March 23, 2019

یوم پاکستان پریڈ میں ملکی دفاع ناقابل تسخیر بنانیوالے ہتھیاروں کی نمائش ‏

جدت ویب ڈیسک ::یوم پاکستان پریڈ میں ملک کا دفاع ناقابل تسخیر بنانیوالے ہتھیاروں کی نمائش کی گئی

یوم پاکستان

النصر میزائل

پریڈ کے دوران دفاع وطن کو ناقابل تسخیر بنانے میں اہمیت کے حامل النصر میزائل کی بھی نمائش کی گئی ۔

النصر میزائل کو موبائل لانچر کے ذریعے بھی لانچ کیا جا سکتا ہے ، النصر میزائل خطے میں موجود کسی بھی اینٹی میزائل نظام کو شکست دینے کی بھرپور  صلاحیت رکھتا ہے ۔

یہ کسی بھی اینٹی میزائل نظام کو شکست دینے کی بھرپور  صلاحیت رکھتا ہے ۔

النصر میزائل کو داغنے کے بعد بھی اس کا ہدف تبدیل کیا جا سکتا ہے ۔

بابر کروز میزائل

پریڈ میں بابر کروز میزائل کی بھی نمائش کی گئی ، سب میرین لانچڈ بابر کروز میزائل 450 کلو میٹر تک اپنے ہد ف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔

ڈرون

پاکستان میں تیار کیے جانے والے ڈرون سب کی توجہ کا مرکز بن  گئے۔

ٹینک

دشمن پر لرزہ طاری کرنے والے  الخالد ٹینک، الضرار ٹینک، ٹی اے ٹی یو ڈی ٹینک  کے دستوں نےدھاک بٹھا دی ۔

ایم ون ون تھری پی اے پی سیز، وی سی سی ون اٹالین سیریز، معاذ اے پی سیز ٹینک ، ایم ون ون تھری پی اے ٹو اے پی سیز، ایم ریپ، ایم ون ون زیرو اے ٹو گنز،توپ خانوں کے دستے سلامی چبوترے سے گزرے۔

پاکستان آرمی ایئر ڈیفنس،اسکائی گارڈ ریڈار، جیراف ریڈار،آرمڈ وہیکل برج کی نمائش کی گئی ۔

March 23, 2019

ملیشین وزیراعظم کےدورہ پاکستان سے سرمایہ کاری کے نئے دروازےکھل گئے مشترکہ اعلامیہ جاری

