July 25, 2017

امریکہ اور ایٹمی ہتھیاروں کی دوڑتاریخ کے آئینہ میں 

جدت ویب ڈیسک :6اگست 1945کو ہیروشیما پر ایٹمی بم گرایا گیا جس میں ایک اندازے کے مطابق1لاکھ 35ہزار افراد صفحہ ہستی سے مٹ گئے۔9اگست1945کون بھلا سکتا ہے جب ناگا ساکی پر ایٹمی بم داغا گیا جس میں تقریبا 75ہزار انسان لقمۂ اجل بن گئے۔یہ تو ورلڈ وار IIکا زمانہ تھا لیکن آج ایٹمی ہتھیار اس سے ہزارھا گنازیادہ طاقتور اور خوفناک ہو چکے ہیں جو پلک جھپکتے ہی اتنی تباہی مچاسکتے ہیں جس کا اندازہ لگانا مشکل ہے۔ ہیرو شیما پر گرایا جانے والاایٹمی بم 15کلوٹونز کی تباہی مچا سکتا تھا ایک کلوٹون سے مرادٹی این ٹی کے ایک ہزار ٹن کی طاقت کے برابرہوتا ہے۔ مثلا اگر اسے نیو یارک سٹی کے ٹائم اسکوائر پر گرایا جائے تو متاثرہ علاقہ کم و بیش ایک میل پر محیط ہوگا ، تصویر میں موجو د پیلی لکیر آگ کی لپٹوں کی نشاندھی کررہی ہے،سرخ دائرے میں 100فیصد تباہی کی نشاندہی کی گئی جس میں بلڈنگ اور املاک مکمل ہو پر تباہ ہوجائیںجبکہ گرے دائرے کو اندر موجود کوئی بھی شے استعمال کے لائق نہ رہیںاور یہاں آباد انسان موت سے بچ بھی جائے تو قریب المرگ ضرور ہوگااو ر اورینج سرکل تھرڈ ڈگری ریڈئیشن کی نشاندہی کیلئے ہےجو تباہ کن ہو۔ موجودہ سب سے تباہ کن ایٹمی ہتھیار بھی امریکہ کے پاس ہے B83جو 1200کلوٹون کی تباہی کےلئے تیار کیا گیا ہےجو کہ ہیروشیما میں پھیلائی گئی تباہی سے 80گنا زیادہ خطرناگ ہوگی یعنی 1.3ملین ٹن TNTاور جس سے تقریبا 7میل سے زیادہ کا علاقہ مکمل طور پر تباہ ہوجائیگا۔1954میں کیسٹل براوو آپریشن کو دوران امریکہ نے تاریخ کا سب سے زیادہ تباہی پھیلانے والاایٹمی حملہ کیااور جو 15ہزار کلوٹون کی تباہی پھیلانے کی طاقت کا حامل تھااور جو ہیروشیما میں داغے گئے بم سو 1000گنا زیادہ طاقت ور تھااور جس کی تابکاری سو 21میل تک کا علاقہ متاثر ہو ا، صرف یہیں تک نہیں بلکہ 30اکتوبر 1961کو سوویت یونین نے Tsar Bombaکا تجربہ کیا جو اس وقت دنیا کا سب سے بڑا ایٹمی تجربہ تھا اور جو 50ہزار کلوٹون تباہی کی طاقت رکھتا تھااور جس سے اٹھنے والے دھویں اور شعلے دنیا کی تمام چیزوں سو بلند تھےاور یہ کتنے بلند تھے اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے دنیا کی بلند ترین چوٹی مائونٹ ایورسٹ 29,035فٹ کے مقابلے میں 209,974فٹ تھی۔ اگر اسے نیویارک سٹی پر داغا جائے تواس سے متاثر ہونے والاعلاقہ 31معکب میل ہوگا۔ Tsar Bombaپانچ دہائی پہلے تیار کیا گیا تھا مگر آج ایک انداز ے کے مطابق 14,900کے قریب ایٹمی ہتھیارپوری دنیا میں موجود ہیں۔ اگر 1963میں دنیا میں ایٹمی ہتھیاروں کے تجربات پر جزوی پابندی کے معاہدےپر دستخط نہ ہوئے ہوتے تو آپ درج بالاتباہی کاریاں دیکھ پاتے۔

