February 16, 2019

امریکی خلائی ایجنسی ناسا کے انٹرن شپ پروگرام کے لیے 12 سالہ پاکستانی طالبہ رادیہ عامر کو منتخب کرلیا گیا

جدت ویب ڈیسک ::امریکی خلائی ایجنسی ناسا کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق کراچی کے برٹش اوور سیز اسکول کی آٹھویں کلاس کی طالبہ رادیہ عامر کو ناسا کے انٹرن شپ پروگرام کے لیے منتخب کیا گیا ہے۔، رادیہ کا تعلق کراچی سے ہے۔
اس ایک ہفتے کے دوران رادیہ کو خلا بازوں کی ٹریننگ دکھائی جائے گی۔ رادیہ سمیت دیگر طلبا کو ورچوئل رئیلٹی کے ذریعے مریخ پر حرکت کرنے، چاند پر اترنے اور چہل قدمی کرنے کا تجربہ کروایا جائے گا۔
اس دوران انہیں صفر کشش ثقل پر حرکت کرنے کے تجربے سے روشناس بھی کروایا جائے گا جو ناسا سمیت دیگر خلائی اداروں میں مصنوعی طور پر تخلیق کی گئی ہے۔ اپنے انتخاب پر رادیہ نہایت خوش ہیں۔ وہ کہتی ہیں کہ وہ ہمیشہ سے خلا باز بننا چاہتی تھیں اور انہیں امید ہے کہ ان کا یہ خواب پورا ہوگا۔
رادیہ کہتی ہیں کہ وہ ناسا میں جا کر پاکستان کا جھنڈا لہرانا چاہتی ہیں۔ انہیں امید ہے کہ ناسا میں انٹرن شپ کا یہ تجربہ ان کے لیے اپنے خواب کی تکمیل میں معاون ثابت ہوگا۔ناسا کی یہ انٹرن شپ ایک ہفتے پر مبنی ہے جو ناسا کے کینیڈی اسپیس سینٹر میں دی جائے گی۔

 

February 14, 2019

خواتین کی نقل و حرکت پر نظر رکھنے کے لیے موبائل ایپ لانچ کردی گئی

ریاض: جدت ویب ڈیسک ::عرب میڈیا کے مطابق سعودی عرب میں ’ابشر‘ نامی ایک ایسی ایپ متعارف کرائی گئی ہے جس کے ذریعے سعودی مرد اپنی خواتین کی نقل و حرکت پر نظر رکھ سکیں گے، جب بھی خواتین بغیر اطلاع سفر کے لیے ملک سے باہر جانے لگیں گی تو ان کے والدین یا شوہر کو علم ہوجائے گا۔
موبائل ایپ ابشر کے باعث اگر کوئی خاتون بیرون ملک جانے کے لیے اپنا پاسپورٹ ایرئپورٹ پر پیش کرے گی تو مذکورہ خاتون کے شوہر کا اہل خانہ کو ایک میسج موصول ہوجائے گا کہ خاتون ملک سے باہر جانا چاہتی ہیں کیا انہیں جانے دیا جائے۔گوگل پلے اور ایپل کے ایپ اسٹور پر یہ ایپ موجود ہے، ابشر نامی ایپ سرکاری طور پر متعارف کرائی گئی ہے۔یہ ایپ ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے، جب ایک سعودی خاتون کی جانب سے تھائی لینڈ میں سیاہ پناہ کی درخواست کرتی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی تھی۔ سیاہ پناہ کی درخواست کرتی خاتون کا کہنا تھا کہ وہ واپس جانا چاہتی ہیں بعدازاں متعلقہ خاتون کو کینیڈا کی شہریت دے دی گئی تھی۔واضح رہے کہ سعودی عرب کے قانون کے تحت اگر خاتون کا ولی چاہے تو اس کے اندرون یا بیرون ملک سفر پر پابندی عائد کرسکتا ہے۔
سعودی عرب کے قومی اطلاعاتی مرکز کی جانب سے تیار کردہ ایپ مفت میں دستیاب ہیں تاہم اس کے ڈاؤن لوڈ ہونے کے تعداد نہیں بتائی جارہی ہے
دوسری جانب سعودی عرب میں اس متنازعہ ایپ پر شدید تنقید کی جارہی ہے، بعض حلقوں نے دونوں بڑے اداروں سے ایپ ہٹانے کا مطالبہ بھی کیا ہے جس کی بدولت سعودی مرد خواتین کی جاسوسی کرسکتے ہیں۔

