September 1, 2017

مغل شاہی عوام کے پیسے پر نہیں ہونی چاہیے سپریم کورٹ

اسلام آباد(جدت ویب ڈیسک )سپریم کورٹ نے فوجداری مقدمہ میں عدم پیشی پر ایڈووکیٹ جنرل خیبر پختونخوا پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایڈوکیٹ جنرل کی تنخواہ اور مراعات پائی کورٹ کے جج کے برابر ہیں جبکہ اڑھائی لاکھ روپے فی کیس الگ سے بھی ملتے ہیں، نوٹیفکیشن میں لکھا ہے کہ مستقبل میں ان مراعات کا حوالہ نہیں دیا جس سکتا، مغل شاہی عوام کے پیسے پر نہیں ہونی چاہیے، غریب آدمی تو ٹماٹر اور لہسن پر بھی ٹیکس دیتا ہے، ہم کام کر رہے ہیں اور کے پی کے سرکاری وکلا عید کیلئے گھروں کو چلے گئے، عدالت کو بے یارو مددگار چھوڑ دیا جاتا ہے، وکلا نے چند سال میں فیسوں میں بے پنا اضافہ کر دیا، فیسوں میں اضافے پر سرکاری وکلا کو بھاری معاوضہ دینا پڑا، ریکارڈ کے مطابق ایڈووکیٹ جنرل کو نوٹس بھی ملا تھا۔ بعد ازاں جسٹس دوست محمد خان کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے تین رکنی بنچ نے سرکاری وکلا کی عدم حاضری پر ملزمان وحید اور ملوک کی ضمانتیں منظور کر لیں ۔ یاد رہے کہ دونوں ملزمان پر تین افراد کو زخمی کرنے کا الزام تھا۔

September 1, 2017

گیارہ ستمبر کا احتساب مارچ ملک سے کرپشن کے خاتمہ اور کرپٹ مافیا کے احتساب کے لیے سنگ میل ثابت ہوگا‘سراج الحق

جدت ویب ڈیسک :جب تک کرپٹ حکمرانوں کو پکڑ کر ان سے لوٹی گئی قومی دولت واپس نہیں لے لیتے ، چوروں اور لٹیروں کا پیچھا کرتے رہیں گے‘امیر جماعت اسلامی  امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہاہے کہ 11 ستمبر کا احتساب مارچ ملک سے کرپشن کے خاتمہ اور کرپٹ مافیا کے احتساب کے لیے سنگ میل ثابت ہوگا، جب تک کرپٹ حکمرانوں کو پکڑ کر ان سے لوٹی گئی قومی دولت واپس نہیں لے لیتے ، چوروں اور لٹیروں کا پیچھا کرتے رہیں گے، نیب معاشی دہشتگردوں کو پکڑنے کی بجائے ان کا سہولت کار بنارہاہے ، جب تک احتساب عدالتیں اپنا فرض پورا نہیں کرتیں ، لوٹ کھسوٹ کا یہ نظام مسلط رہے گا۔ان خیالات کااظہارانہوںنے 11 ستمبر کے احتساب مارچ کی تیاریوں کے سلسلہ میں منصورہ میں منعقدہ جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ احتساب مارچ کرپشن فری پاکستان تحریک کو مہمیز دے گا ۔ مارچ میں لاہور سے راولپنڈی تک ہزاروں لوگ شریک ہوں گے۔ ہم کرپشن میں ملوث بااثر افراد کو پکڑنے اور قومی دولت واپس لینے کے مطالبے سے پیچھے نہیں ہٹیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ ایک طرف غریب مہنگائی ، بے روزگاری اور تعلیم و صحت کی بنیادی سہولتوں کی عدم دستیابی کی وجہ سے پریشان ہے اور دوسری طرف غریب کے ٹیکسوں اور بلوں سے اکٹھی ہونے والی رقم کو لوٹ کر کرپشن کے محل کھڑے کرنے والے آئینی اداروں کا مذاق اڑا رہے ہیں اور انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ۔ احتساب کے ادارے مجرموںکو پکڑنے اور ان سے کرپشن کا پیسہ واپس لینے میں کوئی دلچسپی لینے کے بجائے ان کے سہولت کار بنے ہوئے ہیں ۔ پلی بارگیننگ کے نام پر اربوں روپے لوٹنے والوں سے چند کروڑ لے کر انہیں سات خون معاف کردیے جاتے ہیں جس کا انہیں اختیار ہی نہیں ۔قبل ازیں احتساب مارچ کی تنظیمی کمیٹیوں کے ذمہ داران نے مارچ کی تیاریوں کے حوالے سے مکمل رپورٹ پیش کی ۔ احتساب مارچ 11 ستمبر کو صبح 10 بجے داتا دربار لاہور سے شروع ہوگا اور شام تک راولپنڈی پہنچ جائے گا راستے میں جگہ جگہ سراج الحق اور ان کے قافلے کے شرکاء کا فقید المثال استقبال کیا جائے گا ۔ سینیٹر سراج الحق احتساب مارچ کے راستے کے بڑے شہروں گوجرانوالہ ، گجرات ، کھاریاں ، وزیر آباد ، لالہ موسیٰ ، جہلم ، گوجر خان میں استقبالی جلسوں سے خطاب کریں گے ۔اجلاس میں نائب امیر جماعت اسلامی میاں محمد اسلم، قائم مقام سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی حافظ ساجد انور، امیر العظیم ، سید وقاص جعفری، امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد ، بلال قدرت بٹ ، مولانا جاوید قصوری ، ضیاء الدین انصاری ایڈووکیٹ نے شرکت کی ۔

