قومی ایئر لائن کا غیر ضروری اخراجات میں کمی کا فیصلہ ،ترجمان پی آئی اے

September 2, 2020 5:00 pm

کراچی: ویب ڈیسک ::قومی ایئر لائن نے برطانیہ میں پروازوں کی بندش کے معاملے کی وجہ سے غیر ضروری اخراجات میں کمی کا فیصلہ کر لیا۔
پی آئی اے نے یورپ کے بعد برطانیہ میں تعینات عملہ اور افسران کو واپس بلانے پر غور شروع کر دیا، ذرایع کا کہنا ہے کہ پابندی کے باعث لندن، برمنگھم، مانچسٹر، بریڈ فورڈ سے ایئرلائن عملے کو واپس بلایا جا سکتا ہے۔
مجموعی طور پر برطانیہ میں پی آئی اے کا 19 کے قریب عملہ و افسران تعینات ہیں، اس عملے میں 7 سے زائد پاکستان سے پوسٹنگ پر گئے ہیں جب کہ دیگر 12 مقامی عملے ہیں، عملے کی واپسی سے پی آئی اے کو لاکھوں پاؤنڈز کی بچت ہوگی۔ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے کہ لندن سے ایک انجینئر اور ایک پسنجر سیلز منیجر کے واپسی کے احکامات جاری کر دیے گئے ہیں۔
ترجمان کے مطابق برطانیہ اسٹیشن سے عملے و افسران کی واپسی سے پی آئی اے کے اخراجات میں کمی واقع ہوگی، برطانیہ کی جانب سے عائد پابندی کے باعث پی آئی اے متبادل ذرایع سے آپریشن جاری رکھے ہوئے ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ روز پی آئی اے نے یورپی ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی کی جانب سے پروازوں پر 6 ماہ پابندی کے فیصلے کے خلاف اپیل نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، ترجمان کا کہنا تھا کہ پی آئی اے یورپی ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی کے لیے اپیل مناسب وقت پر دائر کرے گی، قومی ایئر لائن کی جانب سے اپیل سے متعلق تیاری مکمل کی جا چکی ہے۔

متعلقہ خبریں