July 15, 2017

ورلڈ کپ 2011: رانا ٹنگا کا حیران کن انکشاف

کولمبوجدت ویب ڈیسک سری لنکا کے عظیم کپتان ارجنا رانا ٹنگا نے ورلڈ کپ 2011 کا فائنل فکس قرار دیتے ہوئے فائنل مقابلے کی فوری طور پر تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ورلڈ کپ 2011 کو چھ سال بیت چکے ہیں لیکن بھارت کے چیمپیئن بننے کے چھ سال بعد ارجنا رانا ٹنگا نے اس ایونٹ پر سوالیہ نشان لگاتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ یہ بھارت اور سری لنکا کے درمیان کھیلا گیا فائنل فکس تھا۔یاد رہے کہ سری لنکا کے سابق کپتان کا یہ بیان سابق عظیم سری لنکن بلے باز کمار سنگاکارا کے بیان کے بعد سامنے آیا ہے جنہوں نے کہا تھا کہ اس بات کی تحقیقات ہونی چاہیے کہ 2009 کے دورہ پاکستان کی اجازت کس نے دی تھی اور اس بارے میں حکام سے پوچھ گچھ ہونی چاہیے۔2009 میں پاکستان کے دورے پر آنے والی سری لنکن ٹیم پر لاہور میں دہشت گردوں نے حملہ کردیا تھا جس میں چند کرکٹرز زخمی بھی ہوئے تھے اور اس حملے کے بعد پاکستان پر انٹرنیشنل کرکٹ کے دروازے بند ہو گئے تھے۔رانا ٹنگا نے کہا کہ اگر سنگارا دورہ پاکستان کے حوالے سے تحقیقات چاہتے ہیں تو بالکل ٹھیک ہے لیکن پھر میرے خیال میں اس بات کی بھی تحقیقات ہونی چاہیے کہ 2011 کے ورلڈ کپ فائنل میں سری لنکن ٹیم کو کیا ہوا تھا۔ میرے خیال میں وزیر کھیل کو فٹنس مسائل کے بجائے اس بات پر توجہ دینی چاہیے۔سری لنکا کو 1996 کا ورلڈ کپ جتوانے والے کپتان اس رات ممبئی میں ہونے والے فائنل کے کمنٹری پینل میں موجود تھے اور انہوں نے کہا کہ سری لنکن ٹیم کی کارکردگی سے وہ بہت مایوس ہوئے تھے۔انہوں نے کہا کہ میں یہ تو نہیں بتا سکتا کہ اس دن کیا ہوا تھا، وقت آنے پر ایک دن اس راز پر سے ثبوتوں کے ساتھ پردہ اٹھاؤں گا لیکن اس سلسلے میں تحقیقات ہونی چاہیے۔2011 میں ممبئی یکے وانکھیڈے اسٹیڈیم میں سری لنکا اور بھارت کے درمیان کھیلے گئے میچ میں سری لنکا نے مہیلا جے وردنے کی سنچری کی بدولت 275 رنز اسکور بورڈ پر سجائے لیکن پھر گوتم گمبھیر اور کپتان مہندرا سنگھ دھونی کی شاندار اننگز کی بدولت بھارت نے 28 سال بعد چیمپیئن بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

