امانت میں خیانت نہیں ہونے دینگے‘ وزیراعلیٰ ڈٹ گئے مگر کیوں؟ جانئے

کراچی جدت ویب ڈیسک وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت اسٹیل ملز کا ریکوری پلان کے تحت کبھی بھی اپنی زمین نہیں دے گی ۔اسٹیل ملز کی زمین سندھ کے عوام کی امانت ہے اور اس پر کسی قسم کی سودے بازی نہیں ہونے دیں گے۔ وزیر اعلی سندھ نے چیف سیکرٹری سندھ رضوان میمن کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ وہ وفاقی حکومت کو خط لکھ کر یہ واضح کریں کہ اسٹیل ملز کی زمین سندھ حکومت کی ملکیت ہے، اسٹیل ملز کی 65ارب روپے کی واجبات کی ادائیگی کے لیے ہم یہ زمین کسی قیمت پربھی نہیں دیں گے ۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ اسٹیل ملز ایک قومی اثاثہ ہے اور اس کو چلانے کے لیے کافی اچھے مواقع موجود ہیں، جس کے ذریعے اسٹیل ملز کو منافع بخش ادارہ بنایا جاسکتا ہے، اس کے لیے حکومت کے پاس سیاسی عزم اور واضح بزنس پلان ہونا چاہیے جو لگتا ہے کہ ادارے سے وابستہ لوگوں کے پاس اتنا وژن نہیں ہے۔ وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ وفاقی حکومت کا اسٹیل ملز کو چلانے میں سنجیدگی کا اندازہ یہاں سے لگایا جاسکتا ہے کہ گذشتہ ایک سال سے اسٹیل ملز کا کوئی سی ای او مقرر نہیں ہوسکا، ہر چیز عارضی بنیادوں پر چلائی جارہی ہے اور یہ ریکوری پلان بھی انہی لوگوں نے بنایا ہے جس کو کوئی آفیشل اتھارٹی نہیں ۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ وفاقی حکومت نے 1970 کی دہائی میں یہ زمین وفاق کو اسٹیل ملز کمپلیس لگانے کے لیے دی تھی لیکن اس وقت فیڈرل گورنمنٹ اسٹیل ملز کو چلانے میں مکمل طورپر ناکام ہونے کے بعد اب اپنی نظریں اس قیمتی زمین پر لگائے ہوئے ہے لیکن میں یہ بات واضح کرنا چاہتا ہوں کہ ہم اسٹیل ملز کی زمین نہ تو کسی بینک کو اور نہ ہی کسی کارپوریشن کو دیں گے، یہ سندھ کے عوام کی امانت ہے اور سندھ کے عوام کے مفادات کے لیے استعمال کی جائے گی۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ سندھ حکومت کے پاس اپنے واضح منصوبے ہیں، جس کے تحت ہم یہاں پر صنعتی یونٹس، پاور پلانٹس اور دیگر صنعتیں قائم کریں گے ۔وزیر اعلی سندھ نے چیف سیکریٹری کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ آپ وفاق کو خط لکھ کر سندھ حکومت کی پالیسی بتادیں کہ ہم کسی صورت بھی اسٹیل ملز کی زمین واجبات کی ادائیگی کے لیے کبھی بھی نہیں دیں گے۔ وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ واجبات کی ادائیگی وفاقی حکومت کی ذمہ داری ہے،ہمیں اسٹیل ملز کے ملازمین سے ہمدردی ہے ،جن کو گذشتہ 5مہینوں سے تنخواہیں ادا نہیں کی گئیں،ہم ان کی مدد کے لیے وفاق سے بات کریں گے لیکن جہاں تک اسٹیل ملز کی زمین کا تعلق ہے وہ کسی قیمت پر بھی نہیں دی جائے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.