May 26, 2020

سربیا کے ایک مشہور فٹبالر نے ڈپریشن سے تنگ آ کر خود کشی کر لی۔

جدت ویب ڈیسک ::غیر ملکی میڈیا کے مطابق سربیا کے 38 سالہ فٹبال کھلاڑی میلیان مرداکووِچ نے اپنے سر میں گولی مار کر خود کشی کر لی ہے، وہ کچھ عرصے سے ذہنی دباؤ اور پریشانیوں میں مبتلا تھے۔
متعدد فٹبال کلبز کی جانب سے کھیلنے والے ریٹائرڈ معروف اسٹرائیکر بلغراد کے اپارٹمنٹ میں مردہ پائے گئے تھے، ان کی دوست کا کہنا تھا کہ میلیان نے بہت زیادہ شراب نوشی شروع کر دی تھی اور وہ ذہنی دباؤ کا شکار تھے۔میلیان کی دوست اور سنگر ایوانا اسٹانک کا کہنا تھا کہ ہمارے درمیان بہت شان دار تعلق تھا، سب کچھ زبردست لگ رہا تھا، لیکن پھر وہ کئی مسائل کا شکار ہو گیا، وہ زیادہ پینے لگا اور ڈپریشن میں مبتلا ہو گیا، جس کی وجہ سے اس نے خود کشی کر لی۔انھوں نے میڈیا کو بتایا کہ کیریئر کے خاتمے پر وہ پیدا ہونے والے مسائل سے نبرد آزما تھا، کیوں کہ فٹبال ہی اس کے لیے سب کچھ تھا، اس نے ایجنٹ کے طور پر کام شروع کیا لیکن یہ ایسا کام ہے جس میں کبھی آمدن ہوتی ہے اور کبھی نہیں، جس کی وجہ سے وہ ذہنی پریشانی کا شکار ہو گیا تھا۔
ایوانا کا کہنا تھا کہ خودکشی سے ایک دن قبل میلیان نے کچھ زیادہ ہی شراب پی لی تھی، مجھے لگا کہ کچھ غلط ہونے کو ہے، اگلی صبح اس نے پھر شراب پی، ایسے میں جب میں نے ایک پستول اس کے سرہانے دیکھی تو میں سناٹے میں آ گئی۔ میں نے روتے ہوئے اس سے کہا کہ پستول یہاں سے ہٹا دے، اور پھر اس کی ماں کو بھی فون کر کے بیٹے سے بات کرنے کو کہا۔
ایوانا کے مطابق انھیں اس بات کا دھڑکا لگا ہوا تھا کہ میلیان کہیں کچھ کر نہ بیٹھے، میں اپارٹمنٹ ہی میں تھی اور بار بار اس پر نگاہ دوڑا رہی تھی کہ وہ کیا کر رہا ہے، پھر اچانک گولی چلنے کی آواز آئی، میں دوڑ کر باہر گئی اور طبی امداد طلب کی، لیکن وہ مرچکا تھا۔

May 24, 2020

ہسپانوی فٹبال لیگ ‘لا لیگا’ 8 جون سے شروع کرنے کا امکان

جدت ویب ڈیسک ::اسپین کے وزیر اعظم پیڈرو سانچیز نے کہا ہے کہ 8 جون سے ہسپانوی فٹبال لیگ لا لیگا کا تماشائیوں کے بغیر بند اسٹیڈیم میں آغاز ہو سکتا ہے۔

ادھر لیگ کے صدر ژیویئر تیباس نے بھی 12جون سے لیگ کے آغاز کی امید ظاہر کی ہے لیکن لیگ کی جانب سے باضابطہ طور پر مقابلوں کے آغاز کی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا۔

لا لیگا کے کھلاڑیوں نے رواں ہفتے سے ٹریننگ کا آغاز کردیا ہے لیکن اس دوران کورونا کے سبب حفاظتی اقدامات کو خصوصی اہمیت دی جا رہی ہے اور کسی بھی گروپ میں 10 سے زائد کھلاڑیوں کو ایک ساتھ ٹریننگ کی اجازت نہیں۔

