …آج ہم بات کریں گےانسانی ضرورت سے متعلق ایجادات کی جس میں آپ سب کو جان کر خوشی ہوگی کہ سائنسدانوں نے شمسی توانائی کے ذریعے بجلی بنانے کے حوالے سے ایک زبردست تجربہ کیا ہے اور ایک ایسی کار آمد ایجاد کی ہے جو ہر گھر کی ضرورت ہے۔ انہوں نے سولر پینلز کو چھوٹے چھوٹے ٹکڑوں میں تقسیم کردیا ہے جسے تعمیر کے وقت گھر کی چھت پر بطور کیپرل لگایا جاسکتا ہے جو نہ صرف دیکھنے میں بہت خوبصورت ہے بلکہ اس کی تنصیب سے آپ کو حاصل ہوتی ہے انتہائی ارزاں نرخ پر بجلی بھی اور وہ بھی لائف ٹائم گارنٹی کے ساتھ۔ اس کی ایک شیٹ عام ٹائلوں کے مقابلے میں تین گنا مضبوط ہے جبکہ انتہائی سستی بھی ہے تقریباً 2ہزار کے لگ بھگ اسکوائر فٹ لاگت کے حساب سے 2000ہزار اسکوائر فٹ کے گھر پر تقریباً 64000ہزار امریکی ڈالر خرچ آتا ہے جو کہ تیس سالوں تک کار آمد رہے گا ۔ اور یہ عام چھت کے مقابلے میں کافی سستا ہے جبکہ سائنسدانوں کا خیال ہے کہ اس کی لاگت میں مزید کمی متوقع ہے۔تو اس طرح یہ کہا جاسکتا ہے کہ آم کے آم گٹھلیوں کے دام کیونکہ چھت لگانے سے بھی کم خرچ پر آپ کی بجلی مفت میں ملے گی

Leave a Reply

Your email address will not be published.