Related image

February 12, 2019

ایپلی کیشن پاکستان سٹیزن پورٹل نے ورلڈ گورنمنٹ سمٹ میں دوسری پوزیشن حاصل کرلی

اسلام آبادجدت ویب ڈیسک ::: حکومت کی جانب سے لانچ کی جانے والی ایپلی کیشن پاکستان سٹیزن پورٹل نے ورلڈ گورنمنٹ سمٹ میں دوسری پوزیشن حاصل کرلی۔
تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے عوامی شکایات کے ازالے کے لیے بنائی جانے والی ایپلی کیشن پاکستان سٹیزن پورٹل نے عالمی اعزاز حاصل کرلیا، ورلڈ گورنمنٹ سمٹ میں پاکستان سٹیزن پورٹل کو دوسری پوزیشن دی گئی ہے۔واضح رہے کہ تحریک انصاف کی حکومت کی جانب سے عوامی شکایات کے ازالے کے لیے چند ماہ قبل پاکستان سٹیزن پورٹل کے نام سے ایپ بنائی گئی تھی جو عوام میں بے حد مقبول ہوگئی، عوامی اپنی شکایات اس ایپ پر درج کراتے ہیں اور حکومت کی جانب سے عوام کی شکایات کا ازالہ کیا جاتا ہے۔
رپورٹ کے مطابق 87 ممالک سے 44 ہزار 646 ایپلی کیشن مقابلے کے لیے بھیجے گئے، فائنل مقابلے کے لیے 21 ایپلی کیششن کو 7 مختلف کیٹے گریز میں منتخب کیا گیا۔ ہر کیٹے گری میں تین تین ایپلی کیشنز کے مابین مقابلہ ہوا، ایپ کا انتخاب سرکاری امور و عوامی فلاح و بہبود کے ایپ میں ہوا، پاکستان سٹیزن پورٹل آئی ٹی شعبے میں دنیا بھر کے لیے نیا موضوع بنا ہے۔
پاکستان سٹیزن پورٹل گوگل پلے اسٹور پر دنیا کی 7 بہترین ایپ کیٹے گری میں شامل ہے، پورٹل پراڈکٹیویٹی میں ساتویں نمبر پر ریکارڈ کی جارہی ہے، عوام کی طرف سے ایپلی کیشن کو 28 ہزار اسٹارز ملے ہیں۔
رپورٹ کے مطابق اب تک لاکھوں کی تعداد میں افراد نے پاکستان سٹیزن پورٹل کی ایپ میں رجسٹریشن کی جبکہ اس میں بتدریج اضافہ ہورہا ہے، گزشتہ سال عالمی مقابلے کا فاتح بھارت تھا۔

February 6, 2019

واٹس ایپ کا فیس اور ٹچ آئی ڈی سے لاک، ان لاک، سیکیورٹی فیچرزمتعارف

کیلیفورنیا:جدت ویب ڈیسک :: اگرچہ یہ فیچر ابھی آئی فون کے سافٹ ویئر آئی او ایس کے لیے دستیاب ہے لیکن واٹس ایپ نے اشارہ دیا ہے کہ جلد ہی اینڈروئڈ کے لیے بھی یہ سہولت دستیاب ہوگی ۔۔۔اب فون کے بایومیٹرک سیکیورٹی فیچرز کو چہرے (فیس) اور ٹچ آپشن کے ذریعے کھولا اور بند کیا جاسکتا ہے۔ فی الحال یہ آپشن آئی فون کے ایسے ماڈلوں کے لیے دستیاب ہے جو آئی او ایس استعمال کرتے ہیں۔نائن ٹو فائیو نامی ویب سائٹ نے سب سے پہلے اس کی خبر دی ہے جو واٹس ایپ کے ورژن 2.19.20 میں موجود ہے۔ اکاؤنٹ سینٹنگز میں جاکر پرائیویسی مینو میں تبدیلی کرکے اسے استعمال کیا جاسکتا ہے۔ اس طرح کھلے ہوئے فون کے باوجود بھی لوگ آپ کے ویٹس ایپ کو کھولنے سے قاصر رہیں گے۔
تاہم نوٹفیکیشنز سیٹنگ میں آپ کو محتاط رہنا ہوگا کیونکہ اسے تبدیل کئے بغیر بھی واٹس ایپ لاک ہونے کے باوجود کوئی بھی میسج پڑھ سکتا ہے اور اس کا جواب بھی دے سکتا ہے۔ اسی طرح ایپ کو ان لاک کیے بغیر کال وصول بھی کی جاسکتی ہے۔