اسپین کے وزیر اعظم نے کہا کہ اسپین نے وہ کیا ہے جو اب دنیا بھر میں سب کے لیے ایک نئی راہ ہو گی اور اب وقت آ گیا ہے کہ ہر طرح کی روز مرہ کی سرگرمیاں انجام دی جائیں۔

انہوں نے کہا کہ 8 جون سے لا لیگا کا دوبارہ آغاز ہوگا کیونکہ ہسپانوی فٹبال کو دنیا بھر میں لوگ پسند کرتے ہیں لیکن یہ واحد تفریحی سرگرمی نہیں ہوگی جس کا ہم آغاز کرنے جا رہے ہیں۔

اسپین میں فرسٹ ڈویژن کی طرح سیکنڈ ڈویژن کے میچز کا بھی 8 جون سے آغاز متوقع ہے اور ممکنہ طور پر سیویا اور ریئل بیٹس کے درمیان ڈربی میچ سے لیگ کا آغاز ہوگا۔

لیگ کے صدر ژیویئر تباس نے کہا کہ ہم اس فیصلے سے بہت خوش ہیں، یہ کلب، کھلاڑیوں اور کوچز سمیت تمام متعلقہ افراد کی بہترین کوششوں کا نتیجہ ہے۔

ژیویئر تباس نے کہا کہ ہم احتیاط کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑیں گے، صحت کے حوالے سے جو ہدایات جاری کی گئی ہیں ان کی پابندی لازمی ہے تاکہ یہ وائرس دوبارہ نہ آسکے۔

کورونا وائرس کی وبا کی وجہ سے اسپین میں 12مارچ سے فٹبال کی سرگرمیاں معطلی کا شکار ہیں۔

دونوں ڈویژن میں موجود کھلاڑیوں کے بھی ٹیسٹ کیے گئے اور ٹیسٹ کلیئر ہونے کے بعد ہی انہیں انفرادی ٹریننگ کے لیے مئی کے آغاز میں کلب میں واپسی کی اجازت دی گئی۔

اسپین میں دونوں ڈویژن میں 18مئی کو ٹریننگ کے آغاز سے قبل پانچ کھلاڑیوں میں وائرس کی تصدیق ہوئی تھی جس کے بعد وہ آئسولیشن میں چلے گئے تھے۔

اسپین کی فرسٹ ڈویژن میں تمام ٹیموں کو 11 مزید میچز کھیلنے ہیں جہاں پوائنٹس ٹیبل پر بارسلونا سرفہرست ہے جبکہ ریئل میڈرڈ دو پوائنٹس کے فرق سے دوسرے نمبر پر ہے۔

دوسری جانب پرتگال میں پریمیئر لیگ 3 جون سےشروع کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ اسپین دنیا بھر میں وائرس سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ممالک میں سے ایک ہے اور کورونا وائرس سے اسپین میں 28 ہزار 678 افراد ہلاک اور 2 لاکھ 35ہزار سے زائد متاثر ہوئے۔

May 24, 2020

باؤلرز کو باؤلنگ کے لیے تیاری میں دو سے تین ماہ لگ سکتے ہیں بصورت دیگر ان کی انجری کا خطرہ ہے۔(آئی سی سی)

جدت ویب ڈیسک ::کھیل کی عالمی گورننگ باڈی انٹرنیشنل کرکٹ کونسل(آئی سی سی) نے خبردار کیا ہے کہ کورونا وائرس کے سبب لاک ڈاؤن کی وجہ سے باؤلرز کو باؤلنگ کے لیے تیاری میں دو سے تین ماہ لگ سکتے ہیں بصورت دیگر ان کی انجری کا خطرہ ہے۔

کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا کے دیگر کھیلوں کی طرح کرکٹ کی سرگرمیاں بھی مارچ کے ماہ سے منسوخ ہیں البتہ اب لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد مختلف ملکوں نے کرکٹ کی سرگرمیوں کے باقاعدہ آغاز پر غور شروع کردیا ہے۔

رواں ہفتے انگلش کرکٹرز انفرادی ٹریننگ شروع کر چکے ہیں اور عین ممکن ہے کہ جولائی میں ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز سے وہ اپنے سیزن کا آغاز کریں گے۔

