December 2, 2017

سائبر کرائم نے واٹس ایپ کرنے والی خاتون کو ہوش اُڑانے والاجرمانہ کردیا، جانیے

جدت ویب ڈیسک :عرب میڈیا رپورٹس کے مطابق کویتی خاتون کو اپنے دوست کو واٹس ایپ پر بےعزتی کرنا مہنگا پڑگیاکویت میں واٹس ایپ پر تضحیک آمیز پیغام بھیجنے والی خاتون پر 3 ہزار دینار یعنی (10لاکھ پاکستانی روپے  جرمانہ عائد کردیا گیا۔، خاتون نے دوست کو پیغام بھیجا جس میں لکھا کہ ’تم میں شرم نام کی کوئی چیز نہیں، تمہیں شرم آنی چاہیے ،لگتا ہے کہ والدین نے تمہاری تربیت ٹھیک سے نہیں کی‘۔ جب یہ پیغام دوست نے پڑھا تو اس نے ملکی سائبر کرائم بیورو کو اس کی رپورٹ کردی۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ سعودی جج نے 2 خواتین کو واٹس ایپ پر ایک دوسرے کی توہین کرنے پر 10،10 کوڑے مارنے کی سزا سنائی تھی سائبر کرائم بیورو نے شکایت پر کارروائی کرتے ہوئے تضحیک کرنے پر خاتون کو جرمانے کا نوٹس بھیج دیا، جرمانے کی اتنی بڑی رقم دیکھ کر خاتون چونک گئی اور اس کے ہوش اڑ گئے۔کویت سمیت خلیجی ریاستوں میں سوشل میڈیا پر کسی کی بے عزتی کرنے اور توہین آمیز مواد شیئر کرنے کو سنجیدہ نوعیت کے جرائم سمجھ کر سخت سزاؤں کے ساتھ ساتھ بھاری جرمانے عائد کیے جاتے ہیں۔

 

November 30, 2017

پشاورمیں طابعلم کا زلزلہ پروف عمارت کا کامیاب تجربہ

جدت ویب ڈیسک : انجینئرنگ یونیورسٹی آف پشاورکے پی ایچ ڈی کے طالب علم عظمت نے زلزلہ پروف عمارت کا کامیاب تجربہ کرلیا، زلزلہ پروف عمارت 7 اعشاریہ 6 سے زائد شدت کا زلزلہ برداشت کر سکتی ہے۔ ٹیبل پربنائی گئی دو منزلہ عمارت کو مختلف زاویوں سے 7 اعشاریہ 6 میگنیٹیوڈ تک زلزلہ کے جھٹکے دیئے گئے، جس کے دوران عمارت کی اینٹیں تو گر گئیں مگر عمارت کی چھت اور بنیادیں ٹس سے مس نہیں ہوئیں، عمارت میں 15 سے زائد کیمرے اورسینسر بھی لگائے گئے ہیں۔طلباء کی تخلیقی اورتحقیقاتی صلاحیتوں کو عملی جامہ پہنانے کے لئے سمٹ میں ملک بھر کی 20 جامعات اور تعلیمی اداروں کے طلبا اور طالبات نے 60 پراجیکٹس اور ماڈلز پیش کئے۔ ایونٹ کا مقصد طلباء کے عملی کام کو انڈسٹری اور ریسرچ کرنےوالے اداروں کے سامنے پیش کرنے کے لئے پلیٹ فارم مہیا کرنا ہےپی ایچ ڈی کے طالب علم عظمت کا کہنا ہے اگر پاکستان کے بلڈنگ کوڈ کے مطابق عمارات تعمیر کی جائیں تو زلزلہ سمیت دیگر قدرتی آفات سے محفوظ رہ سکتی ہیں۔