 

July 25, 2017

آئی فون میں چھوٹے سوراخ کا کیا مطلب ہے ؟جانیے

کراچی جدت ویب ڈیسک : ۔ اگر آپ اپنے آئی فون کے مائیکروفونز کو ٹیسٹ کرنا چاہیں تو وائس میمو کھول کر ریکارڈنگ کا بٹن دبائیں اور پھر پلے کا بٹن دبا کر آپ اس ریکارڈنگ کو سن سکتے ہیں۔
دی مرر کی ایک رپورٹ کے مطابق یہ سوراخ دراصل ایک مائیکروفون ہے اور آئی فون میں اس طرح کے کل تین سوراخ ہوتے ہیں۔ ان میں سے ایک فون کی سامنے کی جانب سپیکر کے پاس ہوتا ہے جبکہ ایک نچلی طرف ہوتا ہے۔ سامنے اور نچلی جانب کے ساتھ پچھلے کیمرے کے پاس بھی مائیکروفون فراہم کرنے کا مقصد یہ ہے کہ آپ ویڈیو ریکارڈ کرتے ہوئے فون کو جس طرح بھی پکڑیں یہ تمام آوازوں کو اچھی طرح ریکارڈ کرسکے۔اگر آپ آئی فون کے مالک ہیں تو اس کے پچھلے کیمرے کے قریب موجود باریک سوراخ کو دیکھ کر کبھی نہ کبھی ضرور حیران ہوئے ہوں گے کہ آخر اس کا مقصد کیا ہے۔ یہ سوراخ پہلی بار آئی فون 5 میں سامنے آیا اور اس کے بعد سے ہر ماڈل میں موجود ہے۔ا گرچہ اکثر آئی فون صارفین کو اس کا مقصد معلوم نہیں لیکن دراصل یہ ایک اہم کام کیلئے بنایا گیا ہے، خصوصاً جب آپ صاف اور واضح آواز کے ساتھ ویڈیو ریکارڈنگ کرنا چاہیںاس سوراخ کی حقیقت کا انکشاف پہلی بار ایپل کے مارکیٹنگ چیف فل شلر نے ایک تقریب کے دوران کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ آپ فیس ٹائم کال کررہے ہوں یا ویڈیو ریکارڈ کررہے ہوں، آئی فون میں موجود تین مائیکروفون بہترین آڈیو ریکارڈنگ میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔ یہ صرف آڈیو ریکارڈ ہی نہیں کرتے بلکہ نائز کینسلیشن کا فیچر استعمال کرتے ہوئے شور سے پاک آڈیو ریکارڈنگ کرتے ہیں اور ساؤنڈ بیم بنانے کیلئے بھی استعمال ہوتے ہیں جو وائس ریکگنیشن جیسی ایپس میں استعمال ہوتی ہے

