January 23, 2020

کراچی میں جلنے والی جھگیوں کے متاثرین کے لیے یو اے ای کی امداد

کراچی: جدت ویب ڈیسک ::متحدہ عرب امارات کے قونصل جنرل سالم الخدیم نے متاثرہ جگہ کا دورہ کیا,متحدہ عرب امارات کی جانب سے کراچی میں جل کر راکھ ہونے والی جھگیوں کی بستی کے لیے امداد آ گئی۔
تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے تین ہٹی کے قریب جھگیوں میں آگ لگنے کے افسوس ناک واقعے میں متاثرین کی امداد کے لیے کراچی میں واقع یو اے ای قونصل خانے نے اہم قدم اٹھا لیا۔
متحدہ عرب امارات کے قونصل جنرل سالم الخدیم نے متاثرہ جگہ کا دورہ کیا، اس موقع پر کمشنر کراچی افتخار شالوانی بھی ان کے ہم راہ تھے، قونصل جنرل نے متاثرین کے مسائل سنے اور ان میں امدادی اشیا تقسیم کیں۔ امدادی سامان میں کمبل، کھانے پینے کی اشیا اور گرم کپڑے شامل تھے، متاثرین میں عارضی ٹینٹ بھی تقسیم کیے گئے۔
قونصل جنرل متحدہ عرب امارات نے اس موقع پر متاثرین سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ دکھ کی اس گھڑی میں ہم آپ کے ساتھ ہیں، بحالی کے سلسلے میں ہم آپ کی ہر ممکن مدد کریں گے۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ امدادی سرگرمیوں کے سلسلے میں اماراتی ہلال احمر کا کام سال بھر جاری رہتا ہے۔خیال رہے کہ منگل کے روز کراچی کے علاقے تین ہٹی پل کے نیچے واقع جھگیوں میں اچانک آگ بھڑک اٹھی تھی، جس کے باعث 150 جھونپڑیاں جل کر راکھ ہو گئی تھیں۔ سندھ حکومت اور پولیس کی جانب سے متاثرین کو خیمے، خوارک کے سلسلے میں فوری امداد پہنچا دی گئی تھی، بعد ازاں پی ٹی آئی رہنماؤں نے بھی جا کر امدادی سامان تقسیم کیا، سندھ رینجرز کی جانب سے بھی متاثرین میں خیمے تقسیم کیے گئے۔

January 14, 2020

کراچی میں پانی کی قلت کا معاملہ سندھ ہائیکورٹ تک پہنچ گیا۔ ملیر میں پانی کے غیرقانونی کنکشنز کا انکشاف

جدت ویب ڈیسک ::کراچی میں پانی کی قلت کا معاملہ سندھ ہائیکورٹ تک پہنچ گیا۔ ملیر میں پانی کے غیرقانونی کنکشنز کا انکشاف ہوا ہے۔ عدالت نے تمام غیرقانونی کنکشنز فوری ختم کرنے کا حکم اور آئندہ سماعت پر ڈی سی ملیر اور ڈی سی کورنگی کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا۔
سندھ ہائیکورٹ میں ایم ڈی واٹر بورڈ اور تمام 6 اضلاع کے ایس ایس پیز پیش ہوئے اور اپنے علاقوں میں پانی چوری سے متعلق رپورٹ جمع کرائی۔ ڈی سی ویسٹ نے بتایا کہ واٹر بورڈ کے صرف 3 پمپنگ اسٹیشن فعال ہیں، جبکہ ایم ڈی واٹر بورڈ نے بتایا کہ شہر میں 155 پمپنگ اسٹیشنز فعال ہیں۔
ایس ایس پی ملیر نے انکشاف کیا کہ 48 غیرقانونی اور 48 ہی نجی یونٹس کچی آبادیاں میں چلائے جارہے ہیں، لیکن واٹربورڈ تمام یونٹس سے لاعلم ہے اور مقدمہ درج کروایا جائے تو کارروائی کریں گے۔ عدالت نے غیرقانونی پمپنگ اسٹیشن فوری بند کروانے کا حکم دے دیا۔
عدالت نے غیرقانونی کنکشنز کی ذمہ داری واٹربورڈ پر عائد کردی اور کہا کہ ادارے کی نااہلی کے باعث غیرقانونی کام جاری ہے۔ جسٹس کے کے آغا نے کہا غیرقانونی پمپمگ اسٹیشن پر واٹر بورڈ بے نقاب ہوگیا۔
ایس ایس پی ملیر نے بتایا کہ گڈاپ، میمن گوٹھ اور اطراف کے گوٹھوں میں پانی کی لائن ہی موجود نہیں اور ان علاقوں میں واٹر ٹینکر ہی پانی کا واحد ذریعہ ہے۔
جسٹس کے کے آغا نے کہا کہ شہر میں پانی کی پائپ لائن اور پانی نہیں،
جس کے باعث لوگوں کے بنیادی حقوق سلب ہورہے ہیں۔ سماعت 25 جنوری تک ملتوی کردی گئی۔

