September 26, 2017

مقابلے میں بھتہ خورمارا گیا ‘مغوی لڑکی بازیاب ‘ 29ملزمان گرفتار

کراچی جدت ویب ڈیسک شہر کے مختلف علاقوں میں پولیس اور رینجرز کی کارروائیوں میں ایک اغوا کار ہلاک اور 27 ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق سرجانی ٹان میں اینٹی وائلنٹ کرائم سیل پولیس اور سٹیزن پولیس لائژن کمیٹی کی مشترکہ کارروائی کے دوران مقابلے میں ایک اغوا کار و بھتہ خور ملزم مارا گیا، اس کے ساتھی فرار ہوگئے۔ ہلاک شدہ ملزم کے قبضے سے اسلحہ اور مسروقہ موٹر سائیکل برآمد ہوئی۔ ایس ایس پی اے وی سی سی عبداللہ احمد کے مطابق ہلاک شدہ ملزم کی شناخت کامران ولد جمال کے نام سے ہوئی۔ ملزمان کے خلاف گلبرگ میں ٹیلی گراف ایکٹ اور انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج ہے۔ ملزمان بھتہ وصول کرنے آئے تھے خفیہ اطلاع پر کارروائی کی گئی۔ کامران ولد جمال کے خلاف گلبرگ پولیس اسٹیشن میں بھتہ خوری جبکہ فیروز آباد اور لیاقت آباد پولیس اسٹیشن میں سہیل نصیر اور ارسلان کے اغوا کے مقدمات درج ہیں۔ علاوہ ازیں رینجرز نے سعود آباد، چاکیواڑہ اور قائد آباد سے 5 ملزمان گرفتار کرلیے، ترجمان رینجرز کے مطابق گرفتار ملزموں میں محمد عظیم، غلام علی اور عبدالعزیز بھتہ خوری اور ڈکیتی کی متعدد وارداتوں میں مطلوب تھے، جبکہ ملزم اجمل خان اغوا برائے تاوان اور جمیل منشیات فروشی کی وارداتوں میں ملوث ہے۔ رینجرز نے درخشاں اور کورنگی سے تین ملزمان شیخ محمد خالد، فیصل زوہیب شاہ اور وقار احمد کو گرفتار کرکے اسلحہ اور منشیات برآمد کرلی۔ علاوہ ازیں گلشن معمار انوسٹی گیشن پولیس نے 3 روز قبل اغوا ہونے والی لڑکی کو جامشورو میں چھاپہ مار کر بازیاب کرالیا جبکہ ملزم شاہنواز راجپر کو گرفتار کرلیا۔ ایس ایچ او جامشورو غلام حسین کورائی بھی کارروائی میں معمار انوسٹی گیشن پولیس کے ہمراہ تھے۔ ذرائع کے مطابق ملزم کا والد ڈاکٹر ہے جبکہ ملزم کی ماں کا پہلا شوہر ڈی ایس پی تھا جو شہید ہوگیا تھا، دریں اثنا موچکو پولیس نے ملزم صابر کو گرفتار کرلیا۔

September 25, 2017

پریشانی کاخاتمہ،عوام کے مسائل کے حل کیلئےپی ایس پی اورمسلم لیگ فنکشل نے سرجوڑ لئے

کراچی جدت ویب ڈیسک : : تفصیلات کے مطابق پاک سر زمین پارٹی کے ایک وفد نے چیئرمین مصطفیٰ کمال کی زیر قیادت فکشنل مسلم لیگ کے سربراہ پیرپگارا سے کنگری ہاؤس میں ملاقات کی۔پی ایس پی کے چیئرمین مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ عوام کیلئےہرکسی کےپاس جائیں گے، چاہتےہیں کہ عوام کے مسائل حل اور پریشانی کاخاتمہ ہو۔ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور اور خصوصاً سندھ کی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا، اس موقع پر انیس ایڈووکیٹ،اشفاق منگی،رضا ہارون اور دیگر بھی موجود تھے۔یہ بات انہوں نے فکشنل مسلم لیگ کے سربراہ پیرپگارا سے ملاقات کے بعد صدر الدین شاہ کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.مصطفیٰ کمال نے کہا کہ کوئی میرا دشمن نہیں ہے ہرپاکستانی شخص میرا بھائی ہے، ہم رنگ نسل، زبان مسلک سے بالاتر ہوکرعوام کی خدمت کرینگے، پیر پگارا سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ کیلئے نہیں بلکہ مل کر چلنے کیلئے آیا ہوں۔مصطفی کمال نے مزید کہا کہ آج سیرحاصل گفتگوہوئی، پی ایس پی اور فنکشنل لیگ کی سوچ میں کوئی فرق نہیں، فنکشنل لیگ کے ساتھ پرانے تعلقات ہیں،ان کا کہنا تھا کہ ایک ساتھ چلنے کافیصلہ کیا ہے اپنےحلقےمیں کام کریں گے، الیکشن کیلئےتیارہیں، جب بھی اعلان ہوگا میدان میں کھڑے ہونگےانہوں نے کہا کہ صوبے کے مسائل بہت ہیں بچوں کو خوراک نہیں مل رہی، عوام کے پاس پینے کا صاف پانی نہیں ہے۔ اس موقع پرصدرالدین شاہ راشدی نے کہا کہ مصطفیٰ کمال کا ماضی میں اچھا ریکارڈ رہا ہے، ہمارا مستقبل ساتھ ہوگا خدمت پر یقین رکھتے ہیں۔

