Agha Talish Actor 20 Anniversary

اداکار آغا طالش کو دنیا سے کوچ کئے 20سال بیت گئے

لاہور جدت ویب ڈیسک : اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوانے والے اداکار آغا طالش کو دنیا سے کوچ کئے 20سال بیت گئے مگر مداح آج بھی ان کی صلاحیتوں کے معترف ہیں۔پاکستان فلم انڈسٹری میں اکیڈمی کا درجہ رکھنے والے اداکار کا اصل نام آغا علی عباس قزلباش تھا اور وہ 10 نومبر 1927ئ کو لدھیانہ میں پیدا ہوئے تھے۔وہ قیام پاکستان سے قبل ہی فن اداکاری سے منسلک تھے اور لاہور منتقل ہونے کے بعد آغا طالش کے نام سے شہرت پائی۔انہوں نے قیام پاکستان سے پہلے بمبئی میں بننے والی فلم ‘‘سرائے سے باہر‘‘سے اپنی فلمی زندگی کا آغاز کیا۔قیام پاکستان کے بعد وہ پہلے ریڈیو پاکستان پشاور سے منسلک ہوئے اور پھر فلمی دنیا سے وابستہ ہوگئے۔پاکستان آنے کے بعد ان کی پہلی فلم ’’نتھ‘‘ تھی جس کے بعد فلم ’’جبرو‘‘ میں ولن کا کردار کیا جو کامیاب رہا لیکن انہیں اصل شہرت فلم ’’سات لاکھ ‘‘سے ملی۔رائٹر اور ہدایت کار ریاض شاہد نے ان کی زندگی میں اہم کردار ادا کیا اور 1962 میں فلم ’’شہید‘‘ نے آغا طلش کو شہرت کی بلندیوں تک پہنچا دیا۔ان کی دیگر فلموں میں باغی، سہیلی، فرنگی، زرقا، وطن، نیند، کنیز، لاکھوں میں ایک، زینت، امرا جان ادا اور آخری مجرا کے نام سرفہرست ہیں۔انہوں نے سات فلموں میں نگار ایوارڈز بھی حاصل کیے تھے۔آغا طالش انیس فروری 1998ئ کو دنیائے فانی سے رخصت ہوئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.