June 15, 2018

جامعہ کراچی: 9 افسران کی گریڈ 20 میں ، 28 افسران کی گریڈ 19 میں ترقی

کراچی جدت ویب ڈیسک جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل خان نے کہا کہ کسی بھی شعبہ کی ترقی میں ملازمین کا کردار بڑی اہمیت کا حامل ہوتاہے ،ہمیں دھرنوں اور احتجاج میں وقت ضائع کرنے کے بجائے جامعہ کراچی کی ترقی کے لئے کام کرناچاہیئے اور مل بیٹھ مسائل کو حل کرنے کی ضرورت ہے۔جامعہ کراچی کے نامساعد مالی حالات کے باوجود میری پوری کوشش ہوتی ہے کہ جامعہ کے تمام ملازمین کو زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہم کی جائیں ۔ ادارے کی اصل طاقت ملازمین ہیں اور ملازمین کو چاہیئے کہ وہ محنت ،لگن اور ایمانداری سے اپنے فرائض منصبی سرانجام دیں اور ادارے کی ساکھ کو بحال کرنے کے لیے میرا بھرپور ساتھ دیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے شعبہ جاتی ترقی کمیٹی کی سفارشات پر افسران کو دی جانے والی ترقی کے خطوط کی تقسیم کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب کا اہتمام وائس چانسلر سیکریٹریٹ جامعہ کراچی میں کیا گیا تھا۔تقریب میں 09 افسران کو گریڈ 20 میں ترقی جبکہ 28 افسران کو گریڈ 19 میں ترقی اور 05 افسران کو گریڈ 18 میں ترقی دی گئی ۔شیخ الجامعہ ڈاکٹر اجمل خان نے مزید کہا کہ جس ادارے میں ملازمین سے کام لیا جائے مگر ان کو ان کے جائز حقوق بشمول ترقی ،اور دیگر مراعات سے محروم رکھا جائے ،ایسے ملازمین مایوس ہوکر ادارے کی ترقی میں اپنا کردار اداکرنے سے قاصر رہتے ہیں۔صرف وہ ہی ادارے کامیاب ہوتے ہیں جن میں ملازمین کو ان کی خدمات اور صلاحیتوں کا جائز صلہ ملتاہے،میری بطور سربراہ ادارہ یہ ذمہ داری ہے کہ جامعہ کے ایک ایک ملازم کے حقوق کا تحفظ کروں اور انہیں ان کے جائز حقوق کی فراہمی کو یقینی بنائوں ۔مجھے امید ہے کہ میری اس کاوش کو ملازمین قدر کی نگاہ سے دیکھیں گے اور ذاتی فائدے یا مراعات کے بجائے ادارے کی ترقی کو فوقیت دیتے ہوئے شب وروز جانفشانی سے اپنی ذمہ داریاں مزید دیانت داری اور فرض شناسی سے اداکریں گے۔اس موقع پر رجسٹرار جامعہ کراچی پروفیسر ڈاکٹر ماجد ممتاز،رئیس کلیہ علم الادویہ پروفیسر ڈاکٹر اقبال اظہر،رئیس کلیہ نظمیات وانتظامی علوم پروفیسر ڈاکٹر طاہر علی،اراکین سنڈیکیٹ سید غفران عالم،ڈاکٹر صالحہ رحمن اورڈاکٹر محسن علی بھی موجودتھے۔

