November 16, 2020

کیا آپ کے ہاتھوں پیروں میں بھی سردیوں میں پسینہ آتا ہے؟ جانیں اس مسئلے کو کیسے روکا جاسکتا ہے؟

ویب ڈیسک ::انسان کے جسم سے پسینے کا اخراج ایک قدرتی عمل ہے اس طرح جسم کا درجہ حرارت نارمل رہتا ہے لیکن دیکھا گیا ہے کہ موسم سرما جیسے خشک موسم میں جب ہاتھوں اور پاؤں کی نمی کو برقرار رکھنے کے لئے موئسچرائزر اور کولڈ کریموں کا استعمال کیا جارہا ہو وہیں بعض افراد اپنے ہاتھوں اور پیروں سے پسینے کے زیادہ اخراج کے سبب پریشان نظر آتے ہیں۔
یا یوں کہہ لیں کہ موسم کی مناسبت کے بغیر بھی ان کے جسم سے پسینہ عام لوگوں سے زیادہ نکلتا ہے دراصل ایسے لوگوں میں عام لوگوں کے مقابلے جسم میں پسینہ خارج کرنے والے غدود زیادہ متحرک ہوجاتے ہیں۔عموماً ان افراد کو اس مسئلے کا سامنا جسم کے ایک یا دو حصوں میں ہوتا ہے جیسے بغلیں، ہتھیلی یا پیر اور ان حصوں سے اگر پسینہ ضرورت سے زیادہ نکلے تو یہ ایک تشویشناک بات ہے۔
* گھریلو ٹوٹکوں سے علاج
آج کی جدید میڈیکل سائنس نے ہائپر ہائیڈروسس کا علاج بھی دریافت کرلیا ہے اور اس پریشانی میں مبتلا افراد علاج سے استفادہ حاصل کرسکتے ہیں۔ لیکن اس کے تدارک کے لئے کچھ گھریلو ٹوٹکے بھی ہیں، جن پر عمل کر کے وقتی طور پر اس مسئلے پر قابو پایا جاسکتا ہے یہ ٹوٹکے کیا ہیں آئیے آپ کو ان سے آگاہ کرتے ہیں۔
1- بے بی پاؤڈر
ہاتھوں اور پیروں پر پسینے کو آنے سے روکنے کیلئے سب سے آسان طریقہ یہ ہے کہ بچوں کے جسم پر لگائے جاے والے پاؤڈر کا استعمال کریں جسے عموماً بے بی پاؤڈر کہا جاتا ہے تاکہ یہ نمی کو جذب کرکے ہتھیلیوں اور تلوں کو خشک رکھ سکے۔
2- سیب کا سرکہ
پسینے کے اخراج کو روکنے کے لئے ایک اور مفید طریقہ اپنا سکتے ہیں وہ ہے سیب کا سرکہ۔ کیونکہ یہ جسم کے پی ایچ کے درجے کو برابر کر کے جلد کے مساموں سے اضافی پسینے کے اخراج کی روک تھام کرتا ہے۔
3- بیکنگ سوڈا
اگر تھوڑے سے گرم پانی میں دو سے تین چمچ بیکنگ سوڈا کو مکس کرکے اس میں 10 منٹ تک ہاتھوں اور پیروں کو ڈبو کر رکھیں تو روزانہ اس عمل کو کرنے سے پسینے کے مسائل سے بچا جاسکتا ہے۔
1- ہاتھوں پیروں سے زیادہ پسینے کا اخراج
ماہرین صحت ہاتھوں اور پیروں سے اضافی پسینہ نکلنے کی بیماری کو “ہائپر ہائیڈ روسس “کا نام دیتے ہیں اس میں جسم میں پسینہ خارج کرنے والے غدود زیادہ متحرک ہوجاتے ہیں۔ یاد رہے کہ زیادہ پسینے آنے کا عمل موروثی بھی ہوسکتا ہے نیز بہت زیادہ ذہنی دباؤ، ڈپریشن اور پینک اٹیک بھی اس کا سبب بن سکتے ہیں۔
2- ہائپر ہائیڈ روسس کن علامات کو ظاہر کرتا ہے؟
اگر آپ ہائپر ہائیڈروسس کے مسئلہ کا شکار ہیں تو اس پر سنجیدہ ہونے کی ضرورت ہے کیونکہ بہت زیادہ پسینے کا ظاہر ہونا یا اس کا اضافی
اخراج جسم میں کسی بیماری کی علامات بھی ہوسکتے ہیں جیسا کہ خون میں شوگر کی کمی، تھائی رائیڈ گلینڈز کا اضافی ہارمون پیدا کرنا، دل کا دہرہ، اعصابی نظام میں بدنظمی وغیرہ ان تمام مسائل سے بچنے کے لیے احتیاط اور فوری علاج دونوں ضروری ہوتے ہیں۔
یہاں یہ بات بھی اہم طلب ہے کہ اکثر ہمارے جسم میں آئیوڈین کی کمی کے باعث جسم سے پسینے کا زیادہ اخراج ہونے لگتا ہے۔ ضروری ہے کہ اپنے کھانوں میں آئیوڈین والی غذائیں شامل کریں جیسے انڈے، مچھلی، دودھ، دہی، چیز وغیرہ۔

