پیٹرول کوالٹی کو بڑھانے کے لئے آئل ریفائنریریز کا کیمیکل استعمال کرنے کا انکشاف

March 12, 2018 7:52 pm

جدت ویب ڈیسک ::پیٹرول کوالٹی کو بڑھانے کے لئے آئل ریفائنریریز کا کیمیکل استعمال کرنے کا انکشاف ،ہونڈا پاکستان نے پچھلے سال اوگرا کو شکایت کی کہ مقامی تیل کی اداروں نے اس تحقیقاتی آٹکنین نمبر (RON) میں اضافہ کرنے کے لئے پٹرولیم میں اضافی اضافی استعمال کا استعمال کیا ہے، جس کا نتیجے میں اس کے آٹوموبائل کو نقصان پہنچے گا.ہونڈا کے مطابق، کمپنیوں کو پیٹرول کی RON میں اضافہ کرنے کے لئے مینگنیج کا استعمال کر رہا ہے. افسوسناک معاملہ کے بعد، اوگرا نے معاملے کے بارے میں کچھ کارروائی کرنے اور اسے حل کرنے کا فیصلہ کیا. آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی اور پاکستان کے ہائیڈرو کاربن ڈویلپمنٹ انسٹی ٹیوٹ (ایچ ڈی آئی پی) نے پٹرول کے نمونے پر ٹیسٹ کی ایک سیریز منعقد کی ہے اور اب لیبرٹریٹ ٹیسٹ کے مطابق یہ ظاہر ہوتا ہے کہ یقینی طور پر تیل ریفائنریریز اور درآمد کرنے والے کیمیکلز کو اعلی مقدار میں استعمال کررہے ہیں. دوسری صورت میں کم معیار کی پٹرولیم مصنوعات کی کیفیت کو بڑھانے کے لئے – جو صرف گاڑیوں کے لئے خطرناک نہیں بلکہ انسانوں کے لئے بھی بہت خطرناک ہوتا ہے.مقامی نیوز چینل کے مطابق دونوں حکام OGRA اور ایچ ڈی پی پی مقامی طور پر تیار پٹرول کے نمونے جمع کرتے ہیں اور پٹرول کے نمونے درآمد کرتے ہیں اور ایک بار ٹیسٹ کئے جاتے ہیں جب کیمیکلز کو لاگت کی بچت کے لئے RON کی معیار کو بڑھانے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے.یہ ذکر کرنا ضروری ہے کہ ہونڈا نے دعوی کیا ہے کہ غریب معیار کی وجہ سے اس کی 1.5 لیٹر ہونڈا سوک ٹربو کی پیداوار کو روکنا پڑا.دونوں حکام نے اشارہ کیا کہ لیبارٹری کے ٹیسٹ مطلوبہ عناصر کو استعمال کرنے کے لئے استعمال کرتے ہوئے فریروینی اور ایم ایم ٹی جیسے اضافی مواد کا استعمال کرتے ہوئے 90 9 اور 92 وضاحتیں حاصل کرنے کے لئے استعمال ہوتے ہیں. انجن کے اجزاء میں یہ اضافی اجزاء جمع ہوئیں اور چمک پلگ اور ایندھن انجیکرز کو نقصان پہنچانے کے ساتھ ساتھ انجن اور گاڑی اخراج کے نظام کو نقصان پہنچے.اب یہ دیکھنے کے لئے کہ ہونڈا اور دیگر تیل کی مارکیٹنگ کمپنیوں کے تجربات کے نتائج کے بارے میں کیا اثر ہوگا اور کیا حکام مداخلت کریں گے اور اس میں ملوث افراد کو سزا دیں گے.

متعلقہ خبریں