September 18, 2018

وزیراعظم عمران خان وفد کے ہمراہ اپنے 2 روزہ پہلے سرکاری دورے پر سعودی عرب روانہ ہوگئے

اسلام آباد: جدت ویب ڈیسک :: وزیراعظم عمران خان اپنے 2 روزہ پہلے سرکاری دورے پر سعودی عرب روانہ ہوگئے۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان وفد کے ہمراہ سعودی عرب روانہ ہوئے ہیں، وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر اطلاعات فواد چوہدری اور وزیراعظم کے مشیر عبدالرزاق داؤد بھی وزیراعظم کے ہمراہ روانہ ہوئے ہیں۔ذرائع کا کہناہےکہ وزیراعظم عمران خان متحدہ عرب امارات کے ولی عہد کی دعوت پر یو اے ای بھی جائیں گے۔
واضح رہے کہ وزیراعظم سعودی عرب کے بادشاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد محمد بن سلمان کی دعوت پر یہ دورہ کر رہے ہیں۔
ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق وزیراعظم عمران خان دورہ سعودی عرب کے دوران سعودی فرمانروا اور ولی عہد سے الگ الگ ملاقاتیں کریں گے۔اس دوران وہ مدینہ منورہ میں زیارت اور عمرہ کی سعادت بھی حاصل کریں گے۔وزیراعظم سے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر یوسف بن احمد بھی ملاقات کریں گے۔

September 18, 2018

حکومت اور اپوزیشن کے درمیان مبینہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کے لیے خصوصی کمیٹی کے قیام پر اتفاق ہوگیا

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک ::: حکومت اور اپوزیشن کے درمیان مبینہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کے لیے خصوصی کمیٹی کے قیام پر اتفاق ہوگیا جب کہ قومی اسمبلی نے بھی کمیٹی کے قیام کی تحریک منظور کرلی۔
قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر اسد قیصر کی سربراہی میں جاری ہے جس میں وزیراعظم عمران خان بھی شریک ہیں۔
قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے انتخابات 2018 کی چھان بین کے لیے خصوصی کمیٹی کے قیام کی تحریک پیش کی جسے ایوان نے منظور کرلیا۔
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بتایاکہ انتخابات 2018 کی چھان بین کے لیے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان خصوصی کمیٹی کے قیام پر اتفاق ہوگیا ہے، کمیٹی میں حکومت اور اپوزیشن کے ے ممبران کی تعداد برابر ہوگی اور کمیٹی 2018 کے انتخابات پر اپنی آرا قائم کرکے چھان بین کرے گی۔
شاہ محمود قریشی نے کہا کہ خصوصی کمیٹی کا چیئرمین وزیراعظم کی مشاورت سےحکومت نامزد کرے گی، کمیٹی قومی اسمبلی کے ممبران پر مشتمل ہوگی اور اس میں سینیٹ کا کوئی رکن شامل نہیں ہوگا۔
شاہ محمود قریشی نے تحقیقاتی کمیشن کے قیام کی تحریک پیش کیاس سے قبل وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے انتخابی دھاندلی سے متعلق تحقیقاتی کمیشن کے قیام کے لیے تحریک پیش کی گئی جس کے متن کے مطابق مبینہ انتخابی دھاندلی سے متعلق پارلیمانی کمیٹی تشکیل دی جائے جس میں حکومت اور اپوزیشن ارکان شامل ہوں۔تحریک کے متن میں کہا گیا ہے کہ کمیٹی تحقیقات کے لیے ٹی او آرز تیار کرے گی اور آئندہ دھاندلی کی روک تھام کے لیے مناسب اقدامات تجویز کرے گی۔
پی پی کا پارلیمانی کمیٹی کی چیئرمین شپ اپوزیشن کو دینے کا مطالبہ
ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کی رکن شازیہ مری نے مطالبہ کیا کہ خصوصی پارلیمانی کمیٹی میں حکومت اور اپوزیشن کو مساوی نمائندگی دی جائے اور شفاف تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی کی چیئرمین شپ بھی حزب اختلاف کو دی جائے۔اسی طرح کا مطالبہ مسلم لیگ (ن) کے خرم دستگیر نے کرتے ہوئے کہا کہ انتخابات کی شفافیت پر سنگین تحفظات ہیں اس لیے پارلیمانی کمیٹی میں برابر نمائندگی اور چیئرمین شپ اپوزیشن کے پاس ہونی چاہیے۔
عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی، حکومت کا پارلیمانی کمیشن بنانے کا فیصلہ
اس موقع پر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پارلیمانی کمیشن بااختیار ہوگا اور ہم کسی چیز کو پوشیدہ نہیں رکھنا چاہتے، شفافیت پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا تاہم اپوزیشن کا حق ہے کہ وہ احتجاج کرے، ان کا نکتہ اعتراض رجسٹر ہو گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ قائد حزب اختلاف اپنا موقف پیش کریں، اس کو سنا جائے گا، شفاف انتخابات جمہوریت کی ضرورت ہے، ہم نے اپوزیشن کے موقف پر سر تسلیم خم کیا ہے، ، جمہوری قدروں کی مضبوطی اصولی موقف ہے اور اختلافات کے باوجود آگے بڑھنا ہے۔مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کی جانب سے ایک ہی مطالبہ سامنے آنے پر اسپیکر اسد قیصر نے کہا کہ جو بھی کمیٹی بناؤں گا رولز کے مطابق بناؤں گا۔

