April 4, 2020

ویٹنی لیٹرز کے ٹرائلز تین اسپتالوں میں شروع ہورہے ہیں، فواد چوہدری

اسلام آباد : جدت ویب ڈیسک ::وفاقی وزیرفواد چوہدری نے ٹویٹ میں کہا کہ وینٹی لیٹرز کے ٹرائلز سی ایم ایچ راولپنڈی میں بھی ہوں گے، ٹرائل پی ای سی کے منظور شدہ ڈیزائنز کا کیا جارہا ہے۔
پاکستان میں وینٹیلیٹرز کے کلینیکل ٹراࣿیلز (Clinical Trials) جناح ہسپتال لاہور،انڈس ہسپتال کراچی اور سی ایم ایچ راولپنڈی میں شروع ہو رہے ہیں، پاکستان انجینرنگ کونسل کے دو approved design اس فائنل مرحلے کیلئے سلیکٹ کئے گئے ہیں، میڈیکل انجینرنگ میں یہ پاکستان کی بڑی پیش رفت ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ میڈیکل انجینئرنگ میں پاکستان کی یہ بہت بڑی پیشرفت ہے۔
فواد چوہدری نے کرونا مریضوں کےلیے تیار کیے گئے وینٹی لیٹرز سے متعلق بتایا کہ مذکورہ وینٹی لیٹرز کے کلینیکل ٹرائلز تین اسپتالوں میں شروع ہورہے ہیں۔
تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں کہا ہے کہ وینٹی لیٹرز کے کلینیکل ٹرائلز 3 اسپتالوں ‘جناح اسپتال لاہور، انڈس اسپتال کراچی میں شروع کیے جائیں گے۔خیال رہے کہ گزشتہ روز فواد چوہدری نے کہا تھا کہ ٹیسٹنگ کٹس کے اپنے طور پر ٹیسٹ کیے جس کے نتائج درست آئے، دوسرے مرحلے میں کٹس ڈریپ کو دی گئیں تاکہ وہ بھی ٹیسٹ کرلیں۔ان کا کہنا تھا کہ ڈریپ کی منظوری کے بعدٹیسٹنگ کٹس کا عام استعمال شروع ہو جائے گا، عام استعمال سے مطلب لیبارٹریز کو ٹیسٹنگ کٹس دے دی جائیں گی۔

April 4, 2020

فی الحال ہم تعمیرات کے شعبے کو کھول رہے ہیں۔ لوگ فاقوں مریں نہ ہی معیشت کا شیرازہ بکھرے۔وزیر اعظم

ویب ڈیسک :: وزیر اعظم عمران خان کا ٹوئٹ میں کہنا ہے کہ برصغیر میں بلند شرحِ افلاس کیساتھ ہمیں بندشوں میں حدددرجہ توازن درکار ہے۔ کرونا کا پھیلاؤ کم کرنے/مکمل طور پر روکنے کیلئے اگرچہ بندشیں ضروری ہیں تاہم اہتمام لازم کہ ان بندشوں کے باعث لوگ فاقوں مریں نہ ہی معیشت کا شیرازہ بکھرے۔ فی الحقیقت ہم ایک تنی ہوئی رسی پر گامزن ہیں۔
ہم تعلیمی اداروں، خرید و فروخت کے بڑے مراکز، شادی ہالز، اور ریستورانوں سمیت ایسے تمام مقامات بند کر چکے ہیں جہاں افراد کے جمع ہونے کا احتمال ہو۔ تاہم ان بندشوں کے تباہ کن اثرات سے بچاؤ کیلئے پہلے زرعی شعبہ کھلا رکھا گیا اور اب ہم تعمیرات کے شعبے کو کھول رہے ہیں۔