Image result for whatsapp face unlock feature

February 5, 2019

گوگل نے اینڈروئڈ فون کا ایک نیا فیچر متعارف کرادیا ، سماعت سے محروم افرادمستفید ہونگے

واشنگٹن: جدت ویب ڈیسک ::گوگل نے اینڈروئڈ فون کا ایک نیا فیچر متعارف کرادیا ، سماعت سے محروم افرادمستفید ہونگے۔۔۔۔۔ گوگل نے اینڈروئڈ فون کا ایک نیا فیچر متعارف کرایا ہے جس کی بدولت سماعت سے محروم افراد یا سننے میں مشکل محسوس کرنے والے افراد فائدہ اٹھاسکتے ہیں۔
ان ٹولز کا نام لائیو ٹرانسکرائب اور ساؤنڈ ایمپلی فائر ہے جن کی بدولت ثقلِ سماعت یا سماعت سے مکمل محروم افراد مدد لے سکتے ہیں۔ ٹرانسکرائپ کوئی لمحہ ضائع کئے بغیر تمام گفتگو کو سن کر اس کا ٹیکسٹ اسکرین پر دکھاتی رہتی ہے جسے پڑھ کر سمجھا جاسکتا ہے کہ آخر کیا بات ہورہی ہے۔ساؤنڈ ایمپلی فائر کا کام تھوڑا مختلف ہے جو ایسے لوگوں کے لیے بنائی گئی ہے جو کم سنتے ہیں۔ اس ایپ کے ذریعے ہیڈ فون میں آواز کو بڑھا کر سنا جاسکتا ہے ۔ دوسرے لفظوں میں یہ آواز بڑھانے والے آلے کی طرح کام کرتی ہے یعنی ایک ’ہیئرنگ ایڈ‘ کا کام کرتی ہے۔
لائیو ٹرانسکرائپ ایپ کو استعمال میں بہت آسان بنایا گیا ہے۔ جیسے ہی آپ اسے لانچ کرتے ہیں یہ گفتگو سن کر بڑے الفاظ میں ظاہر کرتی ہے اور فل اسٹاپ تک کا اچھا خیال رکھتی ہے۔ تاہم اسے استعمال کرنے کے انٹرنیٹ، ڈیٹا یا وائی فائی درکار ہوگا۔ فون آن رکھنے کی صورت میں جب بھی اس تک آواز آتی ہے یہ وائبریٹ کرکے صارف کو خبردار کرتی ہے کہ کوئی بات کررہا ہے اور اسے سنا جائے۔ اگرچہ ان دونوں ایپس کو اس سال مئی میں لانچ کیا جانا تھا مگر اب یہ پلے اسٹور پر دستیاب ہے اوراس سال پکسل تھری فون میں انہیں انسٹال کیا جائے گا تاکہ لوگ انہیں استعمال کرسکیں۔ دوسری جانب لائیو ٹرانسکرائب کا بی ٹا ورژن لانچ کیا جارہا ہے۔ ٹرانسکرائبک ذریعے آپ دنیا کی 70 زبانوں کی گفتگو کا متن پڑھ سکتے ہیں۔

