وفاق سے جواب طلب،مسیحی تنظیموں کی شراب پر پابندی کیلئے درخواست

December 28, 2018 11:56 am

اسلام آباد:جدت ویب ڈسیک :: ہائی کورٹ نے مذہب کے نام پر شراب کی فروخت کے خلاف کیس میں وفاق سے جواب طلب کرلیا۔درخواست گزاروں نے عیسائیت کے نام پر شراب بیچنے کے 340 لائسنس ہولڈرز کی فہرست عدالت میں پیش کرتے ہوئے کہا کہ عیسائی مذہب کے نام پر شراب کی فروخت پر پابندی لگائی جائے۔اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے تحریری حکم جاری کرتے ہوئے کہا کہ وزارت قانون، مذہبی امور اور بین المذاہب ہم آہنگی کے سیکریٹریز جواب جمع کرائیں۔ پاکستان یونائٹیڈ کرسچین موومنٹ اور سنٹر فار رول آف لاء نے درخواست دائر کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ عیسائی مذہب میں شراب ممنوع ہے اس لیے اس کی فروخت پر پابندی لگائی جائے۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ آئین غیر مسلم ہونے کی بنا پر شراب کے لائسنس کی اجازت دیتا ہے اور آئین کا آرٹیکل 36 ایچ عیسائی مذہب کی تعلیمات کی نفی ہے، عیسائی مذہب کے مختلف مکاتب فکر کے اسکالرز اس معاملے میں عدالتی معاونت کریں گے۔

متعلقہ خبریں