November 16, 2020

گول مٹول نظر آنے والے پھل تربوز اور خربوزے کے بیجوں کے حیران کن فوائد

 

خربوزے کو قدیم زمانے میں جنت کا پھل بھی کہا جاتا تھا جو ہر سال اگست میں درختوں پر پک جاتے ہیں، اس پھل کی میٹھاس سے لطف اندوز ہونے کے لیے ہمیں اس کے بیج نکالنے پڑتے ہیں لیکن تربوز کے بیج کی طرح یہ بیج بھی بے کار نہیں بلکہ اپنے اندر خصوصی فوائد سموئے ہوئے ہیں، ان کا استعمال طب کی دنیا میں ہوتا ہے۔گول مٹول نظر آنے والے پھل تربوز اور خربوزے ناصرف کھانے میں ذائقے دار ہوتے ہیں بلکہ ان کے بیج بھی جادوئی فوائد کے حامل ہوتے ہیں جن کا دواؤں کے طور پر استعمال ہوتا ہے۔

خربوزے کے بیجوں کی خصوصیت

ماہرین کا کہنا ہے کہ خربوزے کے بیج میں مختلف قسم کے وٹامن موجود ہوتے ہیں جن میں بی 9، ب 6 اور پی پی جبکہ طاقتور اینٹی آکسیڈینٹس سی اور اے شامل ہیں جو انسان کے اعصابی نظام کے لیے مفید ہیں۔

خربوزے کا بیج بلڈ شوگر کو کم کرتا ہے

ماہرین کے مطابق خربوزے کے بیج بلڈ شوگر کو کم کرنے اور کم کثافت والے کولیسٹرول کو دور کرنے میں مدد کرتے ہیں، زنک کی اعلی مقدار کی وجہ سے خربوزے کے بیج خاص طور پر مردوں کے لیے فائدہ مند ہیں، زنک خربوزے کے بیجوں کو خوبصورتی کا حقیقی امرت بنا دیتا ہے۔

تربوز کا بیج انسانی طاقت کے لیے مفید

بیج کا خشک پاؤڈر صبح خالی پیٹ اور سونے سے پہلے لینے سے انسانی توانائی میں اضافہ ہوتا ہے اور اگر ایک چمچ شہد کے ساتھ اس کا استعمال کیا جائے تو زیادہ مفید رہے گا۔ اسی طرح اگر ایک گلاس دودھ میں ایک چمچ تربوزے کے بیج کا پاؤڈر ڈالا جائے تو پروسٹیٹ غدود کی بیماری دور ہوسکتی ہے۔

گردے کی پتھری کا مسئلہ

ایسے افراد جن کے گردے میں پتھری ہے ان کو چاہیے کہ وہ ایک کلو تربوز کا بیج 5 لیٹر پانی میں ڈال کر ابلالیں یہاں تک وہ پانی 3 لیٹر ہوجائے اس کے بعد پانی کو ٹھنڈا کرکے خاص مقدار میں پیئیں تو اس مسئلے سے چھٹکارہ ممکن ہے۔