January 9, 2020

وزیر اعلیٰ سندھ کا وزیراعظم کو خط صوبے کیلئے گیس خریدنے سے انکار

جدت ویب ڈیسک ::وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیراعظم عمران خان کو خط لکھ دیا جس میں صوبے کیلئے درآمدی گیس خریدنے سے انکار اور گیس قیمت کے مجوزہ میکنزم کو مسترد کردیا۔
وزیر اعظم کے معاون خصوصی ندیم بابر نے دعویٰ کیا کہ سندھ مہنگی درآمدی آر ایل این جی لینے پر رضا مند ہو گیا ہے جس پر وزیر اعلیٰ سندھ نے وزیر اعظم کو شکایت لگا دی اور ندیم بابر سے وضاحتی بیان جاری کرنے کا مطالبہ کردیا۔
وزیر اعلیٰ سندھ نے خط میں واضح کردیا کہ سندھ درآمدی گیس نہیں خریدے گا ، یہ بھی بتایا کہ سندھ مقامی گیس کی پیداوار میں سرفہرست ہے ، اسکے عوام مہنگی درآمدی آر ایل این جی کی قیمت برداشت نہیں کریں گے ۔
انہوں نے کہا کہ صوبہ سندھ 2500 سے 2600 ایم ایم سی ایف ڈی قدرتی گیس پیدا کرتا ہے جبکہ صرف 1200 سے 1300 ایم ایم سی ایف ڈی گیس ملتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ سندھ کو 520 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو گیس ملتی ہے ، اور اب 1690 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو ایل این جی خریدنے کا کہا جارہا ہے،گیس قیمت کے مجوزہ میکنزم کو مسترد کرتے ہیں۔
خط میں وزیراعلی سندھ نے سندھ کو گیس کی فراہمی یقینی بنانے کا بھی مطالبہ کیا۔

January 7, 2020

نیا سال ترقیاتی کاموں کو مکمل کرنے کا سال ہے، وزیراعلیٰ سندھ

کراچی: جدت ویب ڈیسک ::وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ نیا سال ترقیاتی کاموں کو مکمل کرنے کا سال ہے، یہ سال تعلیم کے شعبے میں مزید بہتری لانے کا سال ہے۔
تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت کراچی میں وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیرصدارت کابینہ کا اجلاس ہوا۔ اس موقع پر مراد علی شاہ نے کہا کہ آج یہ نئے سال کا پہلا کابینہ اجلاس ہے۔
وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ نیا سال نئے جذبے، نئی لگن سے عوام کی خدمت کا سال ہے، غربت کا خاتمہ، ٹڈی دل کا خاتمہ، ترقیاتی کاموں کو مکمل کرنے کا سال ہے۔
انہوں نے تمام محکموں کو خالی اسامیاں 15 جنوری تک جمع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ اسامیوں کی پوزیشن بتائیں تاکہ بھرتی کے لیے اشتہار دے سکیں۔
اجلاس میں سندھ کابینہ نے پروفیسر ڈاکٹر مجیب الدین کی تقرری کی توسیع کردی، سندھ حکومت نے پروفیسر مجیب الدین میمن کو وائس چانسلر ٹنڈو جام یونیورسٹی مقرر کیا تھا۔ عدالت نے یہ فیصلہ غیرقانونی قرار دیا تھا کیونکہ کابینہ نے اس کی توسیع نہیں کی تھی۔
وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت اجلاس میں سندھ کابینہ نے سندھ آکیوپیشنل سیفٹی اینڈ ہیلتھ رولز کی منظوری دے دی۔

