November 20, 2019

سعودی عرب نے فوری ویزا سروس شروع کرنے کا اعلان کردیا

ریاض:جدت ویب ڈیسک :: سعودی عرب نے آئندہ ماہ چھوٹے کاروباری افراد کے لیے فوری ویزا سروس شروع کرنے کا اعلان کردیا۔
غیرملکی خبررساں ادارے سعودی عرب نے آئندہ ماہ دسمبر میں فوری ورک ویزا سروس شروع کرنے کا اعلان کیا ہے، ویزا سروس شروع کرنے کا مقصد چھوٹے کاروباری افراد کو مملکت میں کاروبار کے لیے مدد فراہم کرنا ہے۔
لیبر اور سوشل ڈیولپمنٹ کے وزیر احمد ال راجھی نے کہا ہے کہ یہ ویزا پروگرام نوجوان سعودی شہریوں سمیت دیگر ممالک کے تاجروں کو چھوٹے کاروبار کھولنے، معاشی نمو کو فروغ دینے اور کاروباری توسیع کے منصوبوں کو تیز کرنے کے قابل بنائے گا اور سعودی عرب کی ترقی پر مثبت اثرات مرتب کرے گا۔
اجلاس کے دوران ال راجھی نے کہا کہ وزارت چھوٹے کاروباری مالکان کے لیے کاروبار کا ایک جامع مجموعہ فراہم کرے گی، اس سے ابتدائی ایام میں کاروبار کے استحکام اور تسلسل کو برقرار رکھنے میں مدد ملے گی۔
سعودی وزیر نے کہا کہ ہم نے تارکین وطن مزدوروں کے لیے چھوٹے کاروبار کی ضروریات کا تعین کرنے کے لیے متعدد وسیع مطالعات کیے ہیں جس سے نئی ویزا سروس ان کی ضروریات کو پورا کرسکے گی۔
انہوں نے کہا کہ وزارت ابھرتے ہوئے منصوبوں پر خصوصی اہمیت دیتی ہے، اس نے ملک کی معیشت کو ترقی دینے، نوجوان سعودیوں کے لیے ملازمت کے مواقع پیدا کرنے اور ملازمت کی منڈی میں ان کو بااختیار بنانے میں اپنے کردار کے ایک حصے کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔اس سے قبل وزارت محنت و سماجی ترقی نے حال ہی میں قائم ہونے والے کاروباری اداروں کی سالانہ نمو میں اضافہ کرنے کی کوششوں کے ایک حصے کے طور پر قائم کاروباری افراد کے لیے ویزا سروس کا آغاز کیا جو پھیلنے کے عمل میں ہیں۔

November 20, 2019

وزیر اعظم کی ہدایت پر قائم قرضہ انکوائری کمیشن کا سابقہ ادوار میں بڑی کرپشن کا انکشاف

اسلام آباد ۔جدت ویب ڈیسک ::: وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر قائم قرضہ انکوائری کمیشن نے ابتدائی رپورٹ تیار کر کے حکومت کو پیش کر دی، جس میں کہا گیا ہے کہ سابقہ 2 ادوار میں کمیشن کی مد میں 30 فی صد تک رقم کھائی گئی۔
تفصیلات کے مطابق قرضہ انکوائری کمیشن نے سابقہ ادوار میں لیے گئے قرضوں سے متعلق ابتدائی رپورٹ تیار کر کے حکومت کو پیش کر دی ہے۔
سابق وزیر قانون ڈاکٹر بابر اعوان نے سوشل میڈیا پر ویڈیو بیان میں کہا ہے کہ حسین اصغر کی سربراہی میں کمیشن رپورٹ حکومت کو پیش کر دی گئی ہے، رپورٹ کے بعد کرپشن کے نئے میگا کیسز سامنے آنے والے ہیں۔
نیوز کے مطابق قرضہ انکوائری کمیشن رپورٹ مرتب ہونے کے بعد امکان ہے کہ کرپشن کے نئے میگا اسکینڈل سامنے آئیں گے۔
معروف قانون دان بابر اعوان کا کہنا ہے کہ سابقہ 2 ادوار میں کمیشن کی مد میں 30 فی صد تک رقم کھائی گئی، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مختلف منصوبوں میں 30 فی صد تک رقم بہ طور کمیشن کھانے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔یاد رہے کہ رواں برس 12 جون کو وزیر اعظم عمران خان نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ وہ اپنی نگرانی میں ہائی پاورڈ کمیشن بنا رہے ہیں، 10 سال میں قرضہ 24 ہزار ارب تک کیسے پہنچا، اس کی رپورٹ بنے گی۔
وزیر اعظم نے بجٹ کے بعد قوم سے خطاب میں کہا تھا کہ ن لیگ اور پی پی نے معیشت کو غیر مستحکم کرنے کی پوری کوشش کی، ہائی پاورڈ کمیشن میں آئی ایس آئی، ایف آئی اے، نیب، ایف بی آر اور ایس ای سی پی شامل ہوگی۔

