ایران شدت پسند کالعدم تنظیم القاعدہ کا نیا گڑھ بن چکا ہے ، امریکی وزیر خارجہ کا الزام

January 13, 2021 12:52 pm

واشنگٹن ::امریکہ اور ایران کے درمیان کشیدگی ایک بار پھر بڑھنے لگی، امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ ایران شدت پسند کالعدم تنظیم القاعدہ کا نیا گڑھ بن چکا ، اس کے خلاف کارروائی کا وقت آچکا ہے۔امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایران پر القاعدہ کی پشت پناہی کا الزام لگاتے ہوئے سخت کارروائی کا عندیہ دے دیا، پومپیو کا بھی کہنا ہے کہ ورلڈ ٹریڈ سنٹر پر حملہ کی منصوبہ بندی ایران میں ہوئی تھی اور حملہ آوروں نے ایران کی سرزمین استعمال کرتے ہوئے افغانستان میں تربیت حاصل کی تھی۔
امریکی وزیر خارجہ کے بیان کے مطابق القاعدہ کا نیا آپریشنل ہیڈ کوارٹر ایران میں ہے، ایران نے القاعدہ کے سینئر کمانڈز کو پناہ دے رکھی ہے، ایران امریکہ کی قومی سلامتی کے لئے حقیقی خطرہ بن چکا ہے اور ایران میں مقیم القاعدہ کے اہم کمانڈرز عبدالرحمن المغربی اور سلطان یوسف حسن العارف کو عالمی دہشت گردوں کی لسٹ میں شامل کردیا ہے۔
ادھر ایران نے بھی خطرے کے پیش نظر اسرائیل پر الزام عائد کیا ہے کہ اسرائیل ایران اور امریکہ کے درمیان براہ راست تصادم کی منصوبہ بندی کررہاہے، ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ اسرائیل ٹرمپ انتظامیہ کو اکسا رہاہے کہ اقتدار چھوڑنے سے پہلے ایران پر حملہ کردے،ایرانی جنرل قاسم سلیمانی پر حملہ اوراس کا قتل بھی اسی منصوبہ بندی کا حصہ تھا۔

متعلقہ خبریں