October 28, 2020

ملک میں روزانہ 1000 افراد فالج کا شکار ہو رہے ہیں، طبی ماہرین

کراچی:جدت ویب ڈیسک : طبی ماہرین نے کہا ہے کہ پاکستان میں روزانہ ایک ہزار افراد فالج کے حملے کا شکار ہو رہے ہیں۔ پاکستان اسٹروک سوسائٹی کے جنرل سیکریٹری ڈاکٹر روی شنکر، پاکستان سوسائٹی آف نیورولوجی کے سابق صدر پروفیسر محمد واسع، پاکستان سوسائٹی آف نیورولوجی کے رکن ڈاکٹر بشیر سومرو اور پاکستان اسٹروک سوسائٹی کے نائب صدر ڈاکٹر عبد المالک نے پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں روزانہ ایک ہزار افراد فالج کے حملے کا شکار ہو رہے ہیں، جن میں سے تقریبا 400 افراد موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں، 200 سے 300 افراد روزانہ مستقل معذوری کا شکار ہو رہے ہیں، ضرورت اس امر کی ہے کہ کراچی جیسے شہر میں قومی ادارہ برائے امراض قلب کی طرز پر فالج کے علاج کا اسپتال قائم کیا جائے، ان خیالات کا اظہار پروفیسر ڈاکٹر محمد واسع نے کہا کہ پاکستان میں ہر ایک لاکھ افراد میں سے 12 سو افراد فالج سے متاثر ہو رہے ہیں، 15 سال پہلے یہ تعداد محض ڈھائی سو تھی، پاکستان میں روزانہ فالج کے نتیجے میں 400 افراد زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں، کورونا وائرس کے بعد مارچ سے اب تک فالج سے متاثرہ افراد کی تعداد میں اضافہ ہو گیا،صوبائی حکومتوں کو فالج کی بیماری پر قابو پانے کے لیے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، ضلعی اسپتالوں میں فالج یونٹس قائم کرنے ہوں گے۔

October 28, 2020

نئی تحقیق ۔کررونا وائرس کانیا انداز۔محققین پریشان

ویب ڈیسک :: نئی تحقیق ۔کررونا وائرس کانیا انداز۔محققین پریشان۔۔دنیا بھر میں کورونا وائرس کا قہر کم ہونے کا نام نہیں لے رہا، ایسے میں سائنسدانوں کو معلوم ہوا ہے کہ کورونا وائرس نے انسانی جسم پر حملہ آور ہونے کیلئے نیا راستہ اختیار کیا ہے۔
یہ اس لئے کہا جارہا ہے کیونکہ سائنسدانوں نے اپنی نئی تحقیق میں یہ اخذ کیا ہے کہ اب یہ وائرس انسانوں میں نئے انداز سے داخل؛ ہوگا۔ایک سائنسی میگزین میں شائع ہونے والی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ محققین کے مطابق اب یہ وائرس انسانی جسم میں پروٹین کی مدد سے داخل ہورہا ہے، ان کا کہنا ہے کہ ایک خاص پروٹین اس وائرس کو انسانی جسم میں داخل ہونے کےلئے مدد کر رہا ہے۔تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے باہری حصہ میں نوکیلی یا اسپائک شکل ہوتی ہے اور اس کی اوپری سطح پر ایک خاص پروٹین ہوتا ہے جو انسانی جسم میں موجود سیلز کے پروٹین اے سی ای-2 سے جڑ جاتا ہے۔اس طرح کوروناوائرس انسانی سیلز میں داخل ہو کر اپنی تعداد بڑھاتا ہےاور آہستہ آہستہ جان لیوا وائرس پورے جسم پر قابض ہوجاتا ہے۔سائنسدانوں نے اس حوالے سے مزید دو تحقیقات کی ہیں، سائنسدانوں نےاس دوران انسانی سیلز میں موجود نیوروپلن-1 نامی پروٹین کا پتہ لگایاہے۔ یہ پروٹین بھی انسانی جسم میں کورونا وائرس کے ریسپیریٹر کی طرح ہی کام کرتا ہے۔ایک اور تحقیق میں انگلینڈ کی برسٹل یونیورسٹی کی ریسرچ ٹیم نے بتایا ہے کہ نیوروپلن -1 پروٹین سے کورونا وائرس کے جسم میں داخل ہونے کا پتہ لگایا ہے۔واضح رہے کہ تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ سیلز میں موجود نیوروپلن-1 پروٹین کےحصہ وائرس پر موجود تھے اوریہ وائرس اس پروٹین پر اثر ڈالنے کی صلاحیت رکھتا ہے، اس کے علاوہ جرمنی اور فنلینڈ کے تحقیق کرنے والوں نے بھی اس کی تصدیق کی ہے۔