November 20, 2019

باہرجانے کی اجازت وزیر اعظم نے خود دی ہمارے سامنے طاقتور صرف قانون ہے، چیف جسٹس آصف کھوسہ

اسلام آباد : جدت ویب ڈیسک ::چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ طاقتوروں کا طعنہ ہمیں مت دیا جائے ، ہمارے سامنے طاقتور صرف قانون ہے ، سابق آرمی چیف کے مقدمے کا فیصلہ ہونے جا رہا ہے۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ججز پر اعتراض کرنیوالے تھوڑی احتیاط کریں اور طاقتوروں کا طعنہ ہمیں مت دیں، وزیراعظم نے جس کیس کا طعنہ دیا اس پر بات نہیں کرناچاہتا۔
چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ اس کیس میں باہرجانے کی اجازت وزیر اعظم نے خود دی، ہائی کورٹ نے صرف جزئیات طے کی ہیں، اس معاملے کا اصول محترم وزیراعظم نے خود طے کیا ہے۔
انھوں نے کہا کہ آج کی عدلیہ کا تقابلی جائزہ 2009 سے پہلے والی عدلیہ سے نہ کریں، 2 وزرائے اعظم کو ہم نے نااہل کیا اور ایک کو سزا بھی دی، یہ مثالیں آپ کے سامنے ہیں ہم صرف قانون کے تابع ہیں۔
جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ سابق آرمی چیف کے مقدمے کا فیصلہ ہونے جا رہا ہے ، مختصر وسائل کیساتھ مثالی کام کئے ہیں، ایک آرمی چیف کا مقدمہ عدالت میں چل رہا ہے، ہمارے سامنے طاقتور صرف قانون ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ عدلیہ میں اصلاحات کیلئے اندرونی وسائل استعمال کئے ، اصلاحات کیلئے کسی سے پیسہ نہیں مانگا ، وزیراعظم کا انصاف کے سیکٹر میں تبدیلی کااعلان خوش آئند ہے، انھوں نےوسائل کی فراہمی کی بات کی، جس کا خیرمقدم کرتاہوں۔
چیف جسٹس نے مزید کہا کہ عدلیہ کو اب وسائل کی کمی کا سامنا تھا ، عدلیہ نےپچھلے3سال میں 36لاکھ کیسز کا فیصلہ کیا ، ان کیسز میں شائد ایک یا دو طاقتور لوگ ہوں گے، کوئی شخص طاقتور کہلاتا ہے تو یہ تاثر غلط ہے کہ 36لاکھ کیسز کو بھول جائیں۔
جسٹس آصف سعید کھوسہ کا کہنا تھا کہ وسائل کے بغیر جو عدلیہ کی کارکردگی ہے اس کامعاشرے کو شائد علم نہیں، 25 سال کا کریمنل بیک لاگ ختم کردیا ہے ، ہم نےماڈل کورٹس کا ڈھنڈوراپیٹا نہ اس کاکوئی اشتہار لگایا اسی سسٹم کیساتھ صرف چند پہلوؤں کےذریعےماڈل کورٹس چلائیں۔
انھوں نے کہا کہ وزیراعظم نے عدلیہ کو وسائل دینے کی بات کی ہے ، وہ وسائل دیں گے تو نتائج اس سے کئی گنا بڑھ جائیں گے، سرکار سے ایک پیسہ نہیں مانگا ،عدلیہ جانفشانی سے کام کررہی ہے، 187 دن میں 73ہزار303ٹرائل مکمل کئے ہیں۔
چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ معاشرے کے طبقے عدلیہ پر اعتراض میں احتیاط کریں ، ججز دن رات کام کررہےہیں ان کی حوصلہ افزائی کریں ، ہمارے سامنے کوئی طاقتور نہیں ہیں طاقتور صرف قانون ہے، وزیراعظم کو معلوم ہوگا اجازت انھوں نےخود دی تھی ، وزیراعظم بھی بیان دینےسے احتیاط کریں ، کوئی بھی ادارہ یا انسان پرفیکٹ نہیں ہے۔

Justice Asif Saeed Khosa Chief Justice of Pakistan..