August 31, 2017

مناسک حج کا آغاز پہلے مرحلے میں20 لاکھ عازمین نماز فجر کے بعد منیٰ کی جانب روانہ حج کا اہم رکن اعظم وقوف عرفہ ادا

جدت ویب ڈیسک :مناسک حج کا آغاز ہو گیا ہے ٗ حج کے پہلے مرحلے میں20 لاکھ عازمین نماز فجر کے بعد منیٰ کی جانب روانہ ہوگئے ٗحج کا رکن اعظم وقوف (آج)جمعرات کو ادا کیا جائے گا اور غلاف کعبہ کی تبدیلی کی روح پرور تقریب بھی ہو گی۔اس موقع پرسعودی حکومت کی جانب سیسیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں،مختلف مقامات پرایک لاکھ سے زائد اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔ترجمان وزارت داخلہ کا کہناہے کہ دستاویزات نہ ہونے پر ساڑھے 4 لاکھ افراد کو واپس بھجوا دیا گیا۔عازمین، منیٰ میں دنیا کی سب سے بڑی خیمہ بستی آباد کریں گے ٗحج کا رکن اعظم وقوف عرفہ (آج) جمعرات کو ادا کیاجائیگا۔بدھ کو8 ذی الحج کے دن عازمین غسل کرنے مکہ یا حرم کے قریب احرام باندھ کر حج کی نیت کر کے تلبیہ کہتے ہوئے منیٰ روانہ ہوئے جہاں رات بسر کریں گے ٗنماز پنجگانہ ظہر، عصر، مغرب، عشا اور فجر بھی وہیں ادا کی جائے گی۔9 ذی الحج کا سورج طلوع ہونے کے بعد عازمین عرفات روانہ ہوں گے ،وہاں رکن اعظم وقوف عرفات ہوگا۔ حجاج ظہر اور عصر کی نمازیں قصر ادا کریں گے ۔سورج غروب ہونے تک اللہ تعالی کاذکر اور دعاو استغفار میں مصروف رہیں گے ۔سورج غروب ہو نے کے بعد مزدلفہ روانہ ہوں گے اور مغرب و عشاکی نمازیں مزدلفہ پہنچ کر ادا کریں گے اور پھر نماز فجر تک وہیں رہیں گے۔10ذی الحج کو نماز فجر کے بعد سورج طلوع ہونے تک حجاج ذکر الٰہی اور دعا میں مصروف رہیں گے ٗ پھرشیطان کو کنکریاں مارنے کے لئے وہاں سے منیٰ جائیں گے۔رمی کے بعد قربانی کی جائے گی جس کے بعد مرد اپنا سر منڈائیں گے اور خواتین اپنے بال کٹوائیں گی ۔پھر حجاج طواف زیارت کے لئے مکہ چلے جائیں گے۔منیٰ واپس آکر وہیں گیارہ ٗبارہ ذوالحجہ کی رات قیام کریں گے اورہر دن زوال کے بعد تینوں دن جمرات کو کنکریاں ماری جائیں گی۔بارہ تاریخ کو غروب آفتاب سے قبل منیٰ سے نکلنا ہوگا اور تاخیر چاہیں تو 13 تاریخ کی رات منیٰ میں بسر ہوگی۔حجاج اپنے اپنے ملک روانہ ہونے سے قبل بیت اللہ کا الوداعی طواف کریں گے۔سعودی حکومت کی جانب سیسیکورٹی کے سخت انتظامات ٗمختلف مقامات پرایک لاکھ سے زائد اہلکار تعینات کئے گئے