July 24, 2017

چین نے اسکائی ٹرین کا کامیاب تجربہ کرلیا ،دُنیا حیران

جدت ویب ڈیسک :: فضاء میں لٹکی اور پٹریوں پر چلنے والی اسکائی ٹرین کا کامیاب تجربہ کردیا گیا۔چینی ماہرین کا کہنا ہے کہ جدید اسکائی ٹرین انڈر گراؤنڈ ٹرین سروس کے مقابلے میں تین گنا بہتر سفر فراہم کرتی ہے، اسکائی ٹرین میں سفر کرنے والے مسافر پہاڑوں کے دلفریب مناظر سے لطف اندوز ہوسکیں گے۔ماہرین کا مزید کہنا ہے کہ ٹرین کا ڈیزائن اور ماحول عوامی خواہشات کے عین مطابق تیار کیا گیا ہے، یہ ٹرین ماحول دوست ہے جس میں سفر کرنے کی خواہش ہر شہری کی ہوگی۔تفصیلات کے مطابق چین کی بڑھتی ہوئی آبادی کو دیکھتے ہوئے ماہرین عوام کی نقل و حرکت کو آسان اور مؤثر بنانے کے لیے مختلف تجربات کرتے نظر آرہے ہیں، یک بعد دیگرے جدید ٹرینوں کی ایجاد کے بعد چین میں اب ’’اسکائی ٹرین‘‘ کا کامیاب تجربہ کردیا گیا۔ٹرین میں 510 افراد کے بیٹھنے کی گنجائش موجود ہے، تجربے کو کامیاب بنانے کے لیے ابھی سفر کے لیے ٹکٹ کی رقم مختص نہیں کی گئی بلکہ عوام اس میں بالکل مفت سفر کررہے ہیں۔ہوا میں لٹکی ہوئی پٹریوں پر سفر کرنے والی اسکائی ٹرین 70 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے دوڑنے کی صلاحیت رکھتی ہے، آرام دہ سفر اور دلکش نظارے دکھانے والی اسکائی ٹرین کی سروس اب چین کے مشرقی شہر شین ڈونگ میں بھی شروع کی گئی ہے۔

 

July 24, 2017

پاکستانی طالب علم کا کارنامہ الیکٹرک بائیک بنا کر پوری دنیا کو حیران کردیا ، ملک وقوم کا نام روشن ،جانیے

جدت ویب ڈیسک :پاکستان میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں صرف مدد کی ضرورت ہے پاکستانی طالب علم نے اپنی مدد آپ کے تحت الیکٹرک بائیک بنا کر پوری دنیا میں ملک وقوم کا نام روشن کردیا، یہ الیکٹرک بائیک 60کلومیٹر فی گھنٹہ تک دوڑ سکتی ہے اور پوری بیٹری چارج ہونے میں تقریباً تین گھنٹے کا وقت صرف ہوتاہے ۔ ایک سوال کے جواب میں عبدالباسط نے بتایاکہ الیکٹرک بائیک کیساتھ موجود بیٹری کی وارنٹی ایک سال ہے ، اس سے پہلے خرابی ہوئی تو ہم تبدیل کردیں گے، بائیک کی قیمت 40ہزار روپے ہے ۔ رات کی تاریکی میں چلانے کے لیے فرنٹ اور بیک لائیٹ کے علاوہ موبائل چارجنگ کی سہولت بھی موجود ہے پاکستان کی پہلی الیکٹرک بائیک ہے جس کی لگی ہرچیز میڈان پاکستان ہے ،یہ الیکٹرک بائیک پٹرول کے بغیر بیٹری پر چلتی ہے اور ایک دفعہ کی بیٹری چارجنگ کا خرچ 10روپے آتاہے ، بی ایم ڈبلیو کی طرح اس کی ایک مرتبہ سپیڈ فکس کرنے کے بعد آپ پیڈل سے پاؤں ہٹالیں تو وہ برقراررہے گی ، اس میں یہ بھی خصوصیت ہے کہ اگر آپ کو زیادہ سفر کرنا ہے اور بیٹریاں ختم ہورہی ہیں تو اسے فکس کرکے اپنی منزل پر پہنچ سکتے ہیں ، ویسے بھی یہ ایک عام ساکٹ کیساتھ کھڑی کرکے چارج کی جاسکتی ہے ۔

 

July 24, 2017

نیا سوفٹ ویئر متعارف،سرچ انجن گوگل کی رفتار آپ کی سوچ سے بھی زیادہ ہونے والی ہے ، جانیے

