برتن کیوں ٹوٹے؟ 13 سالہ ملازمہ پر تشدد کرنے پر ن لیگی رہنما گرفتار

January 25, 2021 11:24 am

ویب ڈیسک :ـ: رپورٹ کے مطابق پنجاب کے شہر فیصل آباد میں برتن ٹوٹنے پر مالکن نے 13 سالہ گھریلو ملازمہ کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنادیا۔
فیصل آباد کے علاقے پیپلز کالونی نمبر دو میں مالکن نے 13 سالہ گھریلو ملازمہ یاسمین پر تشدد کیا، پولیس کا کہنا ہے کہ خوفزدہ بچی گھر سے فرار ہوکر جھنگ روڈ پر پینسرہ پہنچ گئی تھی، ہائی وے پولیس اہلکاروں نے بچی کو لاوارث دیکھ کر تحویل میں لیا۔
دوسری جانب چیئرپرسن چائلڈ پروٹیکشن بیورو سارہ احمد نے فیصل آباد میں گھریلو ملازمہ پر تشدد کے واقعہ کا نوٹس لے لیا ،چائلڈ پروٹیکشن بیورو فیصل آباد کی ٹیم نے تشدد کا شکار گھریلو ملازمہ کو تحویل میں لے لیا ،فیصل آباد میں 13سالہ یاسمین کو برتن ٹوٹنے پر مالکن نے تشدد کا نشانہ بنایا، مالکن کے تشدد کے بعد بچی گھر سے خوفزدہ ہو کر فرار ہو گئی،چیئرپرسن چائلڈ پروٹیکشن بیورو سارہ احمد کا کہنا ہے کہ بچی کو ڈنڈوں سے تشدد کا نشانہ بنایا گیا،بچی کا میڈیکل کروادیا گیا ہے،بٹالہ کالونی میں برتن توڑنے پر گھریلو ملازمہ کو تشدد کا نشانہ بنانے والے معاملہ پولیس نے مقدمہ کے اندراج کے بعد ملزم لیگی رہنما و سابق ناظم کو گرفتار کر کے حوالات میں بند کر دیا،پولیس کا کہنا ہے کہ ہائی وے پولیس نے متاثرہ کمسن گھریلو ملازمہ کو تھانہ بٹالہ کالونی پہنچا دیا ہے۔ گھریلو ملازمہ کو سابق ناظم کے گھر برتن ٹوٹنے پر تشدد کا نشانہ بنایا گیا، بچی کا طبی معائنہ کروالیا گیا ہے، چہرے، سر اور ٹانگوں پر تشدد کے نشانات موجود ہیں، ڈنڈے مارے جانے سے بچی کے ہاتھوں پر سوجن موجود ہے۔

متعلقہ خبریں