دنیا کی نایاب ترین وہیلز بلوچستان کے سمندر میں

December 10, 2020 4:08 pm

کراچی: ماہی گیروں نے دنیا کی نادر و نایاب نسل کی وہیل کے جوڑے کو بلوچستان کے ساحلی مقام پر اٹکھیلیاں کرتے دیکھا اور اس دلفریب منظر کو موبائل کیمرے کی مدد سے عکس بند کرلیا۔
کھلے سمندر میں مچھلی کے شکار پر جانے والے ماہی گیروں نے پسنی کے قریب ہیمپ بیک نسل کے دنیا میں نادر و نایاب تصور کیے جانے والے وہیل کے جوڑے کو لہروں کے دوش پر فضا میں اچھلتے اور اٹکھیلیاں کرتے دیکھا جس کے بعد بلوچستان کے مقامی ماہی گیروں نے اپنے موبائل کیمرے میں اس دلفریب منظر کو محفوظ کرلیا۔
ڈبلیو ڈبلیو ایف(پاکستان)کے ٹیکنیکل ڈائریکٹر محمد معظم خان کے مطابق عریبین ہیمپ بیک نسل کی وہیل مختلف وجوہات کے مطابق انتہائی کم رہ گئیں ہیں، اس حوالے سے تحقیق کے بعد مرتب کردہ ڈیٹا کے مطابق اب اس نسل کی وہیل دنیا بھر میں صرف 100 کے لگ بھگ ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ عریبین ہیمپ بیک وہیل گرم پانیوں میں رہتی ہے، پاکستان کے علاوہ وہیل کی یہ نسل انڈیا، سری لنکا، اومان، یمن اور ایران کے سمندروں میں پائی جاتی ہے۔محمد معظم خان کے مطابق معدومیت سے دوچار عریبین ہیمپ بیک وہیل کا پاکستانی سمندر میں دیکھا جانا انتہائی خوش آئند ہے، یہ دنیا کی واحد وہیل ہے جو کھانے کی تلاش اور افزائش نسل کے لیے بحیرہ عرب کا رخ کرتی ہیں۔

After Astola Island, Indus River Canyon becomes Pakistan's second Marine Protected Area - Daily Times

Astola Island declared Pakistan's first Marine Protected Area - Arabian Sea Whale Network

Rare humpback whale sighted off Balochistan coast

متعلقہ خبریں