July 2, 2020

ایک انار۔۔سو بیمار۔ کرونا لاک ڈاؤن کے دوران شادی کرنے والا دلہا ہلاک

نئی دہلی: جدت ویب ڈیسک :: ایک انار۔۔سو بیمار۔ کرونا لاک ڈاؤن کے دوران شادی کرنے والا دلہا ہلاک..  بھارت میں کرونا لاک ڈاؤن کے دوران شادی کرنے والا دلہا وائرس سے ہلاک ہوا تو شادی کی تقریب میں شریک 100 افراد بھی کرونا میں مبتلا ہوگئے۔ضلعی انتظامیہ نے شادی کی تقریب میں 50 افراد سے زائد کی شرکت پر تحقیقات کا حکم دے دیا، واضح رہے کہ بہار میں کرونا کے کیسز کی تعداد 9700 سے زائد ہے اور 62 افراد ہلاک ہوچکے ہیں
بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ریاست بہار کے شہر پٹنا میں کرونا لاک ڈاؤن کے دوران شادی کی تقریب ہوئی جو وائرس کے پھیلنے کا سبب بن گئی، دلہا بھی کرونا کا شکار ہوکر چل بسا۔
پٹنا کے رہائشی نوجوان کی حالت کچھ دنوں سے خراب تھی اور اس میں کرونا کی علامات پائی گئی تھیں لیکن گھر والوں نے شادی کی وجہ سے نوجوان کا کرونا ٹیسٹ نہیں کروایا تھا۔
شادی سے چند روز قبل نوجوان مقامی اسپتال میں زیر علاج تھا جہاں اس کے گھر والے زبردستی اسے گھر لے گئے اور شادی کردی تاہم نوجوان شادی کے اگلے روز ہی طبیعت بگڑنے پر چل بسا۔
بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ واقعے کی اطلاع ملنے پر انتظامیہ حرکت میں آئی لیکن مرنے کے بعد نوجوان کا کرونا ٹیسٹ نہیں کیا جاسکا اور اس کے گھر والے اس کی آخری رسومات بھی ادا کرچکے تھے۔
شادی میں تقریباً 350 افراد نے شرکت کی جن میں سے بیشتر افراد کو کرونا کی علامات محسوس ہوئیں اور ٹیسٹ کرانے پر دلہا کے رشتے داروں سمیت 100 افراد میں کرونا کی تشخیص ہوئی۔

Coronavirus Lockdown Forces Patna Couple to Get Married on Video Call

July 2, 2020

پیدل چلتے ہوئے موبائل فون کے استعمال پر پابندی عائد

جدت ویب ڈیسک ::ٹوکیو : حکومت جاپان نے اپنے شہریوں کو کسیہ بھی حادثے سے بچانے کیلئے پیدل چلنے کے دوران موبائل فون کی اسکرین دیکھنے پر پابندی عائد کردی ہے، جس کا اطلاق فی الحال یاماٹو شہر میں ہوگا۔
تحقیق میں ٹوکیو کے مصروف ترین سٹیشن پر پیدل چلنے والوں کی مثال دیتے ہوئے بتایا گیا کہ اگر تمام 1500 افراد سڑک پار کرتے ہوئے اپنی موبائل اسکرین دیکھ رہے ہوں تو ان میں سے دو تہائی کسی نہ کسی حادثے کا شکار ہوں گے۔
تفصیلات کے مطابق جاپان میں پہلی مرتبہ پیدل چلتے ہوئے موبائل فون کی جاپانی موبائل کمپنی این ٹی ٹی کی تحقیق کے مطابق پیدل چلتے ہوئے موبائل فون دیکھنے والوں میں سے 95 فیصد ایسے افراد ہیں جن کی توجہ سکرین پر مرکوز ہونے کے باعث انہیں سامنے نہیں دکھائی دے رہا ہوتا جس کی وجہ سے حادثات میں اضافے کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔اسکرین دیکھنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے، اس پابندی کا اطلاق فی الحال دارالحکومت ٹوکیو کے قریبی شہر یاماٹو میں کیا گیا ہے۔
غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اس نئے قانون کی خلاف ورزی پر جرمانہ یا سزا نہیں ہوگی اور اس کا مقصد چلتے ہوئے موبائل سکرین دیکھنے کے خطرات سے آگاہ کرنا ہے۔یاماٹو کے ریلوے سٹیشن پر اترتے ہی یہ اعلان سنائی دیتا ہے کہ ‘چلتے وقت سمارٹ فون کے استعمال پر پابندی ہے، اپنے فونز اس وقت استعمال کریں جب آپ پیدل نہ چل رہے ہوں۔’ریلوے اسٹیشن پر ہر طرف ہدایات درج ہیں جن کے ذریعے اس نئے قانون کے حوالے سے آگاہ کیا گیا ہے۔ بینرز پر لکھا ہے کہ سڑک، پارکس یا کسی بھی عوامی مرکز میں پیدل چلتے ہوئے موبائل کی سکرین دیکھنے پر پابندی ہے۔
شہریوں کی بڑی تعداد نے اس نئے قانون کی حمایت کی ہے جس میں بڑی عمر کے علاوہ نوجوان بھی شامل ہیں۔ دو لاکھ چالیس ہزار کی آبادی کے اس شہر میں چند لوگ ہی نئے قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے نظر آئے ہیں۔
64 سالہ رہائشی کینزو موری نے اےا یف پی کو بتایا کہ اکثر لوگ چہل قدمی کے دوران ارد گرد کے ماحول پر غور کرنے کے بجائے موبائل فون استعمال کر رہے ہوتے ہیں، لوگوں کا خیال ہے کہ وہ موبائل دیکھے بغیر نہیں رہ سکتے اور ان کے لیے دوستوں کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہنا ضروری ہے۔
یاماٹو کی ایک 17 سالہ شہری اریکا اینا کے خیال میں اس پابندی کے لیے قانون کی ضرورت نہیں ہونی چاہیے تھی بلکہ لوگوں کو خود ہی احتیاط کرنی چاہیے، پیدل چلتے ہوئے سکرین دیکھنے کی عادت خطرناک ہے۔