اسلام آباد : چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ طاقتوروں کا طعنہ ہمیں مت دیا جائے ، ہمارے سامنے طاقتور صرف قانون ہے ، سابق آرمی چیف کے مقدمے کا فیصلہ ہونے جا رہا ہے۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ججز پر اعتراض کرنیوالے تھوڑی احتیاط کریں اور طاقتوروں کا طعنہ ہمیں مت دیں، وزیراعظم نے جس کیس کا طعنہ دیا اس پر بات نہیں کرناچاہتا۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ اس کیس میں باہرجانے کی اجازت وزیر اعظم نے خود دی، ہائی کورٹ نے صرف جزئیات طے کی ہیں، اس معاملے کا اصول محترم وزیراعظم نے خود طے کیا ہے۔

Posted by Daily Jiddat Karachi on Wednesday, November 20, 2019

November 20, 2019

رینجرز ہیڈ کوارٹرز میں اینٹی ٹیرارسٹ وِنگ کی تقریب منعقد۔مجرموں سے برآمد کی گئیں موٹر سائیکلیں اور موبائل فونز ان کے مالکان کو واپس

کراچی: جدت ویب ڈیسک ::سندھ رینجرز نے مختلف کارروائیوں میں مجرموں سے برآمد کی گئیں موٹر سائیکلیں اور موبائل فونز ان کے مالکان کو واپس کر دیے۔
تفصیلات کے مطابق آج کراچی میں رینجرز ہیڈکوارٹرز میں اینٹی ٹیرارسٹ وِنگ کی تقریب منعقد ہوئی، خصوصی تقریب میں مختلف آپریشنز میں برآمد سامان اصل مالکان کے حوالے کیا گیا۔
ترجمان رینجرز کا کہنا تھا کہ برآمد شدہ سامان کوائف کی جانچ پڑتال اور قانونی تقاضوں کے بعد ان کے اصل مالکان کے حوالے کیا گیا، سامان میں 7 موٹر سائیکلیں، 54 موبائل، 15 ہزار روپے شامل تھے۔
ترجمان کا کہنا تھا کہ اپنا سامان وصول کرنے والے مالکان نے رینجرز کو خراج تحسین پیش کیا۔یاد رہے کہ گزشتہ روز سندھ کے شہر حیدر آباد میں پولیس اور رینجرز نے مشترکہ کارروائی کر کے ٹارگٹ کلر شریف عرف کالیا کو گرفتار کر لیا تھا، متعدد وارداتوں میں مطلوب گرفتار ملزم کا تعلق ایم کیو ایم لندن سے ہے۔ذرائع کا کہنا تھا کہ ملزم نے حیدر آباد میں قتل کی 40 سے زائد وارداتیں کیں، ملزم حیدر آباد کی سب سے بڑی بینک ڈکیتی میں بھی ملوث رہا، شریف کالیا پولیس اور رینجرز اہل کاروں کے قتل میں بھی ملوث تھا، ملزم کراچی اور حیدر آباد میں آپریشن شروع ہونے کے بعد سے روپوش تھا۔

November 20, 2019

بانی مائیکرو سافٹ کا پاکستان سے پولیو کے خاتمے کے لیے اپنا تعاون جاری رکھنے کا عزم

جدت ویب ڈیسک ::وزیراعظم کے معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کی ابوظہبی میں مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس سے ملاقات ہوئی جس میں ڈاکٹر ظفر نے بل گیٹس کو پولیو کے خاتمے اور حفاظتی ٹیکہ جات پروگرام کی تفصیلات بتائی۔ اس موقع پر مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس نے پاکستان سے پولیو کے خاتمے کے لیے اپنا تعاون جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔
تفصیلات کے مطابق معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ حفاظتی ٹیکہ جات کی کوریج کو 100 فیصد یقینی بنانے اور پولیو کے خاتمے کیلئے پر عزم ہیں۔ پاکستان کو پولیو فری بنانے کے لیے ایک مربوط اور جامع پلان تشکیل دے دیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ بین الاقوامی ترقیاتی ادارے پاکستان میں پولیو کے خاتمے کیلئے 2.06 بلین ڈالر دیں گے جبکہ حکومت پاکستان پولیو کے خاتمے کیلئے 150 ملین ڈالر فراہم کرے گی۔ اس کے علاوہ بل گیٹس پاکستان میں پولیو کے خاتمے کیلئے 1.08 بلین ڈالر فراہم کریں گے۔اس موقع پر مائیکرو سافٹ کے بانی کا کہنا تھا کہ بل گیٹس فاؤنڈیشن پاکستان سے پولیو کے خاتمے کیلئے اپنا تعاون جاری رکھے گی۔