پاکستان کی ٹیم کو تین ٹیسٹ اور اتنے ہی ٹی20 میچوں کے لیے اگست میں انگلینڈ کا دورہ کرنا ہے اور کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لیے یہ میچز تماشائیوں کے بغیر اسٹیڈیم میں کھیلے جائیں گے۔

تاہم آئی سی سی نے خبردار کیا ہے کہ میچز کے آغاز سے قبل کھلاڑیوں خصوصاً باؤلرز کو جسمانی طور پر خود تیار کرنے کی ضرورت ہے تاکہ وہ انجری سے بچ سکیں۔

کھیل عالمی گورننگ باڈی نے کہا کہ ایک عرصے تک کھیل اور ٹریننگ سے دور رہنے کی وجہ سے باؤلرز کا انجری کا شکار ہونے کا زیادہ خطرہ ہے۔

آئی سی سی نے ٹیموں کو مشورہ دیا کہ وہ اپنے اسکواڈ میں زیادہ باؤلرز رکھیں اور باؤلرز پر پڑنے والے بوجھ کا خصوصی طور پر خیال رکھیں کیونکہ ٹیسٹ کرکٹ میں اترنے سے قبل باؤلرز کو کم از کم 8 سے 12 ہفتوں کی تیاری اور ٹریننگ درکار ہے اور آخری چار ہفتوں میں ہی باؤلنگ کی ٹریننگ کی جائے۔

باؤلرز کی ون ڈے اور ٹی20 کرکٹ میں واپسی سے قبل بھی کم از 6ہفتوں کی تیاری کی ہدایت کی گئی ہے۔

آئی سی سی نے اپنے تمام اراکین کو ہدایت کی ہے کہ وہ کھلاڑیوں کی باحفاظت میں کھیل واپسی اور انہیں انجری سے بچانے کے لیے طبی مشیر یا بائیو سیفٹی آفیشل ساتھ رکھیں۔

واضح رہے کہ رواں ہفتے آئی سی سی نے کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر گیند پر تھوک کے استعمال پر پابندی عائد کردی تھی۔

وائرس کے خطرے سے بچاؤ کے لیے کھلاڑیوں کو سماجی فاصلہ برقرار رکھنا ہو گا اور کوشش کرنی ہو گی غٰرجروری طور پر جسمانی تال میل نہ ہو۔

May 24, 2020

ثقلین کو پلیئرز ڈیولپمنٹ کی ذمہ داری ملنے کا امکان

لاہور: جدت ویب ڈیسک: انٹرنیشنل پلیئرز ڈیولپمنٹ کی ذمہ داری ثقلین مشتاق کو سونپنے کا امکان بڑھ گیا، ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق اسپنر نئے ہائی پرفارمنس سسٹم کا حصہ بنیں گے،انھوں نے انٹرویو بھی دے دیا ہے، سلیکشن کمیٹی کا کوارڈینیٹر محمد اکرم کو مقرر کیے جانے کی بازگشت سنائی دینے لگی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ اسٹرکچر کو جدید بنیادوں پر استوار کرنے کے پلان پر عمل درآمد کا آغاز ہوچکا، نیشنل اکیڈمیز کی جگہ ہائی پرفارمنس سسٹم متعارف کراتے ہوئے 15 اپریل کو جاری کردہ اشتہار میں ڈائریکٹر، ہیڈ کوچنگ، انٹرنیشنل پلیئرز ڈیولپمنٹ اور آپریشنز منیجر کی اسامیوں کیلیے 29اپریل تک درخواستیں طلب کی گئیں تھیں، پہلے سے ہی منتخب افراد کو لانے کیلیے رسمی کارروائی پوری کرنے کی خاطر شرائط میں نرمی بھی رکھی گئی، انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے سابق ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس ڈیوڈ پرسنز کو جز وقتی کنسلٹنٹ مقرر کرنے کا فیصلہ پہلے ہی کیا جا چکا تھا، سابق ٹیسٹ کرکٹر ندیم خان کو ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس تعینات کرنے کا باضابطہ اعلان بھی کردیا گیا، ذرائع کے مطابق ثقلین مشتاق کو ہیڈ آف انٹرنیشنل پلیئرز ڈیولپمنٹ مقرر کے جانے کا امکان روشن ہے۔