October 28, 2020

کون سی کون سی ادویات اور اینٹی ریبیز ویکسین مہنگی ہوگئیں۔جانیے

اسلام آباد ویب ڈیسک :: : ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی نے 94 ادویات کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹی فکیشن جاری کردیا، جس کے مطابق بلڈ پریشر، کینسر، دل اور اینٹی ریبیزویکسین مہنگی ہوگئیں۔
تفصیلات کے مطابق ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی نے جان بچانے والی 94 ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا اورادویات کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا۔
ڈریپ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق جن ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کیا ہے، ان میں ہائی بلڈ پریشر، کینسر، امراض قلب کی ادویات و اینٹی ریبیز ویکسین شامل ہیں۔
نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ اضافہ شدہ ایم آر پی کے حصول کیلئے دو شرائط ہوں گے۔ان ادویات کی اضافہ شدہ قیمت 30 جون 2021 تک منجمد رہیں گے، ڈرگ لیبلنگ و پیکنگ رولز1986 کے تحت پیکٹ کے لیبل پر ایم آر پی پرنٹ کرے گی۔خیال رہے مذکورہ 94ادویات کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری کابینہ نے دی تھی، وفاقی کابینہ نے گذشتہ ماہ 22 ستمبر کو ان ادویات کی قیمتیں بڑھانے کی منظوری دی تھی۔
بعد ازاں وزیراعظم کے معاون خصوصی صحت ڈاکٹرفیصل سلطان نے 94 ادویات کی قیمتوں میں اضافے کو ناگزیر قرار دیتے ہوئے کہا تھا حکومت قیمتیں بڑھانے کے معاملے پر دباؤ میں نہیں آئی، اہم ادویات کی قیمتیں اتنی بڑھائی ہیں کہ لوگوں تک پہنچ سکیں۔

October 27, 2020

موسم کی اوٹ سے ظاہر ہوتے خوش رنگ اور خوش ذائقہ پھلوں میں کیوی کے جادوئی فوائد

کراچی ویب ڈیسک ::بھورے رنگ کا نظر آنے والا یہ کیوی نامی پھل اپنے اندر بیش بہا فوائد رکھتا ہے جس کے روزانہ استعمال سے انسان کئی طرح کی سنگین بیماریوں سے محفوظ رہ سکتا ہے۔
تفصیلات کے مطابق کیوی میں موجود خصوصی اجزا انسان کو دل کے مختلف امراض سے بچاتے ہیں، اس پھل کے استعمال سے لیور، اسٹروک، کارڈیک آریسٹ، ہارٹ اٹیک سمیت دیگر کئی سنگین بیماریوں کا خطرہ ٹلا رہتا ہے۔ اس پھل سے متعلق ہونے والی تحقیق میں دیگر حیران کن فوائد بھی سامنے آئے ہیں، کیوی میں بھرپور مقدار میں فائبر ہونے کی وجہ سے انسان کا دل تازہ اور صحت مند رہتا ہے جس سے دل کئی بیماریوں سے بھی محفوظ رہتا ہے۔کیوی انسانی جسم میں خون جمنے نہیں دیتا، اس سے کینسر جیسی سنگین بیماری سے بھی بچا جاسکتا ہے، پھل میں موجود اینٹی آکسیڈنٹس جلد کو صاف اور خوبصورت بناتے ہیں، اس سے دھوپ کے منفی اثرات جلد پر مرتب نہیں ہوتے، کیوی کے استعال سے اسکن(جلد) پر جھریاں بھی نہیں پڑتیں۔
نیند نہ آنے کی پریشانی میں مبتلا افراد کیوی کھائیں تو پرسکون نیند آئے گی، کیوی کھانے سے نیند کی کوالٹی 5 سے 13 فیصدی تک بہتر ہوجاتی ہے، یہ آنکھوں کے لیے بھی بہت مفید ہے۔
علاوہ ازیں اس پھل کے استعمال سے آپ سانس کی بیماریوں، وزن کے مسائل سمیت دیگر کئی طرح کے سنگین امراض سے خود کو محفوظ رکھ سکتے ہیں، کیوی سے انسانی ٹیشوز بھی صحت مند رہتے ہیں۔مذکورہ پھل سے بلڈ پریشر بھی کنٹرول میں رہتا ہے، کیوی جسم میں سوڈیم کا لیول کم کرنے میں بھی معاونت کرتا ہے، اس پھل کو کھانے والے افراد سوجن کے مسائل سے بھی دور رہتے ہیں۔