اسلام آباد :جدت ویب ڈیسک : ملیشین وزیراعظم مہاتیر محمد کے دورہ پاکستان سے سرمایہ کاری کے نئے دروازے کھل گئے، مشترکہ اعلامیے میں کہا گیا دونوں ممالک میں کئی شعبوں میں باہمی تجارت اورتعاون کے فروغ اور سرمایہ کاروں کیلئے اچھا ماحول فراہم کرنے پر اتفاق ہوا۔
تفصیلات کے مطابق ملیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کا دورہ پاکستان کا مشترکہ اعلامیہ جاری کردیا ، اعلامیہ میں کہا گیا عمران خان اورمہاتیرمحمدکےدرمیان ون آن ون ملاقات ہوئی، دونوں رہنماؤں کےدرمیان خوشگوارماحول میں تفصیلی بات چیت ہوئی جبکہ رہنماؤں میں علاقائی عالمی، باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
مشترکہ اعلامیہ میں کہا ویزہ پابندیوں کےخاتمےسےمتعلق ایم اویو اور سیکریٹری خارجہ سطح پر ہونے والے مشاورتی عمل کا جائزہ لیاگیا، مہاتیر محمد نے نشان پاکستان کا اعزاز عطا کرنے پر شکریہ ادا کیا۔
اعلامیہ کے مطابق اتفاق ہواپاک ملائیشیاتعلقات اسٹریٹجک تعلقات میں تبدیل ہوچکے، نئی سطح کے تعلقات دونوں ممالک کے درمیان رابطوں اور کئی شعبوں میں باہمی تجارت اورتعاون کو فروغ دیں گے۔
اقتصادی شراکت داری معاہدہ سے متعلق مشترکہ اجلاس جلد بلانے کا فیصلہ
اعلامیہ کے مطابق ملائیشین پام آئل،اس کی مصنوعات کی برآمدات میں اضافے کی خواہش کااظہار کرتے ہوئے اقتصادی شراکت داری معاہدہ سے متعلق مشترکہ اجلاس جلد بلانے پر بھی اتفاق ہوا جبکہ دونوں ملک اعلیٰ تکنیکی تعلیم اورووکیشنل ٹریننگ کے شعبےمیں تعاون کریں گے۔
ملیشیا نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی کوششوں کو سراہا
مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا اقتصادی شراکت داری معاہدے کا اجلاس جلد بلانے کا فیصلہ کیا اور سرمایہ کاروں کیلئےمناسب ماحول فراہم کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا جبکہ ملیشیا نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی کوششوں کو سراہاْ۔
اعلامیہ میں کہا اعلیٰ تکنیکی تعلیم اورووکیشنل ٹریننگ کےشعبہ میں تعاون اور امت مسلمہ کودرپیش مسائل کےحل کیلئےمشترکہ کوششوں پر بھی اتفاق کیا، دونوں رہنماؤں نےامت مسلمہ کودرپیش مسائل پر تفصیلی بات کی اور فلسطین، کشمیر اور دیگر متنازع مسلم علاقوں پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔
اسلامی شخصیات سے متعلق توہین آمیزموادپرمشترکہ لائحہ عمل اپنانے پر اتفاق
جاری اعلامیہ کے مطابق اسلامی شخصیات سے متعلق توہین آمیزموادپرمشترکہ لائحہ عمل اپنانے پر اتفاق کیا اور کہا گیا دہشتگردی کوکسی مذہب سےنہیں جوڑا جاسکتا۔
مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا وزیراعظم نے مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سےآگاہ کیا، دونوں رہنماوں کا باہمی اقتصادی تعلقات کے مزید استحکام اور دونوں ممالک کے مابین تجارت، سرمایہ کاری کیلئے مواقع پیداکرنے پر اتفاق ہوا۔

March 23, 2019

تجدید عہد کا دن۔آج کا دن ہماری ذمےداری کی یاددہانی کرانے کا دن ہے، بلاول بھٹو

اسلام آباد : جدت ویب ڈیسک ::پیپلز پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا آج کا دن ہماری ذمےداری کی یاد دہانی کرانے کا دن ہے، نظریہ پاکستان کی جڑوں پر کلہاڑے مارنے والے باز آجائیں، پیپلز پارٹی قائداعظم، شہید بھٹو، شہید بی بی کا خواب پورا کر کے دم لے گی۔
تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو نے یوم پاکستان پر اپنے پیغام میں کہا آج بانیان مملکت خدادادکے وژن سے تجدید عہد نو کا دن ہے، آج کادن ہماری ذمےداری کی یاددہانی کرانے کا دن ہے۔بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ پاکستان میں جمہوری معاشرہ قائم کرنا ہماری ذمے داری ہے، ایسا معاشرہ جہاں امن ، انصاف و انسانی حقوق کا احترام ہو، نظریہ پاکستان کی جڑوں پر کلہاڑے مارنے والے باز آجائیں۔پی پی چیئرمین نے کہا اقوام چند افراد کے مفاد پورا کرنے کے لیے اصول نہیں بناتیں، باوقار قومیں قومی مفاد،عوام کی بہبود سامنے رکھ کر بیانیہ بناتی ہیں، انتہا پسندی ودہشت گردی سے پوری قوم زخمی ہے، خطرات منڈلا رہے ہیں، ایسےحالات کاسامنا کرنے کے لیے اٹل ارادوں کی ضرورت ہے۔ان کا کہنا تھا کہ دکھاوے اور عارضی بنیادوں پر بنائی گئی پالیسیز ہمیشہ ناکام ہوئی ہیں، پاکستان پیپلز پارٹی نظریہ پاکستان اور قرارداد پاکستان کی حقیقی علمبردار ہے، ہم تمام مشکلات، ناانصافیوں اور انتقامی کارروائیوں کا مقابلہ کریں گے۔ بلاول بھٹو نے کہا پیپلز پارٹی قائداعظم، شہید بھٹو، شہید بی بی کا خواب پورا کر کے دم لے گی، وہ خواب پرامن ، ترقی پسند اور خوشحال پاکستان کا خواب ہے۔

