July 21, 2019

بینکوں کو غیر ملکی کرنسی میں عوام سے کاروبار کرنے کی اجازت

کراچی جدت ویب ڈیسک :اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے ایکسچینج کمپنیوں کو کرنسی کے کاروبار سے روکنے کا آغاز کرتے ہوئے بینکوں اور ان کی تمام شاخوں کو ملک بھر میں عوام سے غیر ملکی کرنسی کے خرید و فروخت کرنے کی اجازت دے دی۔ رپورٹ کے مطابق اسٹیٹ بینک نے غیر ملکی زر مبادلہ کا نظر ثانی شدہ مینوئل جاری کردیا جس میں کرنسی کے کاروبار کے حوالے سے تفصیلات درج ہیں جبکہ ایکسچینج کمپنیوں کا کام بھی بینکوں کو دے دیا گیا ہے۔قبل ازیں بینکوں کو غیر ملکی زرمبادلہ براہ راست عوام سے خریدنے یا فروخت کرنے کی اجازت نہیں تھی سوائے ان کے جن کی اپنی ایکسچینج کمپنیاں تھیں۔اسٹیٹ بینک نے ایکسچینج کمپنیوں کے مستقبل کے حوالے سے کچھ نہیں کہا جنہیں حالیہ پیش رفت سے خدشات ہیں۔غیر ملکی کرنسی نوٹوں کی عوام سے خریداری کے حوالے سے اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ پاکستانی ہوں یا غیر ملکی تمام بیرون ملک سے آئے افراد بغیر کسی حد کے غیر ملکی کرنسی و دیگر کسٹم حکام کے 10 ہزار یا اس سے زائد نقد پر ٹیکس ادا کرنے کی پرچی کے ساتھ اسے بینک لاسکتے ہیں۔بتایا گیا کہ ‘ایسی کرنسیوں و دیگر کو آزادانہ طور پر مجازی بینک پاکستانی روپے میں ادا کرکے خریدے گا، مجازی ڈیلرز بھی اکاؤنٹ ہولڈرز کی جانب سے اپنے غیر ملکی کرنسی اکاؤنت سے نکالی گئی غیر ملکی کرنسی خرید سکتے ہیں جسے پاکستانی روپے میں ادا کیا جائے گا’۔بینکوں کو بھی غیر ملکی کرنسی کی موجودگی اور اسے عوام کو فروخت کرنے کا کہا گیا ہے۔مینوئل میں کہا گیا کہ یہ مجازی ڈیلرز کی ذمہ داری ہے کہ اپنی شاخوں میں ضرورت کے مطابق غیر ملکی کرنسی کی بروقت دستیابی یقینی بنائے تاکے وہ اپنے صارفین کی ضروریات کو پورا کرسکیں۔غیر ملکی کرنسی نوٹوں کی عوام کو فروخت کے حوالے سے اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ ڈیلرز غیر ملکی کرنسی نوٹوں کو بیرون ممالک جانے والے افراد کو فروخت کرسکیں گے۔کرنسی ڈیلرز کا کہنا ہے کہ بینکوں کو روزانہ کی بنیاد پر عوام سے کرنسی کا کاروبار کرنے اجازت دینے کا مطلب ہے کہ اب یہاں ایکسچینج کمپنیوں کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن آف پاکستان کے سیکریٹری جنرل ظفر پراچہ کا کہنا ہے کہ ‘میں اعلیٰ حکام میں خود ایسے شخص کو جانتا ہوں جو ایکسچینج کمپنیوں کو بند کرنا چاہتا ہے’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘عوام اب با آسانی غیر ملکی کرنسی کی خرید و فروخت نہیں کرسکیں گی کیونکہ بینک لاکھوں افراد کی ضروریات کو پورا نہیں کرسکتے جبکہ بینک اس کام کے ہم سے زیادہ پیسے بھی لیں گے’۔انہوں نے کہا کہ بینکوں کو باہر سے ملنے والی رقم پر 12 سے 14 روپے ملتے ہیں جبکہ ایکسچینج کمپنیاں یہ سہولت مفت فراہم کرتی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ‘ہم غیر ملکی کرنسی کے بدلے ڈالر کی درآمد سے ملک کو سالانہ 10 سے 11 ارب ڈالر فراہم کرتے ہیں’۔انہوں نے مزید کہا کہ ‘ اگر ایکسچینج کمپنیاں بند ہوگئیں تو اس سے براہ راست جڑے 25 ہزار افراد بے روزگار ہوجائیں گے جبکہ مزید 60 ہزار افراد جو اس کاروبار سے کسی نہ کسی طرح جڑے ہیں وہ بھی بے روزگار ہوں گے۔

July 21, 2019

وزیراعظم کی امریکی تاجروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی پیشکش

