January 20, 2020

آسٹریلیامیں آگ کےبعد ژالہ باری اورطوفان نےتباہی مچادی, گاڑیوں اورعمارتوں کو نقصان پہنچا

جدت  ویب ڈیسک ::سڈنی : مشرقی آسٹریلیا کےآگ سے متاثرہ علاقوں میں شدید ژالہ باری ہوئی ہے جس کے باعث گاڑیوں اورعمارتوں کو نقصان پہنچا ہے۔
تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا کے مختلف شہروں میں شدید ژالہ باری ہوئی ہے ۔آسٹریلوی شہر میلبورن اور کینبرا میں زبردست طوفان سے شدید نقصان پہنچا ہے اور کچھ علاقوں میں گولف کی گیندوں کی مانند بڑے اولے پڑے ہیں ۔
نیوساوتھ ویلز کے کچھ علاقوں میں گرد کےطوفان کےباعث گردوغبار کےبادل چھاگئے۔ آسٹریلین محکمہ موسمیات کےمطابق آج بھی نارتھ ساوتھ ویلز ،وکٹوریا اسٹیٹس میں طوفانی ہواوں کیساتھ شدید بارش اور ژالہ باری کاامکان ہے ۔ ملک کے دارالحکومت میں سینکڑوں ایمرجنسی کالزموصول ہوئیں،ژالہ باری کے باعث لوگوں کے گھروں ،دفتروں کی کھڑکیوں اور کارزکی ونڈشیلڈ ز متاثر ہوئیں ۔
پیر کے روز سڈنی اور برسبین میں بھی شدید طوفان کی پیش گوئی کی گئی ہے ۔ تیز ہواؤں نے دھول کے بادل بھی پیدا کر دیئے ہیں ، اورنج اور ڈوبو جیسے این ایس ڈبلیو شہروں میں عارضی طور پر آسمان چھپ گیاہے ۔
آسٹریلیا کے جنوب مشرق میں درجن بھر علاقے اب بھی آگ کی لپیٹ میں ہیں جنہیں سب سے زیادہ تباہ کن قرار دیا گیا ہے۔ ستمبر کے بعد سے آگ سے کم از کم 30 افراد ہلاک ، 2،000 سے زیادہ مکانات تباہ اور 10 ملین ہیکٹر رقبے میں جل گئے۔ریکارڈ درجہ حرارت ، شدید خشک سالی اور آب و ہوا میں بدلاؤ نے موسمیاتی بحران کو مزید تیز کردیا ہے۔

January 20, 2020

بین الاقوامی ادارے اسپیکٹیٹر انڈیکس نے بھارت کو دنیا کا پانچواں سب سے زیادہ خطرناک ملک قرار دے دیا

جدت ویب ڈیسک ::لندن: بین الاقوامی ادارے اسپیکٹیٹر انڈیکس نے بھارت کو دنیا کا پانچواں سب سے زیادہ خطرناک ملک قرار دے دیا۔
غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اسپیکٹیٹر انڈیکس نے 2019 میں خطرناک ممالک کی فہرست جاری کردی جس کے مطابق برازیل، جنوبی افریقا، نایجیریا، ارجنٹینا اور بھارت دنیا کے خطرناک ترین ملک قرار دئیے گئے ہیں۔
خطرناک ممالک کی فہرست میں برطانیہ کا 12واں اور امریکا کا 16واں نمبر ہے۔
اسپیکٹیٹر انڈیکس کی فہرست میں پیرو چھٹے، کینیا ساتویں، یوکرائن آٹھویںِ، ترکی نویں، کولمبیا دسویں نمبر پر موجود ہیں۔
انڈیکس نے تمام معاشرتی پہلوؤں کو دیکھ کر 20 ممالک کی فہرست کو ترتیب دیا جس میں بھارتی حکومت کا مقبوضہ کشمیر غاصبانہ قبضہ، نیا شہریت قانون، ہندووتوا کی ترویج، اقلیتوں کے حقوق غصب کرنا، گائے کے نام پر قتل اور خواتین کو ہراساں کیا جانا شامل ہے۔
واضح رہے کہ اس سے قبل بھی ورلڈ انڈیکس نے بھارت کو غیرملکی سیاحوں کے لیے ایشیا کا خطرناک ترین ملک قرار دیا تھا۔
ورلڈ انڈیکس کے مطابق بھارتی خواتین سمیت کینیڈین اور آسٹریلوی خواتین بھی اپنے آپ کو بھارت میں محفوظ محسوس نہیں سمجھتیں۔

