June 15, 2018

سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد موبائل کارڈ ٹیکس ختم ہونے سے ایف بی آر 15 روز میں 2 ارب ٹیکس سے محروم ہوگا

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک ::: سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعدموبائل فون کارڈ پر سروس چارجز اور ٹیکس ختم ہونے سے ایف بی آر کو 15 روز میں 2 ارب روپے ٹیکس نہیں ملے گا۔
ایف بی آر ذرائع کے مطابق موبائل فون کے کارڈ پر تمام ٹیکس اور سروس چارجز 15 روز کے لیے ختم ہونے پر کمپنیوں کو 15 روز میں ایک ارب 45 کروڑ روپے کم ملیں گے، کارڈ لوڈ کرنے پر کمپنیاں 10 فیصد کے حساب سے سالانہ 35 ارب روپے سروسز چارج لیتی تھیں۔ذرائع کا بتانا ہےکہ سیلز ٹیکس کی مد میں 19.5 فیصد کے حساب سے 70 ارب روپے صوبوں کو ٹیکس ملتاہے لیکن اب صوبوں کو خدمات پر سیلز ٹیکس کی مد میں 15 روز میں 2ارب 91 کروڑ روپے نہیں ملیں گے۔ذرائع کے مطابق موبائل فون پر کارڈ لوڈ کرنے سے 120 ارب روپے کا ٹیکس جمع ہوتا ہے، ایف بی آر کو 12.5 فیصد کے حساب سے سالانہ 50 ارب روپے تک ملتے ہیں تاہم اب ایف بی آر 15 روز میں 2 ارب روپے ٹیکس نہیں ملے گا۔

June 14, 2018

ایمریٹس اسکائی وارڈز نے نیا مائی فیملی پروگرام متعارف کرادیا

کراچی جدت ویب ڈیسک ایمریٹس اسکائی وارڈز اپنی فیملی آفر میں بہتری لیکر آیا ہے اور مائی فیملی کے نام سے مزید پرکشش پروگرام متعارف کرادیا ہے۔ فیملی ممبرز اب ایمریٹس کی پروازوں پر اسکائی وارڈز مائلز کو ملا کر 100 فیصد تک جمع کرسکتے ہیں اور وہ ان مائلز کو پہلے کے مقابلے میں زیادہ آسانی سے استعمال بھی کرسکتے ہیں۔ ایمریٹس کی فلائٹس پر ہر ممبر 100 فیصد تک مائلز جمع کرسکتا ہے اور کسی بھی وقت ہر ممبر کے مائلز سے وہ ایک جگہ جمع ہوجاتے ہیں۔ ایمریٹس اسکائی وارڈز کی عالمی سطح پر 20 ملین کی ممبرشپ ہے اور تمام ممبرز مائی فیملی آفر میں شامل ہونے کے اہل ہیں۔ ایک اکاؤنٹ میں خاندان کے نامزدہ سربراہ سمیت 8 فیملی ممبرز شامل ہوسکتے ہیں ۔ ایمریٹس اسکائی وارڈز کے سینئر وائس پریذیڈنٹ ڈاکٹر نجیب بن خضر نے کہا، “ہم ایمریٹس اسکائی وارڈز پروگرام میں ہر ٹچ پوائنٹ پر اپنی آفرزمیں بہتری لاکر اپنے ممبرز کو بہتر سروس، انتخاب اور سہولت کی فراہمی یقینی بناتے ہیں۔ یہ نیا مائی فیملی پروگرام ہمارے ممبرز کے لئے پہلے سے بہتر اور زیادہ باسہولت ہے جس کی بدولت وہ 100 فیصد تک اسکائی وارڈز مائلز جمع کرسکتے ہیں جبکہ ریوارڈ مائلز کو تیزی سے حاصل کرنے کے ساتھ اپنی سفری ضروریات کے مطابق استعمال بھی کرسکتے ہیں۔” ایمریٹس کا نیا اسکائی وارڈز پروگرام ‘مائی فیملی’ ایئرلائن کی غیرمعمولی فیملی آفر کو دوران سفر اور گراؤنڈ دونوں جگہ پر استعمال کی سہولت دیتا ہے۔ دوران پرواز سفر میں بچے خصوصی کھلونوں، ایکٹویٹی پیکس، بچوں کے الگ سے کھانے کے ساتھ بچوں کے لئے مخصوص انٹرٹینمنٹ ایمریٹس کے ایوارڈ یافتہ انفلائٹ انٹرٹینمنٹ سسٹم آئس پر دستیاب ہوگی۔ گراؤنڈ پر ایمریٹس فیملی چیک ان ایریا فراہم کرتا ہے اور دبئی میں اعزازی طور پر گھومنے پھرنے اور تمام ایئرپورٹس پر فیملی کے لئے ترجیحی طور پر بورڈنگ کی سہولت فراہم کرتا ہے۔ ایمریٹس اسکائی وارڈز پروگرام میں مائی فیملی اسکی مسلسل جدت لانے کا ایک سلسلہ ہے جس میں ممبرز کو مزید فیچرز متعارف کرائے جائیں گے تاکہ انہیں مائلز کے حصول میں پہلے سے زیادہ آسانی ہو اور وسیع اقسام کی فلائٹس، سفر اور لائف اسٹائل پارٹنرز کی سہولیات کے ساتھ حاصل شدہ ریوارڈز تک باآسانی رسائی بھی حاصل ہو۔ گزشتہ ماہ ایمریٹس اسکائی وارڈز پروگرام نے اسکائی وارڈز مائلز کی خریداری، تحفتاََدینے اور منتقل کرنے کی قیمتوں میں کمی لاکر اپنے ممبرز کو مائلز کے انتظام میں مزید سہولت فراہم کی ہے۔ ایمریٹس اسکائی وارڈز کی ممبرشپ مفت ہے۔ فلائٹ ریوارڈز اور اپ گریڈز کے ساتھ ممبر 100 سے زائد پروگرام پارٹنرز بشمول ایئرلائنز، ہوٹلز اینڈ ریٹیل اینڈ لائف اسٹائل آؤٹ لٹس کے ذریعے اسکائی وارڈز کے مائلز حاصل اور استعمال کرسکتے ہیں۔ ممبرز عالمی سطح پر مقبول تقاریب میں شرکت سے لطف اندوز ہوسکتے ہیں اور دنیا بھر کے بڑے شہروں میں ایمریٹس کے 41 لاؤنجز تک رسائی حاصل کرسکتے ہیں۔ دیگر فائدوں میں لاؤنج تک رسائی، ترجیحی طور پر چیک ان اور بورڈنگ اور وائی فائی کے لئے خصوصی سہولت اور دوران سفر نشستوں کا جدید انداز سے انتخاب بھی شامل ہے۔ مزید تفصیلات کے لئے (www.emirates.com/Skywards) وزٹ کریں۔