March 23, 2019

یوم پاکستان پر مودی کی مبارکباد،ملکر کام کرنےکی خواہش کا اظہار

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک :یوم پاکستان کے موقع پر بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا وزیراعظم عمران خان کے نام خصوصی پیغام، وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ٹوئٹر پر جاری کیے گئے پیغام میں بتایا گیا ہے کہ بھارتی وزیراعظم مودی نے یوم پاکستان پر نیک خواہشات اور مبارکباد کا پیغام بھیجا ہے۔ پیغام میں برصغیر کے لوگوں کی جانب سے جمہوری استحکام، پرامن اور تشدد سے پاک ماحول، خوشحالی اور ترقی کیلئے کام کرنے کی خواہش کا بھی اظہار کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی جانب سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کیے گئے پیغام میں بتایا گیا ہے کہ بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی نے ان سے رابطہ کیا ہے۔وزیراعظم عمران خان نے بتایا ہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے انہیں یوم پاکستان کے سلسلے میں خصوصی پیغام بھیجا ہے۔بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے یوم پاکستان پر نیک خواہشات اور مبارکباد کا پیغام بھیجا ہے۔ مودی کی جانب سے یوم پاکستان کے موقع پر پاکستانی قوم کو خصوصی طور پر مبارکباد دی گئی ہے۔ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے اپنے پیغام میں مزید کہا ہے کہ ان کی خواہش ہے کہ برصغیر کے لوگوں کی جانب سے جمہوری استحکام، پرامن اور تشدد سے پاک ماحول، خوشحالی اور ترقی کیلئے کام کیا جائے۔مودی نے مزید کہا کہ وقت آگیا ہے کہ دہشت گردی سے پاک ماحول میں مل کر آگے بڑھیں۔ واضح رہے کہ 26 فروری کو بھارتی فضائیہ کی جانب سے پاکستانی کی سرحدی حدود کی خلاف ورزی کرنے کے بعد دونوں ممالک کے درمیان جنگ کا خطرہ پیدا ہو گیا تھا۔ اس دوران وزیراعظم عمران خان نے بھارتی وزیراعظم مودی سے رابطہ کرنے کی کوشش کی تھی۔ تاہم جنگی جنون میں مبتلا مودی نے اس وقت رابطوں کا کوئی جواب نہیں دیا تھا۔ لیکن مودی کی جانب سے اب یوم پاکستان کے موقع پر وزیراعظم عمران خان کے نام خصوصی پیغام بھیجا گیا ہے۔

March 22, 2019

آرمی چیف جنرل قمر باجوہ سے آذربائیجان کے وزیردفاع کی ملاقات

راولپنڈی جدت ویب ڈسیک :: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے آذربائیجان کے وزیردفاع نے ملاقات کی، ملاقات میں باہمی تعلقات اور خطے کی سکیورٹی صورتحال پر گفتگو کی گئی۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق آذربائیجان کے وزیردفاع کرنل جنرل ذاکرحسنوف نے راولپنڈی میں جی ایچ کیو کا دورہ کیا۔
اس موقع پر انہوں نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی، ملاقات میں باہمی دلچسپی کےامور اور علاقائی سیکیورٹی صورتحال اور دفاعی تعاون پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
آذربائیجان کے وزیردفاع کرنل جنرل ذاکرحسنوف نے اپنی گفتگو میں خطے میں قیام امن کی کوششوں اور دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کے مثبت کردار کی تعریف کی۔ ان کا کہنا تھا کہ خطے میں امن کیلئے پاکستان کا مثبت کردار قابل قدر ہے، اس کے علاوہ کرنل جنرل ذاکرحسنوف نے یادگارشہداء پرحاضری دی اور پھول چڑھائے۔