واشنگٹن:جدت ویب ڈیسک : وزیراعظم عمران خان نے امریکی تاجروں سے ملاقات کرکے انہیں پاکستان میں سرمایہ کاری کی پیشکش کی ہے ۔ واشنگٹن میں وزیراعظم عمران خان سے ٹیکساس سے تعلق رکھنے والے پاکستانی نژاد بزنس مین اور ڈیموکریٹک پارٹی کے رکن طاہر جاوید نے ملاقات کی جب کہ امریکن بزنس مین جاوید انور نے بھی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی۔سرکاری خبررساں ادارے کے مطابق وزیراعظم نے امریکی تاجروں اور سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں اقتصادی اور کاروباری مواقعوں سے فائدہ اٹھائیں۔ دوسری جانب سرمایہ کاروں نے بھی پاکستان میں سلامتی کی بہتر صورت حال کو سراہا اور ساتھ ہی توانائی و سیاحت سمیت سرمایہ کاری کی دلچسپی کے دیگر اہم شعبوں کی نشاندہی بھی کی۔ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان کے امریکا پہنچے پر امریکا میں مقیم پاکستانیوں کی بڑی تعداد نے وزیراعظم کو خوش آمدید کہا اور پاکستان ہاو?س پہنچنے پر ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا، وہاں موجود افراد نے پلے کارڈز بھی اٹھا رکھے تھے جن پر پاکستان زندہ باد کے نعرے درج تھے ۔

July 20, 2019

پہلے کہا تھا جھاڑو پھرے گا، سارے چوروں کو ٹک ٹکی لگے گی ,شیخ رشید

جدت ویب ڈیسک ) وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا ہے کہ سارے چوروں کو ٹک ٹکی لگے گی۔ جھاڑوں پھرنے کی چار ماہ قبل پیش گوئی کردی تھی۔
ریلوے ہیڈکوارٹرز لاہور میں اجلاس کی صدارت کے بعد میڈیا سے بات چیت میں وزیر ریلوے بولے سارے چوروں کی منزل ٹک ٹکی ہے۔ ابھی تو کھیل شروع ہوا ہے تو لوگوں نے چیخیں مارنا شروع کردی ہیں۔ انہوں نے کہا پہلے ہی کہا تھا جو جتنا چیخ رہا ہے وہ ٹکٹکی کے قریب ہے۔ بعض لوگوں کے وکٹ کے دونوں طرف تعلقات ہوتے ہیں۔ وزیراعظم سے کہا ہے تمام چوروں سے پیسہ وصول کریں۔
وزیر ریلوے نے کہا کہ ریلوے کو پچھلے سال سے دس ارب روپے زیادہ منافع ہوا ہے۔ انہوں نے مزید کہا ان کی وزارت تاریخ کی پہلی وزارت ہو گی جو ہر چھ ماہ بعد ملازمین کی تنخواہوں میں دس فیصد اضافہ کرے گی۔شیخ رشید کی ریلوے ہیڈکوارٹرز میں موجودگی کے دوران ریلوے کے کنٹریکٹ ملازمین احتجاج کرنے پہنچ گئے۔ مظاہرین نے مستقل بنیادوں پر تقرریوں کا مطالبہ کیا۔

July 18, 2019

فش فارمنگ کیلئے ملک بھر میں پروسیسنگ یونٹس لگا نے کا فیصلہ

اسلا م آباد( جدت ویب ڈیسک ) حکومت نے ملک بھر میں فشریز کے شعبے کی ترقی اور پیداواربڑھانے کیلئے چاروں صوبوں میں فش پروسیسنگ یونٹس قائم کرنے کا فیصلہ کیاہے جس کا مقصد فشریز کے شعبے کی پیداوار کو فروغ دینا ہے اور فشریز فارمنگ سے وابستہ افراد کو سہولت فراہم کرنا ہے ۔
منصوبے پر6 ارب روپے خرچ کئے جا ئینگے ، دستیاب دستاویزات کے مطابق حکومت نے ملک میں مچھلی کی پیداوار کو بڑھانے کیلئے 4 سالہ پروگرام شروع کرنے جارہی ہے ۔
یہ منصوبہ وفاق اور صوبوں کے درمیان شیئرنگ کی بنیادوں پر ہوگا جس کیلئے وفاقی حکومت ایک ارب 31کروڑ روپے جبکہ صوبائی حکومت پنجاب 2 ارب 42 کروڑ، صوبائی حکومت سندھ 57 کروڑ روپے سے زائد کی رقم فراہم کر یگی۔اس کے علاوہ نجی شعبہ اس منصوبے کیلئے ایک ارب 80 کروڑ روپے کی معاونت فراہم کر یگا۔منصوبہ کے تحت ملک بھر میں فش اور جھینگا ہیچریز قائم کی جائیں گے اور فشریز کے شعبے کی بہتری کیلئے ماڈل فارمز اور ریسرچ سنٹر بھی قائم کئے جا ئینگے ۔ دستاویز کے مطابق فشریز کے شعبہ میں ترقی اور بہتری کی وسیع گنجائش موجود ہے جس کی موجودہ برآمدات 250 ملین ڈالر ہیں جن میں کئی ملین ڈالر اضافہ کیا جا سکتا ہے ۔مچھلی کی افزائش کیلئے جدید طریقوں کو اپنایا جا ئیگا ۔ منصوبے کے تحت فشریز کے شعبے میں جدت لانے کیلئے رورل بزنس حب قائم کئے جا ئینگے او ر فارمرز کو جھینگا فارمنگ کے فروغ کیلئے امداد فراہم کی جا ئیگی۔

