December 13, 2018

بھوت سے شادی کرنے والی امینڈا نے شوہر سے علیحدگی کرلی،جانیے کیوں ؟

ڈبلن:جدت ویب ڈیسک ::کیا کبھی آپ نے سنا کہ عورت کی شادی کسی بھوت سے ہوئی ہو،اب یہ کہانی پڑھیے۔۔۔۔۔۔ تین سو سال قبل مرنے والے بحری قزاق کے بھوت سے شادی کرنے والی آئرلینڈ کی خاتون نے دعویٰ کیا ہے کہ اُن کی اپنے شوہر سے راہیں جدا ہوگئیں اور طلاق کا فیصلہ انہوں نے اپنی خوشی سے کیا۔تفصیلات کے مطابق آئرلینڈ سے تعلق رکھنے والی 45 سالہ امینڈا سپیرولارج نامی خاتون نے دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے مردوں کی بے وفائی کو دیکھتے ہوئے مجبورا ایک بھوت سے شادی کی۔
خاتون کا دعویٰ ہے کہ جس سے انہوں نے شادی کی یہ دراصل 300 سال قبل مرنے والےبحری قزاق کی روح تھی مگر اس شادی سے بھی امینڈا خوش نہ رہ سکیں اور انہوں نے طلاق لے لی۔
امریکی نشریاتی ویب سائٹ سے گفتگو کرتے ہوئے آئرشی خاتون کا کہنا تھا کہ ’ہیٹی سے تعلق رکھنے والا قزاق 17ویں صدی میں اپنے جرائم کی وجہ سے بہت مشہور تھا، اُسے سنگین جرائم کی پاداش میں سزائے موت دی گئی تھی مگر وہ بھوت بن کر گھومتا رہا اور اسی دوران ہماری ملاقات بھی ہوئی‘۔
خاتون کی شادی کو قانونی شکل دینے کے لیے پادری کی خدمات بھی حاصل کی گئیں جبکہ رسم کے لیے کشتی کو درمیان سمندر میں آئرلینڈ کے سمندری مقام پانیوں لے جایا گیا تھا جہاں لڑکی کے گھر والے اور پادری موجود تھے۔امینڈا نے علیحدگی کے حوالے سے نیا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ ’میرے شوہر نے تنبیہ کی کہ میں آئندہ پراسرار چیزوں یا مخلوق کے ساتھ چھیڑ چھاٹ نہ کروں‘۔
خاتون نے دیگر لوگوں کو تنبیہ کی کہ آپ بھی پراسرار چیزوں کے ساتھ الجھنے سے گریز کریں بصورت دیگر میری طرح کے مسائل سے دوچار ہوجائیں گے۔ امینڈا نے یہ بھی اعلان کیا کہ وہ آنے والے وقتوں میں اپنی شادی اور تعلقات کے حوالے سے سب کو آگاہی دیں گی۔امریکی میڈیا رپورٹ کے مطابق امینڈا کی گزشتہ برس شادی ہوئی تھی جس کے بعد انہوں نے اعلان کیا تھا کہ ’میں بہت خوش ہوں کیونکہ بھوت میری روح کا ساتھی اور کامل شریک حیات ہے‘۔خاتون کا اپنے مبینہ خاوند کے بارے میں دعویٰ تھا کہ وہ ’پائریٹس آف کیریبین‘ کے کپٹن جیک اسپیرو کی طرح نظر آتا ہے، اُس کی رنگت اور بالوں کا رنگ بالکل سیاہ ہے‘۔