June 12, 2018

عید پر مرغن اوردیر ہضم غذاؤں سے مکمل پرہیز کیا جائے ‘حکمائ

لاہور جدت ویب ڈیسک :بسیار خوری یا پر خوری ہمیشہ صحت کے لئے نقصان دہ ہے۔اعصابی تناؤ،دماغی کمزوری،ہائی بلڈ پریشر ،شوگر اور پیٹ کی بیماریاں زیادہ کھانے ہی سے پیدا ہوتی ہیں،مہینہ بھرروزے رکھنے کے بعد ہمیں انپے معدہ انتڑیوں جگر گردوں اور پٹھوں کو آرام دینے کا سنہری موقعہ میسر آیا تھا کوبسیار خوری سے ایک دن ہی میں ضائع کر دیتے ہیں،عید کے دن مرغن غذائیں مثلاً روسٹ،مرغ قومہ ،بریانی،کڑاہی گوشت،حلوہ پوری،کچوری،نان چنے،سری پائے،کیک، مٹھائیاں،آئس کریم کوک وغیرہ کا جی بھر کے استعمال کرتے ہیں،نتیجتاً بیمار ہوکر بستر سے لگ جاتے ہیں۔ایک ماہ تک اپنے جملہ اعضائ کو آرام دینے کے بعد ہلکی اور زودہضم غذا کی ضرورت ہوتی ہے لہذا مرغن اوردیر ہضم غذاؤں سے مکمل پرہیز کرنا چاہیے۔ان خیالات کا اظہار طبی ماہرےن پروفےسر حکیم محمد احمد سلیمی، پروفےسر حکیم محمد افضل میو، پروفےسر حکیم سید عمران فیاض، حکیم احمد حسن نوری،، حکیم عطائ الرحمن صدیقی، حکیم حامد محمود، حکیم عمر فاروق گوندل ، حکیم امجد وحید بھٹی، حکیم محمد اسحق، حکےم محمد احمد، حکیم محمد ابو بکر ، حکیم فیصل طاہر صدیقی ، ڈاکٹر سکندر حیات زاہد نے ’’ عید سعید اور ہماری صحت‘‘ کے حوالے سے منعقدہ مجلس مذاکرہ میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ ناشتہ میں سویاں بنائیں اور اس میں دودھ ڈال کر استعمال کریں۔دوپہرکے کھانے میں سبزی گوشت ،جپاتی کے ساتھ اور رات کے کھانے میں بھی ہلکی زود ہضم غذا کا استعمال کریں۔انہوں نے کہا کہ آج کل سیب ،امررود،انگور،کیلا،وغیرہ عام دستیاب ہیں۔ان میں سے کسی ایک پھل کو استعمال کرنے سے جسم کو بھرپور توانائی حاصل ہوتی ہے۔ان پھلوں سے نشاستہ دار اجزائ،قدرتی نمکیات مثلاً سوڈیم، کیلشیم،پوٹاشیم، فولاد،فاسفورس اور مقطر پانی کا فی مقدار میں حاصل ہوتا ہے۔یہ پھل قبض نہیں ہونے دیتے اور انسان تندرست و توانا رہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک میں سگریٹ،نسوار کثرت چائے نوشی اوردیگر منشیات کے عادی افراد دن بھر ان چیزوں سے پرہیز کرتے ہیں۔ ایک ماہ تک ان مضر صحت اشیا سے پرہیز کرنے کے بعد عید پرتمام کثریں نکال لیتے ہیں۔حالانکہ رمضان شریف کا مہینہ ان منشی اشیائ کے عادی افراد کے لئے ہمیشہ کے لئے ان بری عادتوں سے نجاب کا سنہری موقعہ فراہم کرتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ موٹاپے سے پریشان حال لوگوں کے لئے بھی رمضان شریف کا مہینہ ایک نعمت ہے۔اگر فربی کی جانب مائل افراد اس مرض سے نجات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو رمضان کے بعد بھی اسی تسلسل کو برقرار رکھتے ہوئے موٹاپے سے مکمل نجات حاصل کر سکتے ہیں۔رمضان المبارک کا مہینہ ہمیں نظم و ضبط اور ہر بات میں اعتدال کے تحت زندگی بسر کرنے کا موقعہ فراہم کرتا ہے۔رمضان کے بعد بھی اسی نظم و ضبط اور اعتدال کو برقرار رکھنے کی اشد ضرورت ہے۔