July 14, 2017

سولہ سالہ نسیم اختر نے عالمی سنوکر چیمپین ٹائٹل جیت کر پاکستان کا نام روشن کردیا

جدت ویب ڈیسک ؛پاکستان کے صوبہ پنجاب کے ایک چھوٹے سے شہر ساہیوال سے تعلق رکھنے والے 16 سالہ محمد نسیم اختر نے چینی کیوئسٹ کو ہرا کر بیجنگ میں منعقدہ انڈر 18 عالمی سنوکر چیمپئن شپ جیتی ہے۔ نسیم اختر جونیئر سنوکر کا عالمی ٹائٹل جیتنے والے پہلے پاکستانی ہیں اور بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے نسیم نے اس جیت کو ملک کے نام معنون کیا۔ان کا کہنا تھا کہ ’مجھے بہت خوشی ہو رہی ہے اور میں اپنی یہ جیت عوام اور اپنے والدین کے نام کرتا ہوں جن کی دعاؤں سے آج مجھے یہ مقام ملا ہے۔نسیم اختر کے مطابق ساہیوال سے چین تک کا ان کا یہ سفر آسان نہیں تھا۔’راستے میں بہت سی مشکلات آئیں۔ ایک وقت تھا ہمارے پاس پریکٹس کی لیے ٹیبل بھی نہیں تھے۔ پھر پاکستان بلیئرڈ اور سنوکر ایسوسی ایشن نے ہمارے لیے مختلف شہروں میں کیمپ لگائے۔ ایران سے ہمارے لیے کوچ کو بلوایا گیا۔ ان کی کوچنگ سے میری گیم میں کافی نکھار آیا۔خیال رہے کہ چین میں ہونے والی سنوکر کی عالمی چیمپیئن شپ میں 29 ممالک کے 48 کھلاڑیوں نے حصہ لیا۔ پاکستان کی جانب سے نسیم اختر کے ساتھ حارث طاہر نے بھی انڈر 18 کی چیمپئن شپ میں حصہ لیا۔البتہ حارث کو اپنے ہی ہم وطن نسیم کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ نسیم اختر کہتے ہیں کہ انھوں نے یہ چیمپیئن شپ تو جیت لی لیکن اس بڑی جیت کے پیچھے ایک لمبا سفر رہا ہے۔’پہلے میں نے پنجاب چیمپیئن شپ جیتی، پھر نیشنل انڈر 18 اور 21۔ اس کے بعد میں انڈیا گیا اور وہاں ایشیئن سیمی فائنلسٹ بنا اور اب انڈر 18 عالمی سنوکر چیمپیئن کا ٹائٹل حاصل کیا ہے۔ اب میرا اگلا ہدف عالمی انڈر 21 ہے۔حارث طاہر کو چین کے زینگ نے مات دی جبکہ نسیم اختر چین کے حریف منگکی سے تین کے مقابلے میں چار فریم سے میچ ہار گئے’پہلا میچ مجھ سے صحیح سے کھیلا نہیں گیا، میری گیم اتنی اچھی نہیں تھی لیکن پھر بھی ہار جیت گیم کا حصہ ہے۔ اب اگلے میچ جیتنے کی پوری کوشش کروں گا۔عالمی سنوکر چیمپیئن شپ میں بدھ سے انڈر 21 کے مقابلوں کا آغاز ہو گیا ہے جس میں پاکستان کے دونوں کھلاڑی جیت کے لیے پرعزم ہیں البتہ پہلے روز کے مقابلوں میں دونوں کا آغاز بہتر نہ رہا۔

July 14, 2017

بھارتی ایتھلیٹ نے ایک میڈل کیلئے اپنی عزت بیچ دی

ناگپور جدت ویب ڈیسک پیرا لمپک گیمز سوئمنگ چمپئن شپ میں بھارت کے لیے سلور میڈل حاصل اور ورلڈ چمپئن شپ میں کوالیفائی کرنے والی معذور ایتھلیٹ کانچن مالا پانڈے کو جرمنی میں بھیک مانگنا پڑی اور لاکھوں روپے قرض لینا پڑا۔بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ برس ریو اولمپک میں بھارت کے پیرا اولیمپئنز نے 4 میڈلز اپنے نام کیے جس پر خوب جشن منایا گیا مگر اس سال پیرا لمپک سوئمنگ چمپئن شپ میں بھارت کی نمائندگی کرنے والی ناگپور کی معذور ایتھلیٹ کانچن مالا پانڈے نے جرمنی کی سڑکوں پر بھیک مانگ کر مقابلوں میں حصہ لیا کیوں کہ بھارتی حکومت کی جانب سے ان کی کوئی مدد نہیں کی گئی تھی۔معذور ایتھلیٹ نے بھیک میں ملے ہوئے پیسوں سے نہ صرف سوئمنگ چمپئن شپ میں سلور میڈل جیتا بلکہ بھارت کی جانب سے ورلڈ چمپئن شپ کیلئے کوالیفائی کرنے والی پہلی خاتون ایتھیلیٹ کا اعزاز بھی حاصل کیا تاہم اس کے باوجود بھی ایتھلیٹ کو بھارتی حکومت کی جانب سے کسی قسم کی پذیرائی حاصل نہیں ہوئی۔ یہاں تک کہ حکومت کی جانب سے ایتھلیٹ کےلئے ٹور کے انتظامات بھی نہیں کیے گئے۔دوسری جانب غیر ملکی خبر ایجنسی سے بات کرتے ہوئے کانچن مالا پانڈے کا کہنا تھا کہ مجھے ہر حال میں ورلڈ چمپئن شپ کےلئے کوالیفائی کرنا تھا، پتہ نہیں کیوں پیرا لمپک کمیٹی اس کی اہمیت کو نہیں سمجھتی جبکہ صورتحال اتنی شدید ہو گئی تھی کہ مجھے ٹورنامنت میں شرکت کے لیے 5 لاکھ کا قرض لینا پڑا۔