 

 

August 31, 2017

امن مشنز کے مؤثر نفاذ اور اہداف کے حصول کیلئے کام کرنے والی افواج کو مکمل وسائل کی فراہمی ضروری ہے ،مزید جانیے

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک :پاکستان نے اقوام متحدہ کی قیام امن مشنز کے مؤثر نفاذ اور اہداف کے حصول کے لئے ان مشنز میں کام کرنے والی افواج کو مکمل وسائل کی فراہمی پر زور دیتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان عالمی ادارے کے پیس کیپنگ آپریشن میں کلیدی کردار ادا کررہا ہے۔پاکستان کی مستقبل مندوب ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر کے مختلف حصوں میں قیام امن کے لئے اقوام متحدہ کے امن مشنز کے اہداف کو حاصل کرنے کے لئے ضروری ہے کہ انہیں تمام وسائل مہیا کئے جائیں اور ان کی کارروائیاں زمینی حقائق کے مطابق ہونی چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ وسائل میں کمی کی وجہ سے ان مشنز میں کام کرنے والی افواج کو اہداف کے حصول اور اقوام متحدہ کے مینڈیٹ کو موثر طور پر نافذ کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے یو این پیس کیپنگ فورسز کی استعداد کار میں اضافے کے لئے اقدامات کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے کہا کہ عالمی ادارے کے یہ آپریشنز کلیدی کردار کے حامل ہیں‘ ان آپریشنز کے نتیجے میں بحرانوں کے بعد ان علاقوں میں قیام امن اور قوم سازی کی صورت میں بہترین نتائج سامنے آتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان عالمی ادارے کے پیس کیپنگ آپریشن میں کلیدی کردار ادا کررہا ہے پاکستان کا اس حوالے سے گزشتہ چھ دہائیوں کا تجربہ ہے اور اپنے تجربات کی روشنی میں ہم کہ سکتے ہیں کہ عالمی ادارے ان آپریشنز کو زیادہ فعال اور موثر بنانے کے ساتھ ساتھ یو این فورسز کو وسائل کی فراہمی پر توجہ مرکوز کرنی چاہئیں ان آپریشنز کو لچکدار ہونا چاہئے اور اس میں انخلاء کے لئے ایک مکمل حکمت عملی ہونی چاہئے۔اس کے ساتھ ساتھ قیام امن اور امن کے حوالے سے دیگر سرگرمیوں کو فروغ دینا اور انخلاء کے لئے قیام امن اور قوم سازی انخلاء کی حکمت عملی کا حصہ ہونا چاہئے۔ ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے کہا کہ بحرانوں کے اصل اسباب تک پہنچے بغیر قیام امن کے اہداف حاصل نہیں کئے جاسکتے۔غربت کا خاتمہ ‘ بیروزگاری اور سماجی ترقی کے لئے اقدامات اور سیاسی تنازعات کا حل ایسے امور ہیں جس پر پہلے سے زیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے۔