نواز شریف کی طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت مسترد

June 20, 2019 4:42 pm

جدت ویب ڈیسک :: اسلام آباد ہائیکورٹ نے نواز شریف کی طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت مسترد کر دی۔ العزیزیہ ریفرنس میں سزا یافتہ مجرم نواز شریف جیل میں ہی رہینگے۔
گزشتہ سماعت میں نواز شریف کی سزا معطلی کی درخواست پر ان کے وکیل خواجہ حارث نے دلائل دیئے تھے کہ سزا معطلی کے دوران بیماریوں کی تشخیص ہوئی۔
اسلام آباد ہائیکورٹ کے دو رکنی بینچ نے نواز شریف کی درخواست پر سماعت کی تھی۔ جسٹس عامر فاروق نے خواجہ حارث سے استفسار کرتے ہوئے کہا تھا کہ عمومی طور پر جس بنیاد پر ضمانت مسترد ہو اس پر دوبارہ دائر نہیں ہو سکتی، اس نقطے پر عدالت کو مطمئن کریں۔ خواجہ حارث نے موقف اپنایا تھا کہ ایک نقطے پر دوبارہ درخواست دائر ہونے کی عدالتی نظریں موجود ہیں۔
وکیل خواجہ حارث نے دلائل دیے تھے کہ نواز شریف کی زندگی کو خطرات لاحق ہیں۔ 25 مارچ سے بیماری میں اضافہ ہوا۔ کوٹ لکھپت جیل میں قید نواز شریف کو فوری علاج کی ضرورت ہے۔
اس پر جسٹس محسن اختر کیانی نے استفسار کیا تھا کہ چھ ہفتے میں نوازشریف کا کیا علاج کروایا؟ جس پر خواجہ حارث نے بتایا تھا کہ کچھ بیماریاں ان چھ ہفتوں میں ہی سامنے آئیں، نوازشریف کو بیماریوں کی وجہ سے ذہنی تناو بھی ہے، مرض اتنا بڑھ چکا ہے کہ پاکستان میں علاج ممکن نہیں۔

متعلقہ خبریں