July 19, 2017

سپریم کورٹ سے تابوت عمران خان اوران کے حواریوں کے نکلیں گے،عابد شیرعلی

سلام آباد جدت ویب ڈیسک وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ سے عمران خان اورانکے حواریوں کے تابوت نکلیں گے،لاہور ہائیکورٹ نے کل ایک ٹھگ بابراعوان کو بے نقاب کر دیا، عمران خان گرفتاری کے ڈرسے چھپ گئے ہیں،جمہوریت کے اندرکسی قسم کی ٹیمپرنگ کی اجازت نہیں،عمران خان عدالتی اشتہاری ہیں جنہیں ڈر ہے اگرعدالت آگیا تو گرفتار کر لیا جائوںگا، عمران نامے کو خاکستر کر دیں گے۔سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب ٹھگوں اور فریبیوں کا وار نہیں چلے گا ، عمران خان اور اس کے حواریوں کا سپریم کورٹ سے تابو ت نکلے گا ،اپنے آپ کو بہادر سمجھنے والا عمران خان سپریم کورٹ نہیں آرہا ۔عمران خان گرفتاری کے ڈر سے عدالت نہیں آرہا ۔عابد شیر علی نے کہا کہ میاں شریف نے اپنی زندگی میں جائیداد تقسیم کر دی تھی ، سارا زمانہ انکی شرافت کا معترف ہے مگر عمران خان کے والد مستند چور تھے جنہیں سزا ہوئی اور عمران خان بھی پیدائشی ٹھگ اور چور ہے جس نے والد کے چوری کے پیسے سے لندن جا کر پڑھائی کی ۔محمد شریف کی شرافت کی قسمیں زمانہ کھاتا ہے مگر عمران خان کے والد مستند چور تھے، ان کو کرپشن میں سزا ہوئی، انہوں نے پاکستان کے اداروں کے پیسے چوری کیے۔انہوں نے بابر اعوان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ نندی پور میں کروڑوں روپے ہضم کرنے والا بڑی تیاری سے لاہور ہائی کورٹ گیا تھا مگر عدالت نے اس ٹھگ کو بے نقاب کر دیا ۔ بابر اعوان نے نندی پور کے کروڑوں روپے ہڑپ کیے اسے ہتھکڑی لگنی چاہیے ۔وفاقی وزیر مملکت عابد شیر علی نے کہا سپریم کورٹ سے عمران خان اور انکے حواریوں کے تابوت نکلیں گے،عابد شیر علی نے مزید کہا عمران خان نے کرپشن کے پیسوں سے آکسفورڈ میں تعلیم حاصل کی، یہ پیدائشی ٹھگ اور چور ہیں، عمران خان نے پرویز مشرف دور میں 5 شیروانیاں سلوائیں، نوازشریف کا نام لنک کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔گفتگو کے دوران صحافی نے عابد شیر علی سے لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کے حوالے سے سوال پوچھ لیا جس پر عابد شیر علی خاموش ہو گئے ، چند سیکنڈ سوچنے کے بعد انہوں نے صحافی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کیا لوڈ شیڈنگ آپ کو ملتی ہے؟ عابد شیر علی نے جواب کو گول کرتے ہوئے مزید کہا کہ آپ کے چہرے سے لگتا ہے بھابھی سے بھی آپکو مار نہیں پڑی ، آپ خوشی خوشی گھر سے آتے ہیں ۔ یہ کہہ کر عابد شیر علی اپنی گفتگو مختصر کرتے ہوئے سپریم کورٹ کی عمارت میں داخل ہو گئے۔