June 10, 2018

ماجو کے پروفیسرز کی کراچی میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی پر تحقیق میں امریکی حکام کی دلچسپی

کراچی جدت ویب ڈیسک امریکی شہر نیو یارک کے بات چیت کی بیماریوں کے بیو رو،صحت عامہ اور حفظان صحت کے شعبہ کے سربراہ رابرٹ فٹز ہینری نے محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی(ماجو) کی لائف سائینسز کی فیکلٹی کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر کامران عظیم اور ان کے معاون فیضان سلیم کی جانب سے میگا سٹی کراچی میں پینے کے پانی کی فراہمی کے نظام میں بیکٹریاکمیونیٹی کی میٹاجینومک خصوصیات پر تیار کی جانے والی تحقیقی رپورٹ کی بین الاقوامی جرنل میں اشاعت کے بعد اس کی ایک کاپی طلب کرلی ہے۔واضح رہے کہ ماجو کے ان پروفیسرز نے اپنی تحقیقی رپورٹ کی تیاری کے دوران پانی میں پائے جانے والے جراثیم کی موجودگی کا مطالعہ کرنے کے لئے جدید ترین ٹیکنالوجی ڈی این اے کی ترتیب کی اگلی نسل(g Next Generation DNA Sequencin) کا استعمال کیا گیا تھا جس سے بیش بہا معلومات حاصل کی گئی تھیں اور یہ بات سامنے آئی تھی کہ کراچی میں فراہم کئے جانے والے پینے کے پانی میں موجود جراثیم کی اکثریت بیماریاں پیدا نہیں کرتی ہیں۔یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ تحقیق کے شعبہ کی اس نئی ٹیکنالوجی سے امریکہ،یورپ اور چین کے بہت کم شہروں میں فراہم کئے جانے والے پینے کے پانی پر تحقیق کی گئی ہے۔پروفیسر ڈاکٹر کامران عظیم نے امریکہ کے ایک بڑے شہر نیویارک کے صحت عامہ کے شعبہ کی جانب سے انکی تحقیقی رپورٹ کی کاپی طلب کرنے پر اپنی مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا کے چند ہی ممالک کے شہروں میں اس نئی ٹیکنالوجی کی مدد سے پینے کے صاف پانی پر تحقیق کی گئی ہے جن میں اب پاکستان بھی شامل ہو گیا ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ اس تحقیقی رپورٹ کی مدد سے ہمارے ریسرچ اسکالرز مزید تحقیق و تفتیش کرسکتے ہیںخاص طور پر ماحولیات اور پانی کی فراہمی و نکاسی کے ذمہ دار اداروں کو یہ تحقیقی رپورٹ بڑی مفید معلومات فراہم کرسکتی ہے۔

