آئل ٹینکرز کی ہڑتال ،کراچی میں پیٹرول کی قلت ، عوام پریشان

کراچی جدت ویب ڈیسک آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال کے دوسرے روز بھی جاری پیٹرول کی سپلائی معمول کے مطابق نہ ہونے کی وجہ سے کراچی میں پیٹرول کی قلت پیدا ہونا شروع ہوگئی، پیٹرول پمپس پر تیل کی فراہمی بند ۔ تفصیلات کے مطابق اوگرا کی جانب سے روڈ سیفٹی اور ٹینکرز کی فٹنس چیک کرنے کے فیصلے پر ٹینکرز ایسوسی ایشنکی ہڑتال دوسرے روز بھی جاری ہو نے کے باعث کراچی کے مختلف پیٹرول پمپس پر پیٹرول ختم ہونے سے عوام کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ادھر پشاور میں بھی آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال کے باعث کچھ پیٹرول پمپس پر تیل کی فراہمی اور آئل ڈپو بند ہوگیا ہے۔ آل پاکستان آئل ٹینکر ایسوسی ایشن کے چیر مین میر یوسف شاہوانی نے کہاہے کہ کرایوں میں جبری کٹوتی، اوگرا سمیت حکومتی اداروں کے سخت رویئے اور موٹروے پولیس کی جانب سے ناجائز جرمانے اور چالان کے خلاف ہڑتال کررہے ہیں۔میر یوسف شاہوانینے کہا کہ جب تک مطالبات منظور نہیں ہوں گے پورے ملک میں تیل کی سپلائی بند رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ٹینکر مالکان حکومت کو 3ماہ کا ایڈوانس ٹیکس ادا کرتے ہیں مگر حکومت انہیں ریلیف دینے کے بجائے استحصال کررہی ہے۔چیرمین آئل ٹینکر ایسوسی ایشن نے کہا کہ موٹر وے پولیس جرمانے عائدکرنے پر لگی ہوئی ہے، پنجاب میں پٹرولنگ پولیس کی جانب سے آئل ٹینکر کو ہراساں کیا جاتا ہے جب کہ سندھ میں ایکسائز پولیس کی بھتہ خوری وغنڈہ گردی عروج پر ہے ۔انہوں نے کہاکہ وزارت پٹرولیم نے جب سے آئل ٹینکرز سے متعلق امور اوگرا کے سپر د کیے ہیں تب سے آئل ٹینکر مارکیٹنگ کمپنیوں اوگرا اور آئل ٹینکر اونرز ایسوسی ایشن کی کوئی بھی مشترکہ میٹنگ نہیں بلائی گئی، صرف بند کمروں میں احکامات جاری کیے جارہے ہیں جس سے ٹرانسپورٹروں کا استحصال ہو رہا ہے۔ڈی جی آئل کا کہنا ہے کہ ملک میں پٹرول کے 4 جہاز کھڑے ہیں جن میں 11 لاکھ 6 ہزار میٹرک ٹن پٹرول موجود ہیاور ملک میں اس وقت پٹرول کا اسٹاک 21 لاکھ میٹرک ٹن جب کہ ڈیزل کا 4 لاکھ میٹرک ٹن اسٹاک موجود ہے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک میں پٹرول،ڈیزل کی ترسیل میں کوئی رکاوٹ نہیں۔دوسری جانب ترجمان اوگرا کی جانب سے مقف اپنایا گیا ہے کہ روڈ ٹرانسپورٹ سے متعلق اوگرا معیارات پر سمجھوتا نہیں کیا جائے گا، ٹینکرز کا فٹنس سرٹیفکیٹ دیکھا، ٹینکرز کا ایکسل اور ایکسپلوسیو لائنس بھی چیک کیا جائے گا۔ترجمان نے کہا کہ ٹیمیں آئل ٹینکرز کی فٹنس چیک کریں گی، روڈ ٹرانسپورٹ سے متعلق اوگرا معیارات کو چیک کیا جائے گا، ٹائرز کی صحت، ڈرائیور کی فٹنس، لائسنس اور ڈرائیونگ ٹائم چیک ہوگا۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ ٹرانسپورٹ معیارات کو یقینی بنانے کا مقصد انسانی جانوں کو ضیاع سے بچانا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.