پاکستانی فلم ’ڈارلنگ‘ امریکی ریاست ٹیکساس میں ہونے والے فلم فیسٹیول کے ایوارڈ کے لیے نامزد

February 13, 2020 5:54 pm

ویب ڈیسک ::پاکستانی مختصر فلم ’ڈارلنگ‘ امریکی فلمی ایوارڈ کے لیے نامزد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔خواجہ سرا تھیٹر ڈانسر اور ایک نوجوان کی دوستی اور محبت کے گرد گھومتی کہانی پر بنی شارٹ پاکستانی فلم ’ڈارلنگ‘ کو امریکی ریاست ٹیکساس میں ہونے والے فلم فیسٹیول کے ایوارڈ کے لیے نامزد کیا گیا ہے۔
’ڈارلنگ‘ کو امریکی فلم فیسٹیول سے قبل گزشتہ سال 86 سال پرانے وینس فلم فیسٹیول میں بھی پیش کیا گیا تھا اور فلم نے اسی فیسٹیول میں ایوارڈ بھی اپنے نام کیا تھا۔
ڈارلنگ وہ پہلی پاکستانی فلم تھی جسے وینس فلم فیسٹیول میں نہ صرف پیش کیا گیا بلکہ وہ اس میں ایوارڈ بھی اپنے نام کرنے میں کامیاب گئی، اس کے علاوہ اسی فلم کو کینیڈا میں ہونے والے ٹورنٹو انٹرنیشنل فلم فیسٹیول میں بھی پیش کیا گیا تھا۔
وینس اور ٹورنٹو کے علاوہ ڈارلنگ کو کانز اور برلن فلم فیسٹیول میں بھی پیش کیا گیا تھا اور تمام فیسٹیول میں فلم کی کہانی کو بہت سراہا گیا۔
اب ’ڈارلنگ‘ کو آئندہ ماہ امریکی ریاست ٹیکساس میں ہونے والے ’ساؤتھ بائے ساؤتھ ویسٹ‘ (ایس ایکس ایس ڈبلیو‘ فیسٹیول میں نہ صرف پیش کیا جائے گا بلکہ اس فلم کو مذکورہ فلم فیسٹیول میں دیے جانے والے ایک ایوارڈ کے لیے بھی نامزد کیا گیا ہے۔فلم کے ہدایت کار صائم صادق نے اپنی انسٹاگرام پوسٹ میں بتایا کہ ’ڈارلنگ‘ کو آئندہ ماہ مارچ میں ٹیکساس کے شہر آسٹن میں ہونے والے فلم فیسٹیول میں پیش کیا جائے گا۔انہوں نے فلم کی اداکارہ مہربانو کو بھی اپنی پوسٹ میں مینشن کیا اور فلم فیسٹیول انتظامیہ کا شکریہ بھی ادا کیا۔
‘ڈارلنگ‘ کی کہانی لاہور سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان شانی اور ایک مخنث خاتون علینا کی دوستی پر مبنی ہے جو تھیٹر اسٹیج ڈانسر ہوتی ہیں۔
علینا کا کردار علینا خان نے ادا کیا ہے جو کہ لاہور سے تعلق رکھنے والی ایک مخنث خاتون ہیں جب کہ شانی کا کردار عبداللہ ملک نے ادا کیا۔
‘ڈارلنگ’ کی دیگر کاسٹ میں مہر بانو اور نادیہ افغان بھی شامل ہیں جب کہ فلم کی ہدایات کراچی سے تعلق رکھنے والے فلم ساز صائم صادق نے دیں جنہوں نے امریکا سے تعلیم حاصل کر رکھی ہے۔

ڈارلنگ نے وینس فلم فیسٹیول میں ایوارڈ بھی جیتا تھا—اسکرین شاٹ

فلم میں مہربانو نے بھی اہم کردار ادا کیا—اسکرین شاٹ

متعلقہ خبریں