May 23, 2020

دروہ انگلینڈ کیلئے ممکنہ کھلاڑیوں کے ناموں پر مشاورت شروع

لاہور جدت ویب ڈیسک:پاکستان کرکٹ ٹیم کے دورہ انگلینڈ کے لیے سلیکٹرز نے ممکنہ کھلاڑیوں کے ناموں کے حوالے سے ابتدائی مشاورت کاآغاز کر دیا ہے۔حتمی مشاورت عید کی چھٹیوں کے بعد ہو گی اور امکان ہے کہ 30 ممکنہ کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) ان دنوں دورہ انگلینڈ کی تیاریوں میں مصروف ہے، اس حوالے سے دو روز قبل پی سی بی نے کھلاڑیوں کو بریفنگ بھی دی ہے اور اپنے پلان کے بارے میں آگاہ کیا ہے۔کرکٹرز کی صحت اور حفاظت پر سمجھوتہ نہ کرنے کی یقین دہانی دلاتے ہو ئے پی سی بی نے اعلان کیا کہ جون کے اوائل میں کرکٹرز کی ٹریننگ کو پلان کیا جا رہا ہے، اس ٹریننگ کے لیے تمام طریقہ کار طے کیے جا رہے ہیں اور بظاہر یہی لگتا ہے کہ کرکٹرز گروپ کی شکل میں ٹریننگ کریں گے اور اس کے لیے نیشنل کرکٹ اکیڈمی کو ہر طرح سے محفوظ بنایا جائیگا۔ٹریننگ کیمپ کے لیے کون کون ممکنہ کھلاڑیوں میں شامل ہو گا، اس کے لیے سلیکٹرز نے ابتدائی مشاورت کا آغاز کر دیا ہے جبکہ حتمی مشاورت عید کی چھٹیوں کے بعد ہو گی اور اس کے ساتھ ممکنہ کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کر دیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق 30 ممکنہ کھلاڑیوں کو کیمپ میں بلایا جائے گا اور پی سی بی 25 کھلاڑیوں کو انگلینڈ بھیجنے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے، کیمپ میں سنٹر ل کنٹریکٹ 2020-21 میں شامل تمام 21 کھلاڑی شریک ہوں گے،اس کے علاوہ فواد عالم سمیت ان کرکٹرز کو بھی بلایا جائے گا جو حالیہ اسکواڈز کا تو حصہ رہے ہیں لیکن کنٹریکٹ میں شامل نہیں ہیں، ان میں محمد موسیٰ، عماد بٹ، خوشدل شاہ اور عثمان قادر کے نام ہیں۔ذرائع کے مطابق محمد عامر، وہاب ریاض، شعیب ملک اور محمد حفیظ کے حوالے سے بھی مشاورت ہو رہی ہے۔ٹی توئنٹی ورلڈ کپ ملتوی ہونے کی وجہ سے شعیب ملک اور محمد حفیظ کا کیس کمزور پڑ سکتا ہے، محمد عامر اور وہاب ریاض بنگلادیش کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز میں شامل نہیں تھے تاہم اب محمد عامر کو ممکنہ کھلاڑیوں میں شامل کیا جا سکتا ہے۔ٹریننگ سے قبل تما م کرکٹرز، اسپورٹ اسٹاف اور متعلقہ لوگوں کیکووڈ 19 ٹیسٹ ہوں گے۔

