July 14, 2017

حیرت انگیز انکشاف ،پاکستان میں ہر سال کتنا پانی ضائع ہوتا ہے؟

اسلام آبادجدت ویب ڈیسک :پاکستان میں ہر سال بارشوں کی وجہ سے سیلاب کی بہت خراب صورت حال ہے اگر کوئی بڑا ڈیم ہوتا تو اتنا پانی ضائع نہ ہوتا ،واپڈاکے چیئرمین لیفٹننٹ جنرل (ر) مزمل حسین نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان میں ہر سال 25 ارب روپے کی مالیت کا پانی ضائع کردیا جاتا ہے۔ایک تحقیقی رپورٹ کے مطابق بد انتظامی اور نئے ذخائر تعمیر نہ کرنے کے باعث سنہ 1990 میں پاکستان ان ممالک کی صف میں آگیا تھا جہاں آبادی زیادہ اور آبی ذخائر کم تھے جس کے باعث ملک کے دستیاب آبی ذخائر پر دباؤ بڑھ گیا تھا۔سنہ 2005 میں پاکستان پانی کی کمی والے ممالک کی صف میں آکھڑا ہوا۔اب ماہرین کے مطابق یہ صورتحال مزید جاری رہی تو بہت جلد پاکستان میں شدید قلت آب پیدا ہوجائے گی جس سے خشک سالی کا بھی خدشہ ہےوفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کے دوران واپڈا کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ پاکستان کے دریاؤں میں ہر سال 14.5 کروڑ ایکڑ فٹ ( پانی کو ناپنے کا پیمانہ) پانی آتا ہے تاہم اس میں سے صرف 1.4 ملین ایکڑ فٹ پانی ہی مناسب طریقے سے محفوظ کیا جاتا ہے۔بریفنگ میں واپڈا چیئرمین نے بتایا کہ تربیلا ڈیم کی بنیاد میں ریت جمع ہو رہی ہے جس کے باعث اس کے پانی اسٹور کرنے کی صلاحیت میں 36 فیصد کمی آگئی ہے۔ان کے مطابق تربیلا ڈیم میں پانی جمع کرنے کی صلاحیت 96 لاکھ ملین ایکڑ فٹ سے گھٹ کر 66 لاکھ ملین ایکر فٹ ہوگئی ہے۔انہوں نے اس امر پر بھی افسوس کا اظہار کیا کہ گزشتہ 70 سالوں میں پاکستان میں صرف 2 ڈیم تعمیر کیے جاسکے ہیں۔ماہرین ماحولیات و آب کا کہنا ہے کہ پاکستان میں قلت آب کی صورتحال قدرتی نہیں بلکہ ہماری اپنی پیدا کردہ ہے۔ان کا کہنا ہے کہ اگر ہم فوری طور پر نئے آبی ذخائر بنانے پر توجہ دیں تو ہم ممکنہ خشک سالی سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔یاد رہے کہ پاکستان دنیا کے ان ممالک کی فہرست میں چھٹے نمبر پر موجود ہے جہاں آبادی کے لحاظ سے آبی ذخائر پر شدید دباؤ ہے تتیجتاً پاکستان میں تیزی سے آبی قلت واقع ہورہی ہے اور بہت جلد پاکستان خشک سالی کا شکار ملک بن سکتا ہے۔

July 13, 2017

سیکنڈوں میں دانت صاف ، کیا کبھی بتیسی نما ٹوتھ پیسٹ استعمال کیا ؟

جدت ویب ڈیسک :صحت مند دانت اور صاف صاف چہرہ سب کو اچھا لگتا ہے اور دانتوں کی صفائی کےلئے بھی نئے نئے ٹوتھ پیسٹ ایجاد ہو رہے ہیں تو اب ایما برش نامی یہ ٹوتھ برش بتیسی نما حصے اور ایک گیند پر مشتمل ہے جو دراصل ایک بٹن ہے۔اسے استعمال کرنے کے لیے اسے دانتوں کے اندر بتیسی کی طرح پھنسائیں اور بٹن دبا دیں۔اگلے 10 سیکنڈ میں بتیسی کا ہر حصہ آپ کے ایک ایک دانت کو صاف کردے گا جس کے دوران آپ کو ہلکی سی وائبریشن محسوس ہوگی۔اس کے ہینڈ پیس میں ٹوتھ پیسٹ کا کیپسول رکھا گیا ہے جو پورے ماہ کے لیے کافی ہے۔اسے تیار کرنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ عام ٹوتھ برش کے مقابلے میں دانتوں کو زیادہ بہتر طریقے سے کم وقت میں صاف کرسکتا ہے۔ایما برش نامی اس ٹوتھ برش کی قیمت 90 ڈالرز یا 9 ہزار پاکستانی روپے ہے اور اسے رواں برس دسمبر میں فروخت کے لیے پیش کردیا جائے گاآپ کو اپنے دانت صاف کرنے میں کتنا وقت لگتا ہے؟ ہوسکتا ہے دانتوں کی صفائی یقینی بنانے کے لیے آپ خاصی دیر تک اپنے دانت برش کرتے ہوں۔لیکن اب بتیسی نما اس ٹوتھ برش کے آںے کے بعد یہ مشکل آسان ہوگئی ہے جو صرف 10 سیکنڈز میں دانتوں کو مکمل طور پر صاف کرسکتا ہے

