September 19, 2017

اسلام آباد ہائیکورٹ :صحت اور بیماریاںمعاملہ کیا ہے ؟

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک اسلام آباد ہائیکورٹ کے زیر اہتمام صحت اور بیماریوں کے حوالے سے سمینار منعقد کیا گیا جس میں بار اور پمز کے درمیان ایم او یو بھی سائن کیا گیا بعدازاں اسلام آباد ہائیکورٹ بار کے صدر عارف چوہدری اور پمز کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم نے سیمینار سے خطاب کیا اس موقعہ پر صدر ہائیکورٹ بار کا کہناتھا کہ وکلائ کو ریلیف دینے کی ہر ممکن کوشش کرتا ہوں اسلام آباد کے وکلائ کے لیے کلب کو ترجیحات میں شامل کیابار کونسل ہمارا ادارہ ہے مل کر چلنے میں آسانی ہو گی بار کونسل ہائیکورٹ بار کے معاملات میں مداخلت کرنے کی بجائے وکلائ کی ویلفئیر کے لیے کیے جانےوالے کام کی تعریف کرنی چاہیے نہ کہ تنقید کی جائے تمام وکلائ دوستوں کو یقین دلاتا ہوں وکلائ کی ویلفئیر کے لیے ہر ممکن کوشش جاری رکھونگا اس موقعہ پر پمز ہسپتال کے چیف ایگزیکٹیو ڈاکٹر جاوید کی طرف سے ہائیکورٹ بار کے لیے ہیلتھ سروسز پیکج کا اعلان کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وکلائ کے لیے ہر ممکن تعاون کرین گےدس سال سے وکلائ سے تعلق اور واسطہ ہےایف ایٹ کچہری میں دہشت گردی کا واقعہ ہوا سینکڑوں وکلائ کو پمز لایا گیا ڈاکٹرز ادارے یا بار کونسلز کے مضبوط ہونے پر ہی اچھی روایات قائم ہونگی پمز ہسپتال کو اپ گریڈ کیا اب 19 انسٹیٹیوٹ اس کے ساتھ اٹیچ ہیں انہوں نے وکلائ کو یقین دہانی کروائی کہ 24 گھنٹے میرا نمبر کھلا رہے گا آپ رابطہ کر سکتے ہیں جو ممکن ہوا وہ کرینگے ,وکلائ کی صحت کے لیے ہر تعاون کو تیار ہیں اس کے لئے کسی قسم کے کوئی کارڈ کی ضرورت نہیں ہے وکلائ براہ راست آ کر مل سکتے ہیں سمینار میں وکلائ کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

September 19, 2017

والدین ہوجائیں ہوشیار آن لائن منشیات فروشی کادھندہ عروج پر،ملزمان ڈیفنس سے گرفتار

کراچی جدت ویب ڈیسک :پولیس کےمطابق کراچی کے علاقے ڈیفنس فیز 6 میں کارروائی کرتے ہوئے 4 ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے جو سوشل میڈیا کے ذریعے منشیات فروش کرتے تھے۔ پولیس نے سوشل میڈیا کے ذریعے منشیات فروش کرنے والے گروہ کے 4 ملزمان کو گرفتار کرلیا۔ایس ایچ او درخشاں اورنگزیب خٹک کے مطابق پولیس فیس بک پر اس آپریشن کا خود حصہ تھی اور پولیس نے ہی ملزمان سے منشیات خریدنے کی پیشکش کی، ملزمان کو جگہ کا بتاکر بلایا گیا جہاں انہیں موقع پر ہی گرفتار کرلیا گیا۔پولیس کے مطابق ملزمان کے قبضے سے بڑی مقدار میں منشیات بھی برآمد کی گئی ہے جب کہ ان سے مزید تفتیش شروع کردی گئی ہے اور ان کے دیگر ساتھیوں کی گرفتاری کے لیے بھی اقدامات کیے جارہے ہیںپولیس کے مطابق ملزمان سوشل میڈیا، خاص طور پر فیس بک کےذریعے منشیات فروشی کے لیے لوگوں تک رسائی حاصل کرتے تھے جن میں ان کا خاص ہدف خواتین ہوتی تھیں۔پولیس کا کہنا ہےکہ یہ گروہ 8 افراد پر مشتمل ہے جن کے گرفتار ہونے والے چار کارندوں میں اشرف، تبسم، احسن اور طحہٰ شامل ہیں۔

 

 