Reading This While Walking? In Honolulu, It Could Cost You - The New York Times

Walkie, no talkie: Japan city launches pedestrian smartphone ban

July 2, 2020

بھارت میں کورونا سے ہلاک لاشوں کو گڑھے میں پھینکا جا نے لگا

نئی دہلی:جدت ویب ڈیسک : بھارت میں مودی سرکار کورونا وبا سے قابو پانے میں مکمل طور پر ناکام رہی ہے جس کے باعث ایک دن میں ریکارڈ ہلاکتیں ہورہی ہیں اور لاشوں کو دفنانے کے لیے غیر انسانی طریقے اپنائے جا رہے ہیں جب کہ شادی کے محض دو دن کے بعد دلہا کورونا وائرس سے ہلاک ہوگیا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست کرناٹک کے ضلع بیلاری میں کووڈ-19 سے ہلاک ہونے والے 8 افراد کی لاشوں کی بے حرمتی کی گئی اور لاشوں کو ایک گڑھے میں پھینک دیا۔ لاشوں کو ٹھکانے لگانے کے غیر اخلاقی طریقے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تو ریاست کی انتظامیہ نے لواحقین سے معافی مانگی اور تحقیقات کا حکم دیا۔ نائب کمشنر وار ضلع مجسٹریٹ ایس ایس نکول نے میڈیا کو بتایا کہ کورونا سے ہلاک ہونے والوں کی لاشوں کو دفنانے کے ضابطے کی پوری پابندی کی گئی تاہم اس دوران ضلعی انتظامیہ کا میتوں کے ساتھ سلوک افسوسناک نے جس پر فیلڈ ٹیم کو معطل کر دیا گیا ہے اور ایک نئی ٹیم کو تربیت دی جائے گی۔ دوسری جانب ریاست بہار کے علاقے میں شادی کے محض دو دن بعد دلہا کورونا وائرس سے ہلاک ہوگیا۔ شادی کی تقریب میں سیکڑوں افراد نے شرکت کی تھی جن کے کورونا ٹیسٹ کرائے گئے تو 111 افراد کووڈ مثبت نکلے۔ بھارت میں شادی کی تقریب میں صرف 50 افراد کو شرکت کی اجازت ہے تاہم انتظامیہ عمل درآمد کرانے میں ناکام ہے۔ادھر حیدر آباد شہر کے سرکاری اسپتال میں زیر علاج 34 سالہ نوجوان کی سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں وہ کہہ رہا ہے کہ میرا سانس اکھڑ رہا ہے، اسپتال والے آکسیجن نہیں لگا رہے ہیں میں تین گھنٹے سے کہہ رہا ہوں لیکن کوئی سن نہیں رہا، میرا دل بند ہو رہا ہے۔