January 20, 2020

شہزادہ ہیری شاہی خاندان سے علیحدگی کے بعد فوجی اعزازات سے بھی محروم، شہزاہ ہیری آب دیدہ ہو گئے

لندن: جدت ویب ڈیسک :: شہزادہ ہیری کو شاہی خاندان سے علیحدگی کے بعد فوجی اعزازات سے بھی محروم ہونا پڑے گا، لندن میں ایک تقریب کے دوران شہزادہ ہیری بات کرتے ہوئے آب دیدہ ہو گئے۔
تفصیلات کے مطابق شہزادہ ہیری لندن میں ایک تقریب کے دوران آب دیدہ ہو گئے، انھوں نے کہا کہ خاندان چھوڑنے پر افسوس ہے، تاہم شاہی خاندان سے دست بردای کے سوا ان کے پاس کوئی آپشن نہیں تھا۔
خیال رہے کہ ہیری اور میگھن کے برطانوی شاہی خاندان چھوڑنے کے فیصلے کے بعد اب سارے معاملات طے پا گئے ہیں، شاہی رکنیت سے دست برداری کے فیصلے کے بعد ہیری اور میگھن سرکاری پیسے اور شاہی خطاب استعمال نہیں کر سکیں گے۔
ہیری اور میگھن سے شاہی ٹائٹل واپس لے لیا گیا
فروگمور کاٹیج کی آرایش پر خرچ ہونے والی 31 لاکھ ڈالر کی رقم بھی واپس کرنی ہوگی، ہیری کو افغانستان میں دیے گئے فوجی اعزازات بھی واپس کرنے ہوں گے، ہیری نے خاندان چھوڑنے پر افسوس کا اظہار کیا، انھوں نے کہا دکھ ہے کہ صورت حال یہاں تک پہنچی، امید تھی پبلک فنڈنگ کے بغیر ملکہ کی خدمت اور فوجی تعلق جاری رکھوں گا، بد قسمتی سے یہ ممکن نہ ہو سکا۔ شہزادہ ہیری کا کہنا تھا کہ دادی اور کمانڈر انچیٖف کا بے حد احترام ہے اور ان کا شکرگزار ہوں۔

Image result for prince harry crying

Image result for prince harry crying

Image result for prince harry crying

January 18, 2020

مقبوضہ کشمیر ‘:شدید برف باری کیوجہ سے درجنوں دیہات کے سڑک رابطے معطل ، بجلی اور پانی کا نظام ٹھپ

سرینگر جدت ویب ڈیسک :مقبوضہ وادی کشمیر میں شدید برف باری کی زد میں آنے والے درجنوں دیہات کے سڑک رابطے معطل ہوچکے ہیں جبکہ بجلی اور پانی کا کا نظام ٹھپ پڑا ہے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق منگل کی شب سے جمعرات کی صبح تک وادی کشمیر کے جنوبی اور وسطی علاقوں میں بھاری اور دیگر علاقوں میں درمیانہ درجے کی متواتر برف باری سے سرینگر سمیت پوری وادی سفید چادر میں ڈھک گئی ۔ برف باری کے باعث اگر چہ سردی کی سخت لہر سے لوگوں کو قدرے راحت مل گئی تاہم راستے بند ہونے اور بجلی کے بریک ڈائون سے انہیں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ بھاری برف کے سبب سرینگر میں ڈرینج سسٹم بیکار ہوچکا ہے اور اکثر سڑکیں اور گلی کوچے زیر آب آئے گئے۔ جنوبی کشمیر اور وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام کے مختلف علاقوں میں بجلی کا نظام بھی متاثر ہوا جبکہ پانی کی سپلائی پر بھی اثر پڑا۔ مختلف مقامات پر بجلی کے کھمبے اور ترسیلی لائنیں زمین پر آگئی ہیں جسکے نتیجے میں متعد د علاقے اندھیرے میں ڈوب گئے ہیں۔