July 16, 2019

معاشی رپورٹ، سونے کی قیمت میں اضافہ ڈالر تگڑا، اسٹاک ایکسچینج میں مثبت کاروبار

کراچی / اسلام آباد: جدت ویب ڈیسک ::عالمی بلین مارکیٹ میں سونے کی قیمتیں کم ہونے کے باوجود مقامی صرافہ بازاروں میں سونے کی قیمتوں میں 1 ہزار روپے سے زائد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔
تفصیلات کے مطابق عالمی بلین مارکیٹ میں ٹریڈنگ کے دوران سونے کی قیمت میں ایک ڈالر کمی ہوئی جس کے بعد قیمت 1415 ڈالر فی اونس کی سطح پر پہنچ گئی۔
عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت کم ہونے کے بعد مقامی صرافہ بازاروں میں سونے کی فی تولہ اور دس گرام کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے بعد قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں۔
مقامی صرافہ بازاروں مین سونے کی فی تولہ قیمت 750 روپے اضافے کے بعد 83500 روپے جبکہ 10 گرام کی قیمت میں 643 روپے کے اضافہ کے بعد71587 روپے تک پہنچ گئی۔
جیولرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد ارشد کے مطابق چاندی کی قیمت میں بھی دس روپے کا اضافہ ہوا جس کے بعد لین دین 930 روپے فی تولہ سے ہوئی۔
دوسری جانب امریکی ڈالر ایک مرتبہ پھر پاکستانی روپے پر حاوی ہو رہی ہے، انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر 19 پیسے مہنگا ہو گیا ہے، جس کے بعد ڈالر کی قیمت 160 روپے سے بھی تجاوز کرگئی۔ کاروباری ہفتے کے دوسرے روز انٹربینک میں ڈالر 159.86 سے بڑھ کر 160.05 پر بند ہوا۔علاوہ ازیں پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں دوران ٹریڈنگ 300 پوائنٹس سے زائد کی کمی ریکارڈ کی گئی مگر دوسرے سیشن میں خریداری کا رجحان رہا اور اختتام پر مارکیٹ 13 پوائنٹس اضافے سے 32 ہزار972 پوائںٹس کی سطح پر بند ہوئی۔

July 16, 2019

اسٹیٹ بینک نے مانیٹری پالیسی کا اعلان کردیا، شرح سود میں ایک‌ فیصد اضافہ

کراچی۔ جدت ویب  ڈیسک ::: اسٹیٹ بینک کی جانب سے رواں مالی سال کی پہلی مانیٹری پالیسی کااعلان کردیا ہے، شرح سود میں ایک فیصد کااضافہ کیا گیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک کی مانیٹری پالیسی کمیٹی کااجلاس کے بعد گورنراسٹیٹ بینک ڈاکٹررضا باقر نے پریس کانفرنس میں آئندہ دو ماہ کے لیے شرح سود میں ایک فیصد اضافے کا اعلان کیا۔
گورنراسٹیٹ بینک کی جانب سے مانیٹری پالیسی کے اعلان کے بعد بنیادی شرح سود13اعشاریہ25فیصدہوگئی ہے۔
گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر کے مطابق مہنگائی میں اضافےاورروپےکی قدرمیں کمی کےباعث شرح سود میں اضافے کافیصلہ کیاگیا، اس فیصلےمیں گیس اوربجلی کی قیمتوں میں اضافے کوبھی مدنظررکھاگیا۔
ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ طلب میں کمی کےباعث مہنگائی میں کمی آتی ہے، طلب میں کمی کارحجان دیکھاجارہاہے،ٹیکس کےاطلاق کےباعث قوت خریدمیں بھی کمی دیکھی گئی ہے۔
انہوں نے رواں سال کیلئےافراط زرکی شرح11سے12فیصدتک رہنےکی پیشن گوئی کرتے ہوئے کہا ہے کہ افراط زرکی پیشن گوئی گزشتہ سال کی نسبت زیادہ ہے، آئندہ مال سال میں توقع ہے کہ مہنگائی میں کمی آئےگی۔ شرح سود آج سے قبل بارہ اعشاریہ دوپانچ فیصد تھی جو آٹھ سال کی بلند ترین سطح ہے۔ مئی دوہزار اٹھارہ سےاب تک شرح سود میں مسلسل اضافےکارجحان دیکھا جارہاہے۔ مئی سےاب تک شرح سود میں پانچ اعشاریہ سات پانچ فیصدکااضافہ کیا جاچکا ہے۔یاد رہے کہ رواں سال مئی میں اسٹیٹ بینک نے گزشتہ مالی سال کی آخری مانیٹری پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے اگلے دو ماہ کے لیے سود کی شرح میں اضافے کافیصلہ کیا تھا۔ مرکزی بینک کی شرح سود میں 150 بیسس پوائنٹس کا اضافہ کیا گیا، اسٹیٹ بینک اعلامیے کے مطابق بنیادی شرح سود 12.25 فی صد ہو گئی تھی ۔
اسٹیٹ بینک نے اس موقع پر کہا تھا کہ گزشتہ مانیٹری پالیسی کے بعد 3 نمایاں تبدیلیاں ہوئی ہیں، حکومت نے آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر فنڈ سہولت پر اتفاق کیا، اس پروگرام کا مقصد معاشی استحکام بحال کرنا ہے۔

