دلشاد پری تیسری بار نمایاں پوزیشن لینے والی خاتون پولیس افسر بن گئیں

February 7, 2019 5:01 pm

چترال جدت ویب ڈیسک :: ملک کے دور دراز اور پسماندہ ضلع چترال سے تعلق رکھنے والی دلشاد پری تیسری بار نمایاں پوزیشن لینے والی خاتون پولیس افسر بن گئیں۔  تفصیلات کے مطابق دلشاد پری کا تعلق چترال کے علاقے بونی کے ایک دور دراز گاؤں پیرانٹگ سے ہے، وہ کے پی پولیس میں اپنی خدمات انجام دے رہی ہیں۔دلشاد پری نے پولیس ٹریننگ کالج ہنگو میں پی اسٹنٹ سب انسپکٹر کورس میں صوبے بھر میں پہلی پوزیشن حاصل کی ہے، اس سے پہلے بھی وہ دو بار نمایاں پوزیشنز حاصل کرچکی ہیں۔  دلشاد پری نے سوات طالبان کے دور میں پولیس میں آنے کا فیصلہ کیا تھا۔ ان کا گاؤں سطح سمندر سے 9500 فٹ بلند ہے اور وہ اپنے گاؤں کی پہلی خاتون ہیں جنہوں نے گاؤں سے باہر جاکر تعلیم حاصل کی ہے۔اس وقت دلشاد پری کے پی پولیس، چترال میں بطور اسٹنٹ سب انسپکٹر (اے ایس آئی) اپنی خدمات انجام دے رہی ہے۔ وہ مالاکنڈ ڈویژن سے پہلی خاتون پولیس افیسر ہیں ، جو کہ بطور اے آئی ایس آئی پولیس میں بھرتی ہوئی تھیں۔ حالیہ کامیابی کے بعد جلد ہی دلشاد کو سب انسپکٹر کے عہدے پر ترقی دے دی جائے گی۔
دلشاد اپنے علاقے میں امن و امان کی بحالی کے لیے کوشاں ہیں اور ساتھ ہی وہ چاہتی ہیں کہ ان کے علاقے سے اور بھی خواتین آگے آئیں اور اپنی پسند کے شعبہ جات میں ترقی کرکے اپنےعلاقے اور ملک و قوم کا نام روشن کریں۔
خاتون پولیس اہلکار نے نہ صرف پولیس کی تربیتیں نمایاں پوزیشنز کے ساتھ مکمل کی ہیں بلکہ انہوں نے ایل ایل بی اور بی- ایڈ کی ڈگریاں بھی حاصل کر رکھی ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ فزیکل ایجوکیشن میں بھی ڈپلومہ حاصل کررکھا ہے۔

 

 

متعلقہ خبریں