July 2, 2020

مقبوضہ کشمیر: معصوم بچے کے سامنے شہید کئے گئے نانا کی نمازِ جنازہ ادا کر دی گئی

سوپور: جدت ویب ڈیسک :مقبوضہ کشمیر کے شہر سوپور میں معصوم بچے کے سامنیشہید کئے گئے نانا کی نمازِ جنازہ ادا کر دی گئی۔ ترجمان سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ نے کہا ہے سوپور واقعے کو قریب سے دیکھ رہے ہیں، قتل میں جو بھی ملوث ہے اسے سزا ملنی چاہیے، عرب ٹی وی نے بھی بھارتی بربریت کا پول کھول دیا۔ سوپور میں معصوم بچے کے سامنے شہید ہونے والے نانا کی نمازِ جنازہ ادا کر دی گئی۔ لوگوں کی بڑی تعداد نے جنازے میں شرکت کی۔ ننھے بچے اور رشتے داروں نے بھی سچ بتا دیا۔ گزشتہ روز سوپور میں المناک واقعہ پیش آیا جب بھارتی فوج نے تین سالہ نواسے کے سامنے نانا کو گولی مار کر شہید کر دیا۔ تین سالہ ایاد لاش کے قریب بیٹھا بے بسی سے درندوں کی سفاکیت دیکھتا رہا۔ تصویر سامنے آنے پر ہر آنکھ اشکبارہوگئی، سوشل میڈیا پر بھارتی مظالم کی لوگوں نے بھرپور انداز میں مذمت کی۔ ترجمان جنرل سیکرٹری اقوام متحدہ نے کہا ہے سوپور واقعے کو قریب سے دیکھ رہے ہیں، قتل میں جو بھی ملوث ہے اسے سزا ملنی چاہیے۔

July 2, 2020

بھارت میں زور دار دھماکے سے ہلاکتیں، متعدد زخمی

چنائی:ویب ڈیسک :: بھارتی ریاست تامل ناڈو کے بجلی گھر میں بوائلر پھٹنے سے دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں 6 افراد ہلاک ہوگئے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق تامل ناڈو کے تھرمل بجلی گھر  (این ایل سی پلانٹ) میں بدھ کی صبح اچانک زور دار دھماکا ہوا جس کے بعد دھوئیں کے گہرے بادل چھا گئے۔

دھماکے کے فوری بعد پولیس اور ریسکیو ادارے جائے وقوعہ پہنچے اور امدادی کام شروع کیے۔

بوائلر پھٹنے کا دھماکا اس قدر شدید تھا کہ دور دور تک اس کی آواز سنائی دی اور دھوئیں کے بادل بھی کئی کلومیٹر دور سے نظر آئے۔

پولیس آفیسر شری ابھی نو نے میڈیا کو بتایا کہ دھماکے کے نتیجے میں 6 افراد ہلاک جبکہ 17 زخمی ہوئے، تمام متاثرہ افراد کو اسپتال منتقل کردیا گیا۔این ڈی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق دو ماہ کے دوران بوائلر پھٹنے کا یہ دوسرا واقعہ ہے، بجلی گھر کی انتظامیہ نے تسلسل کے ساتھ پیش آنے والے واقعات کے بعد مشینوں کی مرمت اور تحقیقات کا حکم جاری کردیا۔

بھارت کے وزیرداخلہ امیت شاہ نے واقعے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’مرکزی حکومت مقامی انتظامیہ کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرے گی، دھماکے میں مرنے والوں کے اہل خانہ سے تعزیت کرتا ہوں‘۔

تامل ناڈو کے وزیر اعلیٰ نے دھماکے میں ہلاک ہونے والے افراد کے لواحقین کو فی کس تین لاکھ اور زخمیوں کو تین لاکھ جبکہ معمولی زخمی ہونے والوں کو پچاس پچاس ہزار روپے امداد دینے کا اعلان کیا۔

 

July 1, 2020

ورلڈ بینک نے پاکستان کیلیے 50 کروڑ ڈالر قرض منظور کرلیا

اسلام آباد / کراچی: جدت ویب ڈیسک :ورلڈ بینک نے پاکستان کے لیے 50 کروڑ ڈالر کے قرض کی منظوری دیدی۔ عالمی ادارے کے پاکستان میں واقع دفتر سے جاری کردہ ہینڈ آٹ کے مطابق ورلڈ بینک کے بو رڈ آف ایگزیکٹیو ڈائریکٹرز نے رائز ( RISE) ) پروگرام کے تحت مالیاتی انتظام کاری کے استحکام، شفافیت کے فروغ اور نجے شعبے کی نمو کے لیے 50 کروڑ ڈالر کا قرض منظور کیا ہے۔ قرض کی فراہمی کو لو کاربن انرجی کے حصول کے لیے شعبہ توانائی میں بنیادی اصلاحات سے بھی مشروط کیا گیا ہے۔ ورلڈ بینک کے مطابق کووڈ 19 کے اثرات سے بحالی کے لیے مالیاتی لچک پیدا کرنے کے ضمن میں یہ اصلاحات بے حد اہم ہیں۔ ورلڈ بینک کی جانب سے اس قرض کی منظوری کے بعد پاکستان کو جون میں ملنے والے، منظور ہونے والے قرض کا حجم 3.53 ارب ڈالر ہوگیا ہے۔ گذشتہ روز اسٹیٹ بینک کو چائنا ڈیولپمنٹ بینک سے ایک ارب ڈالر اور بینک آف چائنا سے 30کروڑ ڈالر بھی موصول ہوگئے۔