کھانسی اور دیگر بیماری کے لیے فائدہ مند

جس طرح تربوز کا بیج مندرجہ بالا مسائل کو حل کرتا ہے اسی طرح کھانسی اور دیگر بیماریاں بھی اس سے دور ہوسکتی ہیں۔ بیج کے پاؤنڈر کو گرم پانی اور دودھ میں ملا کر استعمال کرنے سے فرق پڑے گا، کھانے سے پہلے ایک دن میں ایک ہی بار ایک چوتھائی کپ لینا ضروری ہے

November 12, 2020

کسی بھی قسم کا انفکیشن دونوں گردوں کو بیک وقت متاثر کرسکتا ہےپروفیسر ڈاکٹر احمد شعبان

ویب ڈیسک ::گردے اللہ کی بڑی نعمت ہیں انکا خیال  رکھیں نگردوں کے امراض کے نتیجے میں ہونے والی سوزش (سوجن) بعض اوقات اس قدر حد تک بڑھ سکتی ہے کہ جس کی وجہ سے گردہ ضائع ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

عام طور پر جب بیکٹیریا گردے میں داخل ہوتا ہے تو انسان مختلف بیماریوں کا شکار ہوجاتا ہے جس کی وجہ سے پیشاب میں جلن اور مثانے کی تکلیف شروع ہوجاتی ہے۔

عرب میڈیا رپورٹ نے سیدیتی شمارے میں شائع ہونے والے ایک مضمون کا ترجمہ کر کے اسے اپنی ویب سائٹ پر شائع کیا جس کے مطابق گردوں میں ہونے والا کسی بھی قسم کا انفکیشن دونوں گردوں کو بیک وقت متاثر کرسکتا ہے لہذا اسے معمولی نہ سمجھا جائے اور فوری طبیب سے رجوع کیا جائے۔

پروفیسر ڈاکٹر احمد شعبان نے عرب میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ گردے میں بیکٹیریا پیشاب کی نالی یا مثانے کے ذریعے گردوں میں داخل ہوکر انفکیشن پیدا کرتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ گردوں کو سب سے زیادہ متاثر کرنے والا بیکٹیریا کو ای کولی کے نام سے جانا جاتا ہے، یہ ایک عام قسم ہے۔

ڈاکٹر احمد شعبان نے بتایا کہ ’گردوں میں ہونے والے انفیکشن کی وجہ سے اُن پر ورم آجاتا ہے جس کی وجہ سے ناقابلِ برداشت درد محسوس ہوتا ہے، اگر ذیابیطس سے متاثرہ شخص کو گردے کی کوئی بھی بیماری ہو تو یہ اُس کے لیے بہت زیادہ خطرناک ثابت ہوسکتی ہے‘۔

انہوں نے بتایا کہ گردوں کی بیماری مردوں کے مقابلے میں خواتین کو ہونے کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔

گردے کی سوزش کی علامات

بخار ہونا

کمر یا پشت پر شدید درد

پیشاب میں جلن

بار بار پیشاب آنا

گھبراہٹ

مرض کی تشخیص

گردوں میں ہونے والے انفیکشن کا علاج اینٹی بائیوٹکس کے ذریعے پیشاب سے ٹیسٹ کیا جاتا ہے جس کی رپورٹ میں انفیکشن کا سبب اور بیکٹیریا کے بارے میں معلوم کیا جاتا ہے۔

November 11, 2020

ملٹی وٹامن اور منرل سپلیمنٹس ،صرف دل کا بہلاوا ہیں، تحقیق

 