November 28, 2017

F5 )OPPO)کے وہ فیچر جس سے لوگ اس کی طرف کیچے چلے آئے‘جانئے

جدت ویب ڈیسک اس مہینے کی ابتدائ میں اسمارٹ فون مارکیٹ کے بڑے نام ’اوپو‘ (OPPO) نے دھماکہ خیز انداز سے اپنا نیا ’’اوپو F5‘‘ ایک نئے اور منفرد نعرے کے ساتھ متعارف کروایا: ’’سیلفی ایکسپرٹ اور لیڈر۔‘‘ اس پُر رونق اور جھلملاتی تقریب کی کہکشاں انگنت مشہور ہستیوں، معروف سماجی شخصیات اور کاروباری و تجارتی دنیا کی قد آور شخصیات سے سجی تھی۔ ’اوپو‘ (OPPO) کا نیا سلوگن ادارے کے اس مشن کا غماز ہے۔اسمارٹ فون انڈسٹری میں غیرمعمولی مقابلے کے ماحول میں کسی بھی صارف کے لیے بہت مشکل ہوتا ہے کہ وہ بلند پایہ فیچرز کے حامل اور انتہائی قابلِ بھروسہ اسمارٹ فون کا انتخاب کرسکے ۔ جس کا مقصد نوجوان صارفین کو بہترین سیلفی ایکسپیریئنس فراہم کرنا اور اس زمرے میں لیڈر کے طور پر اپنا مقام برقرار رکھنا ہے ۔ذیل میں وہ پانچ ٹھوس باتیں دی جارہی ہیں جو OPPO F5 کو یقینی طور پر آپ کا اگلا اسمارٹ فون بناتی ہیں۔

November 27, 2017

ایسے پودے تیار ہوگئے جو دشمنوں کی جاسوسی اور ماحولیاتی خطرات سے آگاہی دے سکیں گے ،جا نیے

جدت ویب ڈیسک : ٹیکنالوجی کی دُنیا میں تیز ترین ترقی ،امریکا میں ’’ڈیفنس ایڈوانسڈ ریسرچ پروجیکٹس ایجنسی‘‘ (ڈارپا) کے ماہرین اس سے قبل حیرت انگیز دفاعی ٹیکنالوجی پرکام کرتے رہے ہیں اور اب جاسوس پودے ان کا نیا ہدف ہیں جو ماحول اور فضا میں جراثیم، تابکاری، کیمیائی و جراثیمی ہتھیاروں کے علاوہ دشمن کی سن گن بھی لے سکیں گے۔یہ پودے عوام کو اطراف میں موجود خطرناک بارودی سرنگوں سے بھی آگاہ کرسکیں گےان پودوں کو فوجی مقاصد کےلیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ مثلاً یہ کسی بارودی سرنگ کی نشاندہی کرسکتے ہیں جو پھٹنے سے رہ گئی ہو۔ ڈارپا نے اسے ’’ایڈوانسڈ پلانٹ ٹیکنالوجی‘‘ (اے پی ٹی) کا نام دیا ہے جس کے تحت پودوں میں قدرتی طور پر ایسی صلاحیت پیدا کی جائے گی تاکہ وہ آلودگی سے لے کر روشنی کی شدت کو بھی نوٹ کرسکیں گے اور یہ کام جینیاتی انجینئرنگ کے ذریعے انجام دیا جائے گا۔ پہلے گرین ہاؤس اور تجربہ گاہوں میں کام ہوگا اور اس کے بعد تجرباتی بنیادوں پر حقیقی کھیتوں اور قدرتی ماحول میں ان کی آزمائش کی جائے گی جس کی نگرانی امریکی محکمہ زراعت کرے گا۔اس سے روایتی سینسر کی جگہ قدرتی انداز میں کام کرنے والے سینسر بنائے جاسکیں گے اور فوجیوں کی جانیں اور دیگر وسائل بچانے میں مدد مل سکے گی۔ جینیاتی طور پر تبدیل شدہ پودے کئی مواقع پر اپنا ردِ عمل دے سکیں گے اور ان سے خود پودوں پر کوئی منفی اثر نہیں پڑے گا۔ اس ضمن میں 12 دسمبر 2017 سے ڈارپا تجاویز اور پروجیکٹس کی تفصیلات وصول کرے گی۔اس کے بعد ان جاسوس پودوں کی نگرانی سیٹلائٹ کے ذریعے کی جائے گی جو آج اتنے جدید ہوچکے ہیں کہ وہ پودوں کے درجہ حرارت تک پر بھی نظر رکھ سکتے ہیں۔ کامیابی کی صورت کے بعد یہ خاموش جاسوس اپنا کام کرسکیں گے۔ عام زندگی میں سورج مکھی کا پودا سورج کی جانب رخ کرتا ہے اور چھوئی موئی کا پودا ہلکے احساس کے ساتھ ہی بند ہوجاتا ہے۔ عین اسی کیفیت کو دیگر اشیا کی تصدیق کےلیے بھی استعمال کیا جاسکے گا اور یہی ڈارپا کا مقصد ہے۔