January 21, 2020

نئے آنے والے اداکار وں کی حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت ہے’ طلعت حسین

لاہور جدت ویب ڈیسک :پاکستان ٹی وی کے سینئر اداکار طلعت حسین نے کہا ہے کہ میرے دور کے تمام فنکاروں کی ایک بات مشترک ہے کہ ہم سب ہمیشہ سیکھنے کی جستجو میں رہتے تھے اور آج بھی ایسا ہی ہے ،نئے آنے والے فنکاراپنے کام کی وجہ سے اپنا مقام بنا رہے ہیں اور ان کی حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت ہے ۔ ایک انٹر ویو میں طلعت حسین نے کہا کہ قاضی واجد، جمشید انصاری، قوی خان، منور سعید، انور مقصود، بشریٰ انصاری، شکیل اور دیگر بہت سے سینئر اداکار وں نے اپنی محنت کی بدولت نام کمایا اور جب بھی شوبز کی تاریخ لکھی جائے گی ان کے نام سب سے اوپر ہوں گے ۔ ان فنکاروں نے نام بنانے کے لئے برسوں محنت کی ۔ میرے دور کے سب فنکاروں میں ایک بات مشترک ہے کہ ہم تمام لوگ ہمیشہ سیکھنے کی جستجو میں رہتے تھے اور جو آج زندہ ہیں وہ اسی پر گامزن ہیں ۔انہوں نے کہا کہ میں بنیادی طو رپر ریڈیو کا فنکار ہوں جس کے بعد میری انٹری ٹی وی پر ہوئی اور ٹی وی ہی میری وجہ شہرت بنا ۔انہوں نے کہا کہ نئے آنے والے اداکار اچھا کام کر رہے ہیں او ران کی مزید حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت ہے ۔

January 21, 2020

صبا قمر میری پسندیدہ اداکارہ ہیں اور میں ان کی شخصیت اور فن سے بڑی متاثر ہوں ‘ مومنہ اقبال

لاہور جدت ویب ڈیسک :خوبرو اداکارہ مومنہ اقبال نے کہا ہے کہ صبا قمر میری پسندیدہ اداکارہ ہیں اور میں ان کی شخصیت اور فن سے بڑی متاثر ہوں ،صرف ووٹ ڈالنے کی حد تک سیاست سے دلچسپی ہے ، جس جماعت کو ووٹ دیا تھا اس نے سخت مایوس کیا ہے ۔ ایک انٹر ویو میں مومنہ اقبال نے کہا کہ اداکارہ صبا قمر کی اداکاری کی مداح ہوں اور ان کے پراجیکٹ دیکھ کر سیکھنے کی کوشش کرتی ہوں۔انہوں نے کہا کہ اس وقت میری تمام تر توجہ اپنے کیرئیر پرمرکوز ہے اور فی الوقت شادی کا کوئی ارادہ نہیں ۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ انتخابات میں عمران خان کی جماعت کو ووٹ ڈالا تھا لیکن آج مجھے سخت مایوسی ہو رہی ہے کیونکہ انہوں نے وعدہ کیا تھاکہ جلد تبدیلی نظر آئے گی لیکن لیکن ایسا کچھ نہیں ہوسکا ۔ سیاست میں صرف ووٹ ڈالنے کے حد تک دلچسپی ہے اور سیاست میں آنے کا کوئی ارادہ نہیں ۔

January 21, 2020

”عہد وفا ”کیلئے سرائیکی اداکار چاہیے تھا، میں صحیح موقع پر صحیح جگہ پہنچ گیا’ عدنان صمد خان

لاہور جدت ویب ڈیسک : بلاک بسٹر ڈرامہ سیریل ”عہد وفا ”کے معروف کردار عدنان صمد خان (گلزار )نے کہا ہے کہ طارق بن زیاد کی طرح سب کشتیاں جلا کر اداکاری کے میدان میں آیا ہوں،اداکاری کی تعلیم نیشنل اکیڈمی آف پرفارمنگ آرٹ سے حاصل کی اور میں اپنے خاندان میں پہلا شخص ہوں جو اس شعبے میں آیا ہے ۔ ایک انٹر ویو میں انہوں نے کہا کہ انٹرمیڈیٹ کے امتحانات پاس کرنے کے بعد والد محترم کو کہا کہ میں نے اداکاری کرنی ہے، شروع میں تو انہوں نے منع کیا مگر جب دیکھا کہ میں بضد ہوں تو انہوں نے مجھے اجازت دیدی ۔عدنان صمد نے بتایا کہ میرا تعلق ڈیرہ غازی خان کی تحصیل تونسہ شریف کی ایک نواحی بستی گاڈھی سے ہے، یہ دراصل ایک بلوچ قبیلہ ہے، خاندان میں کسی کا دور دور تک اداکاری سے کوئی تعلق نہیں ہے۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ڈرامہ سیریل ” عہد وفا ” کے لئے سرائیکی اداکار چاہیے تھا، میں بس صحیح موقع پر صحیح جگہ پہنچ گیا،ڈرامہ کی شوٹنگ کے دوران احد رضا میر نے میری بہت مدد کی، ہدایتکار سیف حسن نے بھی بہت اچھے طریقے سے سب سمجھایا۔انہوں نے کہا کہ طبیعتاًبہت سست انسان ہوں مگر آگے بڑھنے کا بہت شوقین بھی، ایک بار 16 گھنٹے سویا رہا، بھائی نے جگا کر چیک کیا کہ زندہ بھی ہے یا اگلے جہان چلا گیا۔عدنان صمد نے کہا کہ اب لوگ پہچانتے ہیں، ساتھ تصویریں کھنچواتے ہیں تو بہت اچھا لگتا ہے۔