June 9, 2018

ماہ رمضان میں جلد کی حفاظت کے لیے کچھ ٹپس جانیے

جدت ویب ڈیسک ::گرمیوں اور سردیوں میں جلد کے مسائل ہوتے رہتے ہیں ، پانی کی کمی یا تیز دھوپ۔۔ اور اب رمضان المبارک اللہ تعالیٰ کی طرف سے مسلمانوں کے لیے ایک خاص انعام ہے۔ جس میں معمولات زندگی تبدیل ہو کر رہ جاتے ہیں، نیند اس طرح پوری نہیں ہوتی جس طرح عام دن میں کی جاتی ہے، نظام ہاضمہ میں بھی تبدیلی واقع ہوجاتی ہے۔ روزے کی حالت میں چوں کہ سارا دن پانی نہیں پیا جاتا ا س سے جسم میں پانی کی کمی بھی پیدا ہوجاتی ہے جس کے اثرات چہرے پر ظاہر ہوتے ہیں۔ اس سال ماہ رمضان کی آمد گرمیوں کے موسم میں ہوئی ہے اس لیے کھانے پینے کے اوقا ت چیزوں میں تبدیلی کی وجہ سے ہر قسم کی جلد کو مسائل (skin problems) کا سامنا ہے، آپ کی جلد خشک ، چکنی اور کیل مہاسوں کا شکار ہو سکتی ہے اور چہرے کی خوبصورتی (face beauty) ماندپڑ جاتی ہے۔
رمضان میں جلد کی حفاظت (skincare)
1) چکنی اور مرغن غذائیں نہ کھائیں۔
2) تیز مرچ مسالوں سے بنے سموسے اور پکوڑوں کو اپنی غذا کا حصہ نہ بنائیں۔
3) نیند میں کمی نہ رکھیں ۔اس سے آپ کی جلد مردہ ہونے لگتی ہے۔
4) افطار سے سحری کے دوران پانی پینے سے ہر گز گریز نہ کریں،ورنہ جلد جھریوں کا شکار ہوجائے گی۔
5) تیز دھوپ میں بغیر کسی ضرورت کےسفر نہ کریں۔
6) رس دار پھل کھانے سے ہرگز اجتناب نہ برتیں۔
7) چٹنی، اچار اور چٹ پٹے کھانے نہ کھائیں۔
8) فاسٹ فوڈ کھانے سے خود کو بچائیں اس سے جلد پر ایکنی نکلنے کا خطرہ ہوتا ہے۔
9) گھر پر تیار کیے گئے ماسک جلد پر لگانے سے گریز کریں ۔
10) سحری اور افطاری کے اوقات میں گوشت کے استعمال سے جتنا ممکن ہو بچیں۔
افطار کے وقت یوں تو دستر خوان پر سجے کھانے ہر روزے دار کے لیے ایک انعام ہوتے ہیں ، اور آذان ہونے کے ساتھ ہی روزے دار اس سے تواضع بھی کرتے ہیں ، بھوک ، پیاس اور جلد بازی کی وجہ سے اکثر لوگ بیماری کا شکار بھی ہوجاتے ہیں اور انھی غذائوں میں کچھ ایسی اشیا بھی ہوتی ہیں جو جلد کے لیے نقصان دہ بھی ثابت ہوتی ہیں، اگر آپ اپنی جلد کی بہتر حفاظت (skincare) چاہتے ہیں تو خاص طور پر رمضان المبارک میں ایسی چیزیں کھانے سے گریز کریں جو آپ کی جلد کے لیے نقصان دہ ثابت ہوتی ہیں۔

