August 17, 2017

صحرائے تھر میں مشروم کی بہار،مزید پڑھیے

جدت ویب ڈیسک :صحرائے تھر کی ریت کوبارش نے جہاں ہریالی سے بھر دیا ہے وہیں معروف سوغات کھنبی یعنی مشروم کی پیداور میں اضافہ کر دیا ہے۔ مشروم تھر کے ٹیلوں پر فطری طور پر پیدا ہوتی ہے اس سے متعلق کہا جاتا ہے کہ یہ بارش کے تین یا چار روز بعد زمین کا سینہ چیرتے ہوئے باہر نکل آتی ہے۔مگر زرعی ماہرین کی آراء اس سے مختلف ہےمشروم کو نہ صرف بطور غذا استعمال کیا جاتاہے بلکہ یہ ادویات کے طور پر بھی استعمال ہوتی ہے۔ تھر کی زمین سے ایک ایک کھنبی کو جمع کر کے لڑیوں میں سجایا جاتا ہے اور پھر مسافروں کو فروخت کیا جاتا ہے اگرچہ زرعی تحقیقی ادارے کی جانب سے مشروم کی کاشت کا کامیاب تجربہ کیا جا چکا ھے مگر اس کی کاشت عام نہیں ھوئیتفصیلات کےمطابق بارش کی بوندوں نے ریت کے ٹیلوں میں جان ڈال دی برسوں بعد ہریالی نے تھر کا رخ کیاتو ہر سو بہار آئی مور چہچائےجہاز نما اونٹ نے نازو نخرے دکھائے۔خشک سالی کے خاتمے کے بعد معروف اورقدیم سوغات کھنبی یعنی مشروم بھی تیزی سے اُگنے لگی ہے۔ راتوں رات اگنے والے اس چھوٹے سے پودے کو سبزی کے طور پر استعمال کیا جاتا ہےکھنبی کی تاریخ اتنی ہی پرانی ہے جتنی خود انسان کی۔

 

August 17, 2017

اومیگا تھری کھائیں، ڈپریشن بھگائیں ، جانیے کیسے ؟

جدت ویب ڈیسک :۔ماہرین طب کا کہنا ہے کہ ڈپریشن کو کم کرنے کے لئے دماغ میں موجود سیروٹین مادے کو کم اور معتدل کرنے کی ضرورت ہوتی ہے اور اسکا بہترین طریقہ یہ ہے کہ مریض فوری طور اومیگا تھری والی غذا کھانا شروع کرلے۔اومیگا تھری سبزیوں کے علاوہ مچھلی میں ہوتا ہے ۔ زیادہ مقدار والی پروٹین والی غذا بھی سیروٹین کی بڑھتی ہوئی تحریک کا علاج کرتی ہے ۔اس وقت تمباکو،نشہ آور اور کافی جیسی چیزوں سے پرہیز کرنا چاہئے کیونکہ اس سے سیروٹین کو قوت اور تحریک ملتی ہے ۔اگر دن کا وقت ہے تو سورج کی روشنی میں چلے جانا چاہئے تاکہ وٹامن ڈی سے جسم کا کیمیکل موڈ تبدیل ہوجائے۔ماہرین طب کا کہنا ہے کہ وہ لوگ جنہیں تھائی رائیڈ،ایڈرنل اور سیکس ہارمونز کا مسئلہ ہو انہین فوری طور پر ان کا علاج کرانا چاہئے کیونکہ ہارمونز کی تبدیلی سے برین سیلز کمزور پڑتے ہیںڈپریشن سے جان چھڑوانا اب جتنا مشکل ہے اتنا ہی آسان بھی بنتا جارہا ہے ۔لیکن اس کا انحصار اس بات پر ہوتا ہے کہ آپ خود اس مرض سے کتنا آگاہ ہیں