January 18, 2020

ادلب میں حملے اورجھڑپیں،حکومتی ملیشیاکے جنگجوئوں سمیت 84افرادہلاک

ادلب جدت ویب ڈیسک :شام کے صوبہ ادلب میں حکومت کے فضائی حملوں اورجھڑپوں میں حکومت مخالف جنگجو،سرکاری فوجی اوراتحادی ملیشیاکے اہلکار اورعام شہریوں سمیت 84افرادہلاک ہوگئے،میڈیارپورٹس کے مطابق انسانی حقوق کے شامی مبصر گروپ کے سربراہ رامی عبدالرحمٰن نے بتایا کہ گزشتہ روز نصف شب کو حملہ ہوا۔تازرہ ترین پرتشدد حملوں کے بعد روس کی طرف سے جنگ بندی معاہدہ بھی سبوتاڑ ہوگیا۔ان کے مطابق حملے میں کم از کم 26 حکومت مخالف جنگجو مارے گئے جن میں سے بیشتر حیات تحریر الشام کے رکن تھے۔مبصر گروپ نے کہا کہ مذکورہ لڑائی میں 29 سرکاری فوجی اور اتحادی ملیشیا کے اہلکار بھی مارے گئے۔حکومتی فورسز کے فضائی حملوں میں 19 شہری ہلاک ہوگئے۔شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق حکومت کے زیر کنٹرول حلب شہر کے ایک رہائشی علاقے پر راکٹ فائر کیا گیا۔رپورٹ میں کہا گیا کہ دہشت گرد گروپ کی جانب سے فائر کیے گئے راکٹ سے 6 شہری ہلاک اور 15 دیگر زخمی ہوئے۔واضح رہے کہ اقوام متحدہ نے انکشاف کیا تھا کہ دنیا بھر میں جاری جنگی محاذوں پر بچوں پر حملوں اور ہلاکتوں کی تعداد میں 2010 کے مقابلے میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔گزشتہ 10سالوں کے دوران نت نئے جنگی محاذ کھلے ہیں اور ان محاذوں کے دوران سب سے زیادہ نقصان بچوں کا ہوا ہے جہاں ان ہولناک جنگی محاذوں میں ہزاروں بچے ہلاک اور لاکھوں معذور و بے گھر ہو گئے۔یونیسیف نے دنیا بھر میں جاری تنازعات میں تین ممالک کو سب سے زیادہ خطرناک قرار دیا اور خبردار کیا تھا کہ 2019 میں شام، یمن اور افغانستان میں بچے سب سے زیادہ خطرے کی زد میں ہوں گے۔خیال رہے کہ ترکی کا کئی برسوں سے یہ موقف ہے کہ شام میں موجود کرد جنگجو ‘دہشت گرد’ ہمارے ملک میں انتہا پسند کارروائیوں میں ملوث ہیں اور انہیں کسی قسم کا خطرہ بننے سے روکنا ہے۔

January 18, 2020

ادلب میں لڑائی کے باعث ساڑھے تین لاکھ افراد نے نقل مکانی کی،اقوام متحدہ

نیویارک جدت ویب ڈیسک :اقوام متحدہ نے کہاہے کہ گذشتہ برس دسمبر سے شام کے ادلب صوبے میں روسی حمایت سے جاری اسد رجیم کی فوجی کارروائیوں کے نتیجے میں ساڑھے تین لاکھ افراد بے گھر ہوئے ہیں۔عرب ٹی وی کے مطابق ایک بیان میںاقوام متحدہ کی طرف سے کہا گیا کہ ادلب میں دو ماہ سے کم عرصے کے دوران ساڑھے تین لاکھ افراد ترکی کی سرحد کی طرف نقل مکانی کرچکے ہیں۔ نقل مکانی کرنے والوں میں زیادہ تر بچے اور عورتیں شامل ہیں۔اقوام متحدہ کے رابطہ کار برائے انسانی حقوق کے دفتر سے جاری تازہ رپورٹ میں کہا کہ لڑائی میں شدت کے نتیجے میں انسانی صورتحال بدستور خراب ہوتی جارہی ہے۔شامی اپوزیشن کے زیرکنٹرول ادلب کے جنوبی علاقوں میں شامی رجیم اور اس کی معاون روسی افواج کی طرف سے گذشتہ برس دسمبر سے مسلسل فضائی حملے جاری ہیں۔ ادلب میں معرہ النعمان اور دوسرے علاقوں پرسابقہ النصرہ فرنٹ اور موجودہ ‘تحریر الشام’ محاذ کا کنٹرول ہے۔شامی اور روسی فوج کی بمباری کے باعث نقل مکانی کرنے والے زیادہ تر شہری شمالی ادلب، سراقب، اریحا اور ترکی کی سرحد کے قریب قائم پناہ گزین کیمپوں کا رخ کررہے ہیں۔ ان پناہ گزین کیمپوں میں پہلے ہی بڑی تعداد میں لوگ رہ رہے ہیں۔