June 8, 2018

جامعہ کراچی کے اساتذہ کیلئے عید الائونس کی منظوری

کراچی جدت ویب ڈیسک جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل خان نے جامعہ کراچی کے اساتذہ کے لئے عید الائونس کی منظوری دیتے ہوئے کہا کہ نامساعد مالی حالات کے باوجود بھی جامعہ کراچی کے اساتذہ تدریس وتحقیق میں ہمہ وقت مصروف رہتے ہیں،اگرانہیں تحقیق کے لئے ان کی ضروریات کے مطابق وسائل فراہم کئے جائیں تو یہ اساتذہ اپنی تحقیق کے ذریعے نہ صرف معاشرتی مسائل کے حل بلکہ ملک کی ترقی کے لئے بھی اپنا کلیدی اور مثبت کردار اداکرسکتے ہیں۔کوئی بھی مہذب وترقی پسند قوم ، ملک ،معاشرہ استاد کے مقام ومرتبہ اور اہمیت سے انحراف نہیں کرسکتا،کوئی بھی معاشرہ تعلیم کے بغیر ترقی نہیں کرسکتا اور تعلیم کا حصول استاد کے بغیر ممکن نہیں،اساتذہ ہیسوسائٹی کو محقق، سائنسدان، سیاستدان اور متعدد شعبہ ہائے حیات سے تعلق رکھنے والے ماہرین فراہم کرنے میں کلیدی کردار اداکرتے ہیں۔جامعہ کراچی کے نامساعد مالی حالات کے باوجود بھی میری پوری کوشش ہوتی ہے کہ جامعہ کراچی کے اساتذہ اور ملازمین زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہم کی جائیں اور ان کے تمام واجبات کو بروقت یقینی بنایا جائے۔واضح رہے کہ اساتذہ کے عید الائونس کی رقم جلد ہی ان کے اکائونٹ میں منتقل کردی جائے گی۔جامعہ کراچی کے ناظم امتحانات ڈاکٹر عرفان عزیز کے اعلامیے کے مطابق بی اے ایل ایل بی (آنرز)سال آخر سالانہ امتحانات برائے 2017 ء کے نتائج کا اعلان کردیا گیا ہے۔نتائج کے مطابق ایس ایم گورنمنٹ لاء کالج کی خضرہ فاطمہ بنت سید سعادت حسین چشتی سیٹ نمبر13705 نے 2044 نمبرزکے ساتھ پہلی پوزیشن ،پرنون مشتاق بنت مشتاق احمد انصاری سیٹ نمبر13706 نے2025 نمبرز کے ساتھ دوسری جبکہ محمد مزان بُلادی ولد نیاز علی بُلادی سیٹ نمبر13713 نے 2003 نمبرز کے ساتھ تیسری پوزیشن حاصل کی ۔امتحانات میں کل 31 طلبہ شریک ہوئے،14 طلبہ کو فرسٹ ڈویژن جبکہ 06 طلبہ کو سیکنڈ ڈویژن میں کامیاب قراردیاگیا ۔کامیاب طلبہ کا تناسب 64.52 فیصدرہا۔جامعہ کراچی کے ناظم امتحانات ڈاکٹر عرفان عزیز کے اعلامیے کے مطابق ایل ایل بی سال آخر سالانہ امتحانات برائے 2017 ء کے نتائج کا اعلان کردیا گیا ہے۔نتائج کے مطابق ایس ایم گورنمنٹ لاء کالج کی قرۃ العین اشرف بنت محمد اشرف خان مغل سیٹ نمبر13368 نے 1300 نمبرز کے ساتھ پہلی پوزیشن،منیرہ بنت عباس علی خان سیٹ نمبر13314 نے1295 نمبرز کے ساتھ دوسری پوزیشن حاصل کی جبکہ وحید الزمان ولد مزمل الدین شیخ سیٹ نمبر13270 نے 1285 نمبر ز کے ساتھ تیسری پوزیشن حاصل کی۔امتحانات میں کل 566 طلبہ شریک ہوئے،15 طلبہ کو فرسٹ ڈویژن جبکہ 196 طلبہ کو سیکنڈ ڈویژن میں کامیاب قراردیاگیا ۔کامیاب طلبہ کا تناسب 37.28 فیصدرہا۔وفاقی اردو یو نیورسٹی کے رجسٹرار افضال احمد کے مطابق جامعہ اردو میں بروزمنگل12جون 2018کو’’شب ِ قدر‘‘کے سلسلے میں عام تعطیل ہو گی۔

June 8, 2018

آج دنیا بھر میں دماغ کی رسولی یا برین ٹیومر اور اس سے بچاؤ سے متعلق آگاہی کے لیے برین ٹیومر کا دن منایا جارہا ہے