May 23, 2020

ڈبلیو ڈبلیو ای کے معروف ریسلر سمندر میں ڈوب کر ہلاک

لاس اینجلس جدت ویب ڈیسک:سابق ورلڈ ریسلنگ انٹرٹینمٹ (ڈبلیو ڈبلیو ای) اسٹار شیڈ گیسپرڈ لاس اینجلس کے ایک سمندر میں ڈوب کر ہلاک ہوگئے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق پولیس نے ایک بیان میں بتایا کہ ساحل پر موجود ایک شخص نے گشت کرنے والے افسران کو لاش کے ساحل پر آنے کی اطلاع دی۔بعدازاں پولیس نے لاش کی شناخت شیڈ گیسپرڈ کے نام سے کی اور پھر ان کے خاندان کو بھی مطلع کیا گیا۔پولیس کے مطابق شیڈ گیسپرڈ گزشتہ اتوار کو اپنے 10 سالہ بیٹے آریہ کے ساتھ تیراکی کرنے کے لیے ساحل پر گئے تھے جس دوران وہ سمندر میں ڈوب گئے جب کہ ان کے 10 سالہ بیٹے کو ریسکیو حکام نے باحفاظت نکال لیا۔پولیس نے بتایا کہ شیڈ گیسپرڈ جب ساحل سے 50 گز کے فاصلے پر تھے تب انہیں آخری مرتبہ ایک ریسکیو اہلکار نے دیکھا تھا اور بعد ازاں وہ ڈوب گئے تھے۔شیڈ گیسپرڈ کی ہلاکت پر ان کی اہلیہ کی جانب سے ایک بیان جاری کیا گیا جس میں انہوں نے ریسکیو حکام کا بیٹے کو بچانے اور شوہر کی لاش ڈھونڈنے پر شکریہ ادا کیا۔خیال رہے کہ 39 سالہ شیڈ گیسپرڈ نے اپنے ساتھی جے ٹی جی کے ساتھ ٹیگ ٹیم گروپ کرائم ٹائم کے نصف حصے کی حیثیت سے ڈبلیو ڈبلیو ای میں نمایاں مقام حاصل کیا تھا۔2010 میں ریٹائر ہونے کے بعد شیڈ گیسپرڈ نے کئی ٹی وی اور فلموں میں چھوٹے کردار ادا کیے جن میں 2015 کی کیون ہارٹ کامیڈی ‘گیٹ ہارڈ’ شامل ہے۔

May 23, 2020

موجودہ حالات میں سب سے مشکل مرحلہ کرکٹ نہ کھیل پانا ہے، عائشہ ظفر

لاہور جدت ویب ڈیسک:پاکستان ویمن کرکٹ ٹیم کی کھلاڑی عائشہ ظفر نے کہاہے کہ موجودہ حالات میں سب سے مشکل مرحلہ کرکٹ نہ کھیل پانا ہے، وہ اپنا کرکٹ روٹین، میچز کھیلنا، نیٹس پر جانا، سب بہت مس کررہی ہیں اور جس دن لاک ڈاؤن ختم ہوگا وہ سب سے پہلے نیٹس پر جاکر کرکٹ کھیلیں گی۔ایک انٹرویومیں 25 سالہ بیٹر نے کہا کہ لاک ڈاؤن میں یوں لگا کہ جیسے زندگی رک سی گئی ہو، لوگوں سے روابط محدود ہوگئے اور روزانہ ایک سا ہی معمول بن گیا تھا۔انہوں نے کبھی سوچا بھی نہ تھا کہ گھر سے بالکل باہر نہیں نکل پائیں گے زندگی میں پہلی بار ایسا ہوا کہ بیس دن مکمل گھر پر ہی گزارے ہوں اور کہیں باہر نہیں گئے ہوں۔انہوں نے کہاکہ جب گھر پر ہوتی ہیں تو والدہ کے ساتھ کچن میں ہاتھ بٹا لیا جاتا ہے تاہم ساتھ ساتھ کوشش ہوتی ہے کہ فٹنس پر بھی کام جاری رکھا جائے۔23 ایک روزہ میچز اور 17 ٹی ٹوئنٹی میچز میں پاکستان کی نمائندگی کرنے والی عائشہ ظفر نے کہا کہ ان دنوں وہ خود کو فٹ رکھنے کے لیے زومبا ورک آؤٹ کررہی ہیں جس سے نہ صرف وقت اچھا گزرتا ہے بلکہ فٹنس بہتر کرنے میں بھی مدد ملتی۔عائشہ ظفر کی دو بہنیں مدینہ ظفر اور فائزہ ظفر پاکستان کی قومی اسکواش پلیئرز ہیں اور قومی کرکٹر نے کہا کہ اسکواش پلیئر بہنوں کے ساتھ گھر پر فٹنس میں مقابلہ رہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک دوسرے کی حوصلہ افزائی کیلئے اپنے اپنے اچھے میچز بھی ڈسکس کرتے ہیں اور ساتھ ساتھ بہترین فٹنس ورک آؤٹ پلان پر بھی آپس میں مقابلہ رہتا ہے۔