March 22, 2019

مہاتیرمحمد کو پاکستان کے اعلیٰ ترین ایوارڈ نشانِ پاکستان سےنواز دیا گیا

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک :: ملیشیا کے وزیر اعظم مہاتیرمحمد کو پاکستان کے اعلیٰ ترین ایوارڈ نشانِ پاکستان سے نواز دیا گیا.
تفصیلات کے مطابق آج ملیشین وزیراعظم مہاتیرمحمد کےاعزازمیں ایوان صدرمیں خصوصی تقریب ہوئی، جس میں وزیراعظم پاکستان سمیت اعلیٰ‌ سول و عسکری قیادت نے شرکت کی.
اس اہم تقریب میں وفاقی وزرا، ارکان پارلیمنٹ ا و دیگرمعزز مہمان بھی شریک ہوئے. اس موقع پر صدرعارف علوی نے مہاتیرمحمد کو نشان پاکستان کے اعزاز سے نوازا.
یاد رہے کہ 18 فروری 2019 کو صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو نشانِ پاکستان سے نوازا تھا، یہ مملکت کا اعلیٰ ترین سول ایوارڈ ہے، اورشہزادہ محمد یہ اعزاز حاصل کرنے والے 23 غیر ملکی تھے.  وزیر اعظم ملیشیا نے کہا کہ دورہ پاکستان کا مقصد فقط بہتر تعلقات نہیں، بلکہ کاروباری روابط بھی بڑھانا ہے، پیسہ حکومت نہیں عوام اور سرمایہ کار کےذریعے بنایا جاتاہے، عوام کے پاس روزگار ہوگا تو وہ حکومت کو ٹیکس ادا کرسکیں گے۔ بزنس کانفرنس کےانعقادپرپاکستان کے شکرگزار ہیں.
وزیر اعظم مہاتیر محمد سے قبل وزیر اعظم عمران خان نے خطاب کیا، جس میں‌ انھوں نے ملیشین ماڈل کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہم ملیشیا کے تجربے سے استفادے کے خواہاں ہیں.خیال رہے کہ آج ملیشین وزیر اعظم نے بزنس کانفرنس سے خصوصی خطاب کیا تھا.