جدت ویب ڈیسک ::آج دنیا بھر میں دماغ کی رسولی یا برین ٹیومر اور اس سے بچاؤ سے متعلق آگاہی کے لیے برین ٹیومر کا دن منایا جارہا ہے۔ دنیا بھر میں ڈیڑھ کروڑ سے زائد افراد برین ٹیومر کا شکار ہیں۔
عالمی ادارہ صحت ڈبلیو ایچ او کے مطابق برین ٹیومر کا شکار خواتین کی تعداد مردوں سے کہیں زیادہ ہے۔ادارے کا کہنا ہے کہ دماغی رسولی کا مرض تیزی سے پھیل رہا ہے اور سنہ 2035 تک اس مرض کا شکار افراد کی تعداد ڈھائی کروڑ سے تجاوز کر جائے گی۔
برین ٹیومر کی وجہ
ماہرین کے مطابق اب تک دماغی رسولی بننے کی واضح وجوہات طے نہیں کی جاسکی ہیں تاہم بہت سے بیرونی و جینیاتی عوامل اس مرض کو جنم دے سکتے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ دماغ میں رسولی بننے کی سب سے اہم وجہ بچپن میں تابکار شعاعوں میں وقت گزارنا ہے جو آگے چل کر برین ٹیومر کو جنم دے سکتا ہے۔اس ضمن میں موبائل فون ایک اہم کردار ادا کر سکتے ہیں جن کا مستقل اور حد سے زیادہ استعمال اور ان سے نکلنے والی شعاعیں دماغ پر تباہ کن اثرات مرتب کرتی ہے۔
برین ٹیومر کی ابتدائی علامات مندرجہ ذیل ہیں جن پر فوری توجہ دینے کی ضرورت ہے۔مستقل اور شدید سر درد ۔ برین ٹیومر کا سر درد صبح کے وقت زیادہ ہوتا ہے۔
نظر کی دھندلاہٹ
اگر آپ کے جسم میں اچانک ایک کرنٹ سا پیدا ہو اور ایک لمحے کے لیے آپ اپنے تمام جسم کو مفلوج محسوس کریں تو یہ برین ٹیومر کی نشانی ہے۔ چکر آنا، غنودگی محسوس ہونا
چونک ہمارا دماغ جسم کے تمام افعال کو کنٹرول کرتا ہے لہٰذا بغیر کسی وجہ کے اگر آپ اپنے جسم میں کوئی بھی تبدیلی محسوس کریں جیسے چلنے پھرنے یا کھڑے رہنے میں دقت، بولتے ہوئے الفاظ صحیح ادا نہ ہو پانا یا جسم کے کسی بھی ایک حصے میں شدید کمزوری تو آپ کو فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کرنے کی ضرورت ہے

June 7, 2018

پاکستانی مصنفہ کاملہ شمسی نے برطانیہ میں ویمن پرائز فار فکشن جیت لیا

کراچی جدت ویب ڈیسک ::پاکستانی مصنفہ کاملہ شمسی نے برطانیہ میں ویمن پرائز فار فکشن جیت لیا، وہ کئی کتابوں کی مصنف ہیں ،کامل شمسی نے ناول ’’ہوم فائر ‘‘ کیلئے ویمن پرائز فار فکشن ایوارڈ 2018 اپنے نام کرلیا۔خواتین کو فکشن لکھنے جانے پر دیا جانے والا یہ برطانیہ کا اعلیٰ ترین ادبی ایوارڈ ہے جو ہرسال دیا جاتا ہے۔ کاملہ شمسی یہ اعزاز حاصل کرنے والی پہلی پاکستانی خاتون ناول نگار ہیں۔
سال 1996 میں شروع کیے جانے والے اس اعلیٰ ترین ادبی ایوارڈ میں جیتنے والی لکھاری کو 30 ہزار برطانوی پاؤنڈز کی رقم بھی دی جاتی ہے۔ برطانونی نژاد پاکستانی مصنفہ کامل شمسی نے ناول ’’ہوم فائر ‘‘ کیلئے ویمن پرائز فار فکشن ایوارڈ 2018 اپنے نام کرلیا۔
خواتین کو فکشن لکھنے جانے پر دیا جانے والا یہ برطانیہ کا اعلیٰ ترین ادبی ایوارڈ ہے جو ہرسال دیا جاتا ہے۔ کاملہ شمسی یہ اعزاز حاصل کرنے والی پہلی پاکستانی خاتون ناول نگار ہیں۔
کاملہ شمسی 1973 میں کراچی میں پیدا ہوئیں اور ابتدائی تعلیم کے بعد لندن منتقل ہو گئی تھیں۔
سال 1996 میں شروع کیے جانے والے اس اعلیٰ ترین ادبی ایوارڈ میں جیتنے والی لکھاری کو 30 ہزار برطانوی پاؤنڈز کی رقم بھی دی جاتی ہے۔ناول ’’ہوم فائر‘‘بنیاد پرستی کو موضوع بنا کر لکھا گیا ہے جس میں محبت ، سیاست اور وفاداریوں میں تصادم کو بھی قلم کی نوک تلے لایا گیا ہے۔
رواں سال مارچ میں شارٹ لسٹ کیے گئے 16 ناولز میں کاملہ شمسی کے ’’ہوم فائر‘‘ کے علاوہ ممتاز بھارتی مصنفہ ارون دھتی رائے کا ناول بھی شامل تھا۔