May 20, 2020

والد نے میری ٹیم میں سلیکشن کیلئے رشوت دینے سے انکار کردیا تھا، کوہلی

بھارتی ٹیم کے کپتان ویرات کوہلی نے انکشاف کیا ہے کہ ان کے والد نے ان کی دہلی کی جونیئر ٹیم میں سلیکشن کے لیے رشوت دینے سے انکار کردیا تھا۔ ون ڈے کرکٹ کے عالمی نمبر ایک بلے باز اور بھارتی ٹیم کے کپتان ویرات کوہلی نے بھارتی فٹبال ٹیم کے کپتان کے ہمراہ ایک آن لائن فورم پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ رشوت نہ دینے پر انہیں ٹیم میں نہیں منتخب کیا گیا تھا جس سے ان کا دل ٹوٹ گیا تھا۔انہوں نے کہا کہ میری اپنی آبائی ریاست میں کبھی کبھار کچھ ایسی چیزیں ہوتی ہیں جو درست نہیں ہوتیں اور ایک موقع پر ایک شخص نے مجھے میرٹ پر ٹیم کا حصہ نہیں بنایا تھا۔انہوں نے کہا کہ اس شخص نے میرے والد کو کہا تھا کہ مجھ میں میرٹ تو ہے لیکن فائنل سلیکشن کے لیے کچھ رشوت دینی پڑے گی۔ کوہلی نے بتایا کہ میرے والد نے میرٹ پر سلیکشن پر اصرار کرتے ہوئے کہا کہ اگر آپ کو ویرات کو منتخب کرنا ہے تو میرٹ پر کریں، میں آپ کو کچھ بھی اضافی نہیں دوں گا۔

May 20, 2020

دورہ انگلینڈ ؛ بابرنے فیصلہ مکمل طور پر پی سی بی پر چھوڑ دیا

لاہور: جدت ویب ڈیسک : بابر اعظم نے دورہ انگلینڈ کا فیصلہ مکمل طور پر پی سی بی پر چھوڑ دیا، ان کا کہنا ہے کہ اس سیریز کیے حوالے سے مجھ سے زیادہ فیملی پریشان ہوگی، بورڈ نے ٹور کو محفوظ قرار دیا تو ضرور جاوں گا،پاکستان نے طویل عرصے ہوم میچز نہ کھیلنے کا تلخ تجربہ کیا، اب کورونا کی وجہ سے تماشائیوں کے بغیر اسٹیڈیمز میں کھیلنا پڑے گا۔ تفصیلات کے مطابق ویڈیو کانفرنس میں بابر اعظم نے کہا کہ دنیا تبدیل ہوگئی تو کرکٹ کھیلنے اور دیکھنے کا ماحول بھی بدلے گا، بہت جلد نئی صورتحال کے تقاضوں کو سمجھنا ہوگا، انگلینڈ میں کورونا وائرس کی وجہ سے کیسز کی تعداد بہت زیادہ ہونے کی وجہ سے وہاں کا سفر کرنے والا کوئی بھی فرد خدشات کا شکار ہوگا، ٹور کی صورت میں مجھ سے زیادہ میری فیملی پریشان ہوگی لیکن اگر پی سی بی حالات کا جائزہ لینے کے بعد سیریز کو محفوظ سمجھتا ہے تو میں ضرور جاوں گا۔ ایک سوال پر انھوں نے کہا کہ پاکستانی کرکٹرز 2009 سے2019 تک یو اے ای کے خالی میدانوں میں کھیلتے رہے ہیں۔