March 22, 2019

اسلاموفوبیا کے خلاف متحدہ محاذ تشکیل دینے کی ضرورت ہے، شاہ محمود قریشی

استنبول: جدت ویب ڈسیک : پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اوآئی سی کے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ نیوزی لینڈ مغرب میں د ر آنے والی اسلامو فوبیا لہر کا غماز ہے، اسلاموفوبیا کے خلاف متحدہ محاذ تشکیل دینے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔تفصیلات کے مطابق آج ترکی میں او آئی سی کا ہنگامی اجلاس ہورہا ہے ، پاکستان کے وزیر خارجہ نے اسلامو فوبیا کے بڑھتے ہوئے اثرات پر اجلاس بلانے کے لیے ترکی کا شکریہ ادا کیا۔ اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ہم سب دکھ کی کیفیت میں یہاں اکھٹے ہوئے ہیں۔
او آئی سی کو اسلام اور مسلمان مخالف پراپگنڈہ روکنے اور اس پر نظررکھنے کے لئے طریقہ کار وضع اور اقدامات تجویز کرنے ہوں گے۔ان افراد، ممالک اور تنظیموں سے بات کرنا ہوگی جو مستقل نفرت کا پرچار کررہے ہیں،اوآئی سی کی سطح پر ادارہ جاتی طریقہ کار وضع کیاجائے جو مسلمان اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے کام اورنگرانی کرے۔
ان کا کہنا تھا کہ 50معصوم انسان شہیدہوئے،9شہداکاتعلق پاکستان سے ہے،پاکستان کےبہادرثپوت ندیم رشیدنےکئی انسانوں کی جان بچائی،نعیم رشیدشہیدکی بہادری پرحکومت نےاعلیٰ سول اعزازعطاکرنے کا اعلان کیا ہے۔دیگرپاکستانیوں نےبھی اسی سانحےمیں جام شہادت نوش کیا، یہ تمام افراداپنی برادری میں عزت ووقارکی علامت تھے۔
شاہ محمود قریشی کا کہناتھا کہ یہ دلخراش سانحہ دنیابھرمیں کروڑوں انسانوں کےلئےرنج والم کاباعث بنا،نیوزی لینڈحکومت،شہداکےاہلخانہ سےدلی تعزیت اور ہمدردی کرتےہیں۔سانحےاورشہادتوں کابہت دکھ ہے،زخمیوں کی صحت یابی کیلئےدعاگوہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم نیوزی لینڈاوران کی حکومت کوخراج تحسین پیش کرتے ہیں،متاثرین کی جس طرح انہوں نےمددکی وہ ان کی مثالی قیادت کی نشانی ہے۔شاہ محمود کا کہنا تھا کہ ہم اس دہشت گردی کا سامنا کرچکےہیں لہذا پاکستان اس دکھ اورکرب سےواقف ہے،نیوزی لینڈسےاظہاریکجہتی اور سوگ کےلئےپاکستانی پرچم سرنگوں رہا۔
سانحے پر مزید گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈسانحےپرعالمی رائےبنی،سانحہ خطرناک رجحانات کاپتہ دیتاہے۔مغربی معاشرےکی سیاست میں مسلمان مخالف جذبات خطرناک رجحان ہے،احترام اوربرداشت کےکلچرکی جگہ تعصب اور لوگوں کو نکال باہرکرنےکابیانیہ جگہ لےرہاہے۔مغرب میں بعض حلقوں کی جانب سےلوگوں کی آمدروکنےکی پالیسیوں پرعمل منفی رجحان ہے۔
شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ کرائسٹ چرچ سانحہ ،ایک جنونی سے سرزد ہونے والا ایک محض ایک واقعہ نہیں،یہ مغرب میں در آنے والی اسلاموفوبیا کی لہر کا غماض ہے۔دہشت گردنےمتنوع اور کثیرالقومی معاشرہ کی اقدار پر حملہ کیا ہے اور اس پر گولیاں برسائی ہیں،یہ نسلی بالادستی کی ناقابل قبول اور قابل مذمت سوچ پر مبنی معاشرہ تشکیل دینے کی کوشش ہے۔
ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ واقعہ ایک دم پیش نہیں آیا بلکہ یہ واقعہ سالہا سال سے اسلام اور مسلمانوں کے خلاف دانستہ برتے جانے والے تعصب کی معراج ہے۔افسوس ہے کہ مرکزی میڈیا نے اس میں اہم کردار ادا کیا۔
پاکستانی وزیر خارجہ نے نشاندہی کی کہ کرائسٹ چرچ واقعہ مرض نہیں بلکہ اس کی محض ایک علامت ہے،یہ زیادہ خطرناک اور سرایت کرجانے والے موذی مرض کی موجودگی کی جھلک ہے۔
انہوں نے کہا کہ آج ہم مغرب میں دیکھ رہے ہیں کہ آج بڑے پیمانے پر اس کی تبلیغ کی جارہی ہے،دائیں بازو کی جماعتیں مسلمانوں کو نکال باہر کرنے کا منشور دے رہی ہیں۔نقل مکانی کرنے والی آبادی کے راستے میں دیواریں اوررکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں۔پردے پرپابندیاں اور اسے سیاسی مقاصد کے لئے استعمال کیاجارہا ہے اور اسلامی مقامات اور علامات پر حملے ہورہے ہیں۔
