شہرِ قائد میں چیکنگ اور ناکےپر شہریوں کی تذلیل کرنے والے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ

February 9, 2019 4:11 pm

کراچی: جدت ویب ڈیسک ::تفصیلات کے مطابق کراچی پولیس چیف، اے آئی جی ڈاکٹرامیرشیخ کا کہنا ہے کہ شہر میں پولیس ناکے ختم نہیں کیے ہیں، شہریوں کی سہولت کے لیے تمام ڈی آئی جیز، ایس ایس پیز اور دیگر متعلقہ حکام کواس حوالے سے نئی ہدایات جاری کی ہیں۔شہریوں کی تکریم کو ملحوظِ خاطر رکھنے کے لیے پولیس چیف کی جانب سے دی گئی ہدایات میں کہا گیا ہے کہ چیکنگ کے دوران پولیس اہلکار شہریوں کی عزت و تکریم کا ہر ممکن خیال رکھیں، چیکنگ کرنے والے پولیس اہلکارترش یا رعب داراورحاکمانہ اندازِ گفتگو ہرگز استعمال نہ کریں۔
ہدایت نامے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ پولیس اہلکاروں کی جانب سے ویران مقامات پر انفرادی چیکنگ اور شہریوں کو تنگ کرنے کا عمل مکمل ختم کیا جائے۔ چیکنگ کے بہانے نکاح ناموں کی طلبی، یا منہ سونگھ کر شہریوں کی تذلیل کرنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت ترین کارروائی ہوگی۔جاری کردہ ہدایات میں کہا گیا ہے کہ کسی بھی مقام پر چیکنگ کے لیے ناکہ بندی پوائنگ پرڈی ایس پی، ایس ایچ او یا کسی اور ذمے دار پولیس افسر کی موجودگی کو یقینی بنایا جائے۔شہر میں پولیس کے ناکے یا چیکنگ کہاں کہاں ہوں گی، علاقوں اور مقامات کی لسٹیں بناکر اعلیٰ پولیس حکام کو بھیجنے کا حکم دیا گیا ہے۔  پولیس چیف کا یہ بھی کہنا تھا کہ پولیس اہلکاروں کے موٹرسائیکل گشت کے لیے علاقے کی حساسیت کے حساب سے روٹ پہلے سے متعین کئے جائیں۔تھانے سے علاقے میں ڈیوٹی پر روانہ کرتے وقت پولیس افسران گشت پر مامور اہلکاروں کی مکمل بریفنگ کریں۔

متعلقہ خبریں