میساچیوسٹس: امریکی ماہرین نے دریافت کیا ہے کہ ملٹی وٹامن اور معدنیات (منرلز) سے بھرپور سپلیمنٹس استعمال کرنے والے افراد کو صرف ایسا محسوس ہوتا ہے کہ انہیں ان سے فائدہ ہورہا ہے، ورنہ حقیقت میں ایسا کچھ نہیں ہوتا۔
ریسرچ جرنل ’’بی ایم جے اوپن‘‘ کی ویب سائٹ پر 9 نومبر کے روز شائع ہونے والی اس تحقیق میں اگرچہ ملٹی وٹامن اور منرل سپلیمنٹس استعمال کرنے والوں کو کوئی مشورہ تو نہیں دیا گیا ہے لیکن پیغام بہت واضح ہے: اگر آپ یہ مہنگے سپلیمنٹس نہیں بھی کھائیں گے تب بھی آپ کی صحت پر کوئی فرق نہیں پڑے گا!
بوسٹن، میساچیوسٹس میں ہارورڈ میڈیکل اسکول کے منیش پارانجپی کی قیادت میں 15 امریکی تحقیقی اداروں سے وابستہ ماہرین کی ایک بڑی ٹیم نے امریکیوں میں عمومی صحت سے متعلق کیے گئے ایک قومی سروے کا جائزہ لیا اور اس میں سے 21,603 ایسے بالغ امریکیوں کا انتخاب کیا جن میں سے نصف کا کہنا تھا کہ وہ ملٹی وٹامن اور معدنیات کے حامل سپلیمنٹس استعمال کرتے ہیں جبکہ باقی نصف ان سپلیمنٹس کا استعمال نہیں کرتے تھے۔
ان تمام افراد میں کم از کم 12 مہینوں کے دوران جسمانی بیماریوں اور نفسیاتی کیفیات کو بھی مدنظر رکھا گیا۔ اگرچہ ملٹی وٹامنز اور معدنیات استعمال کرنے والے 30 فیصد افراد کا کہنا تھا کہ یہ سپلیمنٹس استعمال کرنے پر انہیں بہتر محسوس ہوا، لیکن دوسری جانب انہیں پورے سال ویسی ہی تمام بیماریوں اور نفسیاتی مسائل کا سامنا رہا کہ جو اِن سپلیمنٹس کو استعمال نہ کرنے والے افراد کو درپیش رہے۔
جب یہ ڈیٹا مزید باریک بینی سے کھنگالا گیا تو معلوم ہوا کہ ملٹی وٹامن اور معدنیات والے سپلیمنٹس استعمال کرنے کا عملاً کوئی فائدہ نہیں، بلکہ انہیں کھانے والوں میں ’اچھی صحت‘ کا صرف ایک مصنوعی احساس پیدا ہوتا ہے جو دراصل ان سپلیمنٹس کے پرکشش اشتہارات اور سنی سنائی باتوں کا نتیجہ ہوتا ہے۔

November 11, 2020

اسکوبی ڈو کے شریک تخلیق کار اور روبی اسپیئر فاؤنڈیشن کے شریک بانی کین اسپیئر 82 سال کی عمر میں انتقال کرگئے۔

ویب ڈیسک  ::بچوں بڑوں سب کی من پسند اینیمیٹڈ سیریز اسکوبی ڈو کے شریک تخلیق کار اور روبی اسپیئر فاؤنڈیشن کے شریک بانی کین اسپیئر 82 سال کی عمر میں انتقال کرگئے۔

امریکن ٹی وی ایڈیٹر اور رائٹر کین اسپیئر کی موت کی تصدیق ان کے صاحبزادے کیون اسپیئر نے کی۔

کیون اسپیئر کا غیر ملکی میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ ان کے والد کی موت ڈیمنشیا کی عام قسم Lewy body dementia میں پیش آنے والی پیچیدگیوں کے باعث ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ ’کین کو ان کی عقل وفہم، داستان گوئی، خاندان سے وفاداری اور اپنے کام سے مضبوط تعلق کی بنیاد پر ہمیشہ یاد رکھا جائے گا‘۔

کین اسپیئر کے صاحبزادے کا کہنا تھاکہ ’کین اپنی زندگی میں بھی ہم سب کے لیے ایک رول ماڈل تھے اور اس دنیا سے چلے جانے کے باوجود وہ ہمارے دلوں میں زندہ رہیں گے‘۔