September 18, 2018

وفاقی کابینہ نے نئے بجٹ کی تجاویز کی منظوری دے دی ،وزیر خزانہ نےبجٹ پیش کردیا

اسلام آباد: جدت ویب ڈیسک :: وفاقی کابینہ نے منی بجٹ کی تجاویز کی منظوری دے دی۔ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ نے نئے بجٹ کی تجاویز کی منظوری دے دی ہے جسے آج ہی اسمبلی میں پیش کیے جانے کی توقع ہے۔وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا خصوصی اجلاس ہوا جس میں وزیر خزانہ اسد عمر اور سیکریٹری خزانہ سمیت دیگر حکام نے بجٹ تجاویز پر بریفنگ دی۔
ذرائع کے مطابق کابینہ کو ایف بی آر ٹیکس سلیبس اور گزشتہ دور میں دی گئی انکم ٹیکس چھوٹ پر بھی بریفنگ دی گئی۔
ذرائع کا کہنا ہےکہ کابینہ کے اجلاس میں سپر ٹیکس سمیت 158 ارب کے نئے ٹیکس لگانے کی تجاویز پیش کی گئیں اور 450 روپے کے ترقیاتی بجٹ میں کمی کی تجاویز بھی پیش کی گئیں۔
ذرائع کے مطابق کابینہ کے اجلاس میں بجٹ خسارہ 6.6 فیصد کم کرکے پانچ فیصد تک لانے کی تجویز پر غور کیا گیا اور مالیاتی خسارہ جی ڈی پی کے 5.1 فیصد رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، اس کے علاوہ ترقیاتی بجٹ میں 725 ارب روپے کمی اور نان فائلر کی بینکنگ سے لین دین پر ٹیکس کی شرح بڑھانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔
ذرائع نے بتایا کہ کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حکومت 608 ارب روپے تک اخراجات کم کرے گی، حکومتی اداروں، بڑی عمارتوں اور وزرا کے خرچوں کو کم کیا جائے گا۔
ذرائع کا کہناہےکہ وزیراعظم نے کابینہ کے اجلاس میں ہدایت کی کہ درآمدی اشیاء پر ٹیکس اور 158 روپے کے نئے ٹیکسز میں کوشش کی جائے کہ اس سے عام آدمی متاثر نہ ہو۔

