January 17, 2020

نو ماہ میں مالی خسارہ ایک ہزار 922 ارب تک پہنچ گیا ہے ، وزارت خزانہ کا سینیٹ میں اعتراف

جدت ویب ڈیسک :: وزارت خزانہ نے سینیٹ میں تحریری اعتراف کرتے ہوئے کہا رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں ٹیکس وصولیوں کے اہداف حاصل نہیں کر سکے۔ نو ماہ کے دوران مالی خسارہ ایک ہزار 922 ارب تک پہنچ گیا ہے۔
وزارت خزانہ نے تحریری جواب میں بتایا کہ حکومت رواں مالی سال کے پہلے 6 ماہ میں ٹیکس وصولیوں کا ہدف حاصل نہیں کر سکی۔ 2 ہزار 198 ارب روپے کے ہدف کے مقابلے میں 2 ہزار 85 ارب روپے ریونیو اکٹھا ہوا۔
وزارت خزانہ کے مطابق31 جولائی 2015 سے 31 جولائی 2019 تک 25 ارب 59 کروڑ ڈالر قرض لیا گیا۔ عالمی مالیاتی اداروں سے 11 ارب 79 کروڑ اور عالمی کمرشل بینکوں سے 13 ارب 80 کروڑ کا قرض لیا گیا۔ ملک میں زرمبادلہ کے ذخائر 18 ارب 8 کروڑ ڈالر سے زائد ہیں۔
تحریری جواب میں بتایا گیا کہ اثاثہ جات ظاہر کرنے کے آرڈیننس سے ایک لاکھ۔ 24 ہزار اور 587 افراد نے فائدہ اٹھایا۔ ٹیکس ایمنسٹی اسیکم سے حکومت کو ایک کھرب 23 ارب سے زائد کا ریونیو ملا ۔ گزشتہ اسیکم سے 80 ہزار افراد نے فائدہ اٹھایا تھا۔
وفاقی وزیر حماد نے بتایا کہ6 ماہ میں مالی خسارہ 1922 ارب تک پہنچ گیا۔ جو جی ڈی پی کا 5 فیصد ہے۔ قرضے کا کل حجم جی ڈی پی کا 78 فیصد ہے۔
ایوان کو بتایا گیا کہ اسٹیل ملز، پیٹرولیم لمیٹڈ ، او جی ڈی سی ایل سمیت کل 28 ادارے نجکاری کی فہرست میں شامل ہیں۔ دوران اجلاس اپوزیشن ارکان نے معشیت کی بدحالی پر حکومت کو اڑے ہاتھوں لیا۔

January 17, 2020

ملک بھر میں آٹے کا بحران پیدا ہو گیا۔ فی کلو آٹا بیس روپے تک مہنگا کر دیا گیا۔

جدت ویب ڈیسک ::۔۔۔۔۔کراچی میں بھی آٹے کا مصنوعی بحران پیدا ہو گیا ہے۔ قیمت 65 روپے فی کلو تک پہنچ گئی۔لاہور میں چکی کے آٹے کی قیمت میں 6 روپے فی کلو اضافہ کر دیا گیا۔ چکی مالکان کا کہنا ہے آج سے فی کلو آٹا 70روپے میں فروخت کیا جائے گا۔ آٹا چکی مالکان نے کچھ روز قبل بھی آٹے کی قیمتیں بڑھائی تھیں۔
دوسری طرف پنجاب میں آٹے کا بحران شدت اختیار کرنے کے خلاف پنجاب اسمبلی میں قرارداد جمع کروا دی گئی۔ قرارداد مسلم لیگ (ن) کی رکن عظمیٰ بخاری کی جانب سے جمع کرائی گئی ۔
قرارداد کے متن میں کہا گیا پنجاب میں آٹے کا بحران شدت اختیار کر گیا ہے۔ حکومت نے 20 کلو آٹے کے بیگ کا ریٹ 805 روپے مقرر کیا لیکن مارکیٹ میں آٹا 840 سے 850 تک بلیک میں فروخت ہو رہا ہے۔ فلور ملز کے مطابق گندم نہ ملنے سے آٹے کا بحران پیدا ہوا ہے۔ غریب آدمی کو روٹی کے لالے پڑ گئے ہیں۔ حکومت کی جانب سے آٹے کے بحران کو سنجیدگی سے نہیں لیا جا رہا۔
قرارداد میں مطالبہ کیا گیا کہ پنجاب میں آٹے کی بحرانی کیفیت کو ختم کیا جائے۔ حکومت فلور ملز کو گندم کی فراہمی یقینی بنائے۔ حکومت دکانداروں کو سرکاری ریٹس پر آٹے کی فروخت کا پابند کرے۔