Image result for ireland amenda 45 years wedding ghoshat

Image result for ireland amenda 45 years wedding ghoshat

Image result for ireland amenda 45 years wedding ghoshat

Related image

Image result for ireland amenda 45 years wedding ghoshat

December 12, 2018

ہر وقت 13کلو گرام سونا پہن کر گھومنے والا، تاجرسوشل میڈیا پر وائرل

ہوچی من سٹی: جدت ویب ڈسیک :: ویت نام کا ایک تاجر ان دنوں سوشل میڈیا پر غیر معمولی طور پر مقبول ہے جو گھر سے سونا پہنے بغیر باہر نہیں نکلتا لیکن ٹھہریئے اس کے پہنے ہوئے سونے کی مقدار چند گرام نہیں بلکہ 13 کلو گرام ہے جس کی حفاظت کے لیے 5 باڈی گارڈز ہمہ وقت اس کے ساتھ ہوتے ہیں۔پانچ سال قبل تاجر نے زیورات پہننے شروع کیے اور ٹران کے بقول اس کی قسمت جاگنے لگی جس کے بعد اس نے مزید سونا پہننا شروع کردیا۔ اگلے مرحلے میں وہ سونے کی ٹوپی اور قمیص کا آرڈر دے چکا ہے۔
اگرچہ پانچ کلو ہار سے تاجر کی گردن پر بوجھ پڑتا ہے اور ڈاکٹر اس سے منع بھی کرچکے ہیں لیکن ٹران اب بھی اسے گردن میں پہنتا ہے۔ ٹران ایک جانب تو پیٹرول کمپنی کا مالک ہے تو دوسری جانب وہ ڈانس کلب سے بھی رقم کماتا ہے۔36 سالہ ٹران نوک فوب کی ویڈیو یوٹیوب پر بھی دیکھی جاسکتی ہے اور لاکھوں لوگ اسے دیکھ چکے ہیں۔ اس کے بعد خود ٹران نے بھی سونا پہنی ہوئی اپنی تصاویر بھی پوسٹ کیں یہاں تک کہ اس کی شہرت چین اور تھائی لینڈ تک پہنچ گئی۔ بعض لوگوں نے اتنے بڑی مقدار میں سونے پر اپنے شکوک کا اظہار کیا ہے جب کہ بعض کا خیال ہے کہ یہ سونا اصلی ہے کیوں کہ ویت نامی سونا پہننے کو خوش بختی کی علامت سمجھتے ہیں۔
ٹران کے زیورات میں شامل خاص موٹی زنجیر سے بندھا ایک پینڈنٹ قابل دید ہے جس کا وزن 5 کلوگرام ہے۔ دونوں ہاتھوں میں سونے کے کڑوں کا وزن 5 کلوگرام ہے جبکہ 500 گرام کی چار انگوٹھیاں بھی ہیں ساتھ ہی ٹران کمر کے گرد ایک کلوگرام کا پٹا بھی کبھی کبھار پہن لیتا ہے۔

Related image

December 12, 2018

فضائی حالات جانچنے والا،وائجر2 نظامِ شمسی سے باہرنکل گیا

جدت ویب ڈسیک ::آج سے 41 سال قبل قریبی سیاروں کے فضائی حالات جانچنے کے لیے بھیجا جانے والے خلائی جہاز ہمارے نظامِ شمسی کی سرحد سے باہر نکل چکا ہے ۔
تفصیلات کے مطابق واشنگٹن میں منعقدہ امریکن جیوفیزیکل یونین (اے جی یو) کی کانفرنس میں وائجر 2 کے نظام شمسی سے باہر نکلنے کا اعلان کیا گیا ، اس مشن کی دیکھ بھال پر متعین چیف سائنسداں پروفیسر ایڈورڈ سٹون نے اس کی تصدیق کی ہے۔ا ن کا کہنا تھا کہ وائجر ٹو نامی خلائی جہاز جسے 1977 میں خلا میں روانہ کیا گیا تھا، انسان کی تخلیق کردہ وہ دوسری چیز بن گیا ہے جو نظام شمسی کی حد سے باہر نکل گئی ہے۔ اس سے قبل اسی خلائی جہاز کاجڑواں ’وائجر ون ‘ وائجر ون اپنی تیز رفتاری کے سبب ‘ستاروں کے درمیان خلا میں’ وائجر ٹو کے مقابلے میں چھ سال پہلے پہنچ گیا۔
وائجر ون پہلے نظام شمسی کی حد سے نکل چکا ہے تاہم امریکی خلائی ایجنسی کا کہنا ہے کہ وائجر ٹو میں ایک ایسا آلہ نصب ہے جو نظام شمسی سے نکلنے اور کہکشاؤں کے درمیان جانے کے سفرکا مشاہدہ پہلی بار بھیجے گا۔
یہ خلائی جہاز ابھی زمین سے 18 ارب کلو میٹرکے فاصلے پر ہے اور یہ تقریبا 54 ہزار کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے بڑھ رہا ہے۔ وائجر ون اس سے آگے ہے اور اس سے تیز رفتار ہے۔ یہ ابھی 22 ارب کلومیٹر کے فاصلے پر ہے اور 61 ہزار کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے بڑھ رہا ہے۔
انھوں نے کہا کہ دونوں تحقیقاتی خلائی جہاز اب ‘ستاروں کےدرمیان ہیں’ اور وائجر ٹو نظام شمسی کے دائرے سے پانچ نومبر سنہ 2018 کو نکل گیا۔ اس دن سورج سے نکلنے والی شعاع کے ذرات جس کا خلائی جہاز وائجر ٹو سراغ رکھتا تھا اچانک ماند پڑ گئے جس کا مطلب یہ تھا کہ وہ ‘ہیلیو پاز’ عبور کر چکا ہے۔