July 14, 2017

نو سال سے ہوم گراؤنڈ پر کرکٹ نہ ہونے سے نقصان ہوا ہے،سرفراز احمد

کراچی جدت ویب ڈیسک چیمپیئنز ٹرافی کی فاتح پاکستانی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ نو سال سے ہوم گراؤنڈ پر کرکٹ نہ ہونے سے پاکستان کرکٹ کو بہت زیادہ نقصان ہوا ہے اور انٹرنیشنل ٹیموں سے دورہ پاکستان کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پہلا میچ ہارنے پر بہت تنقید ہوئی اور ٹیم کا مورال بھی بہت ڈاؤن تھا لیکن پھر ٹیم مینجمنٹ کو کریڈٹ جاتا ہے جس نے کھلاڑیوں کی حوصہ افزائی کی اور اس کے بعد کھلاڑیوں نے شاندار کھیل پیش کر کے ٹیم کو چیمپیئن بنوایا۔ اس جیت سے پاکستان کرکٹ میں ایک نئی جان آ گئی ہے اور آنے والے وقتوں میں اور اچھے نتائج سامنے آئیں گے ۔انہوں نے کہا کہ چیمپیئنز ٹرافی کے بعد ہماری کوشش ہو گی کہ ہم مستقل مزاجی دکھائیں اور اپنی کارکردگی میں زیادہ سے زیادہ بہتری لائیں۔ سینئرز سے مشورہ نہ لینے کے تاثر کو رد کرتے ہوئے سرفراز نے کہا کہ ایسا نہیں کہ میں سینئر کھلاڑیوں سے مشورے نہیں لیتا، سینئر کھلاڑیوں سے مشورہ لیتا ہوں، شعیب ملک، اظہر علی اور محمد حفیظ سے بہت اچھے تعلقات اور بات چیت ہے اور جب بھی پوچھتا ہوں تو سب اچھا مشورہ دیتے ہیں۔

July 13, 2017

انگلینڈ کیخلاف سیریز میں کم بیک کیلئے سرتوڑ کوشش کرنا ہوگی، ہاشم آملہ

لندن جدت ویب ڈیسک جنوبی افریقہ کی کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز اوپننگ بلے باز ہاشم آملہ نے کہا ہے کہ انگلینڈ کے ہاتھوں پہلے ٹیسٹ میں شکست کے باوجود ٹیم کے حوصلے پست نہیں ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ میزبان ٹیم کے خلاف سیریز میں کم بیک کرنے کے لئے کھلاڑیوں کو سر توڑ کوشش کرنا ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اس مقصد کے حصول کیلئے دوسرے ٹیسٹ میچ میں کامیابی کیلئے ٹیم کو تینوں شعبوں میں کارکردگی دکھانا ہو گی۔انہوں نے کہا کہ میزبان ٹیم کے خلاف دوسرے میچ میں مربوط حکمت عملی کے تحت جیت کیلئے ٹیم کو میدان میں اتاریں گے اور میزبان ٹیم کو شکست دیکر سیریز میں شاندار کم بیک کرینگے۔ انگلینڈ نے جنوبی افریقہ کی ٹیم کو پہلے کرکٹ ٹیسٹ میچ میں 211 رنز سے شکست دی تھی۔ اپنے انٹرویو میں سٹار بلے باز ہاشم آملہ نے کہا کہ موجودہ کمبی نیشن کے ساتھ ٹیم دنیا کی کسی بھی ٹیم کو ہرانے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