Image result for Android 767K subscribers Android Accessibility

Image result for Android 767K subscribers Android Accessibility

February 1, 2019

فیس بک کے صارفین نے سوشل نیٹ ورک چھوڑنے کے بعدکیسا محسوس کیا؟ تحقیق

جدت ویب ڈیسک ::نیویارک یونیورسٹی اور اسٹینفورڈ سے ایک مطالعہ (پی ڈی ایف) سے پتہ چلتا ہے کہ فیس بک کے صارفین کو خوشی، زندگی سے زیادہ مطمئن اور خطرناک، اداس یا اکیلے محسوس کرنے کا امکان کم ہے. انہوں نے دیگر سماجی نیٹ ورکوں کو بھی کم استعمال کیا، اور جب وہ واپس آ گئے تو فیس بک کم استعمال کیا.تحقیق کے مطابق ایک ماہ کیلئے فیس بک کا استعمال ترک کر دینے سےصارفین خوشی محسوس کرتے ہیں
جنہوں نے فیس بک سے دور ہونے والے افراد کو اپنی جگہ پر کرنے کے لئے کچھ چیزیں ملیں، جن میں دوستوں اور خاندان سے ملنے یا ٹی وی دیکھئے شامل ہیں. انہوں نے زیادہ سے زیادہ وقت خرچ ہونے والے خبروں کو خرچ نہیں کیا.اس سے یہ مطلب نہیں ہے کہ آپ کو اپنے اکاؤنٹ کو ختم کرنے کے لۓ جلدی کرنا چاہئے – جیسا کہ TechCrunch نے دیکھا ہے، کچھ عوامل پر غور کرنا ہے. یہ خود کو اطلاع دی گئی اعداد و شمار ہے، لہذا اس موقع کا یہ موقع ہے کہ یہ مضامین کی مکمل جذباتی زمین کی تزئین کی نمائندگی نہ کریں. یہ واضح نہیں ہے کہ اگر وقفے وقفے تک ہو تو کیا ہوگا، اس معاملے کے لئے. اس کے علاوہ، محققین نے یہ مطالعہ 2016 امریکی صدارتی انتخابات سے قبل منعقد کیا، جب سیاسی تنازع بلند ہوتے ہیں. شاید فیس بک چھوڑنے کے لئے یہ زیادہ مزہ ہوسکتا ہے کیونکہ اس نے صارفین کو گرم بحثوں اور بیانات سے بچنے میں مدد ملی ہے. اس کے ساتھ، نتائج دعوی کرنے کے لئے جھوٹ بولتے ہیں کہ ایک وقفے سے بچنے میں مدد مل سکتی ہے. حالانکہ یہ ابھی تک واضح نہیں ہے کہ سوشل نیٹ ورک کس طرح ذہنی صحت کو متاثر کرتی ہیں، ممکنہ مسائل کے اشارے ہیں. سخت سیاسی بات چیت اور چیری سے اٹھایا لمحات کے درمیان، آپ واقعی دوسرے لوگوں کی زندگیوں کی مکمل تصویر نہیں لیتے ہیں – یہ ممکنہ طور پر غیر متوقع طریقے سے آپ کے جذبات کو چھوڑ سکتا ہے.

Image result for Study suggests Facebook users are happier if they leave for a month