June 14, 2018

ایف بی آر نے عید الفطر کی تعطیلات کے بعد چھٹی پر پابندی عائد کردی

لاہورجدت ویب ڈیسک فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ٹیکس وصولیوں میں مشکلات کے باعث عید الفطر کی سرکاری چھٹیوں کے بعد تمام افسران اور اہلکاروں کیلئے چھٹی پر پابندی عائد کردی ہے۔ایف بی آر کی جانب سے جاری سرکلر میں کہا گیا ہے کہ ایف بی آر ہائوس اسلام آباد اور دیگر ذیلی دفاتر میں تعینات تمام افسران اور ماتحت عملے پر عید کی چھٹیوں کے بعد 19جون تا30 جون تک اضافی چھٹیاں لینے پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔اس لئے ایف بی آر کے کسی بھی ملازم کو اس عرصے میں چھٹی نہیں دی جائے گی۔ سرکلر میں مزید کہا گیا ہے کہ جن افسران یا اہلکاروں نے پہلے ہی چھٹی حاصل کر رکھی ہے وہ بھی منسوخ تصور کی جائیں اور ملازمین 19 جون کے بعد دفتر میں حاضری کویقینی بنائیں۔ایف بی آر کے سرکلر میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ تمام متعلقہ حکام اس فیصلے پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں۔ایف بی آر کو رواں مالی سال کے بجٹ میں 4 ہزار 13 ارب روپے ٹیکس وصولیوں کا ہدف دیا گیا تھا تاہم بعد میں اس کو کم کر کے3 ہزار 9 سو 35 ارب روپے کا ہدف دیا گیا تھا۔ایف بی آر کے مطابق رواں مالی سال کے 11 ماہ کے دوران ایف بی آر3 ہزار 2سو 74 ارب روپے کا ٹیکس اکھٹا کیاجاسکا ہے۔اس طرح نظرثانی ہدف حاصل کرنے کیلئے جون کے دوران ساڑھے 6سو ارب روپے کی ٹیکس وصولیاں حاصل کرنا پڑیں گی جو ایک مشکل ترین ہدف ہوگا۔