April 3, 2020

گلوکارہ نازیہ حسن کی آج 55ویں سالگرہ

ویب ڈیسک ::گلوکارہ نازیہ حسن آج حیات ہوتیں تو اپنی 55ویں سالگرہ مناتیں۔ نازیہ حسن نے اپنے بھائی زوہیب حسن کے ساتھ ملکر پاکستان میں پاپ موسیقی کو بام عروج پر پہنچایا۔
پاکستانی میوزک انڈسٹری کو پاپ موسیقی سے متعارف کروانے والی خوبرو گلوکارہ نازیہ حسن 3 اپریل1965ء کو کراچی میں پیدا ہوئیں ، انہوں نے 15 برس کی عمرمیں فنی سفر کا آغاز پاکستان ٹیلی ویژن سے کیا۔
80کی دہائی میں اپنے بھائی زوہیب حسن کے ساتھ بھارتی فلم قربانی کے لیے آپ جیسا کوئی میری زندگی میں آئے تو بات بن جائے ، گانے کی گائیکی کرکے دنیائے موسیقی میں دھوم مچا دی۔
نازیہ حسن کا شہرہ آفاق البم’’ ڈسکو دیوانےٍ 1982ء میں ریلیز ہوا جس نے انھیں شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا ۔
فلم فیئر ایوارڈ اور پرائیڈ آف پرفارمنس سمیت بیسیوں ایوارڈز حاصل کرنے والی نازیہ حسن کینسر جیسے موذی مرض کا مقابلہ نہ کر سکیں اور 13 اگست 2000ء کوزندگی کی محض 35 بہاریں دیکھ کردنیائے موسیقی کو سوگوار کر گئیں۔

Exclusive! Zoheb remembers how Feroz Khan didn't want to work with ...Remembering The 'Queen Of Pop' Nazia Hassan As Her 19th Death ...

 