Kiwi Benefits | HerbaZest

Motivational Quotes on Twitter | Kiwi health benefits, Coconut health benefits, Fruit benefits

October 26, 2020

بلڈ پریشر کم کرنے میں قدرتی اشیا کا استعمال، چائے، بیریاں اور سیب کا کمال

لندن: ویب ڈیسک :: آج کل ہر دوسرا بندہ بلڈ پریشر کا شکار ہے دنیا بھر میں آبادی کا بہت بڑا حصہ بلند فشارِ خون (ہائی بلڈ پریشر) کا شکار ہے اور اس کے تدارک کے لیے چائے، مختلف بیریاں اور فلے وینول نہایت مؤثر ثابت ہوسکتے ہیں۔دنیا بھر میں بلڈ پریشر قابو میں رکھنے کے لیے غذاؤں کا سہارا لیا جاتا ہے جسے اب باقاعدہ ایک علم کا درجہ حاصل ہوچکا ہے ۔ اسےڈائیٹری اپروچ تو اسٹاپ ہائپرٹینشن یا ڈیش کہا جاتا ہے۔ لیکن اب ماہرین کا خیال ہےکہ ڈیش کی لمبی چوڑی غذاؤں کو کھانے کی بجائے اگر سیب اور چائے کا استعمال بڑھایا جائے تو اس کا افاقہ بھی ہوسکتا ہے۔
اس کی وجہ بیان کرتے ہوئے ماہرین نے کہا ہے کہ فلے وینول جادوئی اثرات رکھتے ہیں اور ان کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جاسکتا۔ یہ تحقیق سائنٹفک رپورٹس کی تازہ اشاعت میں چھپی ہیں جس میں ہزاروں افراد کا مطالعہ کیا گیا ہے۔ اگرچہ ڈیش میں سبزیوں اور پودوں کا استعمال کیا جاتا ہے لیکن اس ضمن میں نیا سروے بھی کیا گیا ہے۔
یہ سروے برطانیہ میں کیا گیا ہے جس میں 25618 افراد کو شامل کیا گیا ہے۔ اس سروے میں لوگوں کی عمر، عادات، ورزش، غذائی ترجیحات کو نوٹ کیا گیا۔ ان سے چائے اور سیب کے استعمال کا پوچھا گیا اور اس دوران پیشاب کے ٹیسٹ میں فلے وینولز کا اخراج بھی نوٹ کیا گیا۔ پھر اس مقدار کا بلڈ پریشر سے تعلق بھی نوٹ کیا گیا۔یونیورسٹی آف ریڈنگ کے سائنسداں گنر کونلے اور ان کے ساتھیوں نے یہ سروے کیا ہے فلے وینول دل کے لیے بھی مفید ہے۔ ان کے مطابق فلیوونول کی بلند مقدار چائے، سیب اور بیریوں میں پائی جاتی ہےتاہم کافی میں اس کی مقدار کم ہوتی ہے۔ بعض اقسام کا چاکلیٹوں میں بھی فلیوونول پایا جاتا ہے۔
سائنسدانوں نے ایک دلچسپ بات نوٹ کی کہ جن افراد میں فلیوونول کی مقدار زیادہ تھی ان کا بلڈ پریشر دیگر کے مقابلے میں قدرے کم نوٹ کیا گیا ۔ یہ کمی دو سے چار یونٹ کم تھی۔ اس سے اہم بات یہ معلوم ہوئی کہ جیسے ہی ہائی بلڈ پریشر والے مریضوں میں فلے وینول کی مقدار بڑھائی گئی تو ان کا بلڈپریشر بھی دھیرے دھیرے نارمل ہوتا گیا۔

