شہر قائد میں گیس کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باعث نظام زندگی مفلوج

February 9, 2019 2:31 pm

جدت ویب ڈیسک ::کراچی میں گیس بحران نے شدت اختیار کرلی۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں گیس بندش کے باعث سڑکوں سے پبلک ٹرانسپورٹ غائب ہیں، سینکڑوں افراد دفاتر جانے کے لئے بس اسٹاپ پر گاڑیوں کا انتظار کررہے ہیں جس کے باعث وقت پر دفاتر پہنچنے میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔گیس کی لوڈشیڈنگ نے گاڑیوں کا پہیہ روکنے کے ساتھ ساتھ صنعتوں کا بھی پہیہ روک دیا ہے، شہر قائد کے صنعتی ایریا میں مقررہ مقدار میں گیس نہ ملنے کے باعث کئی فیکٹریاں بند ہیں اور ان میں کام کرنے والے افراد سخت پریشانی کا شکار ہیں۔۔گذشتہ روز وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیراعظم عمران خان کو خط لکھا تھا جس میں گیس کی شدید قلت پر تشویش کا اظہار کیا گیا تھا۔خط میں کہا گیا تھا کہ گیس کی قلت سے گھریلو اور صنعتی صارفین مشکلات کا شکار ہیں،سندھ ملکی گیس کی پیداوار میں تین ہزار ایم ایم سی ایف ڈی دیتا ہے اور سندھ کو صرف ایک ہزار دو سو ایم ایم سی ایف ڈی گیس ملتی ہے۔ گیس کی قلت سے سندھ کی معیشت پر منفی اثرات مرتب کر رہی ہے۔وزیراعلٰی نے خط میں مطالبہ کیا تھا کہ آئین کے تحت سندھ کو گیس کی فراہمی میں ترجیح دی جائے۔دوسری جانب ترجمان سوئی سدرن کے مطابق سی این جی اسٹیشنز کو گیس کی فراہمی مزید چوبیس گھنٹے کیلئے بند کردی گئی ہے، شیڈول کے مطابق فلنگ اسٹیشن کو آج گیس مہیا کی جانی تھی تاہم اب اتوار کی صبح گیس کی فراہمی شروع ہوگی۔

متعلقہ خبریں