Image result for voyager 2

Image result for voyager 2

Image result for voyager 2

November 5, 2018

گوادر کے لوگ آج بھی اپنے آباؤ اجداد سے سیکھے ہوئے طریقے سےکشتی سازی میں مصروف

گوادر: جدت ویب ڈسیک ::دنیا بھر میں جہاں کشتی سازی ایک جدید صنعت کا رخ اختیار کرچکی وہیں گوادر کے کشتی ساز آج بھی اپنے آباؤ اجداد سے سیکھے ہوئے طریقے پر کشتی سازی میں مصروف ہیں۔
گوادر میں موجود کشتی سازی کی صنعت آج بھی جدید ٹیکنالوجی سے دوراور مشکلات کا شکارہے ، ایک بڑی کشتی کی تعمیر میں سال بھرکا وقت صرف ہوتا ہے۔ کشتی کی تعمیر میں عموماً پارٹیکا ، بلاو ٔاور برما ٹیک کی لکڑی کا استعمال کیاجاتا ہے۔ سمندر کی موجوں کامقابلہ کرتی کشتیاں ہنرمندوں کی مہارت اورثقافت کی عکاسی کرتی نظر آتی ہیں لیکن ان کے پیچھے ان کشتیوں کو بنانے والوں کی غربت کی داستاں چھپی ہوئی ہے۔
سارا دن سخت گرمی میں محنت کرنے والا ایک ماہر کاریگر بمشکل اپنی محنت کے عوض بارہ سے تیرہ سو روپے تک حاصل کرپاتا ہے۔ مقامی ہنر مند یہ کشتیاں اپنے آباؤ اجداد سے سیکھے ہوئے طریقے کے مطابق بناتے چلے آرہے ہیں اور حکومتی سرپرستی نہ ہونے کے سبب آج بھی قدیم ذرائع حرفت پر قناعت کرنے پر مجبور ہیں۔
عبد الصمد نامی کشتی ساز نے اے آروائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ یہ ایک وقت اور محنت طلب کام ہے ، اس میں کاریگر کو شدید جسمانی مشقت انجام دینا ہوتی ہے۔ ایک کشتی کی سیٹنگ میں ہی صرف تین سے چار مہینے صرف ہوتے ہیں۔کشتی سازی کے لیے لکڑی کے بڑے ٹکڑوں کو تختوں کی شکل میں ڈھالا جاتا ہے اس کے بعد انہیں انتہائی مشقت سے چھیل کر ہموار اور پالش کے لائق بنایا جاتا ہے ۔ جس کے بعد ان تختوں کو کشتی کی شکل میں جوڑنے کا مرحلہ آتا ہے جو بذاتِ خود ایک مشقت طلب کام ہے۔ ان سارے مراحل سے گزر کر ایک کشتی پانی کی لہروں کا سینہ چیر کر مچھیروں کا رزق تلاش کرنے کے قابل ہوتی ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ جب ایک بار کسی کشتی کو بنانے کے لیے لکڑیاں تیار کرلی جاتی ہیں تو پھر اسے بنانے کا عمل شروع ہوتا ہے جو کہ کشتی کے سائز پر منحصر ہوتا ہے۔ چھوٹی کشتی کی تیاری میں مجموعی طور پر پانچ سے چھ ماہ کا وقت درکار ہوتا ہے تو بڑی کشتی کی تعمیر میں کم از کم ایک سال کا عرصہ لگتا ہے۔