July 19, 2017

کراچی پولیس کی تابڑ توڑ کارروائی 27افراد گرفتار

کراچی جدت ویب ڈیسک کراچی پولیس نے شہر کے مختلف علاقوں میں کارروائیوں میں ٹارگٹ کلر، کالعدم تنظیم کے کارکن، جعلی میجر سمیت 27افراد کو گرفتار کرلیا۔کراچی میں اورنگی ٹائون کے مختلف علاقوں میں پولیس نے آپریشن کرتے ہوئے 15 مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا۔اسکائوٹ کالونی سے سیاسی جماعت کا مبینہ ٹارگٹ کلر پکڑا گیا، کواری کالونی میں ڈکیتی میں مزاحمت پر فائرنگ سے 2افراد زخمی ہوگئے۔صدر، مومن آباد، پاکستان بازار، پیر آباد اور گلبرگ سے جعلی میجر سمیت 11 ملزمان گرفتار کر لیے گئے۔ایس ایس پی ملیر رائو انوار کے مطابق اسکائوٹ کالونی سے سیاسی جماعت کے ٹارگٹ کلر ماجد کو اسلحے سمیت گرفتار کر لیا گیا۔ملزم نے 2012ءمیں اے ایس آئی اسلم قادری کو فائرنگ کرکے شہید کیا جبکہ 2010ئ میں عاطف نامی نوجوان کو فائرنگ کرکے قتل کیا، ملزم سے قتل کے دیگر واقعات میں ملوث ہونے کے شبہے پر تفتیش جاری ہے۔ادھر اورنگی ٹائون میں سیاسی جماعت کے کارکنوں کی ٹارگٹ کلنگ کے بعد مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کیا گیا جس کے دوران 15مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔کارروائی کے دوران لشکر جھنگوی کے امیر صفدر شاہ کے قریبی ساتھی عبدالسلام کو بھی گرفتار کرلیا گیا، ملزم صفدر شاہ کے ہمراہ پولیس اور رینجرز پرحملوں میں ملوث ہے،ملزم نے افغانستان سے تربیت حاصل کی۔ادھر مومن آباد، پاکستان بازار اور پیر آباد سے بھی ڈاکوئوں اور غیرقانوی اسلحے کے 8 ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔گلبرگ سے دو اسٹریٹ کرمنلز کو اسلحے اورچوری کی موٹرسائیکل سمیت گرفتار کیا گیا۔صدر کے علاقے سے پولیس نے جعلی میجر کو گرفتار کرلیا، پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم نے میجر ذوالفقار کے نام سے تعارف کرایا تاہم تصدیق کرانے پہ پتہ چلاکہ ملزم جھوٹ بول رہاہے۔ملزم ڈیفنس کا رہائشی ہے جسے باقاعدہ گرفتار کرکے اس کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

July 18, 2017

نالوں پر غیر قانونی تعمیرات کا خاتمہ کیا جائے‘ جان محمد بلوچ

کراچی جدت ویب ڈیسک چیئرمین بلدیہ ملیر جان محمد بلوچ نے کہا ہے کہ بلدیہ ملیر میں نکاسی آب پر خاص توجہ دینے کی اشد ضرورت ہے ، رہائشی علاقوں میں موجود نالوں کی صفائی ستھرائی ہماری ترجیحات میں شامل ہیں عوام کو صحت و صاف ماحول کی فراہمی کیلئے نکاسی آب ایک اہم جز ہے جسکو ماسٹر پلان کے ذریعے مزید بہتر کیا جارہا ہے ، نالوں پر تجاوزات ہر گز برداشت نہیں کی جائے گی ، نالے پر تجاوزات عوام کے حق پر ڈاکہ ہے جس کی وجہ سے عوام کی مشکلات میں بے حد اضافہ ہو جاتا ہے، تجاوزات کے خاتمے کے اقدامات کر رہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے وائس چیئرمین عبدالخالق مروت ، میونسپل کمشنر عمران اسلم ہمراہ یوسی03 مظفرآبادنالے پر تجاوزات کے خاتمے کی ہدایت دیتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر چیئرمین مالیاتی کمیٹی معراج محمد خان ، چیئرمین تعلیمی کمیٹی سعید خان افغان ،ڈائریکٹر سی سی آئی ایس سلیم خان اور دیگر بلدیاتی افسران بھی موجود تھے۔ چیئرمین بلدیہ ملیر نے موقع پر موجود متعلقہ افسران کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ نالوں پر غیر قانونی تعمیرات کا فوری خاتمہ کیا جائے، فوری طور پر سروے کر کے حتمی رپورٹ پیش کی جائے اور مستقل بنیادوں پر نالے کے مسائل کو حل کیا جائے، نالے کی صفائی کو ہنگامی بنیادوں پر مکمل کیا جائے ، نالوں کے قریب واقع کچرا کنڈیوں کی روزانہ صفائی کو یقینی بنایا جائے، صفائی ستھرائی کے نظام میں مزید بہتری لائی جائے، نالے سے نکلنے والا کچرا فوری اٹھایا جائے، بیماریوں کے پھیلائو کی روک تھام اور صاف ستھرے ماحول کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے سیوریج کی نکاسی کیلئے نالوں کی صفائی کے ساتھ تجاوزات کے خاتمے کو یقینی بنایا جائے ۔