August 17, 2017

تھرپارکر: چکن گونیا کا وائرس بے قابو، مریضوں کی تعداد 2 ہزار تک جا پہنچی

تھرپارکر جدت ویب ڈیسک تھرپارکر میں پھیلنے والا چکن گونیا کا وائرس بے قابو ہوگیا، مریضوں کی تعداد تیزی سے بڑنے لگی، 15 روز میں یہ خطرناک وائرس دو ہزار مریضوں میں پھیل چکا ہے، سب سے زیادہ متاثر ہونیوالی تحصیل چھاچھرو ہے، ہسپتال میں ادویات کا فقدان ہے جبکہ محکمہ صحت تھرپارکر چکن گونیا کے وائرس پر قابو پانے میں مکمل طور نا کام ہوگیا۔تفصیلات کے مطابق تھرپارکر میں پھیلنے والا چکن گونیا کا وائرس چھاچھرو سمیت تھرپارکر کے 30 دیہاتوں میں پھیل چکا ہے، 15 روز میں متاثرہ علائقوں سے آنے والے مریضوں کی تعداد دوہزار تک پہنچ گئی، اس خطرناک وائرس میں سب سے زیادہ متاثر چھاچھرو تحصیل کے گاؤں ہے۔ ہسپتال میں زیر علاج مریضوں کی تعداد بڑھنے سے سہولیات کا فقدان پیدا ہوگیا جس سے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ ہسپتال میں بیڈ کم پڑنے سے مریضوں کو ٹیبلوں اور فرش پر لیٹایا گیا ہے،ہسپتال میں پینے کا صاف پانی تک نہیں فراہم کیا جا رہا ہے۔وائرس کے شکار مریضوں کی احتیاطی تدبیر کے حوالے سے بھی کوئی بندوبست نہیں کیا گیا ہے، وائرس کے شکار مریضوں کو بھی دوسری بیماریوں کے شکار مریضوں کے ساتھ رکھا جا رہا ہے۔ ہسپتال میں زیر علاج مریضوں کا کوئی پرسانے حال نہیں، اس وائرس کے شکار مریض تیز بخار اور جسم کے جوڑوں کے درد سے شدید تکلیف سے دو چار ہیں، محکمہ صحت تھرپارکر اس وائرس پر قابو پانے میں مکمل طور نا کام ہوچکا ہے، مریضوں کی تعداد پورے تھر میں تیزی سے بڑھتی جا رہی ہے۔

August 16, 2017

اقرا یو نیورسٹی مستند بزنس اسکول ہے‘ گورنر سندھ

کراچی جدت ویب ڈیسک گورنر سندھ محمد زبیر کہا ہے کہ اقرا ئ یونیورسٹی نے سال 2002میں اپنے قیام سے اب تک ہمیشہ اپنے طالبعلموں کے لئے سہو لیات کی فراہمی ، تعلیمی اور پیشہ ورانہ جدت طرازی پر توجہ مر کوز رکھی ہے ۔ اس ادارے نے اس عرصے کے دوران متعدددشراکت داریوں کے زریعے بہت سے پرو گرام کا آ غاز کیا۔ یہ شرا کت داری بھی اس حقیقت کا مظہرہے کہ ادارے کی جانب سے تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے اس پرو جیکٹ سے وابستہ تمام افراد نے انتھک کاوشیں انجام دیں۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے HBXہاورڈ بز نس اسکول کے ڈیجیٹل لر ننگ اقدا مات کے آن لائن پروگرام کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کے گورنر کا عہدہ سنبھا لنے کے بعد س سے پہلا دور میں نے جو کیا تھا وہ اقرا ئ یو نیو رسٹی کاہی تھا یہ یو نیورسٹی گز شتہ 20سالوں سے اپنے کردار ادا کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جدھر دیکھوں آج کل تو ہر جگہ بز نس اسکول کھول گئے ہے لیکن اقرائ یو نیورسٹی الگ اور مستند بز نس اسکول ہے۔ انہوں نے کہا کے ہاورڈ اسکول سے الحاق بہت اچھا لبعلعمل ہے اس سے اقرائ یونیورسٹی کے EMBAکے طالبعلموں کو اس ملک میں رہتے ہوئے ہی ہاورڈ بز نس اسکول کی ڈگری ملے گی انہوں نے مزید کہا کے اورچئیر مین اقرا ئ یونیورسٹی حنید لا کھانی کی تعریف کر تے ہوئے کہا کہ ان کی کو ششیں تعریف کے قابل ہے انہوں نے کہا کہ میڈیا کو پازیٹیو پاکستان کی شکل دکھا نی چا ہیے کہ حنید لاکھانی جیسے لو گ بھی ہے جو ملک و قوم کی ترقی میں اپنا کردار ادا کر ررہے ہے۔اس موقع پر چانسلر حنید حسین لاکھانی، کو چانسلر ارم لاکھا نی، وائس چانسلر ڈاکٹر وسیم قاضی ، ڈین آف فیکلٹی نز نس ایڈ منسٹریشن شہر یار ملک ، کراچی یونیورسٹی کے وائس چا نسلر محمد اجمل اور لیاری یونیورسٹی کے وائس چانسلر اختر بلوچ بھی مو جود تھے۔ اس موقع پرڈین آف بزنس ایڈ منسٹریشن فیکلٹی ڈاکٹر شہر یار ملک نے خطاب کر تے ہوئے کہا کہHBX,Coreکا فلیگ شب کور س ہے جو کہ ملٹی ویک آن لائن پرو گرام پر مشتمل ہے اس پرو گرام کو بنیادی کارو باری تعلیم سکھا نے کے لئے مر تب کیا گیا ہے ا س شراکت داری کے تحت اقرائ یونیورسٹی فال 2017سے آ غاز ہو نے والے EMBAپروگرام کے طالبعلموں کو HBXکے مر تب کردہ ا ٓ ن لائن کو رسز آ فر کرے گی اس پرو گرام کے تحت طالبعلم HBXکی جانب سے کی پر مبنی خصو صی طر یقہ کار اور جدید ترین ایکٹو پلیٹ فارم سے مستفید ہو تے ہوئے بز نس اینا لکس ، اکنا مکس فار مینجرز اور فنانشل اکاونٹنگ کے میدان میں شر کت کریں گے ۔ اقرائ یونیو رسٹی کے فال2017EMBAکے پرو گرام میں داخلہ لینے والے طالبعلم جو COReپرو گرام میں شرکت کے خو اہشمند ہیں وہ اس کورس میں شر کت کے زریعے نا صرف دنیا بھر میں HBXکے کیس پر مبنی کو رسز کر نے والے15000طالبعلموں میں شامل ہو نے کا اعزاز حاصل کریں گے بلکہ HBXکے گزشتہ شر کائ کے وسیع نیٹ و رک میں بھی شا مل ہو جائیں گے۔ آخر میں چانسلر حنید لاکھانی نے تقر یب میں شامل تمام شرکائ کا شکریہ ادا کیا۔

August 16, 2017

سائنس دانوں نے انکشاف کردیاکہ۔۔.. عورتوں کی یہ چیز مردوں سے زیادہ تیز ہوتی ہے، جانیے

جدت ویب ڈیسک :سائنسدانوں نے ایک تحقیق میں ایسی بات ثابت کر دی ہے کہ پاکستانی شوہروں کی شامت ہی آ جائے گی۔دنیا میں مردوں کے مقابلے میں خواتین کو کند ذہن اور کم ذہین قرار دیا جاتا ہے لیکن اب امریکی سائنسدانوں کی ایک تحقیق میں یہ ثابت ہوا ہے کہ کہ خواتین کے بیشتر دماغی حصوں میں ہونے والی سرگرمیاں مردوں کے مقابلے میں زیادہ ہوتی ہیں اور ان میں دماغ کے وہ حصے بھی شامل ہیں جن کا تعلق ردعمل کنٹرول کرنے، اضطراب اور مزاج سے ہوتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق تحقیق کے دوران جدید تکنیکوں کی مدد سے مجموعی طور پر دماغ کے 128 مقامات کا جائزہ لیا گیا۔ اس دوران بنیادی نوعیت کی آزمائشوں میں خواتین کے دماغوں میں 65 مقامات پر سرگرمی میں اضافہ مشاہدے میں آیا جبکہ مردانہ دماغوں میں صرف 9 مقامات پر اضافی سرگرمی نوٹ کی گئی۔اسی طرح جب تحقیق میں شامل خواتین و حضرات کو کسی بات پر توجہ مرکوز رکھنے کی آزمائش سے گزارا گیا تو خواتین کے دماغ میں 48 مقامات پر زیادہ سرگرمی کا مشاہدہ کیا گیا جبکہ مردوں میں یہ تعداد صرف 22 تھییہ تحقیق کیلیفورنیا کے ایک نجی ہسپتال میں کی گئی جس کے نتائج ”جرنل آف الزائمرز ڈیزیز“ میں شائع کئے گئے ہیں۔ امریکی سائنسدانوں کی جانب سے کی گئی اس تحقیق میں 26 ہزار 802 بالغ افراد کا مطالعہ کیا گیا۔ ان افراد میں 119 صحت مند جبکہ 26 ہزار 683 ایسے خواتین و حضرات شامل تھے جو کسی نہ کسی دماغی مرض میں مبتلا تھے۔ تحقیق سے سامنے آنے والے نتائج سے ثابت ہوا کہ خواتین کے دماغوں میں خون کا بہاو مردوں کے مقابلے میں زیادہ بہتر ہوتا ہے اور اسی لئے عام طور پر ان کا دماغ نہ صرف مردانہ دماغ کے مقابلے میں زیادہ بہتر طور پر کام کرتا ہے بلکہ انہیں مردوں کی نسبت دماغی امراض بھی کم لاحق ہوتے ہیں۔

 

 

 

August 16, 2017

بادام کھائیں ,ہارٹ اٹیک اور فالج کا خطرہ دور بھگائیں

کراچی جدت ویب ڈیسک طبی ماہرین نے کہاہے کہ باقاعدگی سے بادام کھانے سے جسم میں موجودنقصان دہ کولیسٹرول کی سطح کم ہوتی ہے، جس سے ہارٹ اٹیک اور فالج کا خطرہ کم ہوجاتا ہے۔بادام کے حوالے سے طبی ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ اس میں متعدد وٹامنز اور ایسے اجزا بھی پائے جاتے ہیں جو جسم کو صحت مند اور شخصیت کو خوبصورت بناتے ہیں۔امریکا کی پنسلوانیا اسٹیٹ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیاہے کہ روزانہ کچھ مقدار میں بادام کھانا ایچ ڈی ایل کولیسٹرول کی سطح کو بڑھاتا ہے جو صحت کے لئے فائدہ مند ہے وہیںجسم سے برے کولیسٹرول کو نکال باہر کرتا ہے۔پنسلوانیا اسٹیٹ یونیورسٹی کی سائنسداں پینی کرس ایتھرٹن نے اپنی تحقیقات کو جرنل آف نیوٹریشن میں شائع کرایا ہے۔پینی کرس کے مطابق اس سے قبل کئی تحقیقات سے یہ بھی معلوم ہوا کہ بادام کھانا خود ایل ڈی ایل کولیسٹرول کو بھی کم کرتا ہے، جس کی مقدار بڑھ جائے تو دل کے امراض کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے، اس طرح بادام کھانے سے اچھا کولیسٹرول بڑھتا ہے اور دل دشمن کولیسٹرول کم ہوتا ہے۔انہوں نے کہاکہ اہم بات یہ ہے کہ بادام ایچ ڈی ایل کولیسٹرول کی کارکردگی کو بڑھاتا ہے اور دل کی شریانوں سے ایل ڈی ایل کشید کرکے جسم سے باہر نکال دیتا ہے۔ماہرین نے بادام کھانے والوں کے خون میں ایچ ڈی ایل کولیسٹرول کی مقدار معلوم کی تو تصدیق ہوئی کہ یہ دل کے لیے بھی بہت مفید ہے۔محققین کے مطابق اگرچہ صرف باداموں سے امراض قلب کے خطرے کو مکمل طور پر ختم نہیں کیا جاسکتا، مگر پھر بھی اسے بہت حد تک کم کیا جاسکتا ہے اور یہ ایک صحت مند غذائی انتخاب ثابت ہوتا ہے جو کہ جسم کو گڈ فیٹ، وٹامن ای اور فائبر بھی فراہم کرتا ہے۔انہوں نے بتایا کہ ہم اسے ہر بیماری کا علاج قرار نہیں دیتے، تاہم اعتدال سے اسے کھانا، خاص طور پر جنک فوڈ پر ترجیح دینا صحت مند زندگی کے لیے اچھا اضافہ ثابت ہوسکتا ہے۔اس تحقیق کے دوران 50 مرد و خواتین کو 6 ہفتوں تک بادام کا استعمال کرایا گیا،نتائج سے معلوم ہوا کہ روزانہ 43 گرام بادام کھانا اس حوالے سے مددگار ثابت ہوتا ہے۔