ان کاکہنا تھا کہ اظہار رائے کی آزادی کے نام پر نفرت پھیلائی جارہی ہے۔دانستہ توہین آمیز خاکوں کے مقابلے کرائے جاتے ہیں۔مسلمان جہاں اقلیت میں ہیں، انہیں خاص طورپر منفی انداز سے پیش کیاجارہا ہے اوران کے خلاف نسلی تعصب کو ہوا دی جارہی ہے۔
انہوں نے نشاندہی کی کہ مسلمانوں کو سفید فام اکثریت پر بوجھ قرار دے کر نسلی تعصب کو ابھارا جارہا ہے، اور یہ رجحان مغرب تک ہی محدود نہیں رہا۔پاکستان کا مشرقی ہمسایہ بزعم خود جمہوریت اور سیکولرازم کا دعویدار ہے لیکن حقیقت اس کے برعکس ہے۔بھارت میں بی جے پی مسلمانوں کے خلاف تعصب رکھتی ہے، سماجی، سیاسی اور معاشی امتیاز برتا جارہا ہے،ہندتوا بریگیڈ کے ہاتھوں مسلمانوں کی توہین کی جاتی ہے اور تضحیک کا نشانہ بنایا جاتا ہے،گائے کی حفاظت کے نام پر مسلمانوں کو قتل کیاجاتا ہے، زبردستی مذہب تبدیل کرایا جاتا ہے۔شاہ محمودقریشی نے کہا کہ سکھوں، مسیحیوں اور دلت اقلیتوں کو جبروتشدد کا نشانہ بنایاجاتا ہے،مقبوضہ جموں وکشمیر میں ماورائے عدالت ہلاکتیں ہورہی ہیں،شاہ محمودقریشی احتجاج کرنے والوں پر پیلٹ گن کا استعمال معمول بن چکا ہے۔ریاست شہریوں کو قتل کررہی ہے اور جنسی تشدد کا حربہ ریاستی دہشت گردی کی پالیسی کے طورپر استعمال کیاجارہا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ سمجھوتہ ایکسپریس میں بے گناہ افراد کے قتل میں ملوث مرکزی ملزمان کو بھارتی عدالت نے رہا کردیا۔یہ افراد 68 افراد کے قتل میں ملوث تھے جن میں اکثریت مسلمانوں کی تھی اور 44پاکستانی بھی ان میں شامل تھے۔اقوام متحدہ کے پاس کوئی نظام نہیں جو ہندتوا کی سوچ اور سفید فام متعصبانہ برتری سے لاحق دہشت گردی کرنے والوں کو کالعدم قرار دے۔
وزیر خارجہ نے کہا کہ کرائسٹ چرچ کے شہداءاس مسئلے کی وجہ سے نشانہ بنے ہیں،یہ پہلی بار نہیں ہوا، نہ ہی آخری واقعہ ہے۔ہمیں گہرائی سے اس مسئلے پر غور کرنا ہوگا اور اصلاح احوال کی کوشش کرنا ہوگی۔یہ منفی سوچ کے درخت پر اُگنے والا امتیازات، تعصبات، نسلی برتری، اینٹی سیمیٹ ازم کا زہریلا پھل ہےوہ بنیادیں جھوٹ ہیں جن پر اسلامو فوبیا پھیلایا اور تعصب برتا جاتا ہے، اس رجحان کو ختم کرنا ہوگا۔
اسلامو فوبیا کے مسئلے کی موجودگی سے انکار کیاجاسکتا ہے اور نہ ہی نظر انداز ، اس مسئلے کا سامنا کرنا ہوگا۔سیاسی طاقتوں کی جانب سے مسلمانوں کے خلاف نفرت پھیلانے کی مقبول لہر کو روکنا ہوگا۔مسلمان ممالک میں اتحاد کے بغیر اس لہر کے سامنے بند باندھنا ممکن نہیں ہوگا۔اسلام سے دہشت گردی کو نتھی کرنے کے زہرناک پروپیگنڈے کو روکنا ہوگا۔
شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ہمیں دنیا کو بتانا ہوگاکہ نہ تو تمام مسلمان دہشت گرد ہیں اور نہ ہی تمام دہشت گرد مسلمان ہیں۔ہمیں اس صورتحال سے نبردآزما ہونے کے لئے زیادہ متحرک اور فعال انداز اپنانا ہوگا۔مذہبی عدم برداشت پر اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اور اوآئی سی کی قراردادوں میں عالمی ذمہ داریوں کو بہتر بنایاجائے۔اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا فوری اجلاس بلاکر اسلاموفوبیا پر موثر قانون سازی ہونی چاہئے،سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ کی طرف سے نفرت اورجرم پر مبنی تقاریر روکنے کے لئے نظام وضع کرنے کی حمایت کی جائے۔اقوام متحدہ میں انسداد دہشت گردی کے لسٹنگ فریم ورک پر جامع نظرثانی کی جائے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ القاعدہ کے علاوہ دیگر رنگ ونسل اور مذاہب سے تعلق رکھنے والے دہشت گردوں کو بھی اس فہرست میں شامل کیاجائے،اسلاموفوبیا کے خلاف متحدہ محاذ تشکیل دیاجائے۔ اس سلسلے میں حکومت، عوام، مذہبی ودیگر قائدین، دانشوروں اور ماہرین کی سطح پر بھی مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔مسلمانوں کے خلاف تعصب پر مبنی مواد کا جواب دیا جائے تاکہ مغربی عوام کو حقائق معلوم ہوسکیں،سوشل میڈیا اور دیگر فورمز پر نفرت انگیز مواد کے پھیلاؤکو روکنے کے لئے شراکت دارانہ اور مل کر کوششوں کو فروغ دینا ہوگا۔