July 18, 2017

لیاقت آباد کنکریٹ کے جنگل میں تبدیل

کرا چی جدت ویب ڈیسک کراچی کے علاقے لیاقت آباد کو پورشن مافیا نے کنٹریکٹ کے جنگل میں تبدیل کرکے رکھ دیا ہے۔ عدالتی احکامات اور گراونڈ پلس ٹو سے زائد کی تعمیرات پر پابندی ہوا میں اڑا دی گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق لیاقت آباد میں عمارت گرنے کا یہ پہلا واقعہ نہیں اس سے قبل بھی متعدد واقعات میں درجنوں قیمتی جانیں ضائع ہوچکی ہیں۔23جولائی 2009میں لیاقت آباد نمبر 6میں فردوس شاپنگ سنٹر کے قریب زیر تعمیر عمارت اچانک زمین بوس ہو گئی تھی جس کے نتیجے میں 17افرادلقمہ اجل بنے اور درجن بھر زخمی ہوئے تھے۔5جنوری 2013 میں لیاقت آباد نمبر 5میں تین منزلہ عمارت منہدم ہوئی تھی تاہم خوش قسمتی سے اس سانحے میں جانی نقصان نہیں ہوا تھا۔گذشتہ روز لیاقت آباد نمبر9 میں گرنے والی عمارت کے بارے میں علاقہ مکینوں نے بتایا کہ عمارت کی بالائی منزل پر تعمیراتی کام ہو رہا تھاعمارت کی چوتھی منزل پر پینٹ ہاؤس تعمیر کیا جارہا تھا۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ تعمیراتی کام کیلئے آنے والے مزدوروں نے بھی عمارت کے خستہ حال ہونے کی نشاندہی کی تھی۔پے درپے سانحات کے باوجود لیاقت آباد نمبر 2 اور 3 میں ایس بی سی اے کی ملی بھگت سے غیر قانونی تعمیرات جاری ہیں۔لیاقت نمبر 3میں محمد خالد نامی بلڈر تعمیرات کرارہا ہے۔اسی طرح لیاقت آباد نمبر 2 محمدی مسجد جھنڈا چوک کے قریب غیر قانونی تعمیرات ہورہی ہیں۔رحمانیہ مسجد پلاٹ 2/435 اور پلاٹ نمبر 2/530 پر بھی تیزی سے غیرقانونی تعمیرات جاری ہے۔ علاقہ مکینوں نے مطالبہ کیا ہے کہ غیر قانونی تعمیرات کے سیلاب کو روکا جائے لیاقت آباد نمبر دو اور تین میں غیر قانونی تعمیرات پر افسران سے جواب طلبی کی جائے اور مزید حادثات کی روک تھام کے لئے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی فوری اقدام اٹھائے۔