#Sindh #Chief #Minister Syed Murad Ali Shah presides over a cabinet meeting here on tuesday at New Secretariat. Karachi.

* وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں کابینہ کا اجلاس* اجلاس میں صوبائی وزراء، میشر، قائم مقام چیف سیکریٹری اور متعلقہ افسران شریک* اجلاس کے ایجنڈا میں 12 نکات شامل ہیں، ترجمان وزیراعلیٰ سندھ* سندھ کا بینہ کے ایجنڈا* فشریز رولز 1983 ترمیم کرکے قانونی جیٹیز کو رجسٹرڈ کرنا* سندھ بلیو کاربن پبلک پرائیوٹ پارٹنرشپ پر شروع کرنا، پی ٹی ڈی سی اثاثوں کی صوبوں کو منتقلی* کاروباری اصلاحات میں آسانی کے تحت دوکانداروں اور دیگر کمرشل اسٹیبلشمنٹ کو رجسٹریشن فی سے استثنیٰ کرنا* کابینہ کی سب کمیٹیز کی رپورٹس پیش کی جائیں گی، ترجمان وزیراعلیٰ سندھ* اضافی آئٹمز میں موٹر سائیکل میں ٹریکرز لگانے کیلئے رجسٹریشن ایکٹ میں ترمیم* وائس چانسلر ٹنڈوجام کے خلاف ہائی کورٹ کے فیصلے کے حوالے سے غور* اسکول ایجوکیشن کی طرف سے ایک ضلع سے دوسرے ضلع میں میڈیکل گرائونڈ پر ٹرانسفر* سندھ آکیوپیشنل سیفٹی اینڈ ہیلتھ رولز 2019* فوتی کوٹہ کیلئے اہلیت پر نظرثانی شامل ہیں…#Karachi#Sindh #Chief #Minister Syed Murad Ali Shah presides over a cabinet meeting here on tuesday at New Secretariat.

Posted by Daily Jiddat Karachi on Tuesday, January 7, 2020

January 7, 2020

گورنر سندھ سے ٹرانسپورٹرز کے مذاکرات ناکام،صوبائی وزیر کی تنقید، ہڑتال کا دوسرا دن