April 3, 2020

ویڈیو کالز کے لیے فیس بک میسنجر کی ڈیسک ٹاپ ایپ متعارف

ویب ڈیسک ::فیس بک نے میسننجر کی ڈیسک ٹاپ ایپ متعارف کرادی ہے جس کا بنیادی مقصد لامحدود مفت گروپ ویڈیو کالز کی سہولت فراہم کرنا ہے۔
ونڈوز اور ایپل کے میک آپریٹنگ سسٹم پر کام کرنے والے کمپیوٹرز اور ڈیسک ٹاپ پر اس ایپ کو انسٹال کیا جاسکتا ہے جو موبائل ایپ سے جڑ جائے گی۔
مارچ میں فیس بک نے بتایا تھا کہ ڈیسک ٹاپ برائوزر پر اس کی میسنجر سروس میں آڈیو اور ویڈیو کالز استعمال کرنے والے صارفین کی تعداد میں سو فیصد اضافہ ہوا ہے۔
اس نئی ڈیسک ٹاپ ایپ سے دوستوں اور رشتے داروں سے آڈیو اور ویڈیو کالز کرنا زیادہ آسان ہوجائے گا، کیونکہ برائوزر میں ٹیبز ڈھونڈنے کی زحمت نہیں کرنی ہوگی۔
مختلف کمپنیوں جیسے زوم اور سلیک کی جانب سے بھی ویڈیو چیٹ سروس کو زیادہ بہتر بنانے پر کام کیا جارہا ہے۔
زوم کی جانب سے صارفین سے وعدہ کیا گیا ہے کہ وہ سیکیورٹی ریویو پر نظرثانی کررہی ہے جبکہ سلیک نے مائیکرو سافٹ ٹیمز ویڈیو کال آپشن کو اپنی سروس کا حصہ بنایا۔
فیس بک میسنجر کی جانب سے دنیا بھر میں حکومتوں کے ساتھ مل کر کورونا وائرس کے حوالے سے افواہوں کی روک تھام کے لیے کام کیا جارہا ہے۔
اس مقصد کے لیے چیٹ بوٹس کی سہولت کے ساتھ ساتھ انفارمیشن ہب بھی متعارف کرایا گیا ہے۔
اس انفارمیشن ہب کا مقصد آن لائن غلط معلومات کو پھیلنے سے روکنا بھی ہے۔
میسنجر کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ اس ہب میں ایسے ذرائع صارفین کو فراہم کیے جائیں گے جن سے انہیں اپنے دوستوں، گھروالوں، دفتری ساتھیوں، طالبعلموں، اساتذہ اور دیگر سے گھر میں قرنطینہ کے دوران رابطے میں مدد دے سکیں۔
میسنجر کی جانب سے کورونا وائرس کے حوالے سے افواہوں اور غلط معلومات کو پھیلنے سے روکنے کے لیے فارورڈ میسجز کی تعداد میں کمی لانے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔
اس کے لیے ایک فیچر پر کام ہورہا ہے جس کے تحت صارف ایک میسج کو 5 افراد سے زیادہ کو نہیں بھیج سکے گا، تاکہ افواہوں کے پھیلائو کو مشکل تر بنایا جاسکے۔
یہ فیچر فی الحال متعارف نہیں کرایا گیا مگر فیس بک نے تصدیق کی ہے کہ کمپنی کے اندر اس کی آزمائش کی جارہی ہے۔
اس سے قبل فیس بک نے 19 مارچ کو کورونا وائرس انفارمیشن سینٹر نیوزفیڈ پر سب سے اوپر متعارف کرانے کا اعلان کیا تھا۔
یہ انفارمیشن سینٹر فیس بک کا نیا فیچر ہے جس کا مقصد وائرس کے حوالے سے حکومتوں اور طبی محققین کی جانب سے فراہم کی جانے والی کارآمد معلومات لوگوں تک پہنچانا ہے جبکہ غلط اطلاعات پھیلنے کی شرح کم از کم کرنا ہے۔
یہ انفارمیشن سینٹر رئیل ٹائم میں اپ ڈیٹ ہوگا، جبکہ عالمی ادارہ صحت سمیت دیگر آفیشل ذرائع سے نئی معلومات اور تجاویز فراہم کی جائیں گی۔
اسی طرح فیس بک میں کورونا وائرس کے علاج کے حوالے اشتہارات پر پابندی عائد کی گئی جبکہ عالمی ادارہ صحت کو 2 کروڑ ڈالرز مالیت کے اشتہارات کی جگہ فراہم کرنے کا اعلان کیا۔
واٹس ایپ نے اپنی ویب سائٹ پر کورونا وائرس سے متعلق مستند معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے واٹس ایپ کورونا وائرس کا پیچ متعارف کرایا، جہاں پر لوگوں کو دنیا بھر میں تیزی سے پھیلنے والی وبا سے متعلق درست معلومات تک رسائی کو یقینی بنایا گیا ہے۔
واٹس ایپ کی جانب سے متعارف کرائے گئے کورونا وائرس کی معلومات کے فیچر کو نہ صرف صحت سے متعلق عالمی اداروں کے تعاون سے پیش کیا گیا ہے بلکہ اس فیچر میں درست معلومات کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے میسیجنگ ایپلی کیشن نے متعدد فیکٹ چیکر اداروں کے ساتھ بھی کام کیا ہے۔
مگر اس کے ساتھ ساتھ واٹس ایپ کے کروڑوں صارفین کو درست معلومات کی فراہمی کے لیے عالمی ادارہ صحت نے بھی ایک ہیلتھ الرٹ یا چیٹ بوٹ متعارف کرایا ہے جو اعدادوشمار، مختلف سوالات کے جواب اور دیگر معلومات فراہم کرتا ہے۔
اس مقصد کے لیے +41 79 893 1892 کو فون کانٹیکٹ میں سیو کرکے اس پر hi کا مسیج کردیں، آپ کے سامنے مینیو کھل جائے، جس میں مختلف ایموجیز کے ذریعے مطلوبہ معلومات حاصل کی جاسکتی ہے۔