January 7, 2020

دسمبر 2019 میں مہنگائی میں کمی، 2020 میں مزید کمی متوقع

اسلام آباد: جدت ویب ڈیسک ::ترجمان وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ دسمبر 2019 میں مہنگائی کے بیشتر اشاریوں میں نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی، سنہ 2020 میں مہنگائی میں مزید کمی متوقع ہے۔
تفصیلات کے مطابق ترجمان وزارت خارجہ عمر حامد خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دسمبر 2019 میں مہنگائی کے بیشتر اشاریوں میں نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی۔
ترجمان کا کہنا تھا کہ کنزیومر پرائس انڈیکس (سی پی آئی) اور ہول سیل پرائس انڈیکس (ڈبلیو پی آئی) میں 0.3 فیصد کمی ہوئی، کمی نومبر 2019 کے مقابلے میں کم ہے۔
انہوں نے کہا کہ شہروں کے لیے فوڈ انفلیشن گزشتہ ماہ کی نسبت منفی 1.7 فیصد رہی جبکہ دیہی علاقوں کے لیے گزشتہ ماہ کی نسبت منفی 1.1 فیصد رہی۔
ٹویٹ میں کہا گیا کہ ایک ماہ میں پیاز ساڑھے 12، ٹماٹر ساڑھے 36، مرغی 11.2 فیصد، آٹا 1.1، آلو 2 اور مرچیں 17.6 فیصد سستی ہوئیں۔
وزارت خزانہ کی جانب سے مزید کہا گیا کہ حکومت کی جانب سے مہنگائی میں کمی کے اقدامات جاری ہیں، سنہ 2020 میں مہنگائی میں مزید کمی متوقع ہے۔
خیال رہے کہ وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق گزشتہ ماہ دسمبر کے دوران مہنگائی کی شرح میں 0.34 فیصد کمی ہوئی۔ ادارہ شماریات کا کہنا تھا کہ دسمبر 2018 کی نسبت نومبر 2019 میں مہنگائی کی شرح 12.63 فیصد رہی۔
رپورٹ کے مطابق ایک ماہ کے دوران خشک میوہ جات کی قیمت میں 6.35 فیصد اضافہ ہوا۔ گندم 5.62، انڈے 4.61 اور دالیں 3.80 فیصد مہنگی ہوئیں۔
اسی طرح ٹماٹر 36، پیاز 12، چکن 11 اور تازہ سبزیاں 4.62 فیصد سستی ہوئیں۔ مجموعی طور پر ایک سال میں ٹماٹر 321، پیاز 170 اور تازہ سبزیاں 84 فیصد مہنگی ہوئی تھیں۔

January 6, 2020

دس گرام سونا2230روپے بڑھ کر80075 روپے کا ہو گیا عالمی مارکیٹ میں سونا26 ڈالر اضافے سے1578 ڈالر فی اونس ہو گیا

کراچی : جدت ویب ڈیسک ::سونا پاکستان میں تاریخ کی بلند ترین سطح پرپہنچ گیا، سونے کی فی تولہ قیمت میں 2850 روپے اضافہ کے بعد 93350 روپے ہو گیا۔
تفصیلات کے مطابق عالمی مارکیٹ میں سونے کی فی اونس قیمت میں اضافے کے بعد پاکستان بھر کے صرافہ بازاروں میں بھاؤ مزید بڑھ گئے اور سونا ایک ہی دن میں 2850 مہنگا ہوکر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔
انٹرنیشنل مارکیٹ میں ٹریڈنگ کے دوران سونے کی قیمت 26 ڈالر اضافے کے بعد 1578 ڈالر فی اونس تک پہنچ گئی، ماہرین معاشیات نے قیمتوں میں مزید اضافے کا امکان بھی ظاہر کیا ہے۔
چئیرمین جیولرز ایسوسی ایشن محمد ارشد نے کہا سونے کی قیمتوں میں مزید تیزی دیکھی جاسکتی ہے م مقامی صرافہ بازاروں میں فی تولہ قیمت میں 2850 روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا، جس کے بعد قیمت 93350 تک پہنچ گئی، اسی طرح دس گرام سونے کی قیمت میں 2442 روپے کا اضافہ ہوا، جس کے بعد ریٹ 80032 روپے ہوگئے۔ خیال رہے ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کی موت کے بعد امریکہ اورایران میں بڑھتی کشیدگی کے باعث خام تیل اورسونا مہنگا ہورہا ہے جبکہ ایشیائی حصص بازارمندی کی لپیٹ میں ہیں۔

 

Image result for gold jewellery price in pakistan

January 3, 2020

سونے کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ

جدت ویب ڈیسک ::کراچی: بلین مارکیٹ میں سونے کی فی اونس قیمت میں اضافے کے بعد پاکستان بھر کے صرافہ بازاروں میں بھاؤمزید بڑھ گئے

انٹرنیشنل مارکیٹ میں ٹریڈنگ کے دوران سونے کی قیمت 28 ڈالر اضافے کے بعد 1549 ڈالر فی اونس تک پہنچ گئی، ماہرین معاشیات نے قیمتوں میں مزید اضافے کا امکان بھی ظاہر کیا ہے

آل پاکستان جیولرز ایسوسی ایشن کی رپورٹ کے مطابق عالمی مارکیٹ میں قیمتیں بڑھنے سے مقامی صرافہ بازاروں میں فی تولہ ریٹ میں 1300 روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے بعد قیمت 89 ہزار 500 تک پہنچ گئی۔ اسی طرح دس گرام سونے کی قیمت میں 1114 روپے کا اضافہ ہوا جس کے بعد ریٹ 76 ہزار 731 روپے تک پہنچ گئے۔

Image result for gold price in pakistan

آج 3 جنوری 2020 کے ریٹ

فی تولہ : -/89,500 

دس گرام : -/76,731 

کراچی ، حیدرآباد، سکھر، ملتان، فیصل آباد، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور اور کوئٹہ کی تمام صرافہ بازاروں سونے کی فی تولہ اور دس گرام کی خرید و فروخت نئے ریٹ کے ساتھ ہوئی

یاد رہے کہ گزشتہ روز ٹریڈنگ کے دوران سونے کی فی اونس قیمت میں چار ڈالر کا اضافہ ہوا تھا جس کے باعث مقامی صرافہ بازاروں میں فی تولہ اور دس گرام کی قیمت 100 اور 86 روپے بڑھ گئی تھی

گزشتہ روز اضافے کے بعد سونے کی فی تولہ قیمت 88 ہزار 200 اور دس گرام 75 ہزار 617 روپے تک پہنچی تھی۔