July 13, 2017

سماجی کاموں کے لیےیونس خان نےاپنا بیٹ نیلامی کے لیے پیش کردیا

جدت ویب ڈیسک :کراچی میں فلاحی ادارے کی تقریب میں اپنا قیمتی بیٹ (بلے) نیلامی کے لیے پیش کرتے ہوئے یونس خان نے کہا کہ میرے 10 ہزار رنز بنانے کی عزت کی جاتی ہے ، میری بھی کی جائے، 10 ہزار رنز بنانے کے پیچھے 17 سال کی محنت ہے، بلے کی فروخت سے حاصل ہونے والی آمدنی تعلیم کے لیے وقف کروں گا حکومت رقم پر ٹیکس نہ کاٹے۔انہوں نے کہا کہ کرکٹ کی خدمات حاصل کرنے کے لیے دیگر ممالک نے مجھ سے رابطہ کیا مگر میں نے انکار کیا کیونکہ میں اپنے ملک کے لیے کچھ کرنا چاہتا ہوں، جہاں موقع ملے گا خدمت ضرور کروں گا۔یونس خان نے اُس بیٹ کو نیلامی کے لیے پیش کردیا جس سے انہوں نے تاریخ کے 10 ہزار رنز مکمل کیے تھے، یہ بیٹ انہوں نے ایک فلاحی ادارے کو پیش کیا جس پر یونس خان کے دستخط بھی موجود تھے۔فخرِ مردان نے کہا کہ ہر شخص کو اپنے طور پر فلاحی کام کرنے چاہیے اس میں کسی اور کا نہیں بلکہ اُس کا اپنا ہی فائدہ ہوگا، سب جانتے ہیں کہ قوم کو اچھی تعلیم کی ضرورت ہے، میں نے ایک فلاحی ادارہ کھول رکھا ہے جو سماجی کاموں میں مصروف ہے اور ہمارے پاس مستقبل کے لیے اچھے پلان بھی موجود ہیں۔سابق ٹیسٹ کرکٹر نے کہا کہ سیاسی پارٹی میں شمولیت کا فی الحال کوئی ارادہ نہیں، ساری سیاسی جماعتیں میری اپنی ہیں اور اچھا کام کررہی ہیں امید ہے ایک دن پاکستان میں تبدیلی ضرور آئے گی۔

July 12, 2017

بنگلہ دیشی کھلاڑیوں پر دہشت گردی کے خطرات منڈلانے لگے

لندن جدت ویب ڈیسک برطانیہ میں کھلاڑیوں پر دہشت گردی کے خطرات منڈلانے لگے،بنگلہ دیش کے اوپنر بلے باز تمیم اقبال کی اہلیہ پر تیزاب پھینکنے کی کوشش،معاہدہ ادھورا چھوڑ کر واپس وطن پہنچ گئے۔تفصیلات کے مطابق بنگلہ دیش کے اوپننگ بلے باز تمیم اقبال جو برطانیہ میں کائونٹی کھیلنے میں مصروف تھے اپنا معاہدہ ادھورا چھوڑ کر وطن واپس پہنچ گئے،ذرائع نے بتایا ہے کہ دو روز قبل وہ اپنی اہلیہ اور بچے سمیت برطانیہ کے ایک ریسٹورنٹ میں کھانا کھا رہے تھے کہ چند شر پسند عناصر نے مسلمان ہونے وجہ سے ان کا پیچھا کیا اور ان کی اہلیہ پر تیزاب پھینکنے کی کوشش کی تاہم وہ اپنے مقاصد میں کامیاب نہ ہوسکے،واضح رہے کہ بنگالی اوپنر بلے باز برطانیہ میں ایسیکس کی جانب سے کانٹی کرکٹ کھیلنے کیلئے موجود تھےجو اب واپس بنگلہ دیش پہنچ چکے ہیں تمیم اقبال نے سوشل میڈیا پر اپنے بیان میں کہا ہے کہ دہشت گردی کے واقعہ کی وجہ سے وطن واپش نہیں آیا بلکہ نجی وجوہات کی بنا پر کانٹی کرکٹ چھوڑ کر واپس بنگلہ دیش آئے ہیں۔