September 16, 2017

ورلڈ ریکارڈ :چینی خاتون کی پلکیں کتنی لمبی ہیں ؟

بیجنگ جدت ویب ڈیسک چےن مےں اےک خاتون کی پلکیں 5 انچ لمبی ہیں اور گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کے مطابق انہیں طویل ترین پلکوں کا اعزاز حاصل ہو گےا ہے ۔مرد ہو یا خاتون، پلکوں کی اوسط لمبائی 0.8 سینٹی میٹر سے 1.2 سینٹی میٹر تک ہوسکتی ہے لیکن 49 سالہ یوجیانکشیا کی پلکیں 12.4 سینٹی میٹر طویل ہیں جو قریباً 5 انچ کے برابر ہے۔ 2018 کے لیے گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کو دنیا بھر سے 500 افراد نے طویل ترین پلکوں والی اپنی تصاویر بھیجیں لیکن ان میں سے کوئی بھی یو کے قریب بھی نہ پہنچا۔یوجیانکشیا ایک سابق فنڈ ڈائریکٹر ہیں جو شنگھائی میں رہتی ہیں۔ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کی جانب سے باضابطہ طور پر ان کی پلکوں کی لمبائی 28 جون 2016 کو نوٹ کی گئی تو وہ 12.4 سینٹی میٹر لمبی تھیں اور وہ ان کے ہونٹوں تک جاپہنچتی ہیں۔ لیکن بار بار دیکھنے کے باوجود بھی یقین نہیں آتا کہ دنیا میں کسی کی پلکیں اتنی طویل بھی ہوسکتی ہیں۔یو کے مطابق ان کی پلکیں اب بھی بڑھ رہی ہیں اور 2013 میں ریٹائرمنٹ کے بعد اب تک ان کی پلکیں بڑھ رہی ہیں۔

September 14, 2017

پاکستانی طالبہ نے ملک کا نام پوری دنیا میں روشن کردیا

لندن جدت ویب ڈیسک آکسفورڈ یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کرنے والی پاکستانی طالبہ نے 58 ممالک کے 327 طالبعلموں کو مات دے کراعلیٰ ترین تعلیمی ایوارڈ اپنے نام کرایا۔ آکسفورڈ یونیورسٹی کی جانب سے جاری بیان کے مطابق کنزیٰ عظیمی نےسعید بزنس اسکول سے ایم بی اے کی ڈگری حاصل کی اورانہیں غیر معمولی کارکردگی پر ’’سعید پرائز‘‘ سے نوازا گیا۔ بیان کے مطابق اس امتحان میں 58 ممالک کے 327 طالب علم شریک تھے جن میںسے پاکستانی طالبہ کنزیٰ عظیمی کو ایوارڈ کے لیے منتخب کیا گیا۔ آکسفورڈ یونیورسٹی کے مطابق ہر سال شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طالب علم کو اس ایوارڈ سے نوازا جاتا ہےاسی طرح اس سال بھی یونیورسٹی کے شیلڈونین تھیٹر میں منعقدہ ایک پروقار تقریب میں سعید بزنس اسکول کے ڈین پیٹر ٹوفانو نے کنزیٰ عظیمی کو اس ایوارڈ دیا۔ پیٹر ٹوفانو نے کنزیٰ کی تعریف کی کہ وہ اپنی محنت سے یونیورسٹی کے بزنس نیٹ ورک کی ویمن لیڈرشپ کی چیئرمین منتخب ہوئیں ۔ واضح رہے کہ کنزیٰ عظیمی 2013 میں لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز سے گریجویشن کی ڈگری حاصل کرچکی ہیں ۔

September 14, 2017

ذیابیطس کے مریض صرف 8ہفتوں میں مکمل صحت یاب ہوسکتے ہیں!!

لندن جدت ویب ڈیسک ٹائپ ٹو ذیابیطس کے مریض صرف 8ہفتوں میں مکمل صحت یاب ہوسکتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق ذیابیطس مرض کے حوالے سے برطانیہ میں ہونے والی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اگر ذیابیطس کے مریض 8 ہفتوں تک یومیہ 600 کیلوریز والی غذالیںتو ان کی ٹائپ ٹو ذیابیطس بہت حد تک کم ہوکر خاتمےتک پہنچ سکتی ہے۔نیوکاسل یونیورسٹی کے سائنسدانوں کے مطابق کہ ٹائپ ٹو ذیابیطس میں انسولین کی مناسب مقدار پیدا نہ ہونے کے باعث خون میں شکر کی مقدار بڑھنے لگتی ہے اورتمام اعضا کو متاثر ہوتے ہیں۔عام طور پر یہی مشہور ہے کہ اضافی کیلوریز جگر اور لبلبے پر چکنائی ’فیٹی لیور ڈیزیز‘ کا باعث بنتی ہےاور جس میں جگر ضرورت سےزیادہ گلوکوز بنانے لگتا ہےاورزیادہ کیلوریز کھانے سے اضافی چربی لبلبے پر جمنا شروع ہوجاتی ہے اور یوں انسولین بنانے کی صلاحیت متاثر ہوتی ہے۔یہاں یہ بات انتہائی حیرت انگیز ہے کہ اگر لبلبےپر سے صرف ایک گرام چربی کم ہوجائے تو اس میں دوبارہ انسولین بنانے کی صلاحیت پیدا ہوجاتی ہے اور یوں ذیابیطس کا لیول کم ہونا شروع ہوجاتا ہے اور ٹائپ ٹو کے مریض صحت یاب ہونے لگتے ہیں۔اس تحقیق کے ماہر پروفیسر رائے ٹیلر کے مطابق اگرکوئی دس سال سے شوگر کا مریض ہےتب بھی کیلوریز کی کمی کے ذریعے اس سے نجات ممکن ہے، جبکہ وزن میں بھی 15کلو گرام تک کمی ممکن ہے اوریہ بات عام ہے کہخود شوگر بھی وزن میں کمی کرتی ہے۔ پروفیسر ٹیلرجنہیں 40 سالہ تجربہ حاصل ہے اپنے علم کی روشنی میں بتاتے ہیں کہ شوگر ختم کرنے کا واحد نسخہ کم کیلوریز کا استعمال ہی ہے۔
ماہرین کے مطابق کم کیلوریز سےخالی معدے اورخون میں شکر کیمقدارمیں خاطر خواہ کم ہوتی ہے اور وزن کم ہوتا ہے۔ اور اس ساری محنت کامقصد لبلبے سے چربی اترنا ہے ۔ نیوکاسل یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق اب تک کئی مریضوں کو آزمائش میں خاطر خواہ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔

September 13, 2017

نرسنگ نتائج میں شفافیت اولین ترجیح ہے‘ خیرالنسا

کراچی سے آصف خان کی رپورٹ٭ نرسنگ نتائج میں شفافیت اولین ترجیح ہے ، کنٹرولر خیر النسائ ری کاؤنٹنگ میں 450 طالب پاس ہوئے ہیں یہ وہ طالب علم ہیں جنکی کاپیاںہمیں مسنگ ملی تھی اور کچھ ری چیک میں پاس ہوئے ہیں ۔ مسنگ کاپیاں ہمیں پہلے والی نرسنگ بورڈ کی ٹیم سے ملی تھی جسے ہم نے بخوبی حل کیا ہے ۔ ہماری کارکردگی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے ۔ تفصیلات کے مطابق سندھ نرسنگ ایگزامنیشن بورڈ نے نرسنگ کے ری کاؤنٹنگ کے نتائج کا اعلان گزشتہ روزکردیا ۔ ری کاؤنٹنگ کےلئے ساڑھے 4 ہزار امیدواروں نے درخواستیں جمع کروائی تھی ۔ جس میں چار سو پچاس طلب علم پاس ہوئے ہیں ۔ روزنامہ جدت سے گفتگو کرتے ہوئے سندھ نرسنگ ایگزامنیشن بورڈ کی کنٹرولر خیرالنسائ کا کہنا تھا کہ انہوں نے اور انکی ٹیم کی کاوشوں سے نرسنگ ری کاؤنٹنگ اور مسنگ کاپیوں کے نتائج مکمل ہوئے کیونکہ ہمیں نرسنگ بورڈ کی پہلی والی ٹیم سے چیک کاپیاں ملی تھی اور یہ ہماری ہی ٹیم کو کریڈٹ جاتا ہے ان کاپیوں کو دوبارہ جانچہ جس سے طالب علموں کا وقت اور پیسے دونوں کو بچایا کچھ طالب علم ری چیکنگ میں پاس بھی ہوئے ہیں جس کا بارہا بتا چکے ہے کہ یہ طالب کو حق حاصل ہے کہ وہ اپنے نتائج کو دوبارہ بھی چیک کروا سکتاہے کچھ لوگ اب بھی طالب علموں کو گمراہ کررہے ہیں کہ کنٹرولر آپ کو سپلی کے امتحانات میں بھی فیل کریں گی ۔ میری سمجھ سے بالا تر ہے کس طرح لوگ افواہیں پھیلا رہے ہیں ۔ انہوں نے طالب علموں سے درخواست کی کہ وہ اپنی تعلیم پر توجہ دیں اور اس قسم کی افواہوں پر کان نہ دھریں بلکہ اب جو امتحانات کے نتائج آئیں گے وہ مکمل طور پر شفاف ہوں گے ۔ کیونکہ یہ تمام امتحانات ہماری نگرانی میں ہوں گے ۔ اس سے پہلے والے امتحانات ہماری نگرانی میں نہیں ہوئے تھے جس سے طالب علموں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑا ہمیں طالب علموں کا احساس ہے ہم چاہتے ہیں نرسنگ کے شعبے کا امیج بہتر ہو تاکہ عوام کا نرسنگ کے حوالے سے بننے والے منفی ذہن تبدیل ہوسکیں ۔ مختلف ذرائع سے فون کال اور ایس ایم ایس مجھے گئے کہ آپ نتائج تبدیل کردو ورنہ آپکا تبادلہ کردیا جائے گا لیکن میں اپنے مؤقف پر اٹی ہوئی ہوں اور رہوں گی کیونکہ میں اپنے شعبے سے مخلص ہوں ، نتائج پر کسی قسم کی مصلحت نہیں کی گئی ہے میں اپنی کارکردگی اور ٹیم کی کارکردگی سے مطمئن ہوں ۔ کچھ بروکر اور کرپٹ مافیا کو ہماری کارکردگی اچھی نہیں لگ رہی ہیں اور وہ طالب علموں کو گمراہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں جس میں انہیں ناکامی کا منہ ہی دیکھنا پڑے گا ۔ ہمارے نیتیں صاف ہیں ہم سے زیدہ کوئی بھی طالب علموں کا خیر خواہ نہیں ہے ۔