سان فرانسسکو جدت ویب ڈیسک : سرچ انجن گوگل انٹرنیٹ کی رفتار کی بات ہو تو بعض اوقات کچھ انتہائی غیر معروف اور بظاہر معمولی چیزیں اس پر بہت منفی انداز میں اثر انداز ہوسکتی ہیں۔
گوگل نے مارچ میں اپنے نئے ’کنجینسچن کنٹرول ایلگوردم‘ سافٹ ویئر کا آزمائشی استعمال کیا تو اس نے یوٹیوب پر ڈیٹا کی منتقلی میں چار سے 14 فیصد کا اضافہ کر دیا۔ گوگل کے اس نئے سافٹ ویئر کا نام ’بی بی آر‘ ہے اور دنیا بھر میں انٹرنیٹ کی سپیڈ بڑھانے کے حوالے سے اس سے بھاری توقعات کی جا رہی ہیں۔ گوگل اس سے پہلے Quicپروٹوکول بھی متعارف کرواچکا ہے۔ اس کا مقصد بھی عالمی سطح پر انٹرنیٹ ڈیٹا کے بہاؤ میں تیزی لانا تھا۔ اسی طرح گوگل کروم براؤزر کا بنیادی مقصد بھی ویب سائٹوں اور ویب ایپس کو تیزی کے ساتھ لوڈ کرنا ہے تاکہ انٹرنیٹ کی رفتار میں ہر ممکن اضافہ کیا جاسکےمثال کے طور پر ’کنجیسچن کنٹرول ایلگورد م‘ کو ہی دیکھ لیجئے۔ یہ سافٹ ویئر پروگرام 1980ءکی دہائی میں بنایا گیا تھا۔ جب یہ سافٹ ویئر کسی نیٹ ورک پر زیادہ دباؤ دیکھتا ہے تو اس کی جانب ڈیٹا کی منتقلی کو آہستہ کردیتا ہے۔ یہ سافٹ ویئر دنیا بھر میں بڑے پیمانے پر استعمال ہوتا ہے لیکن انٹرنیٹ صارفین کے لئے اچھی خبر ہے کہ گوگل نے اس کی سست رفتاری سے تنگ آکر ایک نیا سافٹ ویئر بنالیا ہے جو جلد ہی ساری دنیا کا انٹرنیٹ تیز کرنے والا ہے۔

July 20, 2017

تیسلا کی نئی الیکٹرک کار شہریوں کی توجہ کا مرکز بن گئی

دبئی جدت ویب ڈیسک تیسلا کی نیو الیکٹرک کار شہریوں کی توجہ کا مرکز بن گئی ۔ بڑی تعداد میں لوگوں نے کار کے فیچرز میں خصوصی دلچسپی کا اظہار کیا۔ پیٹرول کی بچت، خوبصورتی، آٹو فنکشن ، کلر، ونڈ اسکرین و دیگر خصوصیات کے باعث کار کی خریداری بڑھ گئی۔ تیسلا فرسٹ ریٹیل اسٹور اور سروس سینٹر یو اے ای لانچنگ میں صنعتکاروں، تاجروں اور شہریوں کی کثیر تعداد میں شرکت۔ بزنس مین عدنان اقبال ، محمد احمد بنی ہاشم، ایڈوائزر اکنامک ڈیولمپنٹ میں صنعتکار سلیمان علی، نور حلابی نے کاروں کی مارکیٹ میں الیکٹرک کار کے متعارف ہونے پر ایک اچھی کاوش قرار دیا ہے ۔ سی ای او ایلن مسک نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ الیکٹرک کار میں ماڈل (S) (X) اور ماڈل تھری سیفٹی اور سیلف ڈرائیونگ کے لحاظ سے بہترین ہے۔ تیسلا نے آٹومیٹک فیچرز متعارف کرائے ہیں۔ انویسٹرز کار میں خصوصی دلچسپی کا اظہار کر رہے ہیں دنیا بھر کے صار فین آن لائن بھی کار بک کرواسکتے ہیں تمام وہیکلز کی پراڈکشن یو اے ای میں ہورہی ہے۔ فری نیچرل ریسورسز اینڈ ونڈ اور پیٹرول کی بھی بچت ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تیسلا ماڈل نے زیرو ٹو 100KPH صرف 2.7 سیکنڈ اور ماڈل (X) زیرو ٹو 100KPH 3.1 سیکنڈ ہے۔ برانڈ ایوارڈ وننگ آل الیکٹرک کار ماڈلز ہیں۔