کراچی میں اسپتال کے باہر سے دو ماہ کی بچی اغوا

November 23, 2020 3:17 pm

کراچی: جدت ویب ڈیسک :بہادر آباد چار مینار چورنگی کے قریب سے دو روز قبل مبینہ طور پر اغوا کی جانے والی بچی کو پولیس تاحل بازیاب نہ کرا سکی ، بچی کے اغوا کا مقدمہ نیوٹاون تھانے میں درج کر کے تفتیش اینٹی وائلنٹ کرائم سیل ( سی آئی اے ) کے سپرد کر دی گئی۔محمد امجد نامی شخص نے 21 نومبر 2020 کو تھانہ نیو ٹاون میں آکر تھانے کے ڈیوٹی افسر سب انسپکٹر محمد ارشاد کو بتایا کہ وہ مکان نمبر MC-546 شملہ پہاڑی مانسہرہ کالونی بن قاسم محلہ لانڈھی کا رہائشی ہے اور پرائیوٹ کمپنی میں ملازمت کرتا ہے ۔مدعی نے اپنے بیان میں بتایا کہ اس کی اہلیہ حنا بی بی اور اس کی بہن عذرہ بی بی صبح 5 بجے نجی ویلفیئر ٹرسٹ ( کلینک) بہادر آباد ڈاکٹر کو دکھانے کے لیے ٹوکن لینے گئے تھے اور دن تقریبا ڈھائی بجے میری بچی کی دوائی لینے کے بعد گھر جانے لگے تو ایک خاتون نے میری اہلیہ سے کہا کہ آپ کی بچی بہت پیاری ہے مجھے دو میں اس کو بوتل سے دودھ پلاتی ہوں میری بیوی نے بچی ہما جس کی عمر دو ماہ ہے اور دودھ کی بوتل اس نامعلوم خاتون کو دے دی اور وہ پیدل چلتے ہوئے بہادرآباد چار مینار چورنگی تک آئے پھر تقریبا ساڑھے 3 بجے کے قریب وہ عورت اچانک بچی سمیت غائب ہوگئی میری بیوی اور بہن نے اس خاتون کو کافی ڈھونڈا اور جب وہ نہیں ملی تو مجھے فون کر کے اطلاع دی جس پر میں تھانے رپورٹ درج کرانے آیا ہوں۔

متعلقہ خبریں