Related image

Image result for wood bought making in gwadar

Related image

November 3, 2018

ملتان میٹرو کرپشن کیس، چینی انجینئرز نے راز اگل دیئے،پاکستان میں مزید بڑی گرفتاریاں متوقع

جدت ویب ڈسیک ::ملتان میٹرو کرپشن کیس، چینی انجینئرز نے راز اگل دیے، کک بیکس لینے کا اعتراف کرنے پر گرفتار کر لیا گیا، چینی حکومت نے پاکستان سے رابطہ کر لیا، ملزمان تک رسائی دے دی۔ تفصیلات کے مطابق ملتان میٹرو بس کرپشن کیس میں بڑی پیش رفت ہوئی ہے۔ ملتان میٹرو بس منصوبہ تعمیر کرنے والی چینی کمپنی کے 2 انجینئرز نے راز اگل دیے ہیں۔
ملتان میٹرو بس منصوبہ تعمیر کرنے والی چینی کمپنی کے 2 انجینئرز نے کک بیکس حاصل کرنے اک اعتراف کر لیا ہے۔ اعتراف کیے جانے پر چینی حکومت نے چینی کمپنی کے دونوں انجنیئرز کو گرفتار کر لیا ہے۔ چینی حکومت نے چینی انجینئرز کی گرفتاری کے بعد اس حوالے سے حکومت پاکستان سے رابطہ بھی کیا ہے۔ چینی حکومت نے ملتان میٹرو بس کرپشن کیس کی تحقیقات کے سلسلے میں گرفتار چینی انجینئرز تک پاکستان کی حکومت کو رسائی دے دی ہے۔
چینی انجینئرز سے پوچھ گچھ کیے جانے کے بعد پاکستان میں مزید بڑی گرفتاریاں متوقع ہیں۔ ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں مسلم لیگ ن کی مشکلات میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے۔ خاص کر سابق وزیراعلی پنجاب اور قومی اسمبلی کے موجودہ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کے گرد گھیرا مزید تنگ ہو سکتا ہے۔ واضح رہے کہ سابق وزیراعلی پنجاب شہباز ان دنوں نیب کی حراست میں ہیں۔
حکومت پاکستان اب چین میں گرفتار چینی انجینئرز سے پوچھ گچھ کر سکے گی۔ اس سلسلے میں وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہزاد اکبر فوری چین روانہ ہو گئے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہزاد اکبر اپنی ٹیم کے ہمراہ چین کیلئے روانہ ہوئے ہیں۔ معاون خصوصی شہزاد اکبر کے ساتھ ڈی جی نیب عرفان منگی بھی چین گئے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہزاد اکبر اور ان کی ٹیم چین میں چینی انجینئرز سے تفصیلی پوچھ گچھ کرے گی۔