January 20, 2020

مانی کی اپنی بیوی کی تعریفیں۔۔’پاکستان میں شاید ہی کوئی ہو جس نے دو بچوں کے بعد یہ پوزیشن حاصل کی‘

جدت ویب ڈیسک ::حرا مانی کا شمار پاکستان کی کامیاب اداکاراؤں میں کیا جاتا ہے جنہیں اپنے ڈرامے ’دو بول‘ کی وجہ سے پاکستان بھر میں خوب شہرت ملی۔
اداکارہ گزشتہ سال اے آر وائے کے ڈرامے ’دو بول‘ میں جلوہ گر ہوئیں جس میں ان کے ہمراہ عفان وحید نے مرکزی کردار نبھایا۔
اس ڈرامے میں حرا مانی کی اداکاری کو بے حد سراہا گیا جبکہ یہ گزشتہ سال کا کامیاب ڈراما بھی ثابت ہوا۔
اور اب حرا مانی کو اسی ڈرامے کے لیے پاکستان انٹرنیشنل اسکرین ایوارڈز (پیسا) میں بہترین اداکارہ کے ایوارڈ کے لیے نامزد کیا گیا ہے۔
جہاں اداکارہ کو ان کے ساتھی اور مداح اس نامزدگی کے لیے مبارکباد دے رہے ہیں وہیں حرا کے شوہر اداکار سلمان شیخ عرف مانی نے بھی ان کی تعریفوں کے پل باندھ دیے۔انسٹاگرام پر مانی نے ایوارڈ سے لی گئی ایک تصویر شیئر کی جس پر انہوں نے لکھا کہ ’پاکستان میں شاید ہی کوئی ہو جس نے ایک میزبان کے طور پر شروعات کی، کامیڈی کی، شوبز میں آنے سے پہلے شادی کی، دو بچوں کے بعد سنجیدہ اداکاری میں ٹاپ پوزیشن حاصل کی‘۔
انہوں نے مزید لکھا کہ ’بہت کم وقت میں تم نے بہت کچھ حاصل کرلیا، تم ایک بہترین اداکارہ ہو، اور سب سے اچھی بات یہ ہے کہ ایکشن سے پہلے اور کٹ کے بعد تم دل کی اچھی، عام سی گھریلو سی حرا ہو، ایسے ہی سر جھکا کر چلتی رہو‘۔مانی کی اس پوسٹ پر حرا نے کمنٹ کرتے ہوئے لکھا کہ وہ ان سے محبت کرتی ہیں۔
حرا مانی نے خود بھی ایوارڈ کی یہ تصویر شیئر کی جس پر انہوں نے مداحوں کا شکریہ ادا کیا اور لکھا کہ ایوارڈ ملے نہ ملے ان کے لیے یہ نامزدگی ہی بہت بڑی بات ہے۔