July 15, 2019

وفاقی حکومت کا امپورٹ ایکسپورٹ بینک بنانیکا فیصلہ

جدت ویب ڈیسک :: وفاقی حکومت نے بیرونی تجارت کےفروغ کےلئے ایکسپورٹ امپورٹ بینک بنانے کا فیصلہ کر لیا ، بینک برآمد کنندگان کو غیر ملکی زرمبادلہ کے حصول میں معاونت فراہم کرے گا۔
وزارت خزانہ ذرائع کے مطابق ایگزم بینک پاکستان کی برآمدات بڑھانے میں مدد گار ہوگا جبکہ ایکسپورٹ امپورٹ بینک ایکسپورٹرز کو فارن کرنسی کے حصول میں معاونت دے گا۔
بینک میں چیف ایگزیکٹیو کی تعیناتی کیلئے بینکنگ سیکٹر میں تجربہ رکھنے والے افراد سے درخواستیں طلب کرلی گئیں۔ فنانس، بینکنگ اور بزنس مینجمنٹ میں ماسٹر کی ڈگری لازمی قرار، بینکنگ کی اعلیٰ مینجمنٹ میں 20سال کا کم از کم تجربہ ہونا چاہیے۔درآمدی مال اور برآمدات کیلئے قرض کی اسکیموں کی تیاری کا تجربہ اولین شرط ہوگا۔ عالمی مالیاتی اداروں سے ان سکیموں کیلئے مزاکرات کی اہلیت لازمی قرار دی گئی ہے جب کہ فنانس اور اکنامکس میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری رکھنے والوں کو ترجیح دی جائےگی۔

July 15, 2019

سو پر سو ، آفر ، موبائل ریچارج ،سو روپے کے ری چارج پر 88روپے 9 پیسے ملیں گے

جدت ویب ڈیسک :: سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہا تھا کہ موبائل سیلولر کمپنیاں کسی قسم کے سروس یا مینٹی ننس چارجز صارفین سے وصول نہیں کر سکتی۔مہنگائی کی چکی میں پسے شہریوں کیلئے ایک اچھی خبر ہے ، اب سو کے کارڈ پر 76 اعشاریہ 94 کی بجائے 88 روپے نو پیسے ملیں گے ، سپریم کورٹ کے حکم پر موبائل کمپنیوں نے آپریشنل اور سروسز فیس کی وصولی ختم کردی ، موبائل کمپنیاں آپریشنل اور سروسزچارجز کی مد میں 12 روپے9 پیسے اضافی کٹوتی کرتی تھیں۔
موبائل صارفین کے لیے بڑی خوشخبری ہے کہ سپریم کورٹ کے حکم پر موبائل کمپنیوں نے آپریشنل اور سروسز فیس کی وصولی ختم کردی، اب صارفین کو 100 روپے کے کارڈ پر 76 روپے 94 پیسے کی بجائے 88روپے 90 پیسے ملیں گے۔سپریم کورٹ نے موبائل کمپنیوں کو سروس اور مینٹی ننس چارجز کی وصولی سے روکا تھا ، اب صارفین کو 100 روپے کے کارڈ پر 76 روپے 94 پیسے کے بجائے 88 روپے 90 پیسے ملیں گے۔اب آپریشنل اورسروسزچارجز کی مد میں12 روپے9 پیسے کارڈ سے کٹوتی نہیں ہوگی۔