8 Benefits of Apple for the Skin | Femina.in

October 26, 2020

انگلیوں کی مدد سے قد بڑھانے کا حیرت انگیز طریقہ ۔آپ بھی جانیے

ویب ڈیسک ::قد انسان کی شخصیت پر ایک بہت بڑا اثر ڈالتا ہے جن لوگوں کا قد لمبا ہوتا ہے وہ ہرجگہ پرسکون اور پراعتماد ہوتے ہیں مگر جن لوگوں کا قد تھوڑا چھوٹا رہ جاتا ہے وہ ذرا لوگوں کے سامنے محفلوں میں احساسِ کمتری کا شکار ہوجاتے ہیں۔ اور قد کو بڑھانے کے لئے مختلف قسم کے ٹوٹکے اور دوائیوں کا استعمال کرتے ہیں۔ جس سے فائدہ ہو یا نہ وہ اس کی وکئی گارنٹی نہیں ہوتی۔ مگر آج ہم آپ کو ایک ایسی ورزش بتاتے ہیں جس کو استعمال کرکے آپ صرف اپنی انگلیوں کی مدد سے ہی اہنا قد بڑھانے کا کام کرسکتے ہیں۔
اپنے بائیں ہاتھ کے انگھوٹھے سے دائیں انگھوٹھے پر زور دیں اور دس منٹ تک اسی طرح انگھوٹھے پر وزن دیتے جائیں، اسی طرح پاؤں کے انگھوٹوں کو زمین پر اس طرح رکھیں کہ سارا وزن پیر کے انگھوٹوں پر ہوں۔ یہ ورزش روزانہ کریں، صبح نہارمنہ اور رات کو سونے سے قبل۔ اس دوران آپ کی انگلیوں سے مماثل ہڈیاں اور اعصاب زیادہ فعال ہوتے ہیں جوکہ قد بڑھانے والے ہارمونز کو متحرک کرتے ہیں یہی وجہ ہے کہ اس ورزش سے آپ کا قد کسی حد تک بڑھ سکتا ہے۔

Increase Height with Acupressure Point At Any Age | Color Therapy For He... | Acupressure points, Acupressure, Acupressure treatment