Image result for hira mani husband

Image result for hira mani dobol nomination

January 20, 2020

دھمکیوں کے بعد سرمد کھوسٹ کا ’زندگی تماشا‘ ریلیز نہ کرنے پر غور

جدت ویب ڈیسک  ::۔۔۔فلم ساز سرمد کھوسٹ نے نامعلوم افراد کی جانب سے آن لائن دھمکیاں ملنے کے بعد اپنی آنے والی فلم ’زندگی تماشا‘ کو ریلیز نہ کرنے پر غور شروع کردیا۔
سرمد کھوسٹ نے پہلے ہی بتایا تھا کہ ان پر فلم کو ریلیز نہ کرنے کے لیے دباؤ ڈالا جا رہا ہے اور انہیں جہاں دھمکیاں دی جا رہی ہیں، وہیں ان کے خلاف پولیس و عدالتوں میں شکایتیں بھی درج کروائی جا رہی ہیں۔
سرمد کھوسٹ کی فلم ’زندگی تماشا‘ کا ٹریلر گزشتہ برس ریلیز کیا گیا تھا جب کہ مذکورہ فلم کو بیرون ممالک میں ہونے والے فلم فیسٹیول میں بھی پیش کیا گیا تھا جہاں اس فلم کو ایوارڈز بھی دیے گئے۔
تاہم چند ہفتے قبل سرمد کھوسٹ نے اچانک یوٹیوب سے فلم کا ٹریلر ہٹاتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں دھمکیاں مل رہی ہیں اس لیے ٹریلر کو ہٹایا جا رہا ہے تاہم فلم کو 24 جنوری 2020 کو ریلیز کیا جائے گا۔
تاہم بعد ازاں سرمد کھوسٹ نے خود کو دھمکیاں ملنے کا انکشاف کرتے ہوئے 17 جنوری کو صدر و وزیر اعظم کے نام کھلا خط لکھ کر ان سے مدد طلب کی تھی۔
فلم کی کہانی سماجی مسائل کے ارد گرد گھومتی ہے—اسکرین شاٹ
فلم ساز نے چیف جسٹس آف پاکستان سے بھی مدد کی اپیل کی تھی اور کہا تھا کہ ان کی فلم ’زندگی تماشا‘ میں کوئی قابل اعتراض مواد نہیں تاہم اس باوجود انہیں دھمکیاں دی جا رہی ہیں۔
دھمکیوں کے باوجود سرمد کھوسٹ نے ’زندگی تماشا‘ کو مقررہ وقت پر ریلیز کرنے کے عزم کا اعادہ بھی کیا تھا تاہم اب فلم ساز نے فلم کو ریلیز نہ کرنے پر غور شروع کردیا۔
سرمد کھوسٹ نے 19 جنوری کو ٹوئٹر اور انسٹاگرام پر پاکستانی عوام کے نام کھلا خط لکھتے ہوئے اس بات کا اشارہ دیا کہ ممکن ہے کہ وہ دھمکیوں کی وجہ سے فلم کو ریلیز نہ کر پائیں۔
فلم میں ایمان سلیمان نے اہم کردار ادا کیا ہے—اسکرین شاٹ
اپنے طویل خط میں سرمد کھوسٹ نے فلم کی کہانی پر بھی بات کی اور بتایا کہ فلم کی کہانی ایک اچھے مسلمان اور اسلام کی کہانی ہے، فلم میں ایک اچھے مولوی کو دکھایا گیا ہے۔
فلم ساز نے لکھا کہ فلم میں کسی بھی مذہبی فرقے کی بات نہیں کی گئی اور نہ ہی فلم کسی مذہب اور فرقے کے خلاف ہے، فلم سماج کی عکاسی کرتی ہے۔

Image result for zindgi tamasha

January 18, 2020

شوبز میں آنے سے پہلے گارمنٹس فیکٹری میں کام کرتا تھا ‘ ہمایوں سعید

لاہور جدت ویب ڈیسک :نامور اداکارہمایوں سعید نے کہا ہے کہ بچپن میں بالکل بھی شرارتی نہیں تھا ،میں ایک گارمنٹس فیکٹری میں بطور جنرل مینیجر ملازمت کرتا تھا لیکن فیکٹری کراچی سے لاہور منتقل ہونے کی وجہ سے شوبز میں آ گیا ۔ ایک انٹر ویو میں ہمایوں سعید نے کہا کہ اپنے پہلے ہی آڈیشن میں کامیاب ہو گیا اور مجھے ڈرامہ سیریل میں مرکزی دیا گیا ۔ پہلے دن شوٹ ہوا تو پروڈیوسر اور ہدایتکار کی توقعات کے مطابق مرکزی کردار نہیں کر سکا اور میرا کردار تبدیل کر دیا گیا لیکن میں نے وہ ڈرامہ چھوڑ دیا ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے ایک دوست کے ساتھ مل کر سنگل ڈرامہ بنایا جو بہت برا تھا لیکن جس پروڈیوسر نے مجھے پہلے ڈرامے میں مسترد کیا تھا انہوں نے کہا کہ جو ڈرامہ تم نے بنایا ہے وہ برا ہے لیکن تم بہتر ہومیرے پراجیکٹ میں کیا ہو گیا تھا ۔ اسی پروڈیوسر نے ڈرامہ سیریل ” یہ جہاں ” میں کاسٹ کیا ، اس کے بعد مجھے ایک کمرشل بھی ملا او راس کے بعد میں نے پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا ۔ انہوں نے کہا کہ حالات اور شوق مجھے شوبز میں لے کر آئے ،آغاز کا دور مشکل تھا لیکن میں نے محنت کی اور اللہ تعالیٰ نے مجھے ثمر دیا ۔