گوگل کی نئی سہولت۔ڈیٹا خود بہ ڈیلیٹ ۔صارفین کیا کریں؟

June 27, 2020 2:35 pm

نیویارک جدت ویب ڈیسک ::: انٹرنیٹ کی سب سے بڑی کمپنی گوگل نے صارفین کا ایک سال پرانا ڈیٹا خود کار طریقے سے ڈیلیٹ کرنے کا نظام متعارف کروادیا۔
ٹیکنالوجی پر نظر رکھنے والی ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق گوگل کے سربراہ سندر پچائی نے گزشتہ روز کمپنی کی جانب سے پرائیویسی سینٹگز میں ہونے والی تبدیلیوں کی تصدیق کی اور بتایا کہ اب صارفین کا ایک سال پرانا ڈیٹا سسٹم سے خود بہ خود ڈیلیٹ ہوجائے گا۔
انہوں نے بتایا کہ اب صارفین کو کمپنی کی جانب سے ریکارڈ کی گئی تمام معلومات کو 3 سے 18 مہینے کے دوران خودکار طریقے سے ڈیلیٹ کرنے کا اختیار دے دیا ہے۔
گوگل نے اس تبدیلی کے ساتھ ہی ڈیفالٹ سیٹنگز کو تبدیل کر کے اسے آٹو ڈیلیٹ کردیا، جس کے بعد صارفین کی معلومات مخصوص وقت کے بعد خود بہ خود ڈیلیٹ ہوجائیں گی۔
سروس کے بعد بھی صارفین کے پاس اپنی مرضی سے معلومات ڈیلیٹ کرنے کا آپشن موجود رہے گا یعنی اگر وہ کچھ ریکارڈ کو محفوظ رکھنا چاہیں تو رکھ سکیں گے۔
لوکیشن ہسٹری
گوگل کے نئے نظام کے تحت لوکیشن ہسٹری 18 مہینے کے بعد خود بخود ختم ہوجائے گی۔
ویب اور ایپ استعمال کا ریکارڈ
گوگل ویب اور ایپ کی ہسٹری بھی 18 ماہ کے بعد خود بہ خود ڈیلیٹ ہوجائے گی، صارفین کو کمپنی پہلے ای میل کر کے آگاہ کرے گی تاکہ وہ اپنا ڈیٹا محفوظ کرلیں۔
یوٹیوب ہسٹری
گوگل کی نئی سروس کے تحت یوٹیوب پر سرچ کیا جانے والا مواد 36 ماہ بعد نظر آنا بند ہوجائے گا۔
گوگل کے سربراہ سندر پچائی نے بتایا کہ صارفین کو یہ اختیار ہوگا کہ وہ اپنی مرضی کے حساب سے ریکارڈ محفوظ رکھ سکیں، صارفین کو سیٹنگز میں جاکر آپشن آن کرنا ہوگا۔

Google will now automatically delete Web & App activity, Location history, and YouTube search history for new users

متعلقہ خبریں