اظہر علی کا بنگلہ دیش کے خلاف میچ میں کامیابی پر خوشی کا اظہار

Azhar Ali Test Player Pakistan Cricket Team
February 10, 2020 5:49 pm

راولپنڈی جدت ویب ڈیسک :پاکستان ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کے کپتان اظہر علی نے بنگلہ دیش کے خلاف میچ میں کامیابی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان کو جیت کی ضرورت تھی ،س سے ہمیں پوائنٹس ملیں گے، ٹیسٹ چمپئن شپ کے لیے ہر میچ جیتنے کی کوشش کریں گے،عامر اور وہاب ریاض کے بعد شاہین شاہ آفریدی اور نسیم شاہ کی صورت میں اچھے باولرز مل گئے ہیں، اگلے میچ میں وکٹ کے حساب سے سلیکشن کریں گے، جو ٹیم کیلئے اچھا ہو گا اسے ضرور کھلایا جائے گا، فواد میں صلاحیت ہے وہ کسی بھی وقت کھیل سکتے ہیں ۔ پیر کو میچ کے اختتام پرپریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کپتان اظہر علی نے کہا کہ حارث بیٹنگ کے ساتھ باولنگ بھی اچھی کرتا ہے اس لیے اسے کھلایا۔ انہوںنے کہاکہ نیوزی لینڈ میں جیتنا اصل مقصد ہے، کوشش ہے ٹیسٹ رینکنگ میں پوزیشن ٹھیک رہے۔ انہوںنے کہاکہ نسیم شاہ اور شاہین اچھے بائولر سامنے آئے ہیں، شاہین نے ٹیسٹ میں اچھی باولنگ کی جس کو بھی موقع ملے وہ کارکردگی دیکھائے، ان فاسٹ باولر کو دیکھ کر نئے باولرز کو حوصلہ ملے گا۔انہوں نے کہا کہ سپنر ماضی میں وکٹ لیتے ہیں تاہم فاسٹ باولر زیادہ فائدہ مند ہوتے ہیں، یاسر شاہ سے لوگوں کی توقعات زیادہ تھیں، وہ ہمارے چمپئن بائولر ہے، یہاں سپنر کیلئے زیادہ ماحول نہیں تھاوہ اپنے آپ کو ہر ماحول میں ایڈجسٹ کرنے کی کوشش کر رہا ہے، ہوم کنڈیشن کا ہر ٹیم کو فائدہ ہوتا ہے، کچھ عرصے سے ہماری بیٹنگ بہتر چل رہی ہے،۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش کا شکریہ وہ یہاں آئے، پہلے سری لنکا آیا ان کا بھی بہت شکریہ ،بنگلہ دیش کی انڈر 19 ٹیم کو مبارک باد پیش کرتا ہوں، تمیم اقبال بہت اچھا کھلاڑی ہے اسے جلدی آئوٹ کرنے کی کوشش تھی جس میں کامیاب رہے، بابر اور شان باالخصوس حارث اور اسد کی بہترین پارٹنر شپ رہی تاہم جیت کا کریڈٹ باولر کو جاتا ہے، نسیم شاہ کو ہیڑک کو انجوائے کیا ،کراوڈ بھی لطف اندوز ہوا، جان بوجھ کر فائن لیگ پر بھیجا تاکہ شائقین اس کو داد دیں اور یہ اپنے ہوم گراؤنڈ میں انجوائے کرے۔ ایک سوال پر انہوںنے کہاکہ فواد عالم کسی بھی وقت اپنے اچھے کھیل کا مظاہرہ کرینگے۔ انہوںنے کہاکہ حارث اپنے جگہ اور فواد عالم اپنی جگہ بہتر کھیلنے والے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے کیے تیاری ضروری ہے۔ ایک سوال پرانہوںنے کہاکہ شاہین نے ون ڈے کے بعد ٹیسٹ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا،انہیں دیکھ کر باقی کھلاڑیوں کو بھی مزید بہتری لانے کا موقع ملے گا۔ ایک سوال پر انہوںنے کہاکہ پاکستان اور دوبئی کی مٹی میں بہت فرق ہے۔ انہوںنے کہاکہ دوبئی میں کھیلنے کیلئے بہت زیادہ حکمت کی ضرورت نہیں ہوتی،پاکستان میں کھیلنے کے لیے منصوبہ بندی کرنی پڑتی ہے۔انہوںنے کہاکہ ہوم گراؤنڈ میں کھلاڑیوں کی کارکردگی کو زیادہ مانیٹر کیا جاتا ہے،بنگلہ دیش کا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ انہوں نے پی سی بی کی دعوت قبول کی،امید ہے کہ بنگلہ دیش دوبارہ بھی پاکستان آئیگا۔ انہوںنے کہاکہ انڈر 19 کی ٹیم کو بہت مبارکباد پیش کرتے ہیں،تمیم اقبال بنگلہ دیش کے اچھے بیٹسمین ہیں ۔ ایک سوال پر انہوںنے کہاکہ جیت کا کریڈٹ سب پلیئرز کو جاتا ہے،پہلی اننگ اچھی تھی دوسری میں تھوڑا مشکل ہوا۔ انہوںنے کہاکہ نسیم کو ہیٹ ٹرک ملی تو بھرپور انجوائے کرنے کا سوچا تھا۔

متعلقہ خبریں