September 25, 2017

یونیسف نے صوبہ سندھ میں نافذ تعلیمی ایمرجنسی کا پول کھول دیا، جانیے

کراچی جدت ویب ڈیسک : اقوام متحدہ کے ادارہ برائے نونہالان (یونائیٹڈ نیشن چلڈرنز فنڈ) یونیسف نے صوبہ سندھ میں نافذ تعلیمی ایمرجنسی کا پول کھول دیا۔ یونیسف کی رپورٹ کے مطابق سندھ کے 50 فیصد سے زائد اسکول بنیادی سہولتوں تک سے محروم ہیں۔رپورٹ کے مطابق 53 فیصد طلبا اور 54 فیصد طالبات کے پرائمری اسکولز میں پینے کا پانی بھی دستیاب نہیں۔یونیسف کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق سندھ کے 50 فیصد طلبا کے اور47 فیصد طالبات کے پرائمری اسکولز باتھ روم کی بنیادی اور اہم ضرورت سے محروم ہیں، جبکہ مڈل اسکول کی سطح پر اس سہولت کا فقدان 30 فیصد طلبا اور 29 فیصد طالبات کے اسکولوں میں ہے۔مڈل اسکول کی سطح پر 40 فیصد بوائز اور 39 فیصد گرلز اسکول جبکہ ہائی اسکول کی سطح پر 7 فیصد طلبا کے اور 4 فیصد طالبات کے اسکول اپنے طلبا کو پینے کا پانی تک فراہم کرنے سے قاصر ہیں۔مذکورہ رپورٹ جاری کرتے ہوئے یونیسیف نے اسکول اسٹریٹجک پلان 2022-2017 بھی مرتب کردیا۔دوسری جانب وزیر تعلیم سندھ جام مہتاب ڈہر نے مذکورہ رپورٹ پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کو یقینی بنا رہے ہیں۔ جون 2018 تک یہ ہدف پورا کرلیں گے۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ طالبات کے اسکولوں میں بنیادی سہولتوں پر سمجھوتہ نہیں ہوگا

September 25, 2017

یونیورسٹی روڈ پر پینے کےصاف پانی کی پائپ لائن پھٹ گئی جس کے باعث لاکھوں گیلن پانی ضائع ہوگیا مرمتی کا م نہ ہوسکا، شہری پریشان

کراچی جدت ویب ڈیسک :: یونیورسٹی روڈ پر پینے کے صاف پانی کی پائپ لائن پھٹ گئی جس کے باعث لاکھوں گیلن پانی ضائع ہوگیا ہے۔ کراچی اینڈ سیوریج بورڈ کی نااہلیاں عروج پر ہیں ، کراچی کے شہری صاف اور میٹھے پانی کے لیے ترستے ہیں ، گھروں میں پانی آتا نہیں جب کہ سڑکوں پر ضائع ہوتا رہتا ہے، کراچی میں یونیورسٹی روڈ پر 30 انچ قطر کی پائپ لائن پھٹ گئی جس کے باعث لاکھوں گیلن صاف پانی ضائع ہوگیا، تاہم واٹر بورڈ کا عملہ غائب ہے، اطلاع کرنے کے باوجود کوئی بھی پائپ لائن کی مرمت کرنے نہیں آیاواضح رہے کہ کراچی ان دنوں کچرے کا ڈھیر بناہوا ہے کہیں سیوریج کا تو کہیں پینے کا پانی سڑکوں کی تباہی کا باعث بن رہا ہے ، واٹر بورڈ شہریوں کو پانی فراہم کرنے میں ناکام ہوگیا ہے، لوگوں کا کہنا ہے کہ جتنا نقصان کراچی کو واٹر بورڈ نے پہنچایا اتنا کسی ادارے نے نہیں پہنچایا، یہاں لوگوں کو پینے کا پانی میسر نہیں ہے اور پائپ لائن پھٹ جانے کے باعث لاکھوں گیلن صاف اور میٹھا پانی ضائع ہوگیا لیکن واٹر بورڈ کوکوئی فکر نہیں اگر انہیں فکر ہوتی تو کوئی نہ کوئی یہاں پائل لائن کی مرمت کے لیے موجود ہوتا، شہری واٹراینڈ سیوریج بورڈ کی ناہلی پر سخت پریشان ہیں، سڑک پر پانی بہنے کی وجہ سے ٹریفک کی روانی بھی متاثر ہورہی ہے اور ٹریفک جام ہوگیا ہے۔