September 18, 2018

سوال پوچھتا رہوں گا کہ ہمارے یہاں مہاجرین یہ جو انسان رہ رہے ہیں ان کا کیا بنے گا؟ وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد: جدت ویب ڈیسک :: وزیراعظم عمران خان نے مہاجرین کو شہریت دینے سے متعلق قومی اسمبلی سے تجاویز مانگ لیں۔
قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مہاجرین کو شہریت دینے سے متعلق فیصلہ نہیں ہوا، اس پر بحث کے لیے بات چھوڑی ہے، آپ سب اس پر تجاویز دیں، ہم سب سے تجاویز مانگیں گے اور فیصلہ کرنے سے پہلے سب سے مشاورت کریں گے۔انہوں نے کہا کہ سوال پوچھتا رہوں گا کہ ہمارے یہاں یہ انسان رہ رہے ہیں ان کا کیا بنے گا؟ ان پر فیصلہ کرنا پڑے گا، 1951 کے قانون کے تحت جو پیدا یہاں پیدا ہوتے ہیں شہریت ان کا حق ہے کیونکہ یورپ سمیت دیگر ممالک میں بھی یہ قوانین ہیں جو بچے پیدا ہوتے ہیں شہریت ان کا حق ہے۔
عمران خان نے کہا کہ بین الاقوامی قوانین ہیں آپ مہاجرین کو زبردستی نہیں بھیج سکتے اس لیے مہاجرین کے جو یہاں پیدا ہوئے ان کے لیے کوئی پالیسی بنانا پڑے گی، یہ انسانی حقوق کا مسئلہ ہے، قوم کو کبھی نہ کبھی ان کا فیصلہ کرنا پڑے گا۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کراچی کےا ندر اسٹریٹ کرائم بڑھنے کی وجہ یہی ہے کہ جو یہاں پیدا ہوئے انہیں نوکریاں نہیں مل رہیں، ان کے بچے اسکول نہیں جاسکتے، ہماری ہر سوسائٹی میں یہ شدید مسائل آنے والے ہیں۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جومہاجرین عارضی طور پر آتے ہیں ان کے لیے الگ قانون ہے لیکن بنگلادیش سے سے آنے والے لوگ یہاں 45 سے 50 سال سے رہ ہے ہیں ان کا استحصال ہورہا ہے، نہ ان کو شہریت ملتی ہے اور نہ وہ واپس جاتے ہیں، ان کی نسلیں بڑھ چکی ہیں، نہ ہم ان کو ملک سے باہر بھیج سکتے ہیں نہ وہ ہمارے شہری ہیں وہ نان شہری بن چکے ہیں، انسانیت کے تقاضے پر کہہ رہا ہوں کہ وہ انسان ہیں اگر آج ان کا فیصلہ نہیں ہوا تو کب کریں گے؟

September 18, 2018

اسپیکر اسد قیصر کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا اجلاس انتخابی دھاندلی سے متعلق تحقیقاتی کمیشن کے قیام کے لئے تحریک قومی اسمبلی میں پیش

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک ::: انتخابی دھاندلی سے متعلق تحقیقاتی کمیشن کے قیام کے لئے تحریک قومی اسمبلی میں پیش کردی گئی جس پر ارکان کی جانب سے بحث کی جارہی ہے۔
اسپیکر اسد قیصر کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا اجلاس جاری ہے جس میں وزیراعظم عمران خان سمیت وفاقی وزرا اور اپوزیشن ارکان موجود ہیں۔
منی بجٹ آج پیش کیا جائے گا
وفاقی حکومت کی جانب سے آج کے اجلاس میں منی بجٹ بھی پیش کیا جائے گا جس کی منظوری کابینہ سے حاصل کرلی گئی ہے۔
منی بجٹ میں سُپر ٹیکس سمیت 158 ارب روپے کے نئے ٹیکس لگائے جائیں گے جبکہ ترقیاتی بجٹ میں 450 ارب روپے کی کمی کی جا رہی ہے ۔
وفاقی کابینہ نے منی بجٹ تجاویز کی منظوری دے دی
ذرائع کے مطابق کابینہ کے اجلاس میں بجٹ خسارہ 6.6 فیصد کم کرکے پانچ فیصد تک لانے کی تجویز پر غور کیا گیا اور مالیاتی خسارہ جی ڈی پی کے 5.1 فیصد رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، اس کے علاوہ ترقیاتی بجٹ میں 725 ارب روپے کمی اور نان فائلر کی بینکنگ سے لین دین پر ٹیکس کی شرح بڑھانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔
ذرائع نے بتایا کہ کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حکومت 608 ارب روپے تک اخراجات کم کرے گی، حکومتی اداروں، بڑی عمارتوں اور وزرا کے خرچوں کو کم کیا جائے گا۔
اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے انتخابی دھاندلی سے متعلق تحقیقاتی کمیشن کے قیام کے لیے تحریک پیش کی گئی جس کے متن کے مطابق مبینہ انتخابی دھاندلی سے متعلق پارلیمانی کمیٹی تشکیل دی جائے جس میں حکومت اور اپوزیشن ارکان شامل ہوں۔
تحریک کے متن میں کہا گیا ہے کہ کمیٹی تحقیقات کے لیے ٹی او آرز تیار کرے گی اور آئندہ دھاندلی کی روک تھام کے لیے مناسب اقدامات تجویز کرے گی۔
ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کی رکن شازیہ مری نے مطالبہ کیا کہ خصوصی پارلیمانی کمیٹی میں حکومت اور اپوزیشن کو مساوی نمائندگی دی جائے اور شفاف تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی کی چیئرمین شپ بھی حزب اختلاف کو دی جائے۔
اسی طرح کا مطالبہ مسلم لیگ (ن) کے خرم دستگیر نے کرتے ہوئے کہا کہ انتخابات کی شفافیت پر سنگین تحفظات ہیں اس لیے پارلیمانی کمیٹی میں برابر نمائندگی اور چیئرمین شپ اپوزیشن کے پاس ہونی چاہیے۔
عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی، حکومت کا پارلیمانی کمیشن بنانے کا فیصلہ
اس موقع پر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پارلیمانی کمیشن بااختیار ہوگا اور ہم کسی چیز کو پوشیدہ نہیں رکھنا چاہتے، شفافیت پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا تاہم اپوزیشن کا حق ہے کہ وہ احتجاج کرے، ان کا نکتہ اعتراض رجسٹر ہو گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ قائد حزب اختلاف اپنا موقف پیش کریں، اس کو سنا جائے گا، شفاف انتخابات جمہوریت کی ضرورت ہے، ہم نے اپوزیشن کے موقف پر سر تسلیم خم کیا ہے، ، جمہوری قدروں کی مضبوطی اصولی موقف ہے اور اختلافات کے باوجود آگے بڑھنا ہے۔مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کی جانب سے ایک ہی مطالبہ سامنے آنے پر اسپیکر اسد قیصر نے کہا کہ جو بھی کمیٹی بناؤں گا رولز کے مطابق بناؤں گا۔