June 5, 2018

جامعہ کراچی کے تمام افسران کو عید الائونس جاری کرنے کے احکامات جاری

کراچی جدت ویب ڈیسک جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل خان نے کہاکہ سندھ حکومت کی جانب سے جامعہ کراچی کو تین کروڑ روپے کی گرانٹ کا چیک موصول ہوگیاہے اور یہ گرانٹ جامعہ کراچی کے پی ایچ ڈی اساتذہ کو سابق وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی جانب سے اعلان کردہ پی ایچ ڈی الائونس کے اضافی پندرہ ہزار روپے دیئے جانے کی مد میںدی گئی ہے جس پر میں حکومت سندھ کے تعلیم دوست اقدامات پر ان کا بیحد شکریہ اداکرتاہوں۔جامعہ کراچی کی انتظامیہ ہر پی ایچ ڈی فیکلٹی ممبرکو75000 روپے(پانچ ماہ کے بقایاجات کی مد میں) گرانٹ کے جامعہ کراچی کے اکائونٹ میں منتقل ہوتے ہی فراہم کردے گی۔ڈاکٹر محمد اجمل خان نے مزید کہا کہ مجھے امید ہے کہ پی ایچ ڈی الائونس کے اضافی رقم کی مزید پانچ ماہ کی گرانٹ بھی جلد جامعہ کراچی کو فراہم کردی جائے گی ۔علاوہ ازیں جامعہ کراچی کے تمام افسران کو عید الائونس جاری کرنے کے احکامات جاری کردیئے گئے اور جلد ہی عید الائونس کی رقم ان کے اکائونٹ میں منتقل ہوجائے گی۔میری پوری کوشش ہے کہ جامعہ کراچی کے نامساعد مالی حالات کے باوجود تمام اساتذہ کو بھی جلد سے جلد عید الائونس فراہم کیا جائے اور اس سلسلے میں بہت جلد فائنانس کمیٹی کا اجلاس منعقد کیا جارہاہے جس میں اساتذہ کو عید الائونس دینے کے حوالے سے فیصلہ کیا جائے گا۔ میری پوری کوشش ہوگی کہ جامعہ کراچی کے اساتذہ کو بھی جلد سے جلد عید الائونس کی ادائیگی کو ممکن بنایا جائے۔جامعہ کراچی کے ناظم امتحانات ڈاکٹر عرفان عزیز کے اعلامیے کے مطابق ایل ایل بی سال اول اور دوئم سالانہ امتحانات برائے 2017 ء کے نتائج کا اعلان کردیا گیاہے۔نتائج کے مطابق ایل ایل بی سال اول کے امتحانات میں 1174 طلبہ شریک ہوئے،651 طلبہ کو کامیاب قراردیاگیاجبکہ 523 طلبہ ناکام قرارپائے۔کامیاب طلبہ کا تناسب 55.45 فیصد رہا۔ایل ایل بی سال دوئم کے امتحانات میں 645 طلبہ شریک ہوئے،493 طلبہ کو کامیاب قراردیاگیا جبکہ 152 طلبہ کو ناکام قرارپائے۔کامیاب طلبہ کا تناسب 76.43 فیصدرہا۔