April 3, 2020

دنیا بھر میں کرونا وبا کے مریض 10 لاکھ، ہلاکتوں کی تعداد 53 ہزار تک جا پہنچی

برسلز/انقرہ/تہران:جدت ویب ڈیسک :عالمی وبا کرونا وائرس سے دنیا بھر میں 10 لاکھ سے زائد افراد بیمار ہوگئے جبکہ مرنے والوں کی تعداد 53 ہزار سے بڑھ گئی ۔میڈیارپورٹس کے مطابق فرانس میں گزشتہ روز کرونا وائرس سے مزید 1355 اور اسپین میں 961 اموات کا اعلان کیا گیا جس کے بعد دنیا بھر میں چوبیس گھنٹوں میں ہلاکتوں کی تعداد ساڑھے پانچ ہزار ہوگئی۔ عالمگیر وبا کی زد میں آنے والے مریضوں کی تعداد دس لاکھ اور اموات کی تعداد 52 ہزار سے زیادہ ہوچکی ہے۔امریکا میں روزانہ بڑے پیمانے پر کرونا وائرس کے ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں جس کی وجہ سے مریضوں کی تعداد غیر معمولی طور پر بڑھ رہی ہے۔ مزید 25 ہزار کیسز کی تصدیق ہوئی ہے اور 700 سے زیادہ افراد ہلاک ہوگئے۔ اس وقت ملک میں کیسز کی مجموعی تعداد 2 لاکھ 40 ہزار اور ہلاکتوں کی تعداد 5800 سے زیادہ ہے۔جان ہاپکنز یونیورسٹی اور ورڈومیٹرز کے مطابق اٹلی میں گزشتہ روز 760 اموات ہوئیں۔ اٹلی میں کل ہلاکتیں 13915 اور اسپین میں 10348 ہوگئی ہیں۔ اٹلی میں مریضوں کی تعداد ایک لاکھ 15 ہزار اور اسپین میں ایک لاکھ 12 ہزار ہوچکی ہے۔برطانیہ میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 569، بیلجیم میں 183، جرمنی میں 176، نیدرلینڈز میں 166 اور ایران میں 124 افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ فرانس میں ہلاکتوں کی تعداد 5387، ایران میں 3160، برطانیہ میں 2921، نیدرلینڈز میں 1339، جرمنی میں 1107 اور بیلجیم میں 1011 تک پہنچ گئی ہے۔کئی دوسرے ملکوں میں بھی گزشتہ 24 گھنٹوں میں بڑی تعداد میں ہلاکتیں ہوئی ہیں جن میں ترکی میں 79، سویڈن میں 69، برازیل میں 57، سوئزرلینڈ میں 48 اور کینیڈا میں 47 اموات شامل ہیں۔ جرمنی میں مریضوں کی تعداد 84 ہزار، فرانس میں 59 ہزار، ایران میں 50 ہزار اور برطانیہ میں 33 ہزار سے زیادہ ہوگئی ہے۔ سوئزرلینڈ اور ترکی میں تعداد 18 ہزار، بیلجیم میں 15 ہزار، نیدرلینڈز میں 14 ہزار اور کینیڈا اور آسٹریا میں 11 ہزار ہے۔چینی حکام کے مطابق ان کے ملک میں گزشتہ روز 6 ہلاکتیں ہوئیں اور 35 نئے کیس سامنے آئے۔ اس طرح کل ہلاکتیں 3318 اور مجموعی کیسز 81589 ہیں جو اب چار ملکوں سے کم ہیں۔دنیا بھر میں کرونا وائرس کے 10 لاکھ سے زیادہ متاثرین میں 2 لاکھ 10 ہزار ایسے لوگ شامل ہیں جو مکمل طور پر صحت یاب ہوچکے ہیں۔ 52 ہزار اموات ہوچکی ہیں۔ باقی 7 لاکھ 44 ہزار افراد اب بھی اس بیماری میں مبتلا ہیں جن میں سے 37 ہزار کی حالت تشویش ناک ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق دوسری جانب اس خطرناک بیماری سے دنیا بھر میں 2 لاکھ 8 ہزار سے زائد افراد صحت یاب بھی ہوچکے ہیں۔ کرونا وائرس سے سب سے زیادہ ہلاکتیں اٹلی میں ہوئیں جبکہ سب سے زیادہ مریض امریکا میں ہیں۔ غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ دنیا بھر میں کورونا وائرس کے مصدقہ مریضوں کی تعداد اس سے بہت زیادہ ہو سکتی ہے۔