September 18, 2018

لندن ‘منی لانڈرنگ کیس: برطانیہ میں گرفتار ہونے والی پاکستانی سیاسی شخصیت کا نام سامنے آگیا

لندن جدت ویب ڈیسک : برطانیہ میں گرفتار ہونے والی پاکستانی سیاسی شخصیت کا نام سامنے آگیا، ٹڈاپ اسکینڈل میں نامزد فرحان جونیجو پر ایف آئی اے کراچی کی جانب سے 25 مقدمات درج کیے گئے جن کی تحقیقات جاری ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی حکومت قائم ہوئے لگ بھگ ایک ماہ ہو چکا ہے۔۔پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو جہاں بہت سے چیلنجز درپیش ہیں ان میں سے ایک بڑا چیلنج ملک سے باہر موجود پاکستانی پیسے کو ملک میں واپس لانا ہے۔اس ضمن میں حکومت نے زبردست اقدام اٹھاتے ہوئے برطانوی حکومت سے بات چیت شروع کر دی ہے۔برطانوی ہائی کمشنر نے اپنی پہلی ہی ملاقات میں وزیر اعظم عمران خان کو ہر قسم کے تعاون کا عندیہ دے دیا تھا۔ جبکہ پیر کے روز وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کی جانب سے بھی اعلان کیا گیا کہ پاکستان اور برطانیہ کے درمیان مجرمان کے تبادلے اور لوٹی ہوئی دولت کی واپسی کے حوالے سے معاہدہ طے پاگیا ہے۔اس حوالے سے تازہ ترین خبر ہے کہ برطانیہ میں موجود ایک پاکستانی سیاستدان کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔پاکستانی سیاستدان کو منی لانڈرنگ کے الزامات میں گرفتار کیا ہے۔اب سیاسی شخصیت کا نام بھی سامنے آگیا ہے۔ ذرائع کے مطابق گرفتار ہونے والے پاکستانی سیاسی شخصیت کا نام فرحان جونیجو ہے اور اس کی عمر 40 سال ہے۔۔برطانیہ کی نیشل کرائم ایجنسی نے منی لانڈرنگ میں ملوث فرحان جونیجو کو گرفتار کیا۔اس موقع پر انکی 30 سالہ اہلیہ کو بھی گرفتار کیا گیا۔یہ دونوں میاں بیوی لندن میں 80 لاکھ پاونڈ کے اثاثے رکھتے ہیں اور انکے پاس ان اثاثوں کی کوئی قانونی دستاویزات موجود نہیں تھیں۔ ذرائع کے مطابق فرحان جونیجو ٹڈاپ اسکینڈل میں نامزد ہے اور اس پر ایف آئی اے کراچی کی جانب سے 25 مقدمات درج کیے گئے جن کی تحقیقات جاری ہیں۔ اس حوالے سے پاکستانی اور برطانوی حکام کے درمیان معلومات کا تبادلہ کیا گیا جس کے بعد فرحان جونیجو کی گرفتاری عمل میں آئی۔ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ فرحان جونیجو پیپلز پارٹی کے مرحوم رہنما امین فہیم کا فرنٹ مین تھا۔ جبکہ ٹڈاپ اسکینڈل میں سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی بھی نامزد ہیں۔ فرحان جونیجو 2013 میں ٹڈاپ اسکینڈل میں کروڑوں روپے لوٹ کر امریکا فرار ہوگیا تھا۔اس حوالے سے نیشنل کرائم ایجنسی کا کہنا ہے کہ دونوں کو پوچھ گچھ کے بعد رہا کردیا گیا تاہم مزید تحقیقات جاری ہیں اور تحقیقات میں قومی احتساب بیورو (نیب) اور وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کی معاونت حاصل رہی۔