February 1, 2019

لٹل صوفیہ نے صرف 59 دنوں میں 75 ہزار ڈالر کی فنڈنگ حاصل کرلی

کیلیفورنیا:جدت ویب ڈیسک :: امریکا میں سلیکن ویلی میں واقع ایک کمپنی نے لِٹل صوفیہ نامی روبوٹ بنایا ہے جو بچوں سے بات کرنے اور گانا گانے کےعلاوہ انہیں پروگرام کی زبان اور ہنر (کوڈنگ) بھی سکھاتا ہے اور بچے اسے دیکھ کر بہت خوش ہوتے ہیں۔اسے ایک چھوٹی استانی بھی کہا جاسکتا ہے۔ آئی او ایس اور اینڈروئڈ ایپ کے ساتھ استعمال کرنے سے پائتھن اور بلوکلی زبان میں پروگرامنگ سیکھی جاسکتی ہے۔ صوفیہ کو 7 سے 13 سال تک کے بچوں بالخصوص لڑکیوں کے لیے بنایا گیا ہے تاکہ ان میں سائنس، ٹیکنالوجی ، ریاضی اور انجینئرنگ کا شعور اجاگر کیا جاسکے۔
ہینسن روبوٹکس کے تیار کردہ اس روبوٹ کی اونچائی صرف 36 سینٹی میٹر ہے جس کےانسانی چہرے پر تاثرات بھی دیکھے جاسکتے ہیں۔ اس کے سر کی پشت شفاف بنائی گئی ہے جس میں برقی سرکٹ اور دیگر آلات دیکھے جاسکتے ہیں۔ ماہرین نے اسے ’تعلیمی ایلکسا‘ کا نام دیا ہے۔اس ایجاد میں مکمل روبوٹ جیسے فنکشن رکھے گئے ہیں جن کی فہرست طویل ہے۔ یہ بچوں کو لطائف سناتی ہے، گنگناتی ہے، بات کرتی ہے اور گیمز کھیلتی ہے۔ اس سے بڑھ کر صوفیہ میں آگمینٹیڈ رئیلٹی کے فنکشن ہیں جس کی بدولت آپ اسے نئے کپڑے پہنانے سے قبل ہی اس کا روپ دیکھ سکتے ہیں۔۔ اس روبوٹ کی قیمت 99 ڈالر ہے جو جلد بکنگ کرنے والے افراد حاصل کرسکتے ہیں اور بعد میں اس کی قیمت 149 ڈالر تک جاپہنچے گی۔واضح رہے کہ یہ ایک کِک اسٹارٹر ایجاد ہے جس نے صرف 59 دنوں میں 75 ہزار ڈالر کی فنڈنگ حاصل کرلی جو ہدف کے مقابلے میں آدھی ہے

Image result for little sophia

January 31, 2019

فیس بک کی طرح،گوگل کا اپنے آئی فونز کی نگرانی کرنے کے لئے نوجوانوں کو تحفہ کارڈ پیش

جدت ویب ڈیسک ::فیس بک کی طرح،گوگل کا اپنے آئی فونز کی نگرانی کرنے کے لئے نوجوانوں کو تحفہ کارڈ بھی پیش ۔۔۔۔۔صرف ایک دن قبل، اس نے اس بات کا اشارہ کیا کہ فیس بک ریسرچ پروگرام کے ایک حصے کے طور پر، ان کے سوشل میڈیا کی مکمل رسائی حاصل کرنے کے بدلے میں لوگوں کو ادائیگی کر رہا تھا. گوگل کو بھی اسی طرح سے آئی فونز کے استعمال کی نگرانی کر رہا ہے. جہاں فیس بک آگئی، اس کے بعد گوگل بھی اس کے بعد ہی ایک نجی ایپ کو تقسیم کرنے کی اطلاع دی گئی تھی جس کے بارے میں معلومات کی نگرانی اور جمع کرنے کے بارے میں تحفہ کے طور پر تحفہ کارڈز کے تبادلے میں لوگوں کو اپنے آئی فونز استعمال کرتے ہیں. تاہم، گوگل نے اپلی کیشن کو معذور کردیا ہے، ٹیک کروچ کی اطلاع دی ہے.
گوگل کے وی پی این اے، جس نے ‘سکرین وے میٹر’ کہا جاتا ہے، ایپل کے انٹرپرائز پروگرام پر منحصر ہے، اندرونی ایپس کی تقسیم کو ایک فرم کے اندر اندر فراہم کرتا ہے. Google کا اطلاق ایک پروگرام کا حصہ ہے جو 2012 کے ارد گرد ہے اور پہلے ہی ایک کروم توسیع کے ذریعہ گھریلو ویب تک رسائی حاصل کرنا شروع کردیتا ہے اور خاص طور پر Google فراہم کردہ ٹریکنگ روٹر ہے.
18 سال سے زیادہ صارفین کو اسے ڈاؤن لوڈ کرنے کی اجازت دی گئی تھی، لیکن 13 اور اس سے زیادہ سالوں میں ان پروگراموں میں شامل ہونے کی اجازت دی گئی تھی اگر والدین رضامندی کے ساتھ وہ اسی گھر میں ہیں. Google نے ایسے سائٹس جیسے سائٹس کا دورہ کیا، جمع کردہ ایپس، ٹی وی شو ادا کیا، آلہ آئی پی ایڈریس، اور کوکیز جیسے ڈیٹا جمع کیے.
ویجر کو ایک بیان میں، ایک گوگل کے ترجمان نے اعتراف کیا کہ سکرین کی پیمائش میٹر iOS اے پی پی کو ایپل کے ڈویلپر انٹرپرائز کے پروگرام کے تحت چلانا نہیں ہونا چاہئے اور یہ ایک غلطی تھی جس سے وہ معذرت خواہ ہیں. نمائندے نے بتایا کہ اب وہ اپلی کیشن کو غیر فعال کر چکے ہیں.
اس کے علاوہ، $ 20 کے بدلے میں رسائی حاصل کرنے کے فیس بک کی رپورٹ کے بعد، ایپل پر پابندی لگا دی اور اس سرٹیفکیٹ کو منسوخ کر دیا جس نے فیس بک کی صلاحیت کو اندرونی iOS اطلاقات کو چلانے اور تقسیم کرنے کی صلاحیت کو مسترد کر دیا، فیس بک، انسٹاگرام اور اس سے زیادہ پہلے کی تقسیم سے انکار کر دیا.
فیس بک کے لئے، قانون سازوں نے اس بات پر زور دیا ہے کہ یہ مستقبل کے رازداری کے قوانین میں مداخلت کیسے کرسکتا ہے اور ‘wiretapping نوجوانوں کو کبھی بھی جائز نہیں ہونا چاہئے