June 13, 2018

پاکستان آرمی نے دہشت گردوں کی کمر توڑدی ،میاں زاہد حسین

کراچی جدت ویب ڈیسک پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر، بزنس مین پینل کے سینئر وائس چیئر مین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ ضرب عضب کی شاندار کامیابی سے پاکستان امن کی راہ پر گامزن ہوا۔پاکستان سے لے کر افغانستان بارڈر تک کاسارا علاقہ دہشت گردوںسے کم مدت میں کلیئر کروالیا گیا اور وزیرستان کے پر خطر علاقوں میںموجودخطرناک بین الاقوامی دہشت گرد تنظیموں کی کمر توڑ دی گئی۔ یہ آپریشن بیک وقت وزیرستان ، جنوبی پنجاب، سندھ اور بلوچستان میں شروع کیا گیا جس کے حیران کن نتائج سامنے آئے۔ سلیپرز سیلز کی بڑی تعداد انٹیلیجنس بیسڈ آپریشنز(IBOs) کے ذریعے سے ختم کی گئی جو پاکستان کی مایہ ناز انٹیلیجنس ایجنسیوں کی بہترین کارکردگی کی دلیل ہے۔ میاں زاہد حسین نے بزنس کمیونٹی سے گفتگو میں کہا کہ آپریشن کے پہلے سال کے دوران دہشت گردوں کے 837ٹھکانوں کو تباہ کرنے کے علاوہ 253ٹن بارودی موادقبضہ میں لیا گیا۔ پاکستان آرمی نے 18ہزار سے زائد اسلحہ بشمول لائٹ اور ہیوی مشین گنز، اسنائپر رائفلز، راکٹ لانچرز اور کلاشنکوفوں کی بڑی تعداد قبضہ میں لی۔ پاکستان آرمی کے اعداد وشمار کے مطابق آپریشن کے دوران ہزاروں کی تعداد میں دہشت گردوں کو گرفتار کرنے کے ساتھ انکے ٹھکانے اور مواصلاتی نظام کوبھی تباہ کیا گیا تاکہ یہ دہشت گرد ملک میں دوبارہ سر نہ اٹھا سکیں ۔ آپریشن کے اٹھارہ مہینوں کے دوران13ہزار2سو IBOsکے ذریعے 183دہشت گرد ہلاک جبکہ2193گرفتار کئے گئے۔ 11ملٹری کورٹس کا قیام عمل میںلا یا گیا ،جنہیں پہلے مرحلے میں 142کیس منتقل کئے گئے۔ پاکستانی حکام کے مطابق اس آپریشن کے دوران30ہزار302خاندانوں کے 9 لاکھ 39ہزار8 سو59افراد بے گھر ہوئے ۔ حکومت نے امریکہ اور متحدہ عرب امارات کی مدد سے متا ثرہ بے گھرافراد کو ضروریات زندگی مہیا کرنے کے ساتھ ساتھ مالی معاونت بھی فراہم کی۔آپریشن کے اختتام پر مرحلہ وار IDPsکی واپسی کو پاکستان آرمی نے یقینی بنایا۔ مستقبل میں دہشت گردی کی روک تھا م کے لئے زبردست اقدامات کئے گئے ہیں، جس میں وزیرستان کے انفراسٹرکچر کی بہتری کے ساتھ ساتھ فاٹا اور پاٹا کا KPKکے ساتھ انضمام بھی شامل ہے۔ آپریشن ضرب عضب کے دوران ملک بھرسے دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کو ختم کردیا گیا اور ملک میں پائیدارامن کے قیام کے لئے اورملک سے آخری دہشت گرد کے خاتمے تک فروری2017میں وزارت داخلہ کی زیر نگرانی تمام مسلح افواج ، پولیس ، رینجرز اور ایجنسیوں کا مشترکہ آپریشن ردالفساد لانچ کیا گیا۔اس آپریشن کے ایک سال کے دوران 15بڑے اور 4535انٹیلیجنس بیسڈ آپریشن کئے گئے جس کے دوران4510دہشت گرداور1859غیر رجسٹرڈ افغان باشندے گرفتار کئے گئے، 4083مختلف اسلحہ جات اور 6لاکھ سے زیادہ ایمونیشن قبضہ میں لی گئیں۔ 558افراد نے اپنی گرفتاریاں پیش کیںاور اس دوران 108دہشت گرد ہلاک ہوئے۔اس آپریشن کے تحت پاکستان آرمی کے زیر نگرانی مختلف اداروں کے تعاون سے آپریشن سے متاثرہ علاقوں کی تعمیر نو کا کام بھی جاری ہے۔ میاں زاہد حسین نے کہا کہ کراچی میں قیام امن اور تجارتی سرگرمیوں کی بحالی میں سندھ رینجرز کار کردار ناقابل فراموش ہے۔ سندھ رینجرز کے سابق ڈی جی لیفٹیننٹ جنرل بلال اکبر اور موجودہ ڈی جی میجر جنرل محمد سعیدکراچی میں قیام امن کے دیرینہ خواب کو شرمندئہ تعبیر کرنے کے لئے مبارکباد کے مستحق ہیں۔ کراچی میں امن کے قیام سے شہر کی تجارتی، معاشی اور صنعتی سرگرمیوں میں بہتری آئی ہے اور اس سال عید کی ریکارڈ خریداری ہوگی کیونکہ عوام میںجان و مال کے تحفظ کا احساس پیدا ہوا ہے اور عوام کااداروں پر اعتماد بھی بحال ہوا ہے۔