واضح رہے کہ 1969 میں کین اسپیئر نے امریکن رائٹر اور کارٹونسٹ جوئی روبی کے ساتھ مل کر مشہور زمانہ کارٹون سیریز اسکوبی ڈو، ویئر آر یو تخلیق کی تھی جب کہ جوئی روبی رواں برس ماہ اگست میں انتقال کرگئے تھے۔

 

November 9, 2020

سردیوں میں ایڑیوں کو پھٹنے سے بچانے کا نہایت آسان طریقہ

کراچی ۔ویب ڈیسک ::موسم سرما میں ایڑیاں پھٹنا نہایت تکلیف دہ مسئلہ بن سکتا ہے جو چلنا پھرنا بے حد مشکل بنا دیتا ہے جبکہ پھٹی ایڑیوں پر زخم بن جاتے ہیں اور خون بھی بہنے لگتا ہے۔
4 عدد موم بتیاں لے کر پین میں ڈال کر انہیں پگھلا لیں، پگھلنے کے بعد ان میں سے دھاگہ نکال لیں۔ اس کے بعد اس میں ایک چائے کا چمچ ہلدی، ایک چمچ نمک، ایک چمچ ناریل کا تیل، ایک چمچ سرسوں کا تیل اور 2 چٹکی پھٹکری ڈال دیں۔
پھٹکری کے استعمال میں بہت احتیاط کریں کیونکہ یہ جلد کو کاٹ بھی سکتی ہے۔ان تمام اشیا کو پین میں ہی اچھی طرح ملا لیں، اس کے بعد کسی جار میں بھر کر رکھ لیں۔ ٹھنڈا ہونے کے بعد یہ کریم کی شکل اختیار کرجائے گی۔اس کریم کو روزانہ ایڑیوں پر لگائیں، صرف 2 دن میں ہی اس کا اثر واضح ہونا شروع ہوجائے گا۔
شیف فرح کے مطابق اس کریم کے روزانہ استعمال سے صرف ایک ہفتے میں ہی ایڑیاں نرم و ملائم ایسی ہوجائیں گی جیسے کبھی پھٹی ہی نہیں۔ نجی ٹی وی شو میں شیف فرح نے سردیوں میں ایڑیوں کو پھٹنے سے بچانے کا نہایت آسان طریقہ بتایا۔

 