کراچی: جدت ویب ڈیسک :گورنر سندھ عمران اسماعیل سے ٹرانسپورٹرز کے مذاکرات نا کام ہو گئے ہیں، گڈز ٹرانسپورٹرز کی ہڑتال کا آج دوسرا دن ہے، صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ نے معاملے کو تنقید کا نشانہ بنا لیا۔
تفصیلات کے مطابق گڈز ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن نے آج بھی ہڑتال جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے، افغان ٹرانزٹ ٹریڈ اور آل کراچی ٹائر ایسوسی ایشنز کی جانب سے بھی ہڑتال کی حمایت کر دی گئی ہے۔
ٹرانسپورٹرز نے مال بردار گاڑیاں سڑکوں پر کھڑی کر دی ہیں، جس کے باعث پورٹ قاسم اور کراچی پورٹ سمیت سبزیوں، پھلوں اور دواؤں کی ترسیل معطل ہو گئی ہے۔ خیال رہے کہ ملک بھر میں گڈز ٹرانسپورٹ کی 3 لاکھ سے زائد گاڑیاں ہیں جب کہ کراچی سے روزانہ 17 ہزار سے زائد گاڑیاں دیگر شہروں کو جاتی اور آتی ہیں۔
خیال رہے کہ گڈز ٹرانسپورٹرز نے مطالبات کی منظوری تک کل سے ہڑتال شروع کی ہے، ٹرانسپورٹرز کا کہنا ہے کہ ڈرائیونگ لائسنس فیس تجدید میں 100 فی صد اضافہ کیا گیا، 18 سو روپے فیس کو 18 ہزار روپے کر دیا گیا، اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے پر عمل درآمد نہیں ہو رہا، ایکسل لوڈ ایس آر او 2 ہزار پر حکومت اور موٹر وے پولیس عمل نہیں کر رہی، ایکسل لوڈ مینجمنٹ مؤخر کر کے اوور لوڈنگ پر مجبور کیا جا رہا ہے، گڈز ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن نے مطالبہ کیا ہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے حکم پر ایکسل لوڈ مینجمنٹ نافذ کی جائے۔
واضح رہے کہ گڈز ٹرانسپورٹرز مطالبات کی منظوری تک غیر معینہ مدت کے لیے ملک گیر پہیہ جام ہڑتال میں صنعتوں اور بندرگاہوں سے درآمدی اور برآمدی سامان کی ترسیل روک دی ہے، کاٹھور پر احتجاجی کیمپ قائم کیا گیا ہے، جہاں مال بردار گاڑیاں کھڑی کر دی گئی ہیں۔ گڈز ٹرانسپورٹرز کے ترجمان امداد حسین نقوی نے کہا کہ ہڑتال کا آج دوسرا دن ہے اور تاحال وفاقی سطح پر کسی نے ہم سے رابطہ نہیں کیا، وفاقی وزارت مواصلات خواب خرگوش کے مزے لے رہی ہے۔ادھر سکھر میں وزیر ٹرانسپورٹ سندھ اویس شاہ قادر نے کہا ہے کہ مواصلات کی وزارت نا اہل اور نالائق شخص کے سپرد کی گئی ہے، ٹرانسپورٹرز کی ایک دن کی ہڑتال سے کروڑوں کا نقصان ہو رہا ہے، کوئی مسئلہ الجھ جائے تو سلجھانے کے طریقے ہوتے ہیں لیکن ٹرانسپورٹرز کے ساتھ معاملہ سلجھایا نہیں گیا۔
انھوں نے مواصلات کے وزیر کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ نالائق وزرا بیٹھے رہے تو خان صاحب کو جلد پارلیمنٹ سے نکلوا دیں گے، وفاقی حکومت کو کوئی بھی مدد درکار ہے تو ہم ساتھ دینے کو تیار ہیں۔

January 2, 2020

‘گرین لائٹ ہونے تک پاکستان کے دشمن کو لعنت دیں’