June 12, 2018

انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں کمی ‘اوپن مارکیٹ میں استحکام

کراچی جدت ویب ڈیسک انٹربینک مارکیٹ منگل کوپاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالرکی قدر میں اضافہ ریکارڈ کیاگیا۔اوپن کرنسی مارکیٹ میں بھی امریکی ڈالر،سعودی ریال اور چینی یوآن کی قدر میں استحکام،یورو، برطانوی پائونڈ اور یواے ای درہم کی قدر میں اضافہ ریکارڈکیاگیا۔فار ایکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق منگل کوانٹربینک مارکیٹ میں امریکی ڈالر کی قدرمیں 5پیسے کی کمی ریکارڈ کی گئی،جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید119.80روپے سے گھٹ کر119.75روپے اورقیمت فروخت119.90روپے سے گھٹ کر119.85روپے ہوگئی۔اوپن کرنسی مارکیٹ میں امریکی ڈالر کی قدرمیں استحکام رہا،جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید121.00روپے اور قیمت فروخت121.50روپے پرمستحکم رہی ۔یوروکی قدرمیں50پیسے اوربرطانوی پائونڈ کی قدر میں 1.00روپے کااضافہ ریکارڈ کیاگیا،جس کے نتیجے میں باالترتیب یورو کی قیمت خرید140.00روپے سے بڑھ کر140.50روپے اور قیمت فروخت142.00روپے سے بڑھ کر142.50روپے جبکہ برطانوی پائونڈ کی قیمت خرید159.50روپے سے بڑھ کر160.50روپے اور قیمت فروخت161.50روپے سے بڑھ کر162.50روپے ہوگئی۔سعودی ریال کی قدرمیں استحکام جبکہ یواے ای درہم کی قدرمیں10پیسے کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا،جس کے نتیجے میں بالترتیب سعودی ریال کی قیمت خرید31.70روپے اورقیمت فروخت32.10روپے پرمستحکم جبکہ یو اے ای درہم کی قیمت خرید32.50روپے سے بڑھ کر32.60روپے اور قیمت فروخت32.90روپے سے بڑھ کر33.00روپے ہوگئی۔منگل کوچینی یوآن کی قیمت میں استحکام رہا، جس کے نتیجے میں چینی یوآن کی قیمت خرید18.50روپے اور قیمت فروخت19.50روپے پرمستحکم رہی۔