November 7, 2020

کرونا سے بچنا ہے تو دودھ ڈبل روٹی کا استعمال کریں، تحقیق

لندن:کرونا سے بچنا ہے تو دودھ ڈبل روٹی کا استعمال کریں، برطانیہ کے طبی ماہرین نے بتایا ہے کہ اگر دودھ اور ڈبل روٹی میں اضافی وٹامن ڈی شامل کردیے جائیں تو اس کے استعمال سے کرونا سے بچا جاسکتا ہے۔
دی گارڈین کی رپورٹ کے مطابق برطانیہ کے سائنسی ماہرین نے وزرا اور حکومت کو مشورہ دیا کہ وہ اگر شہریوں کو وٹامن ڈی والی چیزیں استعمال کرنے پر زور دیں تو کرونا کے پھیلاؤ کو باآسانی روکا جاسکتا ہے۔
ماہرین نے حکومت کو مشورہ دیا کہ وٹامن ڈی سے بھرپور اشیاء جیسے دودھ اور ڈبل روٹی جیسی عام خوراک میں مزید وٹامن کو شامل کیا جائے تو اس سے وائرس نہ صرف رک سکتا ہے بلکہ حیرت انگیز نتائج بھی سامنے آسکتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق وٹامن ڈی والی خوراک کے استعمال سے مدافعتی نظام مضبوط اور متحرک ہوتا ہے جو کوویڈ 19 کو ختم کر کے اس کے خلاف مزاحمت پیدا کرتا ہے۔
طبی ماہرین نے بتایا کہ برطانیہ کی نصف آبادی وٹامن ڈی کی کمی کا شکار ہے، اسی وجہ سے کرونا کیسز تیزی سے رپورٹ ہورہے ہیں۔ تحقیقی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر گریت ڈیوائس کا کہنا تھا کہ ’اگر حکومتی سطح پر وٹامن ڈی کی افادیت کے حوالے سے پیغامات نشر کیے جائیں تو عوام اُس خوراک کا استعمال شروع کردیں گے‘۔
انہوں نے بتایا کہ اب تک کرونا کے جتنے بھی کیسز سامنے آئے اُن مریضوں میں وٹامن ڈی کی شدید کمی پائی گئی تھی۔ واضح رہے کہ ایک ہفتے قبل ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ کرونا کے 82 فیصد مریضوں میں وٹامن ڈی کی شدید کمی پائی گئی ہے جس کی وجہ سے وہ وائرس سمیت دیگر بیماریوں سے متاثر ہوئے۔
ماہرین کے مطابق وٹامن ڈی کی کمی سے بچے کی ہڈیاں مضبوط نہیں ہوتیں جبکہ نوجوان اور دیگر عمر کی افراد اس کی کمی کی وجہ سے عارضہ قلب سمیت دیگر سنگین بیماریوں کا شکار بھی ہوسکتے ہیں۔
دوسری جانب پبلک ہیلتھ انگلینڈ نے ماہرین نے تحقیق کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ دس برسوں سے فن لینڈ، سوئیڈن، آسٹریلیا، امریکا اور کینیڈا میں دودھ، ڈبل روٹی، نارنجی کا جوس باقاعدگی کے ساتھ استعمال کیا جارہا ہے اُس کے باوجود بھی وہاں کیسز رپورٹ ہوئے۔

November 5, 2020

آئیے ایک گھریلو نسخے سے کھانسی نزلے کاعلاج کریں

ویب ڈیسک ::آئیے ایک گھریلو نسخے سے کھانسی نزلے کاعلاج کریں ، سردیوں کا آغاز ہوتے ہی ہر دوسرے شخص کو نزلے، زکام اور کھانسی کی شکایت ہوتی ہے۔

عام طور پر سردیوں میں نزلہ ، کھانسی جیسی بیماریاں بڑھ جاتی ہیں مگر کرونا کی وجہ سے اب لوگ تذبذب کا شکار بھی ہورہے ہیں۔

 جڑی بوٹیوں کی ماہر سلمہ عاصم نے نزلہ اور کھانسی سے نجات حاصل کرنے کے لیے گھر میں ہی مفید قہوہ بنانے کا طریقہ بتایا۔

سلمہ عاصم نے بتایا اس قہوے کو پینا اور اسٹیم ضرور لینی ہے جس سے جمع ہوا نزلہ اور کھانسی ختم ہوگی۔

انہوں نے بتایا کہ اگر ایک ناک بند ہوجائے اور سر میں درد یا کپنٹیوں میں دکھن ہو تو یہ قہوہ اُس کے لیے بھی بہت زیادہ مفید ہے۔

اجزا

10 لونگیں

بادیان کا پھول

دو دار چینی ایک ایک انچ کا ٹکڑا

دو چھوٹی الائچی

طریقہ

فرائی پان کو چولہے پر رکھیں اور تمام اجزا کو اس میں ڈال دیں اور اسے تھوڑی پکنے کے لیے چھوڑ دیں، جب اس میں اچھی طرح سے ابال آجائے تو اسے اتار لیں اور پھر حسب ضرورت استعمال کریں۔

سلمہ عاصم نے بتایا کہ قہوہ بننے کے دوران اٹھنے والی اسٹیم کو اگر لیا جائے تو اس سے جمع ہوا نزلہ کھل جاتا ہے۔

معجون بنانے کا طریقہ

اجزا

آدھا چھٹانک بادام

ایک چمچہ کالی مرچ

طریقہ

دونوں کو اچھی طرح سے پیس لیں اور پھر اس میں شہد شامل کریں اور پھر اسے ناشتے یا رات کے کھانے میں استعمال کریں۔