November 3, 2018

طلاق کا جشن۔۔۔۔۔۔۔۔ پورے ملک میں ہلچل،جانیے

اسلام آباد( جدت ویب مانیٹرنگ ڈیسک)طلاق کو اللہ نے بہت ہی ناپسندیدہ عمل کہا ہے ، لاہور کے نجی ہوٹل میں دو سہیلیوں نےطلاق کا جشن مناکر غم غلط کیا۔تفصیلات کے مطابق ماہم جو ایک ٹیلی کام انجینئر ہے جسے اس کے شوہر نے طلاق دے دی تھی کی سہیلی جویریہ جو کہ نفیسات کی طالبہ ہے نے اس کے غم کو خوشی میں بدلنے کاانوکھاطریقہ ڈھونڈ نکالا جس سے اس کے چہرے پر مسکراہٹ واپس آگئی۔ ماہم کی طلاق اور اس کے غم میں مبتلا ہونے پر جویریہ کو اس کی اداسی نے پریشان کر دیا تھا جس پر جویریہ نے ماہم کو لاہور کے ایک نجی ہوٹل میں مدعو کیا اور اس کے سامنے ایک چاکلیٹ کیک رکھ دیا جس پر ’’ہیپی ڈائیوورس‘‘ لکھا تھا۔کیک کاٹنے کے بعد دونوں نے طلاق کا جشن منایا جس کی تصاویر سوشل میـڈیا پر وائرل ہو گئیں ۔ماہم کا کہنا ہے کہ اسے اس بات کی قطعی خبر نہیں تھی اور جویریہ نے یہ سب میری چہرے پہ خوشی لانے کے لیے کیا۔لوگوں نے جہاں اداسی بھگانے کے اس طریقے کو سراہا وہاں کئی لوگوں نے دونوں خواتین کے اس طریقے کی ملامت بھی کی ہے۔

Related image

Related image

Related image

October 27, 2018

ایسا میک اپ تیار ہوگیا,جوخواتین کو تیزاب گردی کے حملے سے بچائے گا،جانیے تفصیل

لندن جدت ویب ڈسیک ::: دنیا بھر میں بے رحم مردوں کے ہاتھوں خواتین تیزاب گردی کا شکار ہورہی ہیں اور اب یہ واقعات مغرب میں بھی ہونے لگے ہیں، اس ضمن میں ایک خاتون ماہر نے ایسا میک اپ تیار کیا ہے جو تیزاب پھینکے جانے پر خواتین کے چہرے کو جھلسنے سے بچاسکتا ہے۔
برطانیہ میں بھی خواتین پر تیزاب پھینکنے کے واقعات میں اضافہ ہورہا ہے جس کے بعد ایک مقامی ماہر ڈاکٹر الماس احمد نے ایسا میک اپ تیار کیا ہے جو خواتین کو اس ہولناک حملے سے محفوظ رکھ سکتا ہے۔
واضح رہے کہ لندن میں تیزاب گردی کے واقعات تیزی سے بڑھے ہیں اور 2016ء میں صرف لندن میں 450 افراد پر تیزاب پھینکا گیا جس کی وجہ مختلف جرائم پیشہ گروہوں کی باہمی چپقلش بتائی جاتی ہے، یہ شرح 2014ء کے واقعات کے مقابلے میں دگنا ہوگئی ہے۔
32 سالہ الماس احمد نے کہا کہ برطانوی ماڈل کیٹی پائپر پر تیزابی حملے کے بعد ایسے میک اپ کی اہمیت اور بڑھ گئی ہے۔ انہوں نے ’ اکیریئر‘ نامی مرکب بنایا ہے جو تیزاب کے ساتھ تعامل نہیں کرتا۔ الماس پرامید ہیں کہ یہ مرکب بہت آسانی کے ساتھ روایتی میک اپ، کریموں اور دھوپ سے بچانے والی لوشن میں ملایا جاسکتا ہے۔
الماس نے بتایا کہ وہ گزشتہ 10 برس سے ایسے میک اپ پر کام کررہی ہیں جو خواتین پر اچانک ہونے والے تیزابی حملے سے بچاسکے۔ پہلے مرحلے میں انہوں نے اسے ایک فاؤنڈیشن کریم میں ملایا اس کے بعد وہ اس مرکب سے سن اسکرین اور موئسچرائزر بنائیں گی۔ڈاکٹر الماس احمد کے مطابق ان کا کیمیکل 400 درجے سینٹی گریڈ تک حرارت برداشت کرسکتا ہے اور اس کی تیاری پر وہ اپنی جیب سے لاکھوں روپے خرچ کرچکی ہیں۔ انہیں امید ہے مجاز ادارے ان کی نئی ایجاد کو استعمال کرنے کی اجازت دے دیں گے۔

Image result for london dr almas makeup

Image result for london dr almas makeup

Image result for london dr almas makeup

ڈاکٹر الماس احمد نے تیزاب کے اثر سے بچانے والا میک اپ تیار کیا ہے (فوٹو: ڈیلی میل)