آئل ٹینکرکی ملک گیر ہڑتال، تیل کی سپلائی بندکردی

کراچی جدت ویب ڈیسک اضافی ایکسل بڑھانے اور جرمانوں کے خلاف آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن نے ملک گیر ہڑتال کرتے ہوئے تیل کی سپلائی بند کردی ہے جبکہ ہڑتال سے آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کے دو دھڑوں نے لاتعلقی کااعلان کیا ہے۔چیئرمین پیٹرولیم ڈیلرزایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ پیٹرول پمپوں پر تیل کا ذخیرہ موجود ہے، عوام خوفزدہ نہ ہوں ۔دوسری جانب اوگرا نے آئل مارکیٹنگ کمپنیز کے زیراستعمال آئل ٹینکرز کی چیکنگ کا عمل شروع کردیاہے ۔آل پاکستان آئل ٹینکر ایسوسی ایشن کے چیئر مین میر یوسف شاہوانی نے بتایا کہ آل پاکستان آئل ٹینکر ایسوسی ایشن سندھ اور پنجاب میں کرایوں میں جبری کٹوتی، اوگرا سمیت حکومتی اداروں کے سخت رویہ اور موٹر وے پولیس کی جانب سے ناجائز جرمانے اور چالان کے خلاف ہڑتال کررہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ جب تک ان کے مطالبات منظور نہیں ہوںگے پورے ملک میں تیل کی سپلائی بند رکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ ٹینکر مالکان حکومت کو 3ماہ کا ایڈوانس ٹیکس ادا کرتے ہیں مگر حکومت انہیں ریلیف دینے کے بجائے استحصال کر رہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ موٹر وے پولیس جرمانے عائد کرنے پر لگی ہوئی ہے، پنجاب میں پٹرولنگ پولیس کی جانب سے آئل ٹینکر کوہر اساں کیا جاتا ہے جبکہ سندھ میں ایکسائز پولیس کی بھتہ خوری وغنڈہ گردی عروج پر ہے۔انہوں نے کہا کہ وزارت پٹرولیم نے جب سے آئل ٹینکرز سے متعلق امور اوگرا کے سپر د کئے ہیں تب سے آئل ٹینکر مارکیٹنگ کمپنیوں اوگرا اور آئل ٹینکر اونرز ایسوسی ایشن کی کوئی بھی مشترکہ میٹنگ نہیں بلائی گئی صرف بند کمروں میں احکامات جاری کئے جا رہے ہیں ، جس سے ٹرانسپورٹروں کا استحصال ہو رہا ہے۔میر یوسف شاہوانی نے وزیر اعظم سے اپیل کی کہ ٹرانسپورٹرز کے مطالبات منظور کئے جائیں۔ رہنما کنٹریکٹرزایسوسی ایشن بابراسماعیل نے میڈیا سے بات چیت میں کہاکہ کراچی پورٹ کیماڑی سے ملک بھر کے لیے 600ٹینکرز کی روانگی رک گئی ہے جبکہ کراچی پورٹ قاسم سے بھی تقریبا300 ٹینکرزکی نقل وحمل معطل ہوگئی ہے اور اس وقت محدود تعداد میں پی ایس او کے ٹینکرز سے تیل سپلائی کیا جارہا ہے ۔چیئرمین پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن سمیع خان کا کہنا ہے آئل ٹینکرز ہڑتال کے سبب پیٹرول پمپوں پر وافر مقدار میں تیل ذخیرہ کرلیا ہے۔سمیع خان نے کہاکہ کوشش ہے کہ آئل ٹینکر کی ہڑتال سے عوام کو پریشانی نہ ہوتاہم شہری ضرورت سے زائد پٹرول نہ بھروائیں۔دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ آئل ٹینکرز کی ہڑتال کے اثرات 10 فیصد سے زیادہ نہیں پڑیں گے کیونکہ آئل ٹینکرز مالکان کے 3 گروپس میں سے صرف ایک گروپ نے ہڑتال کی ہے، آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن نے ہڑتال سے لاتعلقی کا اظہار کر دیا ہے اور تیل کی سپلائی جاری رکھنے کا عہد کیا ہے ۔ دوسری جانب سانحہ احمد پور شرقیہ میں 200 سے زائد افراد کی جانیں ضائع ہونے کے بعد اوگرا کو ہوش آگیا اور قوانین پر سختی سے عملدرآمد کرانے کی ٹھان لی ہے۔ذرائع کے مطابق آئل مارکیٹنگ کمپنیز اور کئی آئل ٹینکرز مالکان کو اوگرا کے سخت قوانین ایک آنکھ نہ بھائے اور کئی افراد کی جانیں ضائع ہونے بعد بھی ” ایک تو چوری اوپر سے سینہ زوری ” کے مصداق قوانین پر عمل درآمد کرنے کے بجائے ہڑتال کرکے عوام کو خوار کرنے کا بھرپور بندوبست کرلیا اور ساتھ میں مظلومیت کا راگ بھی الاپنا شروع کر دیاہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.