June 12, 2018

روپے کی بے قدری، اسٹاک ایکسچینج میں مندی ،ایک کھرب16ارب ڈوب گئے

کراچی جدت ویب ڈیسک غیرملکی کرنسیوں کے مقابلے میں پاکستانی روپے کی بے قدری کے باعث پاکستان اسٹاک ایکس چینج میںکاروباری ہفتے کے دوسرے روز منگل زبردست مندی رہی اور کے ایس ای100انڈیکس کی43900،43800،43700،43600،43500،43400اور43300کی نفسیاتی حدوں سے گرگیا،سرمایہ کاری مالیت میں مزید1کھرب16ارب84کروڑ روپے سے زائدکی کمی ،کاروباری حجم گزشتہ روز کی نسبت13.96فیصدکم جبکہ80.82فیصد حصص کی قیمتوں میںکمی ریکارڈ کی گئی۔حکومتی مالیاتی اداروں ، مقامی بروکریج ہائوسزسمیت دیگرانسٹی ٹیوشنزکی جانب سے بینکنگ،سیمنٹ،توانائی، فوڈز، کیکمل اورٹیلی کام سیکٹر میں کریداری کے باعث کاروبار کا آغاز مثبت زون میں ہوا۔ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای100انڈیکس 43967پوائنٹس کی سطح پر دیکھا گیا تاہم ملکی کرنسی مارکیٹوں میں پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قدر میں نمایاں اضافے کے سبب مقامی سرمایہ کار تذبذب کا شکار نظرآئے اور اپنے حصص فروخت کرنے کو ترجیح دی، جس کے نتیجے میں تیزی کے اثرات زائل ہوگئے اورٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای 100انڈیکس43142پوائنٹس کی نچلی سطح پرٹریڈ کیاگیاتاہم غیرملکی سرمایہ کاروں کی جانب سے سرمایہ کاری کے نتیجے میں مارکیٹ میں ریکوری آئی جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس کی 43200کی نفسیاتی حد بحال ہوگئی تاہم اتارچڑھائو کا سلسلہ سارا دن جاری رہا۔مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس702.26پوائنٹس کمی سے43228.90پوائنٹس پر بندہوا۔منگل کومجموعی طور پر339کمپنیوں کے حصص کاکاروبار ہوا، جن میں سے48کمپنیوں کے حصص کے بھائو میں اضافہ،274کمپنیوں کے حصص کے بھائو میں کمی جبکہ17کمپنیوں کے حصص کے بھائو میں استحکام رہا۔سرمایہ کاری مالیت میں1کھرب16ارب84کروڑ14لاکھ26ہزار434روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جبکہ سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت گھٹ کر89کھرب4ارب69کروڑ80لاکھ8ہزار405روپے ہوگئی۔منگل کو13کروڑ77لاکھ87ہزار990شیئرزکا کاروبار ہواجوپیرکی نسبت2کروڑ23لاکھ61ہزار930شیئرزکم ہیں۔قیمتوں کے اتار چڑھائو کے حساب سے رفحان میظ کے حصص سرفہرست رہے، جس کے حصص کی قیمت344.67روپے اضافے سے8198.00روپے اورایبٹ لیبارٹری کے حصص کی قیمت15.82روپے اضافے سے691.82روپے ہوگئی۔ نمایاں کمی کولگیٹ پامولیو کے حصص میں ریکارڈ کی گئی، جس کے حصص کی قیمت100.04روپے کمی سے3497.96روپے اورسائفرٹیکسٹائل کے حصص کی قیمت46.64روپے کمی سے1093.45روپے ہوگئی۔منگل کو بینک آف پنجاب کی سرگرمیاں1کروڑ14لاکھ46ہزار500شیئرزکے ساتھ سرفہرست رہیں، جس کے شیئرزکی قیمت34پیسے کمی سے12.86روپے اورصادق سنزکی سرگرمیاں1کروڑ8لاکھ28ہزار500شیئرزکے ساتھ دوسرے نمبرپررہیں، جس کے شیئرزکی قیمت30پیسے اضافے سے2.30روپے پر بندہوئی۔منگل کوکے ایس ای30انڈیکس395.98پوائنٹس کمی سے21294.54پوائنٹس، کے ایم آئی30انڈیکس1144.61پوائنٹس کمی سے73221.23پوائنٹس جبکہ کے ایس ای آل شیئرزانڈیکس402.33پوائنٹس کمی سے31413.64پوائنٹس پر بندہوا۔

June 12, 2018

نگران حکومت نے عید الفطر سے قبل عوام پر پیٹرول بم گرادیا ،قیمتوں میں اضافےکا اعلان

جدت ویب ڈیسک ::حکومت کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول کی نئی قیمت 4 روپے 26 پیسے اضافے کے بعد 91 روپے 96 پیسے مقرر کردی گئی ہے۔
لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 6 روپے14پیسے کا اضافہ ہوا ہے جس کے بعد نئی قیمت 74 روپے 99 پیسےہو گئی ہے۔مٹی کا تیل 4 روپے 46 پیسے اضافے کے بعد 84 روپے 34 پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے۔اس کے علاوہ ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 6 روپے 55 پیسےکا اضافہ کردیا گیا ہے جس کے بعد نئی قیمت 105روپے 31 پیسے ہوگئی ہے۔نوٹیفکیشن کے مطابق قیمتوں کا اطلاق رات 12 بجے سے ہوگیا اور یہ قیمتیں 30 جون 2018 تک نافذ رہیں گی۔ دوسری جانب ایف بی آر نے بھی پیٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے۔سیلز ٹیکس کی نئی شرح کا اطلاق 12 سے 30 جون کے لیے ہوگا۔ پیٹرول پر سیلز ٹیکس کی شرح 7 فیصد سے بڑھا کر 12 فیصد مقرر کردی گئی ہے جبکہ ہائی اسپیڈ ڈیزل پر سیلز ٹیکس کی شرح 17 فیصد سے بڑھا کر 24 فیصد، مٹی کے تیل پر سیلز ٹیکس کی شرح 7 فیصد سے بڑھا کر 12 اور لائٹ ڈیزل پر سیلز ٹیکس کی شرح 1 فیصد سے بڑھا کر 9 فیصد مقرر کردی گئی ہے۔