July 12, 2017

کرکٹ بورڈ کاقومی کرکٹرز کیلئے نئے سینٹرل کنٹریکٹ کا اعلان

لاہور جدت ویب ڈیسک پاکستان کرکٹ بورڈ نے قومی کرکٹرز کیلئے نئے سینٹرل کنٹریکٹ کا اعلان کردیا نئے سینٹرل کنٹریکٹ میں35 کھلاڑیوں کے نام شامل ہیں اورانہیں 4 کیٹیگریزمیں رکھا گیا ہے ،کھلاڑیوں کامعاوضہ 10 فیصد بڑھایا گیا ہے بتایا گیا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے 35 کرکٹرز کو سال 2017-18کے لیے سینٹرل کنٹریکٹ دینے کا اعلان کردیا ہے۔انئے سینٹرل کنٹریکٹ کا اطلاق یکم جولائی2017 سے تیس جون 2018 تک ہوگا۔کرکٹرز کے معاوضے دس فیصد اضافہ بھی کیا گیا ہے ۔گزشتہ کنٹریکٹ 30کھلاڑیوں کو دیا گیا تھا جن میں سے 22 نیا کنٹریکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے ہیں 8کھلاڑی عمر اکمل ،عمران خان سینئر ، محمد عرفان، خالد لطیف، شرجیل خان، سہیل تنویر، عمر اکمل، انور علی اور ذوالفقار بابر اس بار سینٹرل کانٹریکٹ حاصل نہیں کر پائے۔کرکٹرز کو چار مختلف کیٹگریز میں سینٹرل کنٹریکٹ دئیے گئے ہیں۔پاکستانی فاسٹ بولر محمد عامر اس مرتبہ اے کیٹیگری میں شامل کیے گئے ہیں جبکہ ان کے ہمراہ اے کیٹیگری کا کنٹریکٹ پانے والے دیگر پانچ کھلاڑیوں میں کپتان سرفراز احمد، اظہر علی، شعیب ملک، یاسرشاہ اور محمد حفیظ شامل ہیں۔بی کیٹیگری میں اسد شفیق اپنی جگہ برقرار رکھنے میں کامیاب رہے جبکہ گزشتہ سال سی کیٹگری میں شامل تین کرکٹرز بابر اعظم، عماد وسیم اور آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی کے بہترین کھلاڑی حسن علی ترقی کے بعد بی کیٹیگری میں شامل کیے گئے ہیں۔گیارہ کرکٹرز کو سی کیٹگری میں رکھا گیا ہے اور ان میں بی کیٹیگری سے تنزلی پانے والے وہاب ریاض اور راحت علی کے علاوہ حارث سہیل، سمیع اسلم، شان مسعود، سہیل خان، فخر زمان، جنید خان، احمد شہزاد، محمد عباس اور شاداب خان شامل ہیں۔احمد شہزاد گزشتہ کنٹریکٹ میں ڈی کیٹیگری میں شامل تھے تاہم اس مرتبہ انہیں سی کیٹیگری دی گئی ہے جبکہ آئی سی سی چیمپینئز ٹرافی کے فائنل میں سنچری بنانے والے فخر زمان پہلی مرتبہ براہِ راست سی کیٹیگری میں ہی شامل کیے گئے ہیں۔سب سے زیادہ 14 کھلاڑیوں کو ڈی کیٹیگری ملی ہے جن میں محمد نواز اور محمد رضوان ایک درجہ تنزلی کے بعد سی سے ڈی میں آئے ہیں جبکہ دیگر کھلاڑیوں میں آصف ذاکر، عثمان صلاح الدین، عامر یامین، عثمان شنواری، فہیم اشرف، رومان رئیس، امام الحق، بلال آصف، میر حمزہ، عمر امین، محمد حسن اور محمد اصغر شامل ہیں۔نئے کنٹریکٹ میں کرکٹرز کے معاو میں 10 فیصد اضافہ کیا گیا ہے جس کے بعد کیٹیگری اے میں شامل کھلاڑیوں کو 6لاکھ 50 ہزار، بی 4لاکھ 50ہزار، سی 2لاکھ 60ہزار جبکہ ڈی والوں کو ایک لاکھ 79ہزار روپے ماہانہ ملیں گے۔