January 28, 2019

گھریلو استعمال کی اشیاخریدنے والے صارفین کے لیے خوشخبری،صارفین ایپ کے ذریعے مصنوعی مہنگائی کی شکایت کر سکیں گے

لاہورجدت ویب ڈیسک : : حکومت نے مصنوعی مہنگائی کے خلاف ٹیکنالوجی کے استعمال کا فیصلہ کرتے ہوئے سرکاری قیمتوں کی معلومات کے لیے ایپ متعارف کرادی ،عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ صارفین ایپ کے ذریعے مصنوعی مہنگائی کی شکایت کر سکیں گے۔تفصیلات کے مطابق گھریلو استعمال کی اشیاخریدنے والے صارفین کے لیے اچھی خبر آگئی ، حکومت نے مصنوعی مہنگائی کےخلاف ٹیکنالوجی کے استعمال کا فیصلہ کرلیا ہے ، سیالکوٹ میں سرکاری قیمتوں کی معلومات کے لیے ایپ متعارف کرادی گئی ہے۔“قیمت ایپ” کے ذریعے کھانے پینے کی اشیاء کے سرکاری نرخ معلوم کیے جاسکیں گے، ناجائز منافع لینے والے دکانداروں کے خلاف ڈپٹی کمشنر کاروائی کرے گا۔عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ سیالکوٹ کے شہریوں کو بڑی سہولت فراہم کر رہے ہیں، صارفین ایپ کے ذریعے مصنوعی مہنگائی کی شکایت جبکہ صارف دکانداروں کے رویے یا اضافی قیمت لینے کی شکایت کر سکیں گے۔
عثمان ڈار کا مزید کہنا تھا ڈپٹی کمشنر کی سربراہی میں خصوصی مانیٹرنگ ٹیم تشکیل دے دی گئی، جدید طریقہ کار کے ذریعے ہیرا پھیری کرنے والا دکاندار ٹریس کیا جا سکے گا۔
انھوں نے کہا ابتدائی طور پرایپ کا استعمال سیالکوٹ سے شروع کیا جا رہا ہے، منصوبہ کامیاب ہو گیا تو صوبے کے دیگر اضلاع میں بھی شروع کیا جا سکے گا۔ واضح رہے یاد رہے کہ نئے مالی سال 2018-19کے ساتویں ماہ ( جنوری 2019 ) کے چوتھے ہفتے میں مہنگائی کی شرح میں 0.31 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی، جبکہ کم آمدنی والے طبقے کے لئے قیمتوں کے حساس اشاریئے میں 0.07 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔یاد رہےچند روز قبل حکومت نے عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے اشیائے خردونوش کی قیمتوں کی موثر نگرانی کا اعلان کیا تھا، وفاقی وزیر خسرو بختیارکا کہنا تھا کہ حکومت ذخیرہ اندوزی، منافع خوری کی روک تھام کے لئے پرعزم ہے۔