جدت ویب ڈیسک ::کراچی: شہر قائد میں ایک بار پھر بینرز آویزاں ہوئے ہیں لیکن اس بار یہ بینرز کسی ملکی شخصیت کے خلاف نہیں بلکہ بھارتی وزیراعظم کی مخالفت میں لگائے گئے ہیں۔
کراچی کے علاقے گلستانِ جوہر کے مرکزی جوہر چورنگی سگنل پر منگل کی شب بھارت کے وزیر اعظم نریندر مودی مخالف پوسٹر آویزاں ہوئے ہیں جن میں مودی کو “پاکستان کا دشمن” کہا گیا ہے۔
یہ پوسٹرز کس ادارے، تنظیم یا گروپ کی جانب سے لگائے گئے ہیں اس حوالے سے ابھی تک کچھ معلوم نہیں ہو سکا اور ضلعی انتظامیہ بھی اس معاملے سے لا علم ہے تاہم ایک عہدیدار کے مطابق ان پوسٹرز کو آویزاں کرنے کی کوئی تحریری اجازت نہیں لی گئی۔
نیو ایئر نائٹ پر لگائے گئے ان پوسٹرز پر تحریر کردہ عبارت میں لوگوں کو ٹریفک قوانین پر عملدرآمد کرنے اور ٹریفک سگنل پر انتظار کرنے کی تلقین کے ساتھ ساتھ اس دوران بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو برا بھلا کہنے کا بھی کہا گیا ہے۔
کچھ پوسٹرز پر مودی کو “ظالم اور کشمیریوں کا قاتل” کہا گیا ہے اور لوگوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ ان مظالم کے خلاف آواز اٹھائیں اس سے پہلے کہ دیر ہو جائے۔
ان پوسٹرز پر ہیش ٹیگ see it# لکھا ہوا ہے جو اس سے پہلے کسی تنظیم یا ادارے نے اپنی پہچان کے طور پر استعمال نہیں کیا۔
خیال کیا جارہا ہے کہ ان پوسٹرز کے ذریعے لوگوں کی توجہ انڈین حکومت کی جانب سے کشمیریوں اور بھارت میں بسنے والے مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک کی طرف مبذول کروائی گئی ہے۔
ان پوسٹرز کی تصاویر سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہورہی ہیں اور ان پر تبصرے کیے جارہے ہیں۔
گلستان جوہر کے رہائشیوں کہنا ہے کہ یہ پوسٹرز رات گئے آویزاں کیے گئے ہیں کیونکہ رات 12 بجے کے قریب تو یہ پوسٹرز نہیں تھے۔
یہ پوسٹرز ابھی بھی آویزاں ہیں اور سوشل میڈیا پر صارفین اس حوالے سے مختلف رائے کا اظہار کررہے ہیں۔
کچھ صارفین نے سوال اٹھایا ہے کہ کیا ایسا کرنے سے مسائل حل ہوجائیں گے؟ جبکہ کچھ کا ماننا ہے کہ مودی کو برا بھلا کہنے سے مسائل حل ہوں نہ ہوں کم سے کم دل کو تسلی اور قلبی اطمینان تو حاصل ہوگا۔

January 1, 2020

کراچی میں تیز ٹھنڈی ہواکا راج , کل سے مزید تیز ہوائیں چلیں گی، سردی کی حالیہ لہر 3دن تک برقرار رہے گی۔

جدت ویب ڈیسک ::کراچی مطلع جزوی ابرآلودہے، صبح سے تیز ٹھنڈی ہواوں نے شہریوں کو گھروں میں محصور کردیا، محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کل سے مزید تیز ہوائیں چلیں گی، سردی کی حالیہ لہر 3دن تک برقرار رہے گی۔
موسمیاتی تبدیلی کے اثرات شہرقائد پر بھی پڑنا شروع ہوگئے،سردی کی حالیہ لہر نے شہر کو ملک کے بالائی علاقوں کی ٹھنڈ میں تبدیل کردیا ۔
صبح سویرے چلنے والی یخ بستہ تیز ہواوں نے شہر کے موسم کو ٹھنڈا ٹھار کردیا، شہر کے باسی گھروں میں محصور ہوگئے، سڑکوں پر سناٹا چھا گیا۔
محکمہ موسمیات کے مطابق شہر کا کم سے کم درجہ حرارت 9 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا،، محکمہ موسمیات نے خبردار کیا کہ پارہ مزید نیچے آئے گا،شہر میں شمال مشرق سے 26کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہواچل رہی ہیں۔
محکمہ موسمیات کا کہنا کہ ہوا کی شدت میں مزید بڑھے گی، کل سے تیز ہوائیں چلیں گی موسم مزید سرد ہوگا۔
شہر میں صبح سے ہی ٹھنڈی ہوائیں چلنے سے شہری ٹھٹھر کر رہ گئے،موٹرسائیکل سوار افراد تو زیادہ پریشانی کا سامنا ہے، سر پر ٹوپی ہاتھوں میں دستانے اور جیکٹس پہنے شہری محوسفر دکھائی دیے۔
محکمہ موسمیات کے مطابق ہوا میں نمی کا تناسب 51 فیصد ہے،آئندہ 24 گھنٹے کے دوران موسم سرد اور خشک رہنے کا امکان ہے