September 17, 2018

وزیراعظم عمران خان کا چند روز قبل منجمد سرکاری زمین کو فروخت کرکے قرضہ اتارنے کا عندیہ

کراچی جدت ویب ڈیسک ::تبدیلی سرکار کی توجہ ملک سے قرضہ اتارنے پر لگی ہے، وزیراعظم عمران خان نے چند روز قبل منجمد سرکاری زمین کو فروخت کرکے قرضہ اتارنے کا عندیہ دےدیا۔
سب سے زیادہ اراضی کی ملکیت کا حامل ادارہ ریلوے ہے جو خود خسارے کا شکار ہے اور سالانہ 17ارب روپے کی سبسڈی لے رہا ہے۔
پاکستان کی 34ہزار کنال دیہی اور 17 ہزار کنال شہری زمین منجمد سرمایہ قرار دی گئی ، وزیراعظم عمران خان نے 90 فیصد زمین کی مالیت 300 ارب بتادی۔
سپریم کورٹ کے حکم پر حال ہی میں وارگزار کرائی گئی کراچی، روہڑی، خانیوال، لاہور، راولپنڈی پشاور، حویلیاں میں زمین فروخت کیلئے تیارہے ۔
بلوچستان میں ریلوے کے پاس28 ہزار 428ایکڑ ، سندھ میں 39 ہزار 428 ایکڑ ، پنجاب میں 90 ہزار 306 ایکڑ اور خیبرپختونخواہ میں 9 ہزار 707 ایکڑ زمین ہے
تین ہزار 847 ایکڑ زمین کی مالیت 1 ارب، 80 کروڑ روپے قرار دی گئی ہے ۔ریلوے کے پاس کل 1 لاکھ، 76 ہزار، 690 ایکڑ زمین میں سے 45 ہزار 92 ایکڑ زمین پر قبضہ ہے ۔
فروخت کیلئے صرف 1 لاکھ، 27 ہزار 751 ایکٹراراضی ہے جس کی تیاری میں دو سال سے تین سال لگیں گے۔

 

September 17, 2018

محکمہ اطلاعات سندھ نے اطلاعات میں رجسٹرڈ 74 جعلی اخبارات اور جرائد کی رجسٹریشن کی منسوخی کے احکامات جاری کر دیئے

کراچی جدت ویب ڈیسک :محکمہ اطلاعات سندھ نے اطلاعات میں رجسٹرڈ 74 جعلی اخبارات اور جرائد کی رجسٹریشن کی منسوخی کے احکامات جاری کر دیئے ہیں ۔ جعلی اخبارات اور جرائد کی ڈکلریشن منسوخی کے احکامات وزیر اعلی سندھ کے مشیر برائے اطلاعات بیرسٹر مرتضی وہاب کی ہدایت پر جاری کےے گئے ۔ ذرائع کے مطابق محکمہ اطلاعات سندھ نے اس ضمن میں متعلقہ ڈپٹی کمشنرز کو خطوط ارسال کردئیے ہیں ۔ محکمہ اطلاعات نے سندھ بھر کے اخبارات اور جرائد کی جانچ پڑتال، ملازمین اور ان کے دفاتر سے متعلق انکوائری کمیٹی بنائی تھی ۔ انکوائری کمیٹی کی رپورٹ کی روشنی میں مذکورہ 74 اخبارات کے متعلق اہم فیصلہ کیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق مذکورہ اخبارات کے نہ کوئی دفاتر ہیں اور نہ ہی ان کے کوئی ملازمین ہیں ۔ مذکورہ اخبارات اور جرائد کے ڈکلریشن منسوخ ہونے سے محکمے کو سالانہ لاکھوں روپے اشتہارات کی مد میں بچت ہوگی۔ سیکریٹری محکمہ اطلاعات حکومت سندھ عبدالرشید سولنگی نے 74 جعلی اخبارات اور جرائد کی منسوخی کی تصدیق کر دی ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ ان جعلی روزناموں، ہفتہ وار، ماہانہ اخبارات و رسائل کو مرحلہ وار منسوخ کریں گے ۔