October 21, 2020

بچوں کے بارے میں دل دہلا دینے والا انکشاف

ویب ڈیسک ::ڈبلن: بچوں کے بارے میں دل دہلا دینے والا انکشاف۔۔۔
محققین نے بوتل سے دودھ پینے والے بچوں کے بارے میں یہ دل دہلا دینے والا انکشاف کیا ہے کہ وہ یومیہ پلاسٹک کے 10 لاکھ ذرات نگل جاتے ہیں۔
’نیچر فوڈ‘ نامی جریدے میں شایع تحقیق میں کہا گیا ہے کہ اس بات کے واضح ثبوت ملے کہ انسان بڑی تعداد میں پلاسٹک کے نہایت چھوٹے چھوٹے ذرات روزمرہ کی خوراک کے ذریعے نگل جاتے ہیں، یہ ذرات پلاسٹک کے بڑے ٹکڑے ٹوٹنے کے سبب بنتے ہیں۔تفصیلات کے مطابق آئرلینڈ میں ہونے والی ایک تحقیق میں کہا گیا ہے کہ بوتل سے دودھ پینے والے بچے ہر روز مائیکرو پلاسٹک کے تقریباََ دس لاکھ ذرات نگل جاتے ہیں۔آئرلینڈ کے محققین کا کہنا ہے کہ کھانے کی مصنوعات میں پلاسٹک کے بے تحاشا ذرات موجود ہوتے ہیں جن سے سب سے زیادہ متاثر بوتل سے دودھ پینے والے بچے ہوتے ہیں۔
محققین نے ابھی یہ نہیں بتایا ہے کہ جب یہ ذرات جسم کے اندر جاتے ہیں تو اس سے صحت پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ تاہم ماہرین یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ دودھ کی بوتلوں اور پلاسٹک تھیلیوں میں کتنے فی صد مائیکرو ذرات پائے جاتے ہیں۔تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ پلاسٹک کی ایک بوتل سے فی لیٹر 13 لاکھ سے ایک کروڑ 62 لاکھ تک مائیکرو پارٹیکلز خارج ہوتے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق بوتل سے دودھ پینے والا بچہ زندگی کے ابتدائی 12 ماہ میں اوسطاََ ہر دن 16 لاکھ پلاسٹک کے ذرات نگل جاتا ہے۔محققین نے تجویز دی ہے کہ شدید گرم پانی میں دودھ کی بوتل دھوئی جائے تو پلاسٹک کے ذرات بڑی حد تک کم ہو سکتے ہیں۔ اور ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس تحقیق کا مقصد والدین کو پریشان کرنا نہیں بلکہ مائیکرو پلاسٹک کے صحت پر پڑنے والے ممکنہ خطرات کا جائزہ لینا تھا۔

October 21, 2020

کورونا کی ممکنہ دوسری لہر، 24 گھنٹوں میں 19 افراد جاں بحق

اسلام آباد: جدت ویب ڈیسک :ملک بھر میں کورونا وائرس کے فعال کیسز کی تعداد 9 ہزار378 ہوگئی جب کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 19 افراد کورونا کے باعث جان سے ہاتھ دھوبیٹھے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹرکے تازہ اعداد وشمارکے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا کے660 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد ملک بھرمیں مجموعی کیسز کی تعداد 3 لاکھ 24 ہزار 744 ہوگئی۔ این سی او سی کے مطابق فعال کیسز کی تعداد 9 ہزار 378 ہوگئی جب کہ اب تک کورونا وائرس میں مبتلا 3 لاکھ 8 ہزار 674 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں مزید 19 اموات رپورٹ ہوئیں جس کے بعد مجموعی اموات کی تعداد 6 ہزار 692 ہوگئی۔سندھ میں مریضوں کی تعداد ایک لاکھ 42 ہزار 348 ، پنجاب میں ایک لاکھ ایک ہزار 936، خیبرپختونخوا 38 ہزار 779 ، اسلام آباد میں 18 ہزار 309، بلوچستان میں 15 ہزار 717 ، آزاد کشمیر 3 ہزار 564 اورگلگت بلتستان میں 4 ہزار 091 تعداد ہوگئی۔کورونا وائرس کے خلاف یہ احتیاطی تدابیراختیارکرنے سے اس وبا کے خلاف جنگ جیتنا آسان ہوسکتا ہے۔ صبح کا کچھ وقت دھوپ میں گزارنا چاہیے، کمروں کو بند کرکے نہ بیٹھیں بلکہ دروازے کھڑکیاں کھول دیں اور ہلکی دھوپ کو کمروں میں آنے دیں۔ بند کمروں میں اے سی چلاکربیٹھنے کے بجائے پنکھے کی ہوا میں بیٹھیں۔سورج کی شعاعوں میں موجود یو وی شعاعیں وائرس کی بیرونی ساخت پر ابھرے ہوئے ہوئے پروٹین کو متاثر کرتی ہیں اور وائرس کو کمزور کردیتی ہیں۔ درجہ حرارت یا گرمی کے زیادہ ہونے سے وائرس پرکوئی اثرنہیں ہوتا لیکن یو وی شعاعوں کے زیادہ پڑنے سے وائرس کمزور ہوجاتا ہے۔