کراچی سے دو بڑی آٹو کمپنیوں نے سرمایہ کاری فیصل آباد منتقل کردی ، جانیے کیوں ؟

March 12, 2018 3:41 pm

جدت ویب ڈیسک ::کراچی میں بن قاسم انڈسٹریل پارک اور کورنگی کریک انڈسٹریل پارک کے سرمایہ کاروں نے الزام عائد کیا کہ نیشنل انویسٹمنٹ پارک کی بیوروکریسی رکاوٹیں پیدا کر رہی ہے، جس کے باعث دو بڑی آٹو کمپنیوں نے سرمایہ کاری فیصل آباد منتقل کر دی ہے ۔ وفاقی حکومت نے 3 کمپنیوں کو کار پلانٹ لگانے کی اجازت دی تھی جس سے 372 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کی جانی تھی ۔
لکی موٹرز نے 190 ملین، نشاط گروپ اور ہنڈائی نے 164 ملی جبکہ یونائیٹڈ موٹرز نے 18.8 ملین ڈالرز کی سرمایہ کاری کرنی تھی ۔ این آئی پی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی جانب سے تاخیر کے باعث کمپنی پلانٹ فیصل آباد منتقل کرنے پر مجبور ہو گئی ۔ این آئی پی کی جانب سے دنیا کی بہترین سہولیات کی فراہمی کے وعدے پر سرمایہ کار کمپنیوں کے شیئر ہولڈرز بن قاسم انڈسٹریل پارک میں تقریباً دگنی رقم میں پلانٹ خریدنے پر راضی ہوئے تھے، اس کے عوض سرمایہ کاروں کی جانب سے متعدد مرتبہ یاد دہانی کے باوجود اس وقت این آئی پی کے پاس اضافی بجلی دستیاب نہیں ۔
فیصل آباد اقتصادی زون میں سرمایہ کاری انہیں فائدہ مند دکھائی دیتی ہے ۔ وہاں 66 لاکھ روپے فی ایکٹر زمین فروخت کی جارہی ہے جبکہ 100 کلو واٹ فی ایکڑ کنکشن بھی فراہم کیا جارہا ہے ۔
ذرائع کے مطابق جو کمپنیاں بن قاسم انڈسٹریل پارک میں سرمایہ کاری کر رہی ہیں ، جون 2019 تک ان کمپنیوں کی مجموعی سرمایہ کاری 20 ارب روپے سے تجاوز کر جائے گی ۔
ہنڈائی کمپنی نے بی کیو آئی پی پر پلانٹ لگانا تھا، لیکن نیشنل انویسٹمنٹ پارک کی بیوروکریسی کی مداخلت کے باعث منصوبے کی تکمیل میں تاخیر اور اخراجات میں اضافے سے کمپنی نے سرمایہ کاری فیصل آباد کے خصوصی اقتصادی زون میں منتقل کر دی ۔ اسی صورتحال کا سامنا الفتم موٹرز کو بھی کرنا پڑا جسے کراچی میں گاڑیاں اسمبل کرنے کیلئے بی کیو آئی پی میں 50 ایکڑ الاٹ کیا گیا تھا ۔

متعلقہ خبریں