April 3, 2020

کورونا وائرس: ورلڈ بینک کی پاکستان کے لیے 200 ملین ڈالر امدادکی منظوری

واشنگٹن:جدت ویب ڈیسک : ورلڈ بینک نے پاکستان کے لیے 200 ملین ڈالر کے پیکیج کی منظوری دیدی ہے۔ورلڈ بینک کے بورڈ آف ایگزیکٹو ڈائریکٹرز نے پاکستان کے لیے 200 ملین ڈالر کے پیکیج کی منظوری دیدی ہے جو کورونا وبا سے نمٹنے، صحت کے نظام کو تقویت دینے اور سماجی و اقتصادی مسائل کے حل پر استعمال کیا جائے گا، اس کے علاوہ ضروری طبی سامان کی فراہمی کے 8 جاری منصوبوں سے 38ملین ڈالر کی اضافی رقم بھی حاصل کی جائے گی۔کنٹری ڈائریکٹر ورلڈ بینک کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف لڑنے کے لئے پاکستان کی مدد میں اضافہ کر رہے ہیں، پریپ منصوبہ کورونا کا پتہ لگانے اور نگرانی کرنے کی صلاحیت کو مستحکم کرنے میں مدد کرے گا جب کہ غریبوں کو نقد رقم کی منتقلی میں مدد کے لئے وسائل بھی فراہم کرے گا، اس کے علاوہ پریپ سرکاری اور نجی اسپتالوں میں وینٹیلیٹر اور پیرا میڈیکس کو ذاتی تحفظ کا سازو سامان بھی فراہم کرے گا۔

April 3, 2020

کورونا سے پاکستان کا 2500 ارب کا نقصان، ایک کروڑ 85 لاکھ لوگ بیروزگار ہوں گے

اسلام آباد:جدت ویب ڈیسک : وزارت منصوبہ بندی نے کورونا وائرس کی موجودہ وبا کے سبب 3 ماہ میں معیشت کو ہونے والے نقصان کا تخمینہ 2 سے ڈھائی ہزار ارب روپے لگایا ہے جبکہ اس سے ایک کروڑ23 لاکھ سے ایک کروڑ 85 لاکھ تک لوگ بیروزگار ہوجائیں گے۔نقصان کا انحصارکم درجہ ،درمیانے درجہ اور مکمل لاک ڈاون کو مدنظر رکھ کر لگایا گیا ہے۔گزشتہ روز وزارت منصوبہ بندی میں ہونے والے بین الوزارتی اجلاس میں لاک ڈاون سے ہونے والے نقصانات کے اعداد و شمار پرغورکیا گیا۔ یہ اعداد و شمار پاکستان انسٹیٹیوٹ آف ڈویلپمنٹ اکنامکس اور مختلف سرکاری اداروں کی طرف سے فراہم کیے گئے ہیں۔وزارت منصوبہ بندی نے محدود لاک ڈاون کی صورت میں نقصان کا تخمینہ ایک ہزار 200 ارب، درمیانے لاک ڈاون کی صورت میں ایک ہزار960 ارب اورمکمل لاک ڈاون کی صورت میں ڈھائی ہزارارب ڈالر لگایا ہے۔ نقصانات کا یہ تخمینہ کاروباری نقصانات، ٹیکس ریونیو کے نقصانات،عالمی تجارت کے نقصانات اور بیروزگاری پھیلنے سے ہونے والے نقصانات کو مدنظر رکھ کر لگایا گیا ہے۔