یہ ظرف اور مروت کیا ہوتی ہے؟ اچھوتی اور سبق آموز تحریر

October 9, 2019 11:46 am

مجھے میرے ہاسٹل کے ساتھ کر کے اک چھوٹا سالڑکا جوکہ چوتھی جماعت میں تھا اکثر آتے جاتے ٹکر جاتا تھا اک دفعہ اس نے کسی ٹاک شو میں ٹی وی پہ دو لفظ سن لیے “ظرف”____ “مروت”__اب اسکا مطلب پوچھنے کے لیے اسنے ٹیوشن کے بعد سڑک پہ ہی دھر لیا مجھے _
بھائ
یہ ظرف اور مروت کیا ہوتی ہے؟ ؟
ظرف __ شاید دل کی وسعت مطلب بڑا یا چھوٹا ہونا __
مروت __ فیلگنز یا احساس .!
اسنے اپنی ناک اور اوپری ہونٹ کھینچ کے پوچھا
اچھا! !
تو یہ کیسے ہوتی ہے؟؟
اب اس بچے کے ایسے برجستہ سوال پہ میں نے اسکے تھپکی دی سر کے نیچے اور آگے نکل پڑا___!
مگر وہ دوسرا سوال ہوبہو میرے دماغ میں اٹک کے گیا اتنا برجستہ تھا کہ مجھے معنی تو معلوم ہے مگر مثال کہاں سے ملے جو اتنی ہی بڑی ہو کہ جو اس لفظ کا ویسا ہی احاطہ کر لائے جیسا اسکا حق بنتا ہے ______!!
مگر!
جو اَماں ملی تو کہاں ملی!
مدینہ کی مسجد ہے! پوری ذمہ داری کے ساتھ سورج جلجلا رہا تھا اک لمبے گول دائرے میں رسول اللہ ﷺ بیٹھے ہوئے صحن صحابہ کرام ؓسے کچھا کچھ بھرا پڑا تھا ____!
سامنے
مسجد کا دروازہ کھلا پڑا تھا جس سے سامنے گہری ریت سے اٹی خشک ریتلی سڑک نظر آرہی تھی ___
اچانک اک عورت بال کھلے ہوئے ننگے پیر مٹی سے اٹی ہوئی گزری __ ٹھٹھک کے رکی ___ رخ دروازے کو کرکے پانچوں انگلیوں سے اشارہ کیا __
ادھر آؤ ___!
رسول اللہ ﷺسامنے بیٹھے تھے __ !
جھٹکے سے اٹھے اسقدر جلدی میں اٹھے کے ننگے پاؤں ہی دروازے سے باہر رکھ دیے ___!
ایک پہر گزرا ،دوسرا پھر تیسرا
وہ عورت اپنے ہی حواس می‍ں ہنوذ باتیں کرتی رہی آپ سنتے رہے سنتے رہے! وہ ہاتھ ہلاتی فضا می‍ں اشارے کرتی آپ مسکرا کے سر ہلا دیتے__!
اس کشمکش میں اصحاب پریشان بیٹھے تھے!
اچانک وہ عورت دوبارہ آنے کا کہ کر چلی گئی!
آپ ﷺ سر ہلا کر واپس مسجد میں داخل ہوئے _
پورا جسم سخت گرمی ریت کی جلن کے درحق پسینے میں ڈوب گیا تھا بالوں سے پانی ٹپکنے لگا تھا”
جناب ِ عمر ؓسے رہا نا گیا!
کہا
یا نبیِ برحق!!
وہ عورت تو پاگل بد حواس تھی وہ تو پاگل دیوانی عورت ہے آپ کیوں اسکی عبث بات اتنی دیر کھڑے سنتے رہے؟ ؟؟
بولے! !
عمر!!!
اس عورت کی پورے مدینہ میں کوئی نہیں سنتا
کیا میں محمد ﷺ بھی اسکی نہ سنوں؟
ظرف!
(نہیں یہاں مثال لفظ کے مطلب سے بھی بڑی نکلی)
حاتم تائ کی بیٹی گرفتا کر کے لائی گئی!
سرکار ﷺ کندھے پہ سیاہ چادر لٹکا کے بیٹھے تھے
جوں احاطے میں داخل ہوئی!
کسی نے کہا
دختر ِ حاتم طائی! !
جھٹ سے اٹھے!
کندھے کی چادر گھسیٹ کے کھینچی!
مٹی پہ بچھا کے انہیں بیٹھنے کا کہا!
بولی
“میں حاتم کی بیٹی ہوں!
دور ہٹ گئے!
کسی نے کہا
عیسائی کی بیٹی ہے!!اتنی تعظیم؟
بولے!
سخی کی بیٹی ہے! مجھے سخی کی بیٹی سے حیا آتی ہے ____!!
اُس مقام پہ کہ جہاں گردنیں اترتی ہوں عزتیں اچھلتی ہوں وہاں اک بے دیار عورت کو اتنی تعظیم ملی کے الٹے پاؤں واپس دوڑی اپنے بھائ عدی بن حاتم کو پکڑ کر ساتھ لائی کہا ___ کلمہ پڑھوائیے! ! مسلمان ہوئے!
مروت ! احساس
(یہاں بھی یہ لفظ مثال کے درحق ہیچ)
کسی کا کردار کسی لفظ کے مفہوم سے بھی آگے نکل گیا ہوا ہو __ ایسا میں نے زندگی میں کبھی نہ دیکھا تھا نہ اب دیکھ پاؤں گا____ صلو علیہ وآلہ ِ
#Copied

متعلقہ خبریں