July 13, 2017

سکون کی نیند بہت ہی آسان نسخہ

امریکا جدت ویب ڈیسک کیا آپ ہر رات بستر پر کروٹیں بدلتے رہتے ہیں اور نیند آپ کی آنکھوں سے کوسوں دور رہتی ہے ؟ اگر ہاں تو میٹھی نیند کا آسان نسخہ جان لیں۔بس زندگی کے لیے کسی اچھے مقصد کو منتخب کرلینا ہی اچھی نیند کی بھی ضمانت ہوتا ہے ۔یہ بات امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔نارتھ ویسٹرن یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ جو لوگ زندگی کے مقصد کے حوالے سے فہم رکھتے ہیں، انہیں عمر بڑھنے کے باوجود اچھی نیند لینے میں مشکلات کا سامنا نہیں ہوتا۔تحقیق کے دوران 60 سے 100 سال کی عمر کے 800 سے زائد افراد کا جائزہ لیتے ہوئے ان کے نیند کے معیار اور زندگی کے مقصد کے بارے میں جانا گیا۔نتائج سے معلوم ہوا کہ جو لوگ زندگی میں کوئی مقصد رکھتے ہیں، انہیں خراٹوں یا بے خوابی کی شکایت کا کم سامنا ہوتا ہے ۔محققین کے مطابق یہ نیند کی کمی کے شکار افراد کے لیے اچھی خبر ہے کیونکہ وہ ایک مقصد کو ذہن نشین کرکے بے خوابی کے ساتھ ساتھ خراٹوں کی شکایت کو بھی کم کرسکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک آسان اور ادویات کے استعمال سے پاک نسخہ ہے جو نیند کا معیار بہتر بناتا ہے ، خاص طورپر بے خوابی کے شکار افراد کے لیے یہ بہت فائدہ مند ہے ۔اور یہ بتانے کی ضرورت نہیں کہ نیند کی کمی ذیابیطس، موٹاپے اور دیگر متعدد امراض کا باعث بنتی ہے ۔

July 12, 2017

لاعلاج مرض دور کرنے کیلئے ایک ایسا مشروب جو آپ گھر میں ہی تیار کر سکتے ہیں

دوسری طرف ماہرین کی نئی تحقیق سامنے آئی ہے کہ رات کو اندھیرے میں برش کرکے سونے سے میٹھی نیند آتی ہے۔آکسفورڈ نیورو سائنسدانوں نے ایک تحقیق میں انکشاف کیا ہے کہ سونے سے قبل دانتوں کو باتھ روم کی سفید روشنی میں برش کرنے سے یہ مصنوعی روشنی عین اس وقت ہمارے جسم کو جگانا شروع کردیتی ہے جب سونے کے لیے بستر پرلیٹ رہے ہوتے ہیں اس لیے اگر دانتوں پر برش باتھ روم کی روشنی بند کرکے کیا جائے تو اس عمل سے بہتر نیند کی جاسکتی ہے۔ ماہر طب اور رائل سوسائٹی کے رکن رسل فوسٹر کا کہنا ہے کہ نیند ایک ایسا انسانی فعل ہے جسے ہر انسان اپنی زندگی میں سب سے زیادہ کرتا ہے یعنی ایک انسان اپنی زندگی کے کل وقت کا 36 فیصد وقت سونے میں گزارتا ہے۔رسل کا اس کی مزید وضاحت کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اکثر لوگ سونے سے قبل کمرے کی روشنی تو بند کردیتے ہیں لیکن جب وہ برش کرتے ہیں تو باتھ روم کا بلب آن کردیتے ہیں جس کے باعث نیند پیدا کرنے والے ہارمونز سست پڑ جاتے ہیں تاہم اگر یہ برش اندھیرے میں کیا جائے تو نیند پیدا کرنے والے ہارمونز تیزی سے کام کرتے ہیں اور نیند کو اور بھی بڑھا دیتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ گھر اور دفاتر میں مصنوعی روشنی میں رہنے سے انسانی جسم کنفیوزرہتا ہے کیوں کہ قدرتی روشنی اس سے کہیں زیادہ روشن ہوتی ہے اور جب انسان جب باہر نکلتا ہے تو جسم کے کلاک خود کو ری سیٹ کرنے میں پریشان رہتا ہے